میں نے اور پورے پاکستان نے نااہلی کا فیصلہ قبول نہیں کیا: سابق نااہل وزیراعظم

یمن کے انسانی حالات کے بارے میں کچھ حقائق

سعودیہ نے امریکہ کی حکمت عملی کی حمایت کرکے روس کی ثالثی ٹھوکرا دی

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

کیا روس نے مشرق وسطیٰ میں امریکہ کی جگہ لے لی ہے ؟

فلسطینی گروہوں کی مفاہمت پر ایک نظر

پاک افغان سرحدی بحران، پاراچنار پر مرتب ہونے والے خطرناک نتائج

ڈونلڈ ٹرمپ کی ذہنی بیماری اور دنیا کو درپیش خطرات

سادہ سا مطالبہ ہے کہ لاپتہ افراد کو رہا کرو: ایم ڈبلیو ایم

ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ دنیا اور ایران کی فتح ہے: موگرینی

قندھار میں طالبان کے کار بم دھماکے میں ہلاکتوں کی تعداد 58 تک پنہچ گئی

خطبات امام حسین اور مقصد قیام

افغانستان میں دہشت گردوں کے محفوظ مراکز ہیں: نفیس ذکریا

پاکستان میں انصاف کا خون ہورہا ہے پھر بھی تمام مقدمات کا سامنا کروں گا: نوازشریف

سید الشہداء (ع) کی مصیبت کی عظمت کا فلسفہ

سعودی عرب داعش کا سب سے بڑا حامی ہے: تلسی گیبارڈ

امریکہ کے ملے جلے اشارے، پاکستان کو ہوشیار رہنے کی ضرورت

پاکستان میں سال کا خونریز ترین ڈرون حملہ

حماس اور الفتح کے مابین صلح میں مصر کا کردار

عراق کی تقسیم کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے؟

آن لائن چیزیں بیچنے کے 6 طریقے

داعش، عصر حاضر کے خوارج ہیں

یورپی یونین واضح کرے کہ ترکی کو اتحاد میں شامل کرنا ہے یا نہیں: اردوغان

داعش کے ٹوٹنے سے القاعدہ کی طاقت میں اضافہ

خواتین پر جنسی حملے، دنیا کے بدترین شہروں میں نئی دہلی سر فہرست

امریکہ قابل اعتماد نہیں ہے

جوان، عاشورا کے عرفانی پہلو کے پیاسے ہیں

مسلم لیگ (ن) کا سیاسی امتحان – محمد عامر حسینی

عراق میں ریفرنڈم کا مسئلہ ماضی کا حصہ بن چکا ہے: العبادی

علامہ عباس کمیلی کی علامہ احمد اقبال سے پولیس اسٹیشن میں ملاقات، جیل بھرو تحریک کی حمایت کا اعلان

برطانیہ میں بدترین دہشتگردی کا خطرہ ہے: سربراہ خفیہ ایجنسی

سعودیہ، اور یمن جنگ میں شکست کا اعتراف

کیا سعودیہ اپنی خطے کی پالیسیوں میں تبدیلی لانا چاہتا ہے؟

حلقہ این اے فور میں ضمنی الیکشن

سول ملٹری تصادم: قومی مفاد کا رکھوالا کون

انسان دوستی، انسان دشمنی

شام کا شہر رقہ داعش کے قبضے سے آزاد

ٹرمپ کی باتیں اس کی شکست اور بے بسی کی علامت ہیں: جنرل سلامی

یمن میں متحدہ عرب امارات کے 2 پائلٹ ہلاک

افغانستان: پولیس ٹریننگ سینٹر پر حملہ،32 ہلاک 200 زخمی

عراق: مخمور سے بھی پیشمرگہ کی پسپائی

ایٹمی جنگ کسی بھی وقت چھڑ سکتی ہے

آئندہ انتخابات جیتنے کے بعد ملک کے تمام ادارے ٹھیک کریں گے: عمران خان

نیوز ون چینل کے مالک کے داعش سے مراسم، خطرناک انکشاف

انڈیا میں سبھی مذاہب کے لیے یکساں قانون کے نفاذ کا راستہ ہموار

مشرق وسطیٰ کو «سی آئی اے» کے حوالے کرنا، ٹرمپ کی اسٹرٹیجک غلطی

حضرت زینب (س) کس ملک میں دفن ہیں؟

ایران جوہری معاہدہ، امریکہ اپنے وعدوں پر عمل کرے: یورپی یونین کا مطالبہ

امام سجاد(ع) کا طرز زندگی انسان سازی کیلئے بہترین نمونہ ہے

پاک-ایران گوادر اجلاس؛ دہشتگردوں کی نقل و حرکت کے خلاف موثر کارروائی کا فیصلہ

فوج کے نئے مستعد وکیل

امام زین العابدین علیہ السلام کے یوم شہادت پر عالم اسلام سوگوار

علامہ ناصر عباس جعفری کا کرم ایجنسی دھماکےاور پاک فوج کے جوانوں کی شہادت پر اظہار افسوس

