پاکستان کے ہندوستان کو ہرانے کا کتنا امکان موجود ہے؟

زید حامد، دہشتگردوں کا سہولت کار

شریف خاندان میں بڑھتے ہوئے اختلافات

'شہباز شریف، چودھری نثار اور خواجہ سعد رفیق بھی ساتھ چھوڑ دیں گے'

معیشت کی تباہ حالی کے ذمہ دار کرپٹ حکمران ہیں، کرپشن ملک کیخلاف معاشی دہشتگردی ہے: علامہ راجہ ناصرعباس

مغرب پر اعتماد سب سے بڑی غلطی تھی: پوتن

احسان فراموش زید حامد کی شرانگیزی

بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے سربراہ نے ایران کے خلاف امریکی صدر کا الزام مسترد کردیا

کابل کی مسجد امام زمان میں خودکش حملہ، درجنوں شیعہ نمازی شہید

نوازشریف اوران کے خاندان کو فوری گرفتار کیا جائے: آصف زرداری

یمن کے انسانی حالات کے بارے میں کچھ حقائق

سعودیہ نے امریکہ کی حکمت عملی کی حمایت کرکے روس کی ثالثی ٹھوکرا دی

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

کیا روس نے مشرق وسطیٰ میں امریکہ کی جگہ لے لی ہے ؟

فلسطینی گروہوں کی مفاہمت پر ایک نظر

پاک افغان سرحدی بحران، پاراچنار پر مرتب ہونے والے خطرناک نتائج

ڈونلڈ ٹرمپ کی ذہنی بیماری اور دنیا کو درپیش خطرات

سادہ سا مطالبہ ہے کہ لاپتہ افراد کو رہا کرو: ایم ڈبلیو ایم

ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ دنیا اور ایران کی فتح ہے: موگرینی

قندھار میں طالبان کے کار بم دھماکے میں ہلاکتوں کی تعداد 58 تک پنہچ گئی

خطبات امام حسین اور مقصد قیام

افغانستان میں دہشت گردوں کے محفوظ مراکز ہیں: نفیس ذکریا

پاکستان میں انصاف کا خون ہورہا ہے پھر بھی تمام مقدمات کا سامنا کروں گا: نوازشریف

سید الشہداء (ع) کی مصیبت کی عظمت کا فلسفہ

سعودی عرب داعش کا سب سے بڑا حامی ہے: تلسی گیبارڈ

امریکہ کے ملے جلے اشارے، پاکستان کو ہوشیار رہنے کی ضرورت

پاکستان میں سال کا خونریز ترین ڈرون حملہ

حماس اور الفتح کے مابین صلح میں مصر کا کردار

عراق کی تقسیم کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے؟

آن لائن چیزیں بیچنے کے 6 طریقے

داعش، عصر حاضر کے خوارج ہیں

یورپی یونین واضح کرے کہ ترکی کو اتحاد میں شامل کرنا ہے یا نہیں: اردوغان

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

خواتین پر جنسی حملے، دنیا کے بدترین شہروں میں نئی دہلی سر فہرست

امریکہ قابل اعتماد نہیں ہے

جوان، عاشورا کے عرفانی پہلو کے پیاسے ہیں

مسلم لیگ (ن) کا سیاسی امتحان – محمد عامر حسینی

عراق میں ریفرنڈم کا مسئلہ ماضی کا حصہ بن چکا ہے: العبادی

علامہ عباس کمیلی کی علامہ احمد اقبال سے پولیس اسٹیشن میں ملاقات، جیل بھرو تحریک کی حمایت کا اعلان

