طالبان کی قید سے رہائی: شہباز تاثیر کی دل دہلا دینے والی داستان

سعودی عرب کی ’توہین‘: کویتی بلاگر کو پانچ سال سزائے قید

دنیا، کس قسم کے افراد کو تباہ وبرباد کردیتی ہے؟

ٹرمپ کے خلاف لاکھوں امریکی خواتین کا تاریخی احتجاج

نقیب اللہ قتل؛ راؤ انوار کو پولیس پارٹی سمیت گرفتار کرنے کا فیصلہ

فتویٰ اور پارلیمینٹ

کل بھوشن کے بعد اب محمد شبیر

سعودیہ فوج میں زبردستی بھرتی پر مجبور ہوگیا ہے؛ یمنی نیوز

پاکستان کی غیر واضح خارجہ پالیسی سے معاملات الجھے رہیں گے

پارلیمنٹ پر لعنت

نائیجیریا میں آیت اللہ زکزکی کی حمایت میں مظاہرہ

ایٹمی معاہدے میں کوئی خامی نہیں، امریکی جوہری سائنسداں کا اعتراف

سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان مکار، دھوکہ باز، حیلہ گر اور فریبکار ہیں: قطری شیخ

امریکا نے دہشت گردی کے بجائے چین اور روس کو خطرہ قرار دے دیا

سلامتی کونسل میں پاکستان اور امریکی مندوبین کے درمیان لفظی جنگ

ایک اورماورائے عدالت قتل

کالعدم سپاہ صحابہ کا سیاسی ونگ پاکستان راہ حق پارٹی بھی اھل سیاسی جماعتوں میں شامل

امریکہ اور دہشتگردی کا دوبارہ احیاء

ایرانی جوان پوری طرح اپنے سیاسی نظام کے حامی ہیں؛ ایشیا ٹائمز

دنیائے اسلام، فلسطین اور یمن کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرے

شام کے لیے نئی سازش کا منصوبہ تیار

پاک فوج کیخلاف لڑنا حرام ہے اگر فوج نہ ہوتی تو ملک تقسیم ہوچکا ہوتا: صوفی محمد

امام زمانہ عج کی حکومت میں مذہبی اقلیتوں کی صورت حال

سعودی عرب نائن الیون کے واقعے کا تاوان ادا کرے، لواحقین کا مطالبہ

امریکہ کو دوسرے ممالک کے بارے میں بات کرنے سے باز رہنا چاہیے: چین

پاکستان میں حقانی نیٹ ورک موجود نہیں

سعودی عرب نے یمن میں انسانی، اسلامی اور اخلاقی قوانین کا سر قلم کردیا

پاکستان کو ہم سے دشمن کی طرح برتاؤ نہیں کرنا چاہیے: اسرائیلی وزیراعظم

آرمی چیف نے 10 دہشت گردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی

بھارت: ’حج سبسڈی کا خاتمہ، سات سو کروڑ لڑکیوں کی تعلیم کے لیے

صہیونی وزیر اعظم کے دورہ ہندوستان کی وجوہات کچھ اور

پاکستانی سرزمین پر امریکی ڈرون حملہ، عوام حکومتی ایکشن کے منتظر

روس، پاکستان کی دفاعی حمایت کے لئے تیار ہے؛ روسی وزیر خارجہ

عام انتخابات اپنے وقت پر ہونگے: وزیراعظم

ناصرشیرازی اور صاحبزادہ حامد رضا کی چوہدری پرویزالہیٰ سے ملاقات، ملکی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال

پارلیمنٹ نمائندہ ادارہ ہے اسے گالی نہیں دی جاسکتی: آصف زرداری

زائرین کے لیے خوشخبری: پاک ایران مسافر ٹرین سروس بحال کرنے کا فیصلہ

شریف خاندان نے اپنے ملازموں کے ذریعے منی لانڈرنگ کرائی، عمران خان

امریکہ کی افغانستان میں موجودگی ایران، روس اور چین کو کنٹرول کرنے کے لئے ہے

ایرانی پارلیمنٹ اسپیکر کی تہران اسلام آباد سیکورٹی تعاون بڑھانے پر تاکید

دورہ بھارت سے نیتن یاہو کے مقاصد اور ماحصل

ایوان صدر میں منعقد پیغام امن کانفرنس میں داعش سے منسلک افراد کی شرکت

امریکہ، مضبوط افغانستان نہیں چاہتا

عربوں نے اسرائیل کے خلاف جنگ میں اپنی شکست خود رقم کی

سیاسی لیڈر کا قتل

مقاصد الگ لیکن نفرت مشترکہ ہے

انتہا پسندی فتوؤں اور بیانات سے ختم نہیں ہوگی!