’’باوردی سیاستدانوں‘‘ کے ہوتے جمہوریت محفوظ نہیں

نواز شریف کا کیپٹن صفدر کی احمدی مخالف تقریر سے لاتعلقی کا اظہار

عمران خان کا 26 اکتوبر کو الیکشن کمیشن میں رضاکارانہ پیش ہونے کا فیصلہ

ایران کی دفاعی حکمت عملی میں ایٹمی ہتھیاروں کی کوئی جگہ نہیں

سعودی کارندوں کی آپس میں جنوبی یمن میں جنگ

پانچ مغویان کی بازیابی پاک امریکہ تعلقات کشیدگی کے خاتمے میں مثبت پیشرفت

دس سال جدائی کے بعد فلسطینی گروہ متحد

کے پی کے۔۔۔پی ٹی آئی ناکام ہوئی یا جمہوریت

یمن میں ہیضہ کی بیماری میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 2156 ہو گئی

امریکہ کسی بھی معاہدے کی پابندی نہیں کرتا: ڈاکٹر لاریجانی

امام زین العابدین علیہ السلام کی شہادت کے غم میں فضا سوگوار

ترکی نے عراقی کردستان کے ساتھ اقتصادی تعاون ختم کردیا

ٹرمپ کے اقدامات پوری دنیا کے لیے خطرے کا باعث بن سکتے ہیں: ہلیری کلنٹن

مقتدیٰ صدر کا کردستان کے ریفرنڈم کے نتائج کو باطل کرنے کا مطالبہ

خواتین کےخلاف وہابیت کے مظالم کا ماجرا

آئی ایم ایف نے ایران مخالف امریکی مطالبہ مسترد کردیا

سینٹرل افریقہ میں مسلمانوں کا قتل عام

میں نہیں سمجھتا نواز شریف پھر وزیراعظم بن سکیں گے: خورشید شاہ

2017-08-12 21:00:00

میں نے اور پورے پاکستان نے نااہلی کا فیصلہ قبول نہیں کیا: سابق نااہل وزیراعظم

903693-nawazsharifgujranwala-1502537437-276-640x480

 لاہور: سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہناہے کہ چند لوگ ملک کے مالک نہیں ہوسکتے پاکستان کے اصلی مالک 20 کروڑ عوام ہیں جب کہ میں نے اور پورے پاکستان نے نااہلی کا فیصلہ قبول نہیں کیا اور جنہوں نے مجھے نااہل کیا کیا وہ خود اہل ہیں۔ 

لاہور میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے نوازشریف کا کہنا تھا کہ آج جیسا منظر لاہور میں پہلے کبھی نہیں دیکھا جب کہ کیا مجھے نااہل کرنے کی وجہ سمجھ آتی ہے اور جنہوں نے مجھے نااہل کیا کیا وہ خود اہل ہیں،  مجھے بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نااہل کیا گیا اور اگر بیٹے سے تنخواہ نہیں لی تو نہیں لی، آپ کو کیا مسئلہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپ نے اپنے ووٹ کی طاقت سے مجھے وزیراعظم بنایا اور میں نے 2013 میں وعدہ کیا تھا ملک میں اب پنکھا بھی چلے گا اور چولہا بھی جلے گا۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ آج میں جو جذبہ دیکھ رہا ہوں، یہ انقلاب کا پیش خیمہ ہے اور اگر ابھی بھی انقلاب نہ آیا تو کسی کو انصاف نہیں ملے گا اور غریب کے گھر خوشحالی نہیں آئے گی، ہماری قوم دنیا کی بدترین قوم بن جائے گی، کسی کو روزگار نہیں ملے گا لیکن عوام کی قدر کسی کو نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کیا ہماری 70 سال کی تاریخ میں جو تماشہ چلتا ہوا آرہا ہے ، ان کا احتساب ہونا چاہیے یا نہیں اور ملک کے تمام وزیراعظم  کیا غلط تھے جنہیں مدت پوری نہیں کرنے دی گئی، اس بار کیا پاکستان میں بہتری نہیں آرہی تھی اور پاکستان ترقی نہیں کررہا تھا تو پھر یہ کون ہیں جو پاکستان کے ساتھ اتنا ظلم کررہے ہیں۔

