پارا چنار کا مسئلہ فرقہ واریت نہیں، زمینوں پر قبضہ ہے، علامہ عابد الحسینی

ایسا برا ملک دنیا میں نہیں، کبھی امریکا نہیں جاؤں گا: فلپائنی صدر

یورپی ممالک پر ڈیڑھ سو سے زائد خودکش حملوں کا خطرہ

شریف خاندان تاثر دے رہا ہے کہ میرا اور ان کا کیس ایک ہے: عمران خان

’’میاں صاحب جانے دو شہباز شریف کو آنے دو‘‘ کے بینرلگ

کیا چوہدری نثار ن لیگ کو چھوڑ دیں گے؟

نیتن یاہوکا بیت المقدس کو یہودی بنانے کا منصوبہ

 جو قطر کے ساتھ ہوا وہ باقی ملکوں کے ساتھ بھی ہوسکتا ہے؛ سعودی ولی عہد کی دھمکی

(ن) لیگ کی چوہدری نثار کو منانے کی کوششیں تیز

وزیراعظم کےخلاف عدالتی کارروائی سے جمہوریت کو کیا خطرہ ہے!

مشرق وسطیٰ میں مصالحت کے امکانات

شام اور حزب اللہ کی لبنانی سرحد کے قریب دہشتگرد گروہ النصرہ کے ٹھکانوں پر کارروائی

پاناما کیس کا اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا؟

سعودی عرب ام الفساد اور دہشت گردی کی جڑ ہے

پاکستان بھر میں جاری شیعہ نسل کشی کے خلاف مظاہرے

قطر نے گھٹنے ٹیک دیے؟ سعودی عرب سے مذاکرات کا اعلان

نواز شریف رات تک مستعفی ہونے کا فیصلہ کرلیں: خورشید شاہ

نوازشریف اس بار قدم نہیں بڑھائیں گے

امریکی طوطا چشمی: کیا خارجہ پالیسی پر تجدید نظر کا وقت نہیں آ گیا؟

کیا پاکستان کے لئے ایک امام خمینی کی ضرورت ہے؟

مستعفی ہونے سے انکار: کیا وزیر اعظم کو اپنے ہی گھر پر اعتماد نہیں؟

پنجاب حکومت دہشتگردوں کیخلاف بننے والی سی ٹی ڈی کو اپنے شیطانی عزائم کیلئے استعمال کر رہی ہے: سید ناصرعباس شیرازی

علاقہ بنگش کے شیعہ علمائے کرام کیخلاف ایف آئی آرز کا اندراج قانون کیساتھ مذاق ہے: علامہ عبدالحسین

ٹرمپ سے اختلافات کے باعث وائٹ ہاؤس کے ترجمان عہدے سے مستعفی

وزیر داخلہ چوہدری نثار کے استعفیٰ دینے کی خبر بے بنیاد ہے: وزارت داخلہ

پاکستان میں اب بھی وہابی دہشت گرد فنڈز جمع کررہے ہیں

سعودی عرب میں سیاسی مخالفین کو ٹھکانے لگانے کا اعتراف

دنیا میں 94 فیصد دہشت گردانہ واقعات میں سعودی عرب ملوث

سعودی عرب کی ایرانی سفارتکاروں کے خلاف کویت کے اقدام کی حمایت

گردے کی پتھری سے بچنے کے آسان طریقے

پاناما معاملہ؛ (ن) لیگ کا سپریم کورٹ کا ہر فیصلہ تسلیم کرنے کا فیصلہ

ایران واحد وہ ملک ہے جو امریکہ کے مد مقابل ہے: جنرل اسلم بیگ

داعش میں شمولیت کا اانجام: کارکنوں کو اپنے ہی خاندانوں کو قتل کرنے کا حکم

امریکی و روسی صدور کے درمیان دو خفیہ ملاقاتیں، کب، کہاں ،کیسے اور کیوں ہوئیں؟

ایرانی سفیر ملک بدر: کیا کویت سعودی دباؤ کے سامنے جھک گیاہے؟

کیا پاکستان میں شیعہ ہزارہ کے لیے کہیں‌جائے اماں ہے؟

مسجدالاقصی پر اسرائیل کا کوئی حق نہیں، حماس

امریکہ کا پاکستان پر طالبان اور حقانی نیٹ ورک کے خلاف کارروائی نہ کرنے کا الزام

تحریک انصاف نے پی پی کی ایک اوروکٹ گرا دی

اسلامی دنیا کو اسرائیلی غاصب کے اقدامات پر ردعمل ظاہر کرنا چاہئے

عالم اسلام میں حضرت امام جعفر صادق (ع) کی شہادت کی مناسبت سے عزاداری کا سلسلہ جاری

