کیا مسلم ممالک غلطی پر ہیں؟

زید حامد، دہشتگردوں کا سہولت کار

شریف خاندان میں بڑھتے ہوئے اختلافات

'شہباز شریف، چودھری نثار اور خواجہ سعد رفیق بھی ساتھ چھوڑ دیں گے'

معیشت کی تباہ حالی کے ذمہ دار کرپٹ حکمران ہیں، کرپشن ملک کیخلاف معاشی دہشتگردی ہے: علامہ راجہ ناصرعباس

مغرب پر اعتماد سب سے بڑی غلطی تھی: پوتن

احسان فراموش زید حامد کی شرانگیزی

بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے سربراہ نے ایران کے خلاف امریکی صدر کا الزام مسترد کردیا

کابل کی مسجد امام زمان میں خودکش حملہ، درجنوں شیعہ نمازی شہید

نوازشریف اوران کے خاندان کو فوری گرفتار کیا جائے: آصف زرداری

یمن کے انسانی حالات کے بارے میں کچھ حقائق

سعودیہ نے امریکہ کی حکمت عملی کی حمایت کرکے روس کی ثالثی ٹھوکرا دی

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

کیا روس نے مشرق وسطیٰ میں امریکہ کی جگہ لے لی ہے ؟

فلسطینی گروہوں کی مفاہمت پر ایک نظر

پاک افغان سرحدی بحران، پاراچنار پر مرتب ہونے والے خطرناک نتائج

ڈونلڈ ٹرمپ کی ذہنی بیماری اور دنیا کو درپیش خطرات

سادہ سا مطالبہ ہے کہ لاپتہ افراد کو رہا کرو: ایم ڈبلیو ایم

ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ دنیا اور ایران کی فتح ہے: موگرینی

قندھار میں طالبان کے کار بم دھماکے میں ہلاکتوں کی تعداد 58 تک پنہچ گئی

خطبات امام حسین اور مقصد قیام

افغانستان میں دہشت گردوں کے محفوظ مراکز ہیں: نفیس ذکریا

پاکستان میں انصاف کا خون ہورہا ہے پھر بھی تمام مقدمات کا سامنا کروں گا: نوازشریف

سید الشہداء (ع) کی مصیبت کی عظمت کا فلسفہ

سعودی عرب داعش کا سب سے بڑا حامی ہے: تلسی گیبارڈ

امریکہ کے ملے جلے اشارے، پاکستان کو ہوشیار رہنے کی ضرورت

پاکستان میں سال کا خونریز ترین ڈرون حملہ

حماس اور الفتح کے مابین صلح میں مصر کا کردار

عراق کی تقسیم کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے؟

آن لائن چیزیں بیچنے کے 6 طریقے

داعش، عصر حاضر کے خوارج ہیں

یورپی یونین واضح کرے کہ ترکی کو اتحاد میں شامل کرنا ہے یا نہیں: اردوغان

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

خواتین پر جنسی حملے، دنیا کے بدترین شہروں میں نئی دہلی سر فہرست

امریکہ قابل اعتماد نہیں ہے

جوان، عاشورا کے عرفانی پہلو کے پیاسے ہیں

مسلم لیگ (ن) کا سیاسی امتحان – محمد عامر حسینی

عراق میں ریفرنڈم کا مسئلہ ماضی کا حصہ بن چکا ہے: العبادی

علامہ عباس کمیلی کی علامہ احمد اقبال سے پولیس اسٹیشن میں ملاقات، جیل بھرو تحریک کی حمایت کا اعلان

