خدارا! اب تو جاگ جائیے

وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے چودھری نثار کو منا لیا، ذرائع

اسرائیلی فوج کا ملکی میڈیا پر کس قدر کنٹرول ہے؟

سعودی عرب کے نئے دعوے سفید جھوٹ ہیں : قطر

کچھ ذمہ داری سپریم کورٹ پر بھی عائد ہوتی ہے

ایران امریکی پابندیوں کا سخت جواب دے گا: سید عباس عراقچی

نواز شریف بطور وزیراعظم 14 اگست کو پرچم کشائی نہیں کرسکیں گے: خورشید شاہ

روس نے امریکہ کے خلاف جوابی اقدامات کی دھمکی دے دی

چین ، بھارت کا تنازعہ

عمران خان کی سپریم کورٹ سے پاناما کیس کا فیصلہ جلد سنانے کی درخواست

پاکستانی اسلحہ ساز صنعت بھارت سے بہتر ہے: بھارتی نائب آرمی چیف

عمران خان نااہلی کی جانب گامزن: کیا پیپلز پارٹی کے لیے راہ ہموار کی جارہی ہے؟

محمد بن نائف کا شاہ سلمان کے نام آخری خط

وزیراعظم کے پاس آپشن بہت کم رہ گئے ہیں

کون بنےگا وزیر اعظم ۔۔۔؟

النجوم فائونڈیشن کے نام پر کالعدم سپاہ صحابہ کا نیا ہجوم ۔ گل زہرا

تکفیری دہشتگرد اور ایک ضعیف باپ کی خرن میں ڈوبی عمر بھر کی کمائی

سعودی عرب کے شہزادے نے ابو ظہبی کے ولی عہد کو شیطان صفت قرار دیدیا

کیسا ہوگا آئی فون 8! تصاویر دیکھیں

قطر کا معاشی بحران؛ 388 سعودی کمپنیاں بند، سعودی عرب کا برادر ہمسائیوں کے ساتھ غیر انسانی سلوک

ایران نے قطر کو سانس لینے کا موقع دیا: وزیر دفاع قطر

امریکہ یورپ تعلقات میں سرد مہری

ابوبکر بغدادی دیرالزور میں غائب

بلوچستان میں داعش کے پیچھے کون سی قوتیں ہیں ؟

عراق کو توڑنے کیلئے امریکی اسرائیلی سازشیں عروج پر، کرد رہنماوں کی خفیہ ملاقاتیں

سعودی عرب کا قطر کے بادشاہ کے خلاف بغاوت کی سازش میں ملوث ہونے کا انکشاف

حضرت فاطمہ معصومہ (س) کی شفاعت سے تمام شیعہ بہشت میں وارد ہوں گے

اسرائیل نے ہتھیار ڈال دیے، مسجد اقصیٰ سے میٹل ڈٹیکٹرز ہٹانے کا اعلان

لاہور دھماکہ: کیا یہ آپریشن خیبر فور کا ردعمل تھا؟

مسجد اقصیٰ پر صیہونی یلغار

900 جرمن داعش میں شامل ہو چکے ہیں،جرمن خفیہ ادارہ

بھارت خام خیالی میں نہ رہے سرحدوں کی حفاظت کرنا جانتے ہیں: چین

ترک صدر اردوغان کی سعودی عرب اور قطر کے درمیان کشیدگی کو ختم کرنے کی کوششیں ناکام

پاکستانی تعاون کے بغیر افغان جنگ نہیں جیت سکتے : جنرل جوزف ڈنفورڈ

حزب اللہ لبنان کا عرسال کے 90 فیصد علاقہ پر قبضہ

سعودی شاہ کی سبکدوشی کا ڈرامہ آخری مرحلے میں

29 شوال یوم ولادت حامی رسالت، محسن اسلام حضرت ابوطالب علیہ سلام !

ارفع کریم ٹاور دھماکا، ہلاکتوں کی تعداد 28 ہو گئی، 53 زخمی

خصوصی رپورٹ: دہشتگرد اب بھی پاکستان میں فنڈز جمع کرنے میں مصروف ہیں

چوہدری نثار کے وزیر اعظم سے اختلافات کی اندرونی اور چشم کشا داستان:‌ کیا وزیرداخلہ اب بھی نوازشریف کے جانثار رہیں گے ؟

 شہبازشریف کو وزیر اعظم بنانے کا مطالبہ:  شریف خاندان میں پڑتی دراڑوں کی ان کہی داستان

'26 جولائی سے پہلے پاناما کا فیصلہ سامنے آسکتا ہے'

بھارت میں صدر کا انتخاب: دلت نہیں انتہا پسند ہندو کامیاب ہوا

فیصلہ جو بھی ہو، کیا اعتبار بحال ہوگا؟

بیت المقدس میں کشیدگی ، سلامتی کونسل کا اجلاس کل طلب

ایران نے داعش پر عراقی عوام کی فتح میں فیصلہ کن کردار ادا کیا : عراق

فلسطین آج بھی عالم اسلام کا پہلا مسئلہ ہے: ایران

ایران اور عراق کے درمیاں دفاع اور سیکورٹی کے معاہدے

جے آئی ٹی نے آل شریف کے جرائم سے پردہ اٹھا کر تاریخ رقم کی ہے: اسد نقوی

اسرائیلی وزير اعظم سے متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ کی خفیہ ملاقات

اردن میں اسرائیلی سفارت خانے پر حملہ، ایک شخص ہلاک

سیکڑوں جرمن لڑکے لڑکیاں داعش میں شامل

ایسا برا ملک دنیا میں نہیں، کبھی امریکا نہیں جاؤں گا: فلپائنی صدر

یورپی ممالک پر ڈیڑھ سو سے زائد خودکش حملوں کا خطرہ

شریف خاندان تاثر دے رہا ہے کہ میرا اور ان کا کیس ایک ہے: عمران خان

’’میاں صاحب جانے دو شہباز شریف کو آنے دو‘‘ کے بینرلگ

کیا چوہدری نثار ن لیگ کو چھوڑ دیں گے؟

نیتن یاہوکا بیت المقدس کو یہودی بنانے کا منصوبہ

 جو قطر کے ساتھ ہوا وہ باقی ملکوں کے ساتھ بھی ہوسکتا ہے؛ سعودی ولی عہد کی دھمکی

(ن) لیگ کی چوہدری نثار کو منانے کی کوششیں تیز

وزیراعظم کےخلاف عدالتی کارروائی سے جمہوریت کو کیا خطرہ ہے!

مشرق وسطیٰ میں مصالحت کے امکانات

شام اور حزب اللہ کی لبنانی سرحد کے قریب دہشتگرد گروہ النصرہ کے ٹھکانوں پر کارروائی

پاناما کیس کا اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا؟

سعودی عرب ام الفساد اور دہشت گردی کی جڑ ہے

پاکستان بھر میں جاری شیعہ نسل کشی کے خلاف مظاہرے

قطر نے گھٹنے ٹیک دیے؟ سعودی عرب سے مذاکرات کا اعلان

نواز شریف رات تک مستعفی ہونے کا فیصلہ کرلیں: خورشید شاہ

نوازشریف اس بار قدم نہیں بڑھائیں گے

امریکی طوطا چشمی: کیا خارجہ پالیسی پر تجدید نظر کا وقت نہیں آ گیا؟

کیا پاکستان کے لئے ایک امام خمینی کی ضرورت ہے؟

2017-02-15 17:32:48

خدارا! اب تو جاگ جائیے

سدھماکہ تو اسی دن ہو گیا تھا جس دن سپریم کورٹ کے احکامات کو جوتے کی نوک پر رکھنے والے داخلی سلامتی کے وزیر نے کالعدم تنظیموں کے وفد سے دارالحکومت میں ملاقات کی تھی، لاہور میں تو بس اس دھماکے کی آواز گونجی ہے کہ شاید کوئی جاگ جائے۔ مگر جنہیں خوفناک بم دھماکوں کی سینکڑوں ہولناک آوازیں ، زخمیوں کی سسکیاں، شہیدوں کی سوال پوچھتی نگاہیں ، یتیموں اور بیواؤں کے آنسو اور بین نہ جگا سکے ہوں انہیں صرف صور اسرافیل ہی جگا سکتا ہے۔ حالات میں تبدیلی کیلئے تبدیلی ناگزیر ہوتی ہے۔ ایسا کچھ تو ہے کہ اہل پاکستان سالوں سے لاشوں پر بین کر رہے ہیں مگر ان کے آنسو پوچھنے والا کوئی نہیں۔ ایسا کچھ تو ہے کہ ہم دہشتگردی کے عفریت پر قابو پانے میں ناکام ہیں اور اب ایسا کچھ تو کرنا ہو گا کہ معصوموں کا خون بہنا بند ہو۔

یقینا وزیر داخلہ جناب چوہدری نثار علی خان لاہور دھماکے پر جلد دھواں دار پریس کانفرنس کریں گے۔ قوم کو بتائیں گے کہ دہشت گرد کہاں سے آیا، کس کے پاس رکا، کس نے اس بمبار کی سہولت کاری کی، اور کس نے اس چلتی پھرتی لاش کو بے گناہوں کی موت کا سامان بنایا۔ وزیر موصوف کو سب کچھ معلوم ہو گا۔ اگر علم نہیں ہو گا تو صرف اس بات کا کہ مستقبل میں ایسے سانحات سے بچنے کیلئے کیا کرنا ہے۔ اگر علم نہیں ہو گا تو یہ کہ دہشتگردی کی از سر نو تفہیم کس طرح کرنی ہے۔ اگر وہ نہیں جانتے ہوں گے تو یہ کہ جن امن دشمنوں کو پوری قوم جانتی اور پہچانتی ہے وہ وزیر موصوف کی آنکھوں سے اوجھل کیوں ہیں۔ وہ امن دشمن چوہدری صاحب کو اس لئے نظر نہیں آتے کہ وہ ان کے پہلو میں لگے بیٹھے ہیں۔
 
لاہور دھماکے کی تفصیلات اور حملہ آور کی شناخت کی خوشخبری سنانے کے بعد وزیر داخلہ قوم کو منی لانڈرنگ کیس، عمران فاروق قتل کیس اور الطاف حسین کے گرد گھیرا تنگ ہونے کی نوید سنانا ہرگز نہیں بھولیں گے کیونکہ یہ ریاست کی رٹ اور مجرم کو منطقی انجام تک پہنچانے کا معاملہ ہے۔ ایسا کیسے ہو سکتا ہے کہ سات سمندر پار بھی کوئی شخص کسی پاکستانی شہری کو قتل کرے یا کروائے اور اسلامی جمہوریہ پاکستان اسے انجام تک نہ پہنچائے۔ چوہدری صاحب کے بقول ریاست اپنا فرض بخوبی نبھائے گی۔ ایسی لن ترانیاں سن کر تو شاید ”شرم کو بھی شرم “ آتی ہو گی مگر اہل اقتدار کو پھر بھی سب اچھا دکھتا ہے۔
 
نیشنل ایکشن پلان مرتب ہونے کے بعد بھی ہزاروں پاکستانی شدت پسندی کا شکار ہو کر قبرستانوں میں ابدی نیند سو چکے ہیں مگر اب بھی اس پلان پر اسی طرح شور و غوغا ہے جس طرح اس وقت ہوا تھا جب آرمی پبلک اسکول میں ننھے طلبا کی لاشیں گرائی گئی تھیں۔ بڑے افسوس کے ساتھ یہ کہنا پڑتا ہے کہ اگر یہی سانحہ کسی باشعور قوم کے ساتھ پیش آیا ہوتا تو یقینا یہ آخری سانحہ ہوتا۔ مگر ہم نہ تو باشعور ہیں اور نہ ہی قوم۔ ہر گلی ، ہر گلی ، ہر قصبے اور ہر شہر میں شدت پسندی کا کھلے عام پرچار کیا جا رہا ہے۔ مولوی اور ملا جہاد کے فتوے بانٹ رہے ہیں۔ فساد فی الارض پھیلا رہے ہیں۔ مگر کوئی ان کی زبان روکنے والا نہیں۔ کیونکہ ملا کو کسی کا خوف نہیں۔ جب ایسے ملاؤں کے سرپرست اعلیٰ حکمرانوں کی بغل میں بیٹھے ہوں، ان کی حکومت گرانے کی کوشش کرنے والوں کو دن رات گالیاں دے رہے ہیں اور حکمران جوابی کرم نوازی کا مظاہرہ کر رہے ہیں تو کس کافر کو سزا کا خوف ہو گا۔
 
وزیراعظم ، آرمی چیف، وفاقی وزیر داخلہ ، وزیراعلیٰ پنجاب اور اعلیٰ عہدوں پر متمکن باعزت لوگ اب بھی یہی دعویٰ کر رہے ہیں کہ ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ جیت چکے ہیں۔ آخری دہشت گرد کے خاتمے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ بیانات کا یہ تضاد تو کجا ایسے بیانات سن کو قوم کو بھی شرم آنے لگی ہے مگر اعلیٰ صفات سے عاری حکمران آج بھی بڑی ڈھٹائی کے ساتھ روایتی بیان بازی کر کے قوم کے زخموں پر نمک چھڑک رہے ہیں۔ خدارا! اب تو جاگ جائیے ، خدارا اب تو ہوش سے کام لیجئے، خدارا اب تو روایتی بیان بازی سے ہٹ کر کچھ عملی اقدامات کیجئے کہ صبر کا پیمانہ لبریز ہو رہا ہے۔ اس سے پہلے کہ خلق خدا اس نظام کو لپیٹ کر آپ کے منہ پر دے مارے، خدارا! جاگ جائیے۔
 تحریر: آصف عباس

 

زمرہ جات:  
ٹیگز:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

کیا چل رہا ہے آج کل ؟

- ایکسپریس نیوز

یہ جو ایک ملک ہے

- ایکسپریس نیوز

’’ہمارا دوست ‘‘

- ایکسپریس نیوز

آج کا دن کیسا رہے گا؟

- ڈیلی پاکستان

عابد حسن منٹو کا خواب

- ایکسپریس نیوز

مسئلہ پھول کا ہے

- ایکسپریس نیوز