تہران میں او آئی سی کانفرنس، فلسطین ایجنڈہ سرفہرست

زینب کے قاتل کی گرفتاری کے حوالے سے شہباز شریف کی بے بسی

یورپ کی جانب سے جامع ایٹمی معاہدے کی حمایت کا اعادہ

بن گورین ڈاکٹرین میں ہندوستان کی اہمیت

دہشت گردی کے خلاف متفقہ فتویٰ

شام میں امریکی منصوبہ؛ کُرد، موجودہ حکومت کی جگہ لینگے

شفقنا خصوصی: کیا زینب کے قاتل کی گرفتاری کو سیاسی مقاصد کے لیے چھپایا جا رہا ہے؟

مسئلہ فلسطین، عالم اسلام کا اہم ترین مسئلہ ہے

پاپ کی طرف سے میانمار کے مسلمانوں کی عالمی سطح پر حمایت

امریکا مشترکہ مفادات کی بنیاد پر پاکستان سے نئے تعلقات بنانا چاہتا ہے، ایلیس ویلز

کالعدم تحریک طالبان پاکستان کا بینظیر بھٹو کو قتل کرنے کا دعویٰ

امریکہ، بیت المقدس کے بارے میں اپنے ناپاک منصوبوں ميں کامیاب نہیں ہوگا

پاکستان کے ساتھ تعلقات مزید مستحکم کرنےکےلیے پرعزم ہیں: امریکی جنرل جوزف ڈنفورڈ

اسلامی ممالک کو اختلافات دور کرنے اور باہمی اتحاد پر توجہ مبذول کرنی چاہیے

بھارت ایسے اقدامات سے باز رہے جن سے صورتحال خراب ہو، چین

عمران خان اور آصف زرداری کل ایک ہی اسٹیج سے خطاب کریں گے، طاہرالقادری

اسرائیلی وزیراعظم کا 6 روزہ دورہ بھارت؛ کیا پاکستان اور ایران کے روایتی دشمنوں کیخلاف علاقائی اتحاد ناگزیر نہیں؟

مودی، یاہو اور ٹرمپ کی مثلث

سید علی خامنہ ای، دنیا کے تمام مسلمانوں کے لیڈر ہیں؛ آذربائیجانی عوام

لسانی حمایت کافی نہیں، ایرانی معترضین تک اسلحہ پہنچایا جائے؛ صہیونی ادارہ

خود کش حملے حرام ہیں، پاکستانی علما کا فتوی

پاکستان افغان جنگ میں قربانی کا بکرا نہیں بنے گا ، وزیردفاع

امریکہ کے شمالی کوریا پر حملے کا وقت آن پہنچا ہے؛ فارن پالیسی

یمن پر مسلط کردہ قبیلۂ آل سعود کی جنگ پر ایک طائرانہ نظر

2016-05-16 23:36:10

طالبان کی قید سے رہائی: شہباز تاثیر کی دل دہلا دینے والی داستان

Cil44icUUAAD76Zسابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے بیٹے شہباز تاثیر کا کہنا ہے کہ ان کی رہائی بغیر کسی تاوان کی ادائیگی کے بغیر ہوئی، دہشت مجھے کوڑے مارتے، میرا گوشت کاٹتے اور بھوکا رکھتے، دو بار ڈرون حملوں میں مرنے سے بچا،طالبان کے چنگل سے رہائی کسی معجزے سے کم نہیں۔