برطانیہ میں بدترین دہشتگردی کا خطرہ ہے: سربراہ خفیہ ایجنسی

سعودیہ، اور یمن جنگ میں شکست کا اعتراف

کیا سعودیہ اپنی خطے کی پالیسیوں میں تبدیلی لانا چاہتا ہے؟

حلقہ این اے فور میں ضمنی الیکشن

سول ملٹری تصادم: قومی مفاد کا رکھوالا کون

انسان دوستی، انسان دشمنی

شام کا شہر رقہ داعش کے قبضے سے آزاد

ٹرمپ کی باتیں اس کی شکست اور بے بسی کی علامت ہیں: جنرل سلامی

یمن میں متحدہ عرب امارات کے 2 پائلٹ ہلاک

افغانستان: پولیس ٹریننگ سینٹر پر حملہ،32 ہلاک 200 زخمی

عراق: مخمور سے بھی پیشمرگہ کی پسپائی

ایٹمی جنگ کسی بھی وقت چھڑ سکتی ہے

آئندہ انتخابات جیتنے کے بعد ملک کے تمام ادارے ٹھیک کریں گے: عمران خان

نیوز ون چینل کے مالک کے داعش سے مراسم، خطرناک انکشاف

انڈیا میں سبھی مذاہب کے لیے یکساں قانون کے نفاذ کا راستہ ہموار

مشرق وسطیٰ کو «سی آئی اے» کے حوالے کرنا، ٹرمپ کی اسٹرٹیجک غلطی

حضرت زینب (س) کس ملک میں دفن ہیں؟

ایران جوہری معاہدہ، امریکہ اپنے وعدوں پر عمل کرے: یورپی یونین کا مطالبہ

امام سجاد(ع) کا طرز زندگی انسان سازی کیلئے بہترین نمونہ ہے

پاک-ایران گوادر اجلاس؛ دہشتگردوں کی نقل و حرکت کے خلاف موثر کارروائی کا فیصلہ

فوج کے نئے مستعد وکیل

امام زین العابدین علیہ السلام کے یوم شہادت پر عالم اسلام سوگوار

علامہ ناصر عباس جعفری کا کرم ایجنسی دھماکےاور پاک فوج کے جوانوں کی شہادت پر اظہار افسوس

’’باوردی سیاستدانوں‘‘ کے ہوتے جمہوریت محفوظ نہیں

نواز شریف کا کیپٹن صفدر کی احمدی مخالف تقریر سے لاتعلقی کا اظہار

عمران خان کا 26 اکتوبر کو الیکشن کمیشن میں رضاکارانہ پیش ہونے کا فیصلہ

ایران کی دفاعی حکمت عملی میں ایٹمی ہتھیاروں کی کوئی جگہ نہیں

سعودی کارندوں کی آپس میں جنوبی یمن میں جنگ

پانچ مغویان کی بازیابی پاک امریکہ تعلقات کشیدگی کے خاتمے میں مثبت پیشرفت

دس سال جدائی کے بعد فلسطینی گروہ متحد

کے پی کے۔۔۔پی ٹی آئی ناکام ہوئی یا جمہوریت

یمن میں ہیضہ کی بیماری میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 2156 ہو گئی

2017-06-11 12:27:38

کیا مسلم ممالک غلطی پر ہیں؟

l_167864_033044_updatesوزیراعظم کے مشیر برائے امور خارجہ سرتاج عزیز نے سینٹ میں بیان جاری کیا کہ جنرل راحیل شریف اسلامی عسکری اتحاد کے سربراہ ہیں تاہم اسلامی عسکری اتحاد کے دائرہ کار کا ابھی تعین نہیں کیا گیا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ پاکستانی افواج سعودی عرب سے باہر نہیں جائیں گی اور یہ تاثر ٹھیک نہیں کہ اسلامی عسکری اتحاد ایران پر حملہ کرے گا۔

لیکن اس کے برعکس امریکا عرب اسلامی کانفرنس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور سعودی عرب کے شاہ سلمان کچھ اور ہی کہتے ہیں۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ ایران کو تنہا کیا جائے گا، تہران دہشت گردی اور فرقہ واریت کو ہوا دے رہا ہے۔ سعودی عرب کے شاہ سلمان نے کہا کہ ایران دہشت گردی کا مرکز ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور سعودی شاہ سلمان کے بیانات کی روشنی میں سرتاج عزیز کا بیان محضکہ خیز لگتا ہے۔ امریکہ عرب اسلامی کانفرنس میں دو ہی تقریریں اہمیت کی حامل تھیں اور وہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور سعودی عرب کے شاہ سلمان کی تقریرں تھیں۔ باقی 53 ملک تو صرف تقاریر سننے آئے تھے، انہی میں ایک ہمارے وزیراعظم نواز شریف موجود تھے جن کی تقریر لکھی کی لکھی ہی رہ گئی کیونکہ ان کو بولنے کا موقع بھی نہیں دیا گیا۔

امریکی صدر اور شاہ سلمان کی تقاریر کا مرکزی نقطہ ایران رہا۔ ان کے بیانات نشاندہی کررہے ہیں کہ امریکا اسلامی عسکری اتحاد سے صرف سعودی عرب کو ہی نہیں بلکہ 54 اسلامی ملکوں کو ایران سے لڑوانا ہے۔