برطانیہ میں بدترین دہشتگردی کا خطرہ ہے: سربراہ خفیہ ایجنسی

سعودیہ، اور یمن جنگ میں شکست کا اعتراف

کیا سعودیہ اپنی خطے کی پالیسیوں میں تبدیلی لانا چاہتا ہے؟

حلقہ این اے فور میں ضمنی الیکشن

سول ملٹری تصادم: قومی مفاد کا رکھوالا کون

انسان دوستی، انسان دشمنی

شام کا شہر رقہ داعش کے قبضے سے آزاد

ٹرمپ کی باتیں اس کی شکست اور بے بسی کی علامت ہیں: جنرل سلامی

یمن میں متحدہ عرب امارات کے 2 پائلٹ ہلاک

افغانستان: پولیس ٹریننگ سینٹر پر حملہ،32 ہلاک 200 زخمی

عراق: مخمور سے بھی پیشمرگہ کی پسپائی

ایٹمی جنگ کسی بھی وقت چھڑ سکتی ہے

آئندہ انتخابات جیتنے کے بعد ملک کے تمام ادارے ٹھیک کریں گے: عمران خان

نیوز ون چینل کے مالک کے داعش سے مراسم، خطرناک انکشاف

انڈیا میں سبھی مذاہب کے لیے یکساں قانون کے نفاذ کا راستہ ہموار

مشرق وسطیٰ کو «سی آئی اے» کے حوالے کرنا، ٹرمپ کی اسٹرٹیجک غلطی

حضرت زینب (س) کس ملک میں دفن ہیں؟

ایران جوہری معاہدہ، امریکہ اپنے وعدوں پر عمل کرے: یورپی یونین کا مطالبہ

امام سجاد(ع) کا طرز زندگی انسان سازی کیلئے بہترین نمونہ ہے

پاک-ایران گوادر اجلاس؛ دہشتگردوں کی نقل و حرکت کے خلاف موثر کارروائی کا فیصلہ

فوج کے نئے مستعد وکیل

امام زین العابدین علیہ السلام کے یوم شہادت پر عالم اسلام سوگوار

علامہ ناصر عباس جعفری کا کرم ایجنسی دھماکےاور پاک فوج کے جوانوں کی شہادت پر اظہار افسوس

’’باوردی سیاستدانوں‘‘ کے ہوتے جمہوریت محفوظ نہیں

نواز شریف کا کیپٹن صفدر کی احمدی مخالف تقریر سے لاتعلقی کا اظہار

عمران خان کا 26 اکتوبر کو الیکشن کمیشن میں رضاکارانہ پیش ہونے کا فیصلہ

ایران کی دفاعی حکمت عملی میں ایٹمی ہتھیاروں کی کوئی جگہ نہیں

سعودی کارندوں کی آپس میں جنوبی یمن میں جنگ

پانچ مغویان کی بازیابی پاک امریکہ تعلقات کشیدگی کے خاتمے میں مثبت پیشرفت

دس سال جدائی کے بعد فلسطینی گروہ متحد

کے پی کے۔۔۔پی ٹی آئی ناکام ہوئی یا جمہوریت

یمن میں ہیضہ کی بیماری میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 2156 ہو گئی

2017-06-18 05:09:55

پاکستان کے ہندوستان کو ہرانے کا کتنا امکان موجود ہے؟

India vs

کرکٹ کی تاریخ کے سب سے بڑے میچز میں سے ایک کے لیے لندن نیلے اور ہرے رنگوں میں رنگ جائے گا۔ یہ پہلی بار ہوگا کہ پاکستان اور ہندوستان 50 اوورز کی آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی فائنل میں آپس میں ٹکرائیں گے۔

 

جنوبی ایشیاء کی دو سب سے بڑی ٹیموں کے لیے ورلڈ کپ کے بعد یہ سب سے بڑا مقابلہ ہے۔ پوری دنیائے کرکٹ سانسیں روکے اس میچ کا انتظار کر رہی ہے۔

صرف کچھ ہفتے قبل اگر کوئی اشارتاً بھی یہ کہتا کہ پاکستان آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی کے فائنل میں پہنچ جائے گا تو لوگ اس پر ہنس دیتے۔ کیوں کہ آخرکار سرفراز کی سربراہی میں یہ ٹیم ٹورنامنٹ میں بالکل غیر متوقع طور پر داخل ہوئی تھی۔ آئی سی سی کی ون ڈے رینکنگ میں موجود ٹاپ آٹھ ٹیمیں یہ ٹورنامنٹ کھیلتی ہیں، اور پاکستان آٹھویں نمبر پر تھا۔