رہائی کے بعد برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کو اپنے پہلے اںٹرویو میں پنجاب کے مقتول گورنر سلمان تاثیر کے بیٹے شہباز تاثیر کا کہنا تھا کہ اغواء کاروں نے ان پر بہیمانہ ظلم کیے اور اذیتیں پہنچائیں لیکن اس کے باوجود خدا کو میری زندگی منظور تھی اور اللہ تعالیٰ مجھے بچاتا رہا، شہباز تاثیر کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان کی رہائی بغیر تاوان ادا کیے ہوئی۔

160516072437_shahbaz_taseer_640x360_bbc_nocredit

اغوا کاروں کی قید میں گزرے ایام کا ذکر کرتے ہوئے شہباز تاثیر کا کہنا تھا کہ مجھے شروع میں کوڑے مارنے شروع کیے، تین چار دنوں میں انہوں نے مجھے پانچ سو سے زیادہ کوڑے مارے، اس کے بعد میری کمر بلیڈوں سے کاٹی، پلاس (زمبور) سے میری کمر سے گوشت نکالا، پھر میرے ہاتھوں اور پیروں کے ناخن نکالے، مجھے زمین میں دبا دیا، ایک دفعہ سات دن کے لیےاور ایک دفعہ تین دن کے لیے، پھر مزید تین دن کے لیے مجھے زندہ زمین میں دفن کیا گیا، کہ صرف منہ تھوڑا سے مٹی سے باہر ہوتا تھا۔

ان برے دنوں کا ذکر کرتے ہوئے شہباز تاثیر نے مزید بتایا کہ اغوا کار مجھے بھوکا رکھتے تھے، میرے پہرے داروں کا رویہ بھی میرے  ساتھ بہت برا تھا، میرا منہ سوئی دھاگے سے سی دیا گیا، انھوں نے مجھے سات دن یا شاید دس دن کھانا نہیں دیا، مجھے صحیح طرح یاد نہیں کتنے دن، مجھے ٹانگ پر گولی ماری گئی، میں بہت خوش قسمت ہوں کہ وہ میری ہڈی کو نہیں لگی اور نکل گئی، انہوں نے میرے منہ پر شہد کی مکھیاں بٹھائیں تاکہ میرے خاندان والوں کو دکھا سکیں کہ میری شکل بگڑ گئی ہے، مجھے ملیریا ہو گیا لیکن مجھے دوائی نہیں دی گئی، مجھے کہتے تھے کہ ہمیں بینک اکاؤنٹ دو، وہ مجھے فلم بنانے کے لیے اذیت دیتے تھے، مجھے ایک دن پہلے ہی کہتے تھے کہ تیاری کرو کل یہ ہوگا، میں ان سے کہتا کہ کون سی تیاری کروں، کیسے تیاری کرتے ہیں۔ مجھے کہتے کہ کل تمہارے ناخن نکالیں گے، میں پوری رات نماز پڑھتا، نماز کے بعد نفل اور نفل کے بعد فجر تک دعا کرتا رہتا تھا، مجھے لگتا تھا کہ وہ مجھے جتنا بھی ماریں اللہ نے مجھے اپنی حفاظت میں رکھا ہوا ہے،اللہ تعالی کی طرف سےمیں ایک شیل میں تھا اور وہ اس شیل میں داخل نہیں ہو سکتے ہیں۔

160308151144_salman_taseer_shehbaz_taseer_twitter__maheen_taseer_512x288_twitter_nocredit

تاوان سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں شہباز کا کہنا تھا کہ میری رہائی کسی تاوان کی ادائیگی کے بعد عمل میں نہیں آئی، میں وہاں سے بھاگ گیا تھا، وہاں قید کے دوران جیل میں مجھے ایک آدمی ملا، اس نے میری مدد کی، مجھے کچلاک پہنچانے تک اور کچلاک سے میں نے اپنے خاندان سے رابطہ کیا، اور بعد ازاں اس کے بعد مجھے پاکستان آرمی نے اپنی حفاظت میں لے لیا اور لاہور پہنچایا، میں  نے اپنی رہائی کیلئے کوئی پیسے نہیں دیئے، لیکن جاتے ہوئے میں نے ان کے دس ہزار روپے ضرور لیے تھے۔