سرتاج عزیز کا کہنا ہے کہ پاکستان خطے میں متوازن پالیسی اختیار کئے ہوئے ہیں لیکن دوسری جان پاکستان کا پڑوسی ملک اس اسلامی عسکری اتحاد کو اپنے لیے خطرہ سمجھ رہا ہے اور جب اس عسکری اتحاد کا سربراہ پاکستانی جرنیل ہو تو علاقے میں توازن کس طرح برقرار رہ سکتا ہے؟

مسلم ممالک سمیت پوری دنیا کو اس وقت سب سے زیادہ خطرہ داعش اور القاعدہ سے ہے لیکن امریکا عرب کانفرنس میں اس پر سرسری بات کی گئی ہے ۔

میرے خیال میں اس اتحاد میں مسلم امہ کو فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم اور کشمیریوں پر بھارتی مظالم کے خلاف بات کرنی چاہیے تھی لیکن اس کانفرنس میں یہ بات ایجنڈے میں ہی شامل نہیں تھی۔

اگر ہم ماضی کو دیکھیں تو ہم یہ اندازہ کر سکتے ہیں کہ آگے کیا ہونے جا رہا ہے۔ ماضی میں القاعدہ بنائی گئی اور افغانستان کو تباہ کرکے وہاں بھارتی اثر و رسوخ کو مضبوط کیا گیا اور اب وہاں سے مسلسل واحد مسلم ایٹمی پاور پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی کوششیں جاری ہیں۔

دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے ہزاروں فوجی اور شہری شہید ہوئے، اربوں ڈالرز کا نقصان ہوا اور معاشی طور پر بھی ملک بری طرح متاثر ہوا۔ اسی طرح کویت عراق جنگ کروائی گئی اور بعدازاں بغیر کسی تصدیق اور ثبوتوں کے وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کا الزام لگا کرعراق پر حملہ کرکے وہاں تباہی پھیلائی گئی۔ اب قبول بھی کیا جا چکا ہے اور امریکا کی جانب سے معافی بھی مانگی جا چکی ہے عراق کے پاس ایسے کوئی ہتھیار نہیں ملے۔

کرنل قذافی امریکا مخالف تھے، انہیں مار کر لیبیا کو بھی تباہ کردیا گیا۔ اب داعش سامنے آگئی ہے اور شام بھی تباہ ہو چکا ہے۔

تمام اسلامی ممالک بلخصوص پاکستان کو ماضی سے سبق سیکھنا چاہیے اور اس کا حصہ نہیں بننا چاہیے۔ ترکی کو بھی ایران عراق جنگ اور پاکستان کے افغانستان جنگ کا حصہ بننے سے سبق سیکھ کر اپنی پالیسیوں پر نظرثانی کرنی چاہیے۔

اگر ایسا نہیں کیا گیا تو ہر مسلم ملک کو فرقہ واریت جیسے فتنے کا سامنا بھی کرنا پڑے گا۔

اب سوشل میڈیا پر کہا جا رہا ہے کہ جنرل راحیل شریف مذکورہ عسکری اتحاد کی قیادت چھوڑنے کا سوچ رہے ہیں۔ مجھے نہیں معلوم کہ اس میں کتنی صداقت ہے لیکن ایک بات میں وثوق سے کہہ سکتا ہوں کہ جنرل راحیل شریف ایک پرفیشنل سپاہی اور بڑے سپہ سالارہیں، وہ حالات و واقعات پر گہری نظر رکھتے ہیں اور بخوبی جانتے ہیں کہ درست کیا اور دہشت گردی سے کس طرح نمٹنا ہے۔

مگر بحیثیت واحد ایٹمی طاقت ہمیں اسلامی ممالک کو کمزور اور تباہ کرنے کی سازشوں کو شامل ہونے کے بجائے مسلم دنیا کو متحد کرکے انہیں مضبوط کرنے کی جانب جانب بڑھنا چاہیے۔

سینئر صحافی رئیس انصاری، جیو نیوز کے لاہور میں بیورو چیف ہیں۔ وہ سیاست اور سماجی مسائل پر گہری نگاہ رکھتے ہیں اور انہیں ان موضوعات پر لکھنا پسند ہے۔

زمرہ جات:   Horizontal 3 ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

قانون یاانصاف کی حکومت؟

- ایکسپریس نیوز