نوازشریف نے کہا کہ 1971 میں پاکستان دولخت ہوا تھا، اللہ نہ کرے پاکستان کو پھر کوئی حادثہ پیش آئے اور اگر 4 سال میں یہ تماشے نہیں ہوتے توہم پتا نہیں کیا کرچکے ہوتے، وزیراعظم کو نااہل کرنے کے لیے ایک سال سے مقدمہ چل رہا تھا، مجھے اقتدارکی لالچ نہیں لیکن میں ڈرتا نہیں اور نہ اب میں گھربیٹھوں گا جب کہ اس سسٹم میں وائرس ہے، نہ سماجی انصاف ہے نہ معاشی انصاف ہے، 30،30 سال سے مقدمے لٹکے ہوئے ہیں، ہمیں آئین اورنظام بدلنا ہوگا، ملک کی تقدیر بدلنے کے لیے ہمیں اس سسٹم کوبدلنا ہوگا۔

نوازشریف نے کہا کہ چیرمین سینیٹ نے پارلیمان کو مضبوط کرنے کے حوالے سے جتنی بھی تجاویز دی ہیں، مسلم لیگ (ن) ان کا بھرپور ساتھ دے گی جب کہ وزیراعظم آزاد کشمیر بہت تیزی سے کام کررہے ہیں، مجھے ڈر ہے کہیں ان کو بھی نااہل نہ کردیا جائے کیوں کہ اس ملک میں جو بھی وزیراعظم تیزی سے کام کرتے ہیں ان کو نااہل کردیا جاتا ہے۔ انہوں نے کوئٹہ دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وہاں لوگوں کی اموات پر مجھے افسوس ہوا۔

سابق وزیراعظم نے 14 اگست کو اگلا لائحہ عمل دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کیا آپ انقلاب برپا کرنے کے لیے میرا ساتھ دو گے کیوں کہ جب تک بنیادی نظام ٹھیک نہیں ہوگا، دنیا میں پاکستان کا تماشہ بنتا رہے گا۔

اس سے قبل شاہدرہ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مجھے بتایا جائے شاہدرہ کی عدالت نے کیا فیصلہ سنایا ہے، نوازشریف کی نااہلی کا فیصلہ قبول کیا، مجھے معلوم ہے آپ نے میری نااہلی قبول نہیں کی، میں نے بھی نہیں کی اور پورے پاکستان نے نہیں کی، میرا وعدہ ہے نہ میں چین سے بیٹھوں گا اور نہ آپ بیٹھیں گے جب کہ آپ نے مجھے منتخب کرکے اسلام آباد بھیجا اور انہوں نے مجھے واپس بھیج دیا لیکن ہم سب ملکر پاکستان کو تبدیل کریں گے۔

مرید کے میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے نوازشریف کا کہنا تھا کہ 2013 میں نہ تو چولہا جلتا تھا اور نا ہی کوئی کارخانہ چلتا تھا لیکن میں نے اقتدار سنبھالتے ہی دن رات عوام کی خدمت پر لگا دیئے سڑکیں بن رہی تھیں موٹروے بنائے جارہے تھے، روشنیاں دوبارہ لوٹ رہی تھیں بجلی بلا تسلسل اور سستی فراہم کی جارہی تھی اگر ترقی کی یہی رفتار رہتی تو اگلے دو تین سالوں میں بیروزگاری کا خاتمہ ہوجاتا۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میں نے کوئی کرپشن اور ہیراپھیری نہیں کی، کہتے ہیں ہم نے نوازشریف کو نااہل اس لئے کیا کہ وہ اپنے بیٹے سے تنخواہ نہیں لیتا تھا اگر بیٹے سے تنخواہ لی بھی تو کیا ہوا،  لیکن عوام کے منتخب وزیر کو رسوا اور ذلیل کرکے نکال دیا گیا کیا عوام اس فیصلے کو منظور کرے گی۔

 

زمرہ جات:   پاکستان ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)