اپنے اغوا کی روداد سناتے ہوئے شہباز تاثیر ایک لمحے کیلئے خاموش ہوئے اور انہیں دنوں کو یاد کرکے کانپتے ہوئے بولے کہ مجھے لاہور سے اغوا کرکے میر علی لے جایا گیا، جو وزیرستان کا علاقہ ہے،پھر وہاں سے میرعلی۔ مجھے ہر مہینے ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کیا جاتا، میں میر علی میں 2014 کی جون تک رہا، جب انہی ہی دہشت گرد ازبکیوں کے ساتھیوں نے کراچی ایئرپورٹ پر حملہ کیا، انھیں پہلے سے پتا تھا کہ حکومت اور فوج کی طرف سے کیا ردِ عمل آئے گا، اس لیے انہوں نے مجھے شوال منتقل کردیا، جس کا راستہ شاید دتہ خیل سے جاتا ہے،ادھر میں فروری 2015 تک تھا، اس کے بعد مجھے گومل کے راستے افغانستان کے علاقے زابل لے جایا گیا، وہ جگہیں بدلتے رہتے تھے، کہیں ایک مہینہ کہیں دو مہینے، ایک مرتبہ ڈرون حملوں کی وجہ سے میں ڈیڑھ سال تک ایک خاندان کے ساتھ رہا، کسی کو پتا نہیں تھا کہ میں کون ہوں اور شاید افواہ بھی اڑی تھی کہ شہباز تاثیر ڈرون حملے میں مر چکا ہے، مگر اللہ کے فضل سے میں بچ گیا۔

160420072205_shahbaz_taseer_640x360_taseers_nocredit

اغوا میں ملوث گروہ کا ذکر کرتے ہوئے شہباز تاثیر کا کہنا تھا کہ میں صرف ایک گروپ کے ساتھ تھا اور وہ اسلامک موومنٹ آف ازبکستان تھا اور میں ان ہی کے پاس رہا، ان کے پاس اس وقت تک رہا جب تک افغانی طالبان اور ازبک گروپ کی بیعت کے اوپر لڑائی نہ ہوئی تھی، یہ اس لیے ہوا کہ ازبکوں نے فیصلہ کیا کہ وہ داعش کے ساتھ جائیں گے کیونکہ ان کی نظر میں وہ صحیح خلافت تھی اور افغان طالبان کی صحیح نہیں تھی، تب میں افغان طالبان کے ہاتھوں میں آ گیا، مگر وہ خود بھی نہیں جانتے تھے کہ میں کون ہوں، میں نے انھیں کتنی بار کہا کہ میں ازبکی نہیں ہوں، وہ کہتے کہ میں ازبکی ہوں اور میں نے ان کے ساتھ جنگ کی تھی اور اس لیے پکڑا گیا تھا، اس لیے مجھے جیل میں پھینک دیا گیا۔

رہائی کی تفصیلات بتاتے ہوئے شہباز تاثیر کا کہنا تھا کہ رہا ہونے کے بعد سب سے پہلے جو کھانا کھایا وہ نہاری تھی، کچلاک ریسٹورنٹ میں کچھ نہیں کھایا، آرمی کمپاؤنڈ میں آیا تو انہوں نے کہا کچھ چائے، کافی پانی تو میں نے کہا صرف نہاری، اگر ممکن ہو تو لاہور سے منگوا دیں نہیں تو میں آپ کی بلوچی نہاری بھی کھانے کو تیار ہوں۔

واضح رہے کہ سابق مقتول گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے بیٹے شہباز تاثیر کو ماہ رمضان کے دوران 26 اگست 2011 کو لاہور سے اغوا کیا گیا تھا اور تقریباً ساڑھے چار سال بعد آٹھ مارچ 2016 کو ان کی رہائی بلوچستان کے علاقے میں عمل میں آئی، جہاں اغوا کار انہیں چھوڑ کر فرار ہوگئے۔ سماء

 

 

زمرہ جات:   Horizontal 4 ،
ٹیگز:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

کوئٹہ توکل کانفرنس

- اسلام ٹائمز