بی جے پی رہنما رام ناتھ کووند بھارت کے نئے صدر منتخب

ہمارا احتساب نہیں استحصال ہورہا ہے میرے صبر کا امتحان نہ لیا جائے: وزیراعظم نواز شریف

بارڈر تناذع: کیا بھارت چین کے ساتھ جنگ مول لینے کی غلطی کر سکتا ہے؟

نواز شریف کے حلیف سے حریف تک:  پیپلز پارٹی نے نواز شریف کو ہری جھنڈی کیوں دکھائی؟

آپریشن خیبر فور کی مخالفت: کیا افغانستان دہشت گردوں کی حمایت کر رہا ہے؟

پاکستانی سیاست میں اخلاقیات کا ہتھیار

آیۃ اللہ سیستانی کے فتوے نے عراق کے عیسائیوں کو نجات دلائی: جورج صلیبا

داعش نے عالم اسلام کو جتنا نقصان پہنچایا ہے اسلامی تاریخ میں اس کا سراغ نہیں ملتا

مشرق وسطی میں بحران کی آگ بھڑکانے کے پیچھے سعودی عرب کا مقصد ہے کیا ؟

امام صادق علیہ السلام کی مختصر سوانح حیات

صادق آل محمد، جعفر صادق(ع) کی شب شہادت

قطری شہزادے کا ایک اور خط سامنے آگیا

لندن فلیٹوں کا مالک کون ہے؟ نئی دستاویز منظر عام پر آگئی

بحرین میں نئے فیملی قوانین فقہ جعفریہ کے تشخص اور فقہی احکامات کے منافی ہیں: علمائے کرام

یمن میں ہیضے سے مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ

امریکہ عہد شکن اور عرب ڈکٹیٹروں کا حامی ملک ہے: حسن روحانی

پاناماکیس میں دفاع کے لئے شریف فیملی نے اہم دستاویزات منگوا لیں

وکلا کا ہیر پھیر کاغذ کی کشتی کو ڈوبنے سے نہیں بچا سکتا: سراج الحق

امریکا نے ایران کی 18 شخصیات اور کمپنیوں پر نئی پابندیاں عائد کر دیں

وائٹ ہاؤس کا ٹرمپ اور پیوٹن میں خفیہ ملاقاتوں کا اعتراف

مستونگ میں دہشت گردوں کی فائرنگ سے 4 شیعہ مسلمان شہید

شریف خاندان کی منی ٹریل کا جواب آج تک نہیں آیا: سپریم کورٹ

بحرینی حکمرانوں کی اسرائیل دوستی ایک بار پھر بے نقاب

سی پیک کے خلاف عالمی سازشیں کہاں سے ہو رہی ہیں ؟

قطر کے وزیر خارجہ کا دورہ: کیا نواز شریف کو کچھ لو کچھ دو کا پیغام بہنچایا گیا ہے؟

کیا پاکستان راحیل شریف کی وطن واپسی کی راہ ہموار کر رہا ہے؟

امریکی صدر کے لئے ریڈ کارپیٹ نہیں پچھائیں گے: میئر لندن

یمن تنازع پر سعودی عرب سے براہ راست تصادم کا خطرہ نہیں، ایران

پنجاب کے وزیر محکمہ مال عطا مانیکا نے استعفیٰ کیوں دیا؟

قطر کے وزیر خارجہ کی وزیر اعظم سے ملاقات، پاکستان اور قطر کے درمیان برادرانہ تعلقات ہیں

2017-07-14 09:19:02

پارا چنار کا مسئلہ فرقہ واریت نہیں، زمینوں پر قبضہ ہے، علامہ عابد الحسینی

 

Parachinar

ملی یکجہتی کونسل صوبہ خیبر پختونخوا کی صوبائی کابینہ کے اراکین نے 11جولائی 2017 بروز منگل پارا چنار کا خصوصی دورہ کیا۔
 

اس وفد میں ملی یکجہتی کونسل کے صوبائی صدر اور جماعت اسلامی کے صوبائی امیر مشتاق احمد خان کے علاوہ صوبائی جنرل سیکرٹری پیر سید نور الحسنین گیلانی، مفتی اظہر محمود(جمعیت علمائے پاکستان)، مولانا مقصود احمد سلفی(متحدہ جمعیت اہل حدیث پاکستان)، مولانا ہدایت اللہ، یاسر فرید اعوان، مجلس وحدت مسلمین کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ محمد اقبال بہشتی، مجلس وحدت مسلمین کے صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید عبدالحسین الحسینی، البصیرہ پاکستان سے علامہ سید مرتضیٰ عابدی اور(راقم سید محمد قاسم)، شیعہ علماء کونسل کے صوبائی صدر مولانا حمید حسین امامی، صوبائی جنرل سیکرٹری، مظفر علی اخونزادہ، اقتدار علی اخونزادہ اور دیگر شامل تھے۔ جب کہ وفد میں جماعت اسلامی کرم ایجنسی کے امیر حکمت خان بھی اپنے ساتھیوں کے ساتھ شامل ہو گئے۔

ملی یکجہتی کونسل کا یہ وفد سب سے پہلے پارا چنار کی مرکزی امام بارگاہ میں پہنچا اور وہاں پر انجمن حسینی اور مرکزی پیش نماز علامہ شیخ فدا حسین مظاہری کے ساتھ پارا چنار میں دہشت گردی کے واقعات پر تعزیت کی۔ مشتاق احمدخان، مفتی اظہر محمود ہزاروی اور علامہ مقصود احمد سلفی نے اظہار یکجہتی پر مبنی اپنے خیالات پیش کیے۔ جب کہ علامہ شیخ فدا حسین مظاہری نے وفد کا شکریہ ادا کیا۔ اس کے بعد وفد نے مجلس علماء اہل بیتؑ کے دفتر کا دورہ کیا اور علماء کے ساتھ بھی اظہار تعزیت کیا۔

اس وفد کے لیے تحریک حسینی پارا چنار کے دفتر میں ایک خصوصی نشست کا انعقاد کیا گیا۔ جہاں پرتحریک حسینی پارا چنار کے صدر مولانا یوسف حسین نے وفد کو خوش آمدید کہا اور پارا چنار کے بنیادی مسائل پر گفتگو کی۔ باہمی گفتگو میں پارا چنار کے مسائل کے حل کے لیے تجاویز پر تبادلۂ خیال ہوا۔

اس کے بعد پارا چنار کے بزرگ عالم دین اورمدرسہ آیت اللہ خامنہ ای کے مسؤل اور تحریک حسینی پارا چنار کے سپریم لیڈر، سابق سینیٹر علامہ عابد حسین الحسینی نے تمام وفد کو خوش آمدید کہا اور پارا چنار آمد پر ان کا تہ دل سے شکریہ ادا کیا۔ بالخصوص وفد میں شامل کرم ایجنسی کے اہل سنت عمائدین کا شکریہ ادا کیا۔

علامہ عابد حسین الحسینی نے کہا کہ پارا چنار کا بنیادی مسئلہ فرقہ واریت نہیں بلکہ اصل مسئلہ مقامی زمینوں پر قبضوں کا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اگر پارا چنار کے شیعوں نے اہل سنت کی ایک انچ زمین پر بھی قبضہ کیا ہوتو وہ اہل سنت کے ساتھ مل کر مسئلہ حل کروا دیں گے لیکن پارا چنار کے شیعوں کی صدہ اور بالش خیل میں ہزاروں جریب زمینوں پر کچھ شر پسند عناصر نے قبضہ کیا ہوا ہے۔ اس لیے اہل سنت عمائدین اس مسئلہ کے حل کروانے کے لیے شیعوں کا ساتھ دیں تو اس خونریزی کا خاتمہ ہو جائے گا۔

اسی طرح شیعہ سرکاری ملازمین جب اہل سنت علاقوں میں سرکاری فرائض کی ادائیگی کے سلسلے میں جاتے ہیں تو کچھ شر پسند عناصر انھیں تنگ کرتے ہیں۔ لہٰذا اس مسئلے میں بھی اہل سنت اکابر کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ جب کہ 3شیعہ علاقوں میں تمام اہل سنت ملازمین امن و سکون سے اپنے فرائض ادا کررہے ہیں۔اسی طرح کچھ شر پسند عناصر (حکومتی اور غیر حکومتی دونوں) نے شیعہ علاقوں کے پہاڑوں اورجنگلات کو ایک سازش کے تحت افغانستان میں شامل کردیا ہے جو پاکستان کی سالمیت کے خلاف ایک سازش ہے۔

علامہ سید عابد حسین الحسینی نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ جلد از جلد فاٹا کو صوبہ خیبر پختونخوا میں ضم کیا جائے تاکہ یہاں پر بھی آئین پاکستان کا مکمل نفاذ ہو سکے۔ انھوں نے مزید کہا کہ جماعت اسلامی کا فاٹا کے انضمام کے بارے میں جو اصولی موقف ہے ہم اس کی مکمل حمایت کرتے ہیں اور ان کے ساتھ ہر قسم کے تعاون کے لیے تیار ہیں۔

ملی یکجہتی کونسل کے صوبائی صدر مشتاق احمد خان نے علامہ عابد حسینی کے تمام مطالبات کی حمایت کی اور کہا کہ وہ بطور امیر جماعت اسلامی بھی ان مسائل کے حل کے لیے آواز اٹھائیں گے اور اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے جب کہ کرم ایجنسی کے ان مسائل کے حل کے لیے وہ سینٹ ، قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلی میں بھی آواز اٹھائیں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

جمہوریت اورحکومت

- ایکسپریس نیوز