مگر گرین شرٹس نے فائنل میں سب سے پہلے جگہ بنا کر سب کو حیران کر دیا۔

صرف دو اتوار قبل ہندوستان نے پاکستان کو 124 رنز سے شکست دی تھی۔ اس اتوار بھی ویرات کوہلی کے لڑکوں کو اپنے مخالفین پر ان کے کمزور مڈل بیٹنگ آرڈر کی وجہ سے برتری حاصل ہے۔

پاکستان کا مڈل آرڈر (نمبر تین سے نمبر سات تک) پورے ٹورنامنٹ میں صرف 300 رنز بنا پایا ہے، یعنی فی وکٹ 30 رنز۔ دوسری جانب ہندوستانی مڈل آرڈر نے 90.6 رنز فی وکٹ کی شرح سے تقریباً 500 رنز بنائے ہیں۔

اوپنرز اور ٹیل اینڈرز کے درمیان پانچ بلے بازوں میں سے پاکستان کے پاس چار دائیں ہاتھ کے بیٹسمین ہیں، جبکہ صرف ایک، عماد وسیم ہیں جو بائیں ہاتھ سے کھیلتے ہیں، اور وہ نمبر سات پر آئیں گے۔ ہندوستان اسی کمزوری کو نشانہ بنائے گا۔

ائیں ہاتھ کے باؤلر رویندرا جدیجا ون ڈے میچز میں دائیں بازو کے بیٹسمینوں کے خلاف 29 کی اوسط رکھتے ہیں جبکہ بائیں ہاتھ والوں کے خلاف 60 کی۔ مگر پاکستان کے خلاف میچ، جس میں انہوں نے اظہر علی اور محمد حفیظ کو پویلین واپس بھیجا، کے بعد جدیجا نے اگلے تین میچز میں 140 رنز دے کر صرف دو وکٹیں حاصل کیں۔

پاکستان بھرپور اور مستحکم شروعات کے لیے اپنے اوپنرز پر بہت زیادہ منحصر ہوگا۔ ٹاپ آرڈر میں 27 سالہ فخر زمان کی شمولیت کے بعد پاکستان کو اوپننگ شراکت داری میں زیادہ رنز بنانے کا موقع ملا ہے۔

جنوبی افریقا کے خلاف پاکستان کی پہلی وکٹ نے 40 رنز بنائے۔ سری لنکا کے خلاف اگلے میچ میں اظہر اور زمان نے مل کر 74 رنز بنائے۔ میزبان انگلینڈ کے خلاف انہوں نے مئی 2015 کے بعد پہلی بار پاکستان کی اوپننگ وکٹ پارٹرنرشپ کو 100 رنز سے اوپر پہنچایا۔

بھوانیشور کمار اور جسپریت بھمراہ، دونوں ہی بہترین لینتھ کی باؤلنگ کروا رہے ہیں۔ جنوبی افریقا کے خلاف جو میچ ہندوستان کو لازماً جیتنا تھا، اس میں انہوں نے پہلے پاور پلے کے دوران ہی ہاشم آملہ اور کوئنٹن ڈی کوک کو پویلین کی راہ دکھاتے ہوئے ون ڈے کی سب سے زبردست ٹیم کی بیٹنگ لائن تہس نہس کر دی۔

ہندوستان پاکستان کی اوپننگ جوڑی کو بھی ایسے ہی ہدف بنائے گا، خاص طور پر زمان کو، جو سیمی فائنل میں انگلینڈ کے مارک ووڈ کے خلاف کافی بے چین نظر آئے۔

