مقبوضہ بیت المقدس کو یہودیت کا رنگ دینے میں امارات کے کردار کا پردہ فاش

سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان مکار، دھوکہ باز، حیلہ گر اور فریبکار ہیں: قطری شیخ

امریکا نے دہشت گردی کے بجائے چین اور روس کو خطرہ قرار دے دیا

سلامتی کونسل میں پاکستان اور امریکی مندوبین کے درمیان لفظی جنگ

ایک اورماورائے عدالت قتل

کالعدم سپاہ صحابہ کا سیاسی ونگ پاکستان راہ حق پارٹی بھی اھل سیاسی جماعتوں میں شامل

امریکہ اور دہشتگردی کا دوبارہ احیاء

ایرانی جوان پوری طرح اپنے سیاسی نظام کے حامی ہیں؛ ایشیا ٹائمز

دنیائے اسلام، فلسطین اور یمن کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرے

شام کے لیے نئی سازش کا منصوبہ تیار

پاک فوج کیخلاف لڑنا حرام ہے اگر فوج نہ ہوتی تو ملک تقسیم ہوچکا ہوتا: صوفی محمد

امام زمانہ عج کی حکومت میں مذہبی اقلیتوں کی صورت حال

سعودی عرب نائن الیون کے واقعے کا تاوان ادا کرے، لواحقین کا مطالبہ

امریکہ کو دوسرے ممالک کے بارے میں بات کرنے سے باز رہنا چاہیے: چین

پاکستان میں حقانی نیٹ ورک موجود نہیں

سعودی عرب نے یمن میں انسانی، اسلامی اور اخلاقی قوانین کا سر قلم کردیا

پاکستان کو ہم سے دشمن کی طرح برتاؤ نہیں کرنا چاہیے: اسرائیلی وزیراعظم

آرمی چیف نے 10 دہشت گردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی

بھارت: ’حج سبسڈی کا خاتمہ، سات سو کروڑ لڑکیوں کی تعلیم کے لیے

صہیونی وزیر اعظم کے دورہ ہندوستان کی وجوہات کچھ اور

پاکستانی سرزمین پر امریکی ڈرون حملہ، عوام حکومتی ایکشن کے منتظر

روس، پاکستان کی دفاعی حمایت کے لئے تیار ہے؛ روسی وزیر خارجہ

عام انتخابات اپنے وقت پر ہونگے: وزیراعظم

ناصرشیرازی اور صاحبزادہ حامد رضا کی چوہدری پرویزالہیٰ سے ملاقات، ملکی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال

پارلیمنٹ نمائندہ ادارہ ہے اسے گالی نہیں دی جاسکتی: آصف زرداری

زائرین کے لیے خوشخبری: پاک ایران مسافر ٹرین سروس بحال کرنے کا فیصلہ

شریف خاندان نے اپنے ملازموں کے ذریعے منی لانڈرنگ کرائی، عمران خان

امریکہ کی افغانستان میں موجودگی ایران، روس اور چین کو کنٹرول کرنے کے لئے ہے

ایرانی پارلیمنٹ اسپیکر کی تہران اسلام آباد سیکورٹی تعاون بڑھانے پر تاکید

دورہ بھارت سے نیتن یاہو کے مقاصد اور ماحصل

ایوان صدر میں منعقد پیغام امن کانفرنس میں داعش سے منسلک افراد کی شرکت

امریکہ، مضبوط افغانستان نہیں چاہتا

عربوں نے اسرائیل کے خلاف جنگ میں اپنی شکست خود رقم کی

سیاسی لیڈر کا قتل

مقاصد الگ لیکن نفرت مشترکہ ہے

انتہا پسندی فتوؤں اور بیانات سے ختم نہیں ہوگی!

تہران میں او آئی سی کانفرنس، فلسطین ایجنڈہ سرفہرست

زینب کے قاتل کی گرفتاری کے حوالے سے شہباز شریف کی بے بسی

یورپ کی جانب سے جامع ایٹمی معاہدے کی حمایت کا اعادہ

بن گورین ڈاکٹرین میں ہندوستان کی اہمیت

دہشت گردی کے خلاف متفقہ فتویٰ

شام میں امریکی منصوبہ؛ کُرد، موجودہ حکومت کی جگہ لینگے

شفقنا خصوصی: کیا زینب کے قاتل کی گرفتاری کو سیاسی مقاصد کے لیے چھپایا جا رہا ہے؟

مسئلہ فلسطین، