What should we do? – by Aamir Hussaini

سیکولر بھارت کا خون آلو چہرہ: بھارت میں مسلمانوں سے زیادہ گائے محفوظ

جنرل راحیل شریف کی کمان کس کے خلاف: 39 مسلم ممالک کا مشترکہ دشمن کون؟

موصل جنگ کا خاتمہ یا واشنگٹن کی ایک نئی سازش؟

 شفقنا خصوصی:  اسلامی جمعیت طلبہ کی غنڈہ گردی اور حکومتی خاموشی

سرکاری ٹی وی پر قیدیوں کو مجرم بنا کر پیش کرنا بحرینی آئین کی خلاف ورزی

فلسطینیوں پر اسرائیلی بربر یت کا اعتراف: اقوام متحدہ محض خاموش تماشائی

داعش کی حلب میں شکست پر اسد کے خلاف مغربی میڈیا کا پروپیگنڈا: کیاعراق میں داعش کی شکست پر بھی شیعہ ملیشیاء کے خلاف یہی ڈرامہ دہرایا جائے گا؟

راحیل شریف کی سربراہی: پاکستان کو انتشار کی طرف لے جانے کی سعودی کوشش

ان دلدلوں کو صاف کرو جو خالد مسعود جیسے دہشت گرد پالتی ہیں – عامر حسینی

مدارس سے نکلتا الحاد، الامان

پاک امریکہ تعلقات میں دشواریاں موجود ہیں

پاک فوج کا نیا کردار

لندن ہلاکتوں پر واویلا، شام اور عراق ہلاکتوں پر خاموشی: مسلمانوں کا خون ارزاں کیوں؟

ایران سے روابط، امریکہ کے لیے آج بھی دشمنی کا معیار ہے

پاکستانی حزب اختلاف کی راحیل شریف کے سعودی فوجی اتحاد میں شمولیت کی مخالفت

روہنگیا مسلمانوں کے خلاف آپریشن کابرما کے فوجی سربراہ کا دفاع

گستاخانہ مواد کیس؛ فیس بک سے 85 فیصد مواد ختم کر دیا گیا ہے، سیکرٹری داخلہ

دیواریں مسائل حل نہیں کرتیں

  سعودیہ کی دہشت گردوں کو فنڈنگ: برطانیہ کی آنکھیں کب کھلیں گی؟

امارات اور اسرائیل مشترکہ فوجی مشقیں: شرم تم کو مگر نہیں آتی

 وزیر داخلہ کی پہیلیاں : کون لوگ مذہب کے نام پر افراتفری پھیلانا چاہتے ہیں؟

 سعودی باندی: کیا عرب لیگ کا واحد مقصد ایران کی مخالفت ہے؟

جنوبی سوڈان کا مسلح سیاسی بحران، جنسی جرائم بلند ترین سطح پر

شام اور عراق میں شکست کے بعد داعش کا مستقبل کیا ہوگا؟

اسلام آباد مذہبی مدارس کا گھر: انتہا پسندی کے خلاف جنگ کیا محض لفاظی ہے ؟

کیا اسلامی ممالک سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی اشاعت کو روک سکتے ہیں؟

مردم شماری کے دوران تخریب کاری کی بڑی کوشش ناکام

  پاکستانی آئین کی دھجیاں: کیا حکومت لال مسجد سے خائف ہے؟

بلی تھیلے سے باہر: شام میں تکفیری دہشتگردوں اورصیہونی حکومت کے درمیان تعلقات کھل کر سامنے آگئے

پاکستان نے ہاں کر دی: اسلامی اتحادی افواج کی کمان راحیل شریف سنبھالیں گے

پورا سچ بتائیں یا قوم پر رحم کریں

ایران کے ایٹمی معاہدے پر دوبارہ مذاکرات ناممکن ہیں: یورپی یونین

پاک فوج کا نیا اور غیر واضح کردار

افغان طالبان کی پاکستان آمد، داعش کے خلاف حکمت عملی؟

نواز شریف کی جلاوطنی کی پس پردہ حقیقت فاش

شیعہ افراد کو غیر مسلم شمار کرنے پر افسران معطل

روس پر طالبان کو اسلحہ فراہمی کا الزام: امریکہ کی اپنی ناکامیوں کو چھپانے کی کوشش

شفقنا خصوصی: کیا پیپلز پارٹی غدار ہے؟

جماعت الدعوہ کی لاہور ریلی: دہشت گردی کے خلاف جنگ کا مذاق

ابراہیم شریف کے خلاف کاروائی بحرینی سرگرم کارکنوں کو خاموش کرانے حکومتی مہم کا حصہ ،ایمنسٹی

'حسین حقانی کو ویزا جاری کرنے کا اختیار یوسف گیلانی نے دیا'

پورا سچ بتائیں یا قوم پر رحم کریں

ایک حقیقی المیہ:  کیا پاکستان میں انتہا پسندوں کو سیاست میں حصہ لینے سے روکا جا سکتا ہے؟

شفقنا خصوصی: برطانیہ اپنے ہی پالے سانپوں شکار

سعودیہ کے 5 ٹھکانوں پر یمن کی کامیاب کارروائی؛ 40 فوجی ہلاک اور زخمی

شیعوں‌کو حقیر قرار دینے کی سازش: کے پی کے حکومت کے پس پردہ عزائم کیا ہیں؟

ایٹمی معاہدے کے باوجود بھی اسرائیل کیلئے ایران اہم ترین خطرہ ،موساد سربراہ

فسادیوں کا قصہ

۲۳ مارچ ۔۔۔ ہماری کسرِ نفسی اور ہماراپاکستان ~ نذر حافی

یوم تجدید عہد کے تقاضے

  شفقنا خصوصی: چین اقوام متحدہ کو جوتے کی نوک پر کیوں رکھتا ہے؟

 ہندو انتہا پسندی کی انتہا : بھارت پاکستان پر حملے کا آغاز کرسکتا ہے

اسرائیل روئے زمین کا خبیث ترین قابض

مقدس ہستیوں کی توہین: کیا سوشل میڈیا کو بند کردینا ہی مسئلے کا حل ہے؟

ملک بھر میں یوم پاکستان آج ملی جوش و جذبے سے منایا جائے گا

لندن میں دہشتگردی کے واقعے میں حملہ آور سمیت 4 افراد ہلاک، 20 زخمی

برطانوی پارلیمنٹ کے باہر فائرنگ سے 12 افراد زخمی

یمنی کاروائیوں کا اگلا مرحلہ جنگ کا نقشہ تبدیل کردے گا: یمنی مقبول افواج

لحاف اور مونگ پھلی سے باہر کی دنیا

اصطلاحات کا کھیل اور معذرت کی لوریاں ~ نذر حافی

بیجنگ کے جنوبی ایشیائی ممالک کے تعلقات پر بھارت مداخلت سے بازرہے: چین کی تنبیہ

لبنان کے خلاف سعودیہ کی بھیانک سازش

فوجی عدالتوں سے سیاسی قوتیں خائف کیوں؟

شفقنا خاص : اسلامی جمعیت طلبا نے پاکستان کے تعلیمی اداروں کی کیسے یرغمال بنایا ہوا ہے؟

پس پردہ کہانی: برطانیہ الطاف حسین کے خلاف ایکشن لینے سے گریزاں کیوں؟

The art of hand clapping makes comeback in Egypt

11 ستمبر کے واقعات میں ہلاک ہونےوالوں کے اہل خانہ کی سعودی عرب کے خلاف قانونی کارروائی

یمن کے مظلوم عوام کے قتل عام کےلئے فرانس کی جانب سے سعودی عرب کو ہتھیاروں کی فروخت

امریکا نے 7 اور برطانیہ نے 6 مسلم ممالک کے مسافروں پر نئی پابندی لگا دی

امریکا کے ساتھ جنگ کی صلاحیت رکھتے ہیں: جنوبی کوریا

2017-03-19 00:22:59

What should we do? – by Aamir Hussaini

17265089_10212653825288918_8951025932217569580_nPresident of Ahle Sunnat Waljamat Aurangzaib farooqi was released on 15 March,2017 on order of Anti Terrorist Court Rawalpindi from Adiyala Jail. He had requested ATC Ralwapindi to accept his post arrest plea bail on June 24,2015 in a case of delivering hate speech during a Friday sermon in a Wah Cantt. This request of post bail plea was accepted according to Judge of ATC Rawalpindi due to weak evidences against accused Aurangzaib farooqi.

Aurangzaib Farooqi is head of a banned sectarian organization #ASWJ cover name of #SSP which is also banned and terrorist organization declared by Pakistani Government. His name is included in Fourth Schedule List so he can not make speech in public. According to law a person in Fourth Schedule list can not go out of his city without permission of local administration and this is unlawful for such person to make speeches and lead processions and rallies.

But in case of Aurangzaib farooqi , Muhammad Ahmad Ludhiyanvi or other leadership of banned ASWJ (mostly names of its leadership from top to bottom are in Fourth Schedule list) we see no law implementing on them.

On March 15,2017 Aurangzaib farooqi released from Adiyala Jail Rawalpindi and on 17 March,2017 he came in Central Deobandi Mosque of Havelian of Abbottabad district of KPK where he delivered Friday sermon and offered Friday prayer. During his speech he again told the people present in mosque that he would contest for National Assembly from NA 18.

Head of a banned organization, a name included in fourth schedule is visiting many cities all over the country,making speeches,running pre-election campaign but we see that neither federal government nor any provincial government is serious in implementing law and any local administration is not ready to take action against Aurangzaib farooqi on violation of law and breaking ban on his organization.

What examples are being set by our state when we see that every violent, Takfiri, extremist, sectarian, hatemonger, banned religious cleric (Majority are from Takfiri Deobandi faction of Deobandi school of thought ) is free to spread hatred messages, instigating his followers to wage violence and terror against other sect and religions. He always gets clean chit or bail from court due to insufficient evidences. In most cases he freely led a rally or public meeting under banner of banned organization, get prominent coverage in mainstream media and law never comes in action against such hatred clerics. Aurangzaib faroqi is not only one example we see Mullah Abdulaziz, Muhammad Ahmad Ludhiyanvi, Mufi Naeem, Khadim Hussain Rizvi, Irfan Mashahdi, Qari Rubnawaz Hanafi , Masroor Jhangvi ( now he is Parliamentary leader of JUI-f ), Taj Hanafi and dozens of other hatemonger Mullah roaming free and delivering hate speeches in Public.

We can find such hate speeches on social media, in adieu and video format in markets, published literature is also easily available, working offices of banned organizations all over the country, even running seminaries and schools by these banned outfits but our interior ministries including federal and provincials, local administrations and persecution departments could not find solid evidences against them so they are roaming free.

National Action Plan which was devised for Takfiris and Jihadis now is using just to suppress Sindhi,Baloch,Pashtuns, Saraikis,Urdu speaking, Gilgiti-Balti, Kashmiri political and social activists. Even There is an un-written article included in NAP which is false balancing actions. If you arrest four Takfiri Deobandis then you pick up four Shia,Sunni Barelvi also to create a balance. Aurangzaib farooqi and other many Takfiri Deobandi clerics were released by our courts in cases of violating Amplifier act but hundreds of moderate deobandis,Ahlehadith, Sunni Barelvi and Shia clerics paid heavi fines and in some cases imprisonment in same cases registered against them. You can not hold cultural events, you can not commemorate Urs,Mourning cermonies of Ahle-i-bait and Sahaba ,you can not celebrate spring arrival but Takfiri Mullahs are allowed to do what they want, this is National action plan in Pakistan.

Peaceful young men and women are asking me what should be done in such conditions because neither administrations from top to bottom are ready to stop extremism, Takfirism, Jihadism , hatemongering culture from society and nor we are seeing courts able to block such practices so we have only one way that is non-violent, peaceful but strong efforts to build a great social movement against extremism in Pakistan.

We need to start building of such networks of human rights defenders in every twin and village which reject all types of hate mongering and spreading of violence and that exert powerful mass pressure on state to take real step to curb all such menace.

 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

دعائے ماہ رجب

- سحر ٹی وی

Fifa World Cup 2017.

- وقت نیوز