ہندوستان سے ہارنے کے بعد پاکستان اپنے روایتی طریقے، یعنی حریفوں کے خلاف فاسٹ باؤلرز لانے پر مجبور ہوا۔ جنوبی افریقہ کے خلاف میچ میں اسپنرز نے ایجبیسٹن کی ریگ مال جیسی وکٹ پر گیند کو (قانونی طور پر) ریورس سوئنگ کے لیے تیار کیا۔ حسن علی نے اپنے تباہ کن ریورس سوئنگ کے ساتھ درمیانی اوورز میں کام دکھا دیا۔

ہمیشہ ایسا ہی ہوتا آیا ہے۔

23 سالہ حسن علی اس وقت ٹورنامنٹ کے سب سے زیادہ وکٹ لینے والے ہیں جنہوں نے چار میچز میں 10 وکٹیں لی ہیں۔ اس کے بعد بائیں ہاتھ کے فاسٹ باؤلر جنید خان ہیں، جو سات وکٹوں کے ساتھ نمبر چار پر ہیں۔

محمد عامر تین میچز میں صرف دو وکٹیں لینے میں کامیاب ہوئے ہیں۔ کمر کی تکلیف کی وجہ سے وہ آخری میچ کھیلنے میں کامیاب نہیں ہوئے، مگر ٹورنامنٹ میں ان کی بہترین باؤلنگ کی وجہ سے وہ پھر بھی فائنل میں کھیلنے کے لیے پہلا انتخاب ہوں گے۔ فائنل سے قبل ان کا فٹنس ٹیسٹ لیا جائے گا، اور اگر انہیں فٹ قرار دے دیا گیا، تو ان کے سامنے ایک بہت مشکل ٹاسک موجود ہوگا۔

ہندوستانی اوپنرز شیکھر دھاون اور روہت شرما چار میچوں میں بالترتیب 317 اور 304 رنز بنا کر ٹورنامنٹ میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے کھلاڑی ہیں۔ فائنل کی جانب اپنے سفر میں اس جوڑی نے دو دفعہ 100 رنز سے زیادہ کی شراکت قائم کی، جس میں سے پہلی پاکستان کے خلاف تھی۔

ہندوستانی کپتان کوہلی، جو نمبر تین پر کھیلتے ہیں، نے ٹورنامنٹ میں تین دفعہ نصف سنچری سے زیادہ رنز بنائے ہیں، جبکہ ان کا سب سے بہترین اسکور آخری میچ میں تھا جس میں وہ 96 پر ناٹ آؤٹ رہے۔

واپس اٹھ کھڑے ہونے والے پاکستان کے ساتھ یہ پیش گوئی کرنا مشکل ہے کہ میچ کا نتیجہ کیا ہوگا۔ یہ کبھی بھی حتمی طور پر نہیں کہا جا سکتا کہ آخری دن کیسا پاکستان میچ میں نظر آئے گا۔ کیا یہ وہ پاکستان ہوگا جس نے ٹھیک دو ہفتے قبل ہندوستان کے ہاتھوں بدترین شکست اٹھائی تھی، یا وہ پاکستان جس نے اس شکست کے صرف دو دن بعد دنیا کی بہترین ون ڈے ٹیم کو دھول چٹا دی تھی۔

مگر وہ اتوار، جب پاکستان کو ہندوستان کے ہاتھوں شکست ہوئی تھی، اس کے برعکس اس دفعہ پاکستان میں خود اعتمادی ضرور موجود ہوگی۔ اب وہ پاکستان کھیلے گا جو خود کو اٹھا چکا ہے۔ وہ ٹیم، جس میں سینیئرز کے ناکام ہونے پر جونیئرز نے آگے بڑھ کر سہارا دیا۔

مایوس کن کارکردگی دکھانے والی پاکستانی ٹیم اس اتوار کو چیمپیئن شپ پر نگاہیں گاڑے میدان میں اترے گی۔

بلاشبہ یہ وہ مقابلہ ہے جو اتنا ہی سنسنی خیز ہوگا جتنی اس سے امیدیں ہیں۔

زمرہ جات:   کھیل ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

قانون یاانصاف کی حکومت؟

- ایکسپریس نیوز