حجاب اہم ہے یا لڑکیوں کی تعلیم؟ نواز لیگ کی انتہا پسندانہ سوچ

کرد راہنماءبارزانی کا مستقبل

گلگت بلتستان بنام وفاق پاکستان

بشریت امام زمانہ(ع) کے ظہور کی کیوں پیاسی ہے؟

کردستان میں ریفرنڈم عراق کی خود مختاری کے لیے خطرہ ہے: مشرق وسطیٰ کے ماہر

امریکہ دہشتگردوں کی پشت پناہی کررہا ہے: ترکی

پاکستان نجی سرمایہ کاری کیلئے 5 بہترین ممالک میں شامل

'فاروق ستار کے لندن سے رابطے ہیں، سٹیبلشمنٹ کو دھوکہ دیا جا رہا ہے'

گلگت بلتستان بنام وفاق پاکستان

پاکستان میں چینی سفیر پر حملے کا خدشہ

یمن میں ہیضے میں مبتلا افراد کی تعداد 8 لاکھ

پاکستان اور امریکہ

افغانستان میں حملے: داعش کہاں ختم ہوئی؟!

سیاسی رسہ کشی میں نشانے پر پاکستان ہے

پاکستان میں 5 جی سروس شروع کرنے کی تیاری

سیاسی انتقام کی بدترین مثال،بحرینی جیلوں میں 4000 سے زائد سیاسی قیدی

زید حامد، دہشتگردوں کا سہولت کار

شریف خاندان میں بڑھتے ہوئے اختلافات

'شہباز شریف، چودھری نثار اور خواجہ سعد رفیق بھی ساتھ چھوڑ دیں گے'

معیشت کی تباہ حالی کے ذمہ دار کرپٹ حکمران ہیں، کرپشن ملک کیخلاف معاشی دہشتگردی ہے: علامہ راجہ ناصرعباس

مغرب پر اعتماد سب سے بڑی غلطی تھی: پوتن

احسان فراموش زید حامد کی شرانگیزی

بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے سربراہ نے ایران کے خلاف امریکی صدر کا الزام مسترد کردیا

کابل کی مسجد امام زمان میں خودکش حملہ، درجنوں شیعہ نمازی شہید

نوازشریف اوران کے خاندان کو فوری گرفتار کیا جائے: آصف زرداری

یمن کے انسانی حالات کے بارے میں کچھ حقائق

سعودیہ نے امریکہ کی حکمت عملی کی حمایت کرکے روس کی ثالثی ٹھوکرا دی

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

کیا روس نے مشرق وسطیٰ میں امریکہ کی جگہ لے لی ہے ؟

فلسطینی گروہوں کی مفاہمت پر ایک نظر

پاک افغان سرحدی بحران، پاراچنار پر مرتب ہونے والے خطرناک نتائج

ڈونلڈ ٹرمپ کی ذہنی بیماری اور دنیا کو درپیش خطرات

سادہ سا مطالبہ ہے کہ لاپتہ افراد کو رہا کرو: ایم ڈبلیو ایم

ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ دنیا اور ایران کی فتح ہے: موگرینی

قندھار میں طالبان کے کار بم دھماکے میں ہلاکتوں کی تعداد 58 تک پنہچ گئی

خطبات امام حسین اور مقصد قیام

افغانستان میں دہشت گردوں کے محفوظ مراکز ہیں: نفیس ذکریا

پاکستان میں انصاف کا خون ہورہا ہے پھر بھی تمام مقدمات کا سامنا کروں گا: نوازشریف

سید الشہداء (ع) کی مصیبت کی عظمت کا فلسفہ

سعودی عرب داعش کا سب سے بڑا حامی ہے: تلسی گیبارڈ

امریکہ کے ملے جلے اشارے، پاکستان کو ہوشیار رہنے کی ضرورت

پاکستان میں سال کا خونریز ترین ڈرون حملہ

حماس اور الفتح کے مابین صلح میں مصر کا کردار

عراق کی تقسیم کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے؟

آن لائن چیزیں بیچنے کے 6 طریقے

داعش، عصر حاضر کے خوارج ہیں

یورپی یونین واضح کرے کہ ترکی کو اتحاد میں شامل کرنا ہے یا نہیں: اردوغان

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

خواتین پر جنسی حملے، دنیا کے بدترین شہروں میں نئی دہلی سر فہرست

امریکہ قابل اعتماد نہیں ہے

جوان، عاشورا کے عرفانی پہلو کے پیاسے ہیں

مسلم لیگ (ن) کا سیاسی امتحان – محمد عامر حسینی

عراق میں ریفرنڈم کا مسئلہ ماضی کا حصہ بن چکا ہے: العبادی

علامہ عباس کمیلی کی علامہ احمد اقبال سے پولیس اسٹیشن میں ملاقات، جیل بھرو تحریک کی حمایت کا اعلان

برطانیہ میں بدترین دہشتگردی کا خطرہ ہے: سربراہ خفیہ ایجنسی

سعودیہ، اور یمن جنگ میں شکست کا اعتراف

کیا سعودیہ اپنی خطے کی پالیسیوں میں تبدیلی لانا چاہتا ہے؟

حلقہ این اے فور میں ضمنی الیکشن

سول ملٹری تصادم: قومی مفاد کا رکھوالا کون

انسان دوستی، انسان دشمنی

شام کا شہر رقہ داعش کے قبضے سے آزاد

ٹرمپ کی باتیں اس کی شکست اور بے بسی کی علامت ہیں: جنرل سلامی

یمن میں متحدہ عرب امارات کے 2 پائلٹ ہلاک

افغانستان: پولیس ٹریننگ سینٹر پر حملہ،32 ہلاک 200 زخمی

عراق: مخمور سے بھی پیشمرگہ کی پسپائی

ایٹمی جنگ کسی بھی وقت چھڑ سکتی ہے

آئندہ انتخابات جیتنے کے بعد ملک کے تمام ادارے ٹھیک کریں گے: عمران خان

نیوز ون چینل کے مالک کے داعش سے مراسم، خطرناک انکشاف

انڈیا میں سبھی مذاہب کے لیے یکساں قانون کے نفاذ کا راستہ ہموار

مشرق وسطیٰ کو «سی آئی اے» کے حوالے کرنا، ٹرمپ کی اسٹرٹیجک غلطی

حضرت زینب (س) کس ملک میں دفن ہیں؟

2017-03-18 11:58:20

حجاب اہم ہے یا لڑکیوں کی تعلیم؟ نواز لیگ کی انتہا پسندانہ سوچ

 

 

Hijab

پنجاب کے وزیرہائر ایجوکیشن نے تجویز پیش کی ہے کہ حجاب اوڑھنے والی طالبات کو پانچ نمبر اضافی دیے جائیں گے؟ جس پر اس کے حق اور مخالفت میں میں ایک نئی بحث شروع ہوگئی ہے۔

 

سوشل میڈیا میں سینئر صحافی حسین نقی نے کمنٹ کرتے ہوئے دو سوال اٹھائے

 

حجاب اہم ہے یا لڑکیوں کی تعلیم؟

 

حجاب اہم ہے یا صوبے میں صحت کی سہولتوں کی فراہمی؟

 

ایک مولانا نے لکھا کہ

 

حافظ قرآن کے دس نمبر ہوں یا حجاب کے پانچ ۔۔۔۔۔ یہ درست اقدام نہیں کہلایا جا سکتا۔

 

 

 

دستور پاکستان میں ریاست جہاں اسلامی اقدار کو فروغ دینے کی پابند ہے وہیں اس کے لیے یہ بھی لازم ہے کہ کسی کی حق تلفی نہ ہو۔منصب کا تعلق اہلیت سے ہے تقوے سے نہیں۔ ہمیں ایسا ڈاکٹر انجینئر وکیل جج وغیرہ چاہئیں جو اپنے شعبے میں مہارت رکھتے ہوں۔

 

ہم ایک قابل ڈاکٹر کے پاس علاج کے لیے جاتے ہیں بھلے وہ حافظ قرآن ہو یا نہ ہو اور حجاب لے یا نہ لے۔ اسلام آباد میں اپنے۔ بچوں کے علاج کے لیے میری ہی نہیں اکثریت کی اولین ترجیح ڈاکٹر جے کرشن ہوتے ہیں۔ جے کرشن واقعی ایک مسیحا ہیں۔ لوگ سفارشیں تلاش کرتے پھرتے ہیں کہ جے سے وقت مل جائے۔ سوال ہے کہ۔ کیوں؟ اور جواب ہے اس کی دیانت اور قابلیت۔ سوچیے اگر کوئی بچی قابلیت کی بنیاد پر میرٹ پر پورا نہیں اترتی تو کیا اسے اس وجہ سے ڈاکٹر بنا کر لوگوں کی زندگی سے کھیلنے کا موقع دیا جاءے کہ وہ حجاب کرتی تھی اور حافظ قرآن تھی؟

 

حجاب کیجیے اچھی چیز ہے اور قرآن بھی حفظ کیجیے کہ سعادت کی بات ہے لیکن نمبروں کے لالچ میں نہیں۔ لالچ سے بے نیاز ہو کر۔ ریاست کو سمجھنا ہو گا کہ مذہبی اقدار کے فروغ کے لیے تربیت کا میدان موجود ہے ادھر کا رخ کرے۔ ایسے اقدامات کا کوئی فائدہ نہیں۔ نہ دنیا میں نہ دین میں۔۔پانچ نمبروں کی خاطر حجاب لینے والی بہنیں بیٹیاں صرف قوم کی اجتماعی منافقت اور مفاد پرست رویے میں فروغ کا باعث بنیں گی۔ ان سے خیر کی توقع عبث ہے۔

 

سوال یہ ہے کہ حکومت کی کیا ترجیحات ہیں؟ مذہب کے نام پر عوام کو بے وقوف بنانا یا انہیں صحت و تعلیم کی سہولیات مہیا کرنا۔افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ شہباز شریف جو کہ ایک لمبے عرصے سے پنجاب کے وزیر اعلیٰ چلے آرہے ہیں اپنے صوبے میں تعلیم اور صحت کی سہولیات مہیا کرنےمیں ناکام رہے ہیں۔ان کی تمام تر توجہ پنجاب کے چند بڑے شہروں میں سڑکیں تعمیر کرنا ہے۔

 

پاکستان خاص کر صوبہ پنجاب میں تعلیم کی صورتحال انتہائی دگرگوں ہے۔ سکولوں کو بند کیا جارہا ہے اور دیہاتوں میں تو ان کی عمارتیں مویشی باندھنے کے کام آرہی ہیں۔بی بی سی نے پنجاب کی ایک طالبہ سے تعلیم حاصل کرنے کے متعلق پوچھا تو وہ کہنے لگی کہ میں نے تو ڈاکٹر بننے کا خواب دیکھنا بھی چھوڑ دیا ہے۔ میرا یہ خواب اس وقت ٹوٹ گیا جب میرا سکول بغیر بتائے بند کر دیا گیا۔ ہم سکول جاتے مگر اساتذہ نہیں آتے، کئی دن ایسا چلتا رہا اور بلآخر سکول بند کر دیا گیا۔ اتنا عرصہ گزرنے کے بعد بھی مجھے نہیں بتایا کہ کیا میں کبھی سکول جا سکوں گی یا نہیں۔ اب تو میری سکول جانے کی عمر بھی نکلتی جا رہی ہے۔‘۔

 

چودہ سالہ غزالہ چوتھی جماعت میں تھیں جب ان کے گاؤں رام نگر میں قائم لڑکیوں کا سرکاری سکول بند کر دیا گیا۔ اس علاقے کی لڑکیوں کے لیے یہ واحد سکول تھا جسے انتظامیہ نے آٹھ برس پہلے بند کر دیا۔ پہلے سے خستہ حال سکول کی عمارت اب ایسے ڈھانچے کی مانند ہے جو کسی وقت بھی مکمل منہدم ہو جائے گی۔ گاؤں کی لگ بھگ تمام لڑکیاں ہی اب سکول کی سہولت سے محروم ہیں۔

 

غزالہ کا شمار ان ڈھائی کروڑ بچوں میں ہوتا ہے جن کے پڑھنے لکھنے کا خواب ادھورا رہ گیا۔ان میں بیشتر کو تو سکول کا منہ کھبی دیکھنا نصیب ہی نہیں ہوا اور بعض کے علاقے میں سکول نہ ہونا یا غربت کی وجہ سے سکول کی فیس کا نہ ہونا ان پڑھ رہنے کی وجہ بن رہی ہے۔

 

پنجاب حکومت کی ترجیح کبھی بھی تعلیم نہیں رہی ۔وزیر ہائر ایجوکیشن کو چاہیے کہ وہ مذہب کے نام پر عوام کو لولی پاپ دینے  کی بجائے انہیں باشعور بنائیں اور پنجاب میں تعلیم کی فراہمی اور اس کے معیاربہتر کرنے  پر توجہ دیں ۔

 

نیا زمانہ

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

صحافی گوری لنکیش کا قتل

- ایکسپریس نیوز

قوم ملک سلطنت

- ایکسپریس نیوز

آگ برسی آسماں سے

- ایکسپریس نیوز

کیا یہی زندگی ہے؟

- ایکسپریس نیوز

خوابوں کی تعبیر

- ایکسپریس نیوز