پاکستان سے منی لانڈرنگ

ایران کو تنہا کیا جا رہا ہے، وزیراعظم پاکستان تماشائی بنے رہے: عمران خان

سعودی عرب امریکہ کا کھلونا ہے: پاکستانی اہلسنت برادری

آل سعود جیسی بدترین حکومت کے ساتھ ہتھیاروں کا معاہدہ 'انتہائی خوفناک' ہے: امریکی سینٹر

پی آئی اے کی لندن جانے والی پرواز سے21 کلو ہیروئن برآمد

 ایران کے خلاف الزامات کی بوچھار: امریکہ سعودی ریالوں کے سامنے بچھ گیا

عمران خان کے الزامات: کیا نواز شریف غدار ہیں؟

نواز شریف کا استقبال: سعودیہ کی نواز شریف کی عزت افزائی یا بے عزتی؟

افغان سر زمین پاکستان کے خلاف استعمال ہو رہی ہے، اہم ثبوت حاصل کر لیے گئے

سعودی ڈالر کا کمال:‌ٹرمپ کا ایران پر فرقہ وارانہ فسادات اور دہشت گردی کا الزام

سعودی عرب کو ہتھیار فروخت نہ کئے جائیں، ہیومن رائٹس واچ کا امریکہ سے مطالبہ

دہشت گردوں کے حامی ممالک کی دہشت گردوں کا فنڈ روکنے کی نام نہاد کوشش

راولپنڈی میں ایم کیوایم لندن کے خفیہ نیٹ ورک کا انکشاف

ایران کےانتخابات سے سعودی عرب کے ڈکٹیٹر بادشاہ پر خوف اور ہراس کیوں طاری؟

امریکی اسلامی کانفرنس : سعودی فرماں روا شاہ سلمان کے ایران پر بے بنیاد الزامات

چین نے امریکا کے 20 جاسوس ہلاک کیے: نیویارک ٹائمز

مقدمات سے بچانے کے لیے سعودی عرب نے انتہا پسند مذہبی اسکالر ذاکر نائیک کو شہریت دیدی

اسلامی سربراہی کانفرنس اور اسلامی نیٹو

ٹرمپ کا دورہ بحران میں اضافہ کر سکتا ہے

داعش کی اصل قوت

امریکہ مسلمانوں کا دشمن نہیں: امت مسلمہ کے نام نہاد داعی کا مسلمانوں‌کے زخموں پر نمک

سعودیہ میں‌محلاتی سازشیں: تخت و تاج کیلیے دو سعودی شہزادوں میں کھینچا تانی

آسٹریا بھی مسلم کش پالیسیز کے رستے پر: قرآن کی تقسیم اور برقعے پر پابندی

العوامیہ، سعودی عرب کا غزہ

عالمی عدالت بھی کلبھوشن کی سزا ختم نہیں کرسکتی، مشیر خارجہ

امریکہ اور سعودی عرب نے 4 کھرب اور 60 ارب ڈالر کے معاہدے پر دستخط کردیئے

کلبھوشن کو پاکستانی قانون کے مطابق انجام تک پہنچائیں گے: چوہدری نثار

ٹرمپ کی بیو ی اور بیٹی کیلئے سکارف پہننا ضروری نہیں: سعودی وزیر خارجہ

مسلم رہنماؤں کو اسلام پر لکچر دینے کے لیے ٹرمپ سعودی عرب پہنچ گئے

ایران کے صدارتی انتخاب: ڈاکٹر حسن روحانی ایک بار پھر کامیاب

لرزہ خیز انکشافات: دہشت گرد گروہوں کی پاکستانی خواتین کی ذہن سازی

 جمہوری نظام والے، کافر ہیں: وہابی مفتی کا نیا شوشہ

عالمی عدالت انصاف  کے بعد سلامتی کونسل سے رجوع:  کیا پاکستان کو کلبھوشن کو رہا کرنا پڑے گا؟

حزب اللہ رہنما پر امریکا، سعودی عرب کی مشترکہ پابندی

ٹرمپ: سعودیہ، دودھ دینے والی گائے ہے، جب اس کا دودھ ختم ہوجائے اس کا گلہ کاٹ دینگے

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی مقبولیت کم ترین سطح پر آگئی

کلبھوشن کیس پر عالمی عدالت جانے کا فیصلہ غلط ہے، یہ ہمارا داخلی معاملہ ہے: مشرف

ستم پزیری گناہ کبیرہ ہے

کلبھوشن کیس کی تیاری نامکمل تھی، وقت نہ ملا، حکومت کا اعتراف

مسٹر ٹرمپ! تاریخ لیڈروں کے عبرتناک انجام سے بھری پڑی ہے

وکی لیکس کے بانی جولین اسانج کیخلاف ریپ کی تحقیقات ختم

بحرینی علماء کا آیت اللہ شیخ عیسی قاسم کی مکمل حمایت کا اعلان

انتہا پسندی کا خاتمہ اور فوج کا کردار

اگر بھارت پاکستان کا ایجنٹ پکڑتا تو وہ عالمی عدالت کی پرواہ بھی نہیں کرتا: عمران خان

ایف آئی اے نے سوشل میڈیا پر پاک فوج پر تنقید کرنے والوں کا سراغ لگالیا

کلبھوشن اپنے انجام کو پہنچے گا، قومی سلامتی پر کوئی سمجھوتہ ممکن نہیں: خواجہ آصف

کلبھوشن کی سزا کا معاملہ: پاکستان عالمی عدالت کے فیصلے کا پابند نہیں

کلبھوشن کے معاملے پر عالمی عدالت کا فیصلہ پاکستان کیلئے بڑا دھچکا ہے: خورشید شاہ

شکیل آفریدی کی رہائی کےلیے امریکہ کا پاکستان پر بڑھتا دباؤ

سعودی کرشمہ سازی: اسلام مخالف ٹرمپ اسلام کا درس دے گا

کلبھوشن فیصلہ: عالمی عدالت انصاف اور امریکی دباؤ

نئی امریکی پابندیاں: ایران کا میزائل پروگرام جاری رکھنے کا اعلان

اسرائیل اور سعودیہ کے مشترکہ تعاون کا معاہدہ

علامہ سید مشتاق حسین ہمدانی کی ملّی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا: علامہ ساجد نقوی

نیٹو داعش کے خلاف کارروائی میں شریک نہیں ہوگا: اسٹولٹنبرگ

ایران کے صدارتی انتخاب: صدر حسن روحانی بمقابلہ ابراہیم رئیسی

عالمی عدالت میں پاکستان کی ناکامی

پروفیسر کو کافر کیوں کہا جارہا ہے ؟

حتمی فیصلے تک کلبھوشن کو پھانسی نہ دی جائے: عالمی عدالت انصاف

آسٹریا میں عوامی مقامات پر نقاب لگانے پر پابندی عائد

ٹرمپ نے ایران پر پابندیاں نہ لگانے کے فیصلے کی توثیق کردی

مشعال خان کی روح بے چین رہے گی!

نوجوانوں کو داعش کے نظریات سے بچانا اولین ترجیح ہے: ترجمان پاک فوج

داعش کے راز فاش ہونے پر صہیونی حکومت کیوں چراغ پا ہورہی ہے؟

ڈان لیکس II: حکومت کی برہمی اور سی پیک پر حکومت جھوٹ کی قلعی

احسان اللہ احسان کی معافی کا معاملہ ،ریاست کہاں پر کھڑی ہے ؟

سعودی عرب فضائی حملہ، بچوں سمیت متعدد بے گناہ یمنی شہری ہلاک

اسلامی اتحادی افواج کا معاملہ نازک ہے، پاکستان کو اس اتحاد کا حصہ نہیں بننا چاہیے، پرویز مشرف

سعودی عرب کا امریکی صدر ٹرمپ کے ہاتھ اسلام کو فروخت کرنے کا بھیانک اور ناکام منصوبہ

پی پی رہنما فردوس عاشق اعوان کا تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان

کیا ٹرمپ جال میں پھنس رہے ہیں ؟

2017-03-05 11:47:24

پاکستان سے منی لانڈرنگ

jامریکی حکومت کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان کا صرف ایک گروپ ہر سال اربوں ڈالر منی لانڈرنگ کے ذریعے ملک سے باہر بھجواتا ہے۔ یہ دولت اسمگلنگ ، کرپشن اور دیگر غیر قانونی دھندوں سے حاصل کی جاتی ہے جنہیں ملک کے سیاسی حکمرانوں کی سرپرستی حاصل ہوتی ہے۔ منشیات کی روک تھام کیلئے امریکی ادارے نے دنیا بھر میں ناجائز طریقے سے دولت کو منتقل کرنے اور اس حوالے سے منظم جرائم پیشہ گروہوں اور دہشت گرد گروپوں کے ملوث ہونے کے بارے میں تفصیلی رپورٹ امریکی کانگریس کو پیش کی ہے۔ اس رپورٹ میں ایک پورا باب پاکستان میں کالے دھن کے کاروبار سے متعلق ہے۔ رپورٹ کے مطابق الطاف خانانی گروہ کا سربراہ اگرچہ امریکہ میں گرفتار ہے لیکن یہ گروپ بدستور غیر قانونی دھندے میں مصروف ہے۔
 
یہ سنسنی خیز معلومات پاکستانی اخبارات میں شائع ہونے کے باوجود حکومت یا اس کے اداروں کی طرف سے کسی ردعمل کا اظہار سامنے نہیں آیا ہے۔ حالانکہ اصولی طور پر تو حکومت کو خود ملک میں غیر قانونی کاروبار اور ناجاز دولت کے بارے میں اقدامات کرنے چاہئیں۔ لیکن بیرون ملک سے اس بارے میں معلومات سامنے آنے کے بعد بھی کوئی خاص ردعمل سامنے نہیں آیا۔ حالانکہ اس حکومت کے وزیر خزانہ یہ دعوے کرتے نہیں تھکتے کہ وہ ملک میں ٹیکس نیٹ کو بڑھا کر حکومت کی آمدنی میں اضافہ کرنا چاہتے ہیں۔ وزیراعظم بھی گاہے بگاہے خود انحصاری کے حوالے سے باتیں کرتے ہیں لیکن ملک کے رہنما یہ بتانے سے قاصر ہیں کہ ملک میں وسیع پیمانے پر کالے دھن کا کاروبار ہونے اور کثیر رقوم بیرون ملک روانہ کرنے کی صورت میں کس طرح ملک کی معیشت خود کفالت کی طرف بڑھ سکتی ہے۔
 
کالے دھن اور ناجائز کاروبار کا سب سے بھیانک پہلو یہ ہے کہ اس کے ذریعے ملک میں متحرک دہشت گرد گروہوں کو وسائل حاصل ہوتے ہیں۔ قومی ایکشن پلان کے تحت دہشت گردوں کو ملنے والے مالی وسائل کی روک تھام کیلئے کرپشن کا خاتمہ کرنے کے اقدامات کا عزم کیا گیا تھا۔ سابق آرمی چیف جنرل (ر) راحیل شریف نے متعدد بار یہ قصد کیا تھا کہ وہ کرپشن اور دہشت گردوں کے وسائل کا گٹھ جوڑ توڑ کر دم لیں گے۔ بدقسمتی سے ان کے عہدے کی مدت ختم ہو گئی لیکن کرپشن اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے خلاف قابل ذکر کامیابی دیکھنے میں نہیں آئی۔ یہ بات تسلیم کی جاتی ہے کہ کرپشن اور دہشت گردوں کو ملنے والے وسائل کا گہرا رشتہ ہے۔ اور کرپشن کی سرپرستی ملک کے سیاستدان کرتے ہیں جو کسی نہ کسی طریقہ سے خود کو بچانے میں کامیاب ہو رہے ہیں۔
 
امریکی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان کی معیشت کا وسیع حصہ کالے کاروبار پر مشتمل ہے۔ اس میں اسمگلنگ، دھوکہ دہی، فراڈ ، کرپشن ، جعلی اشیا کی فروخت جیسے ہتھکنڈوں سے حاصل شدہ وسائل کو معیشت کا حصہ بنا لیا گیا ہے۔ ان وسائل کو الطاف خانانی جیسے گروپوں کے ذریعے متحدہ عرب امارات ، امریکہ ، برطانیہ، آسٹریلیا اور دیگر ملکوں کو منتقل کیا جاتا ہے۔ اس مقصد کیلئے جعلی کمپنیوں کا قیام ، رسیدوں اور بلوں کا اجرا یا املاک میں سرمایہ کاری کالے دھن کو چھپانے اور ادھر سے ادھر کرنے کے موثر ترین ذریعے ہیں۔ رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ ملک میں رئیل اسٹیٹ کا کاروبار زیادہ تر نقد رقوم کے تبادلے کی صورت میں ہوتا ہے اور اس بزنس میں دستاویزی کنٹرول کی بھی شدید کمی ہے۔ اس طرح ناجائز دولت کمانے والے اور اس کو منی لانڈرنگ کے ذریعے منتقل کرنے کا کاروبار کرنے والوں کو اس شعبہ سے بہت مدد ملتی ہے۔
 
اس امریکی رپورٹ میں یہ تسلیم کیا گیا ہے کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی عام طور سے بینکوں کے ذریعے
قانونی طریقے سے رقوم پاکستان بھیجتے ہیں۔ انہوں نے 2016 میں 19.7 ارب ڈالر پاکستان بھیجے تھے۔ اس کے علاوہ یہ لوگ ہنڈی اور حوالہ کا استعمال بھی کرتے ہیں لیکن ان ذرائع کو دولت کا ناجائز کاروبار کرنے والے لوگ زیادہ استعمال میں لاتے ہیں۔ الطاف خانانی جیسے گروہ پیچیدہ مالی انتظامات کے تحت ناجائز دولت کو چھپانے اور قانونی کرنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ یہ بات شدید تشویش کا سبب ہونی چاہئے کہ یہ اربوں ڈالر پاکستانی عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈال کر حاصل کئے جاتے ہیں اور پھر انہیں ملکی معیشت سے غائب کر دیا جاتا ہے۔ اس طرح ملک اور اس کے عوام دونوں خسارے میں رہتے ہیں۔ تاہم اس ناجائز کاروبار کو کنٹرول کرنے والے ادارے اپنی نااہلی ، بدنظمی یا سیاسی تائید نہ ہونے کی وجہ سے کوئی اقدام کرنے سے قاصر رہتے ہیں۔
 
ملک میں پاناما لیکس کے ہنگامہ میں عوام میں سیاستدانوں اور حکمرانوں کے وسائل اور غیر قانونی دھندوں کے بارے میں شدید شبہات موجود ہیں۔ اس کے علاوہ غیر قانونی دھندے کے بارے میں شواہد اور معلومات بھی سامنے آ رہی ہیں۔ حکومت کا فرض ہے کہ ان معلومات کا سختی سے نوٹس لے اور ملک کے وسائل سے عوام کو محروم کرنے والے عناصر کا سراغ لگائے۔ یہ کام جس قدر جلد شروع ہوگا، اتنا ہی ملک اور اس کے حکمرانوں کےلئے بہتر ہو گا۔ ورنہ بداعتمادی کی خلیج کسی نئے بحران کو جنم دے سکتی ہے۔
 
تحریر: سید مجاہد علی

 

زمرہ جات:   Horizontal 3 ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

یادوں کے جھروکے

- سحر ٹی وی

ٹیزر- نقطہ نگاہ

- سحر ٹی وی

عرب امریکہ اجلاس

- سحر ٹی وی

Ayena 22 May 2017

- وقت نیوز

WAQT Special 22 May 2017

- وقت نیوز

قند پارسی - 21 مئی

- سحر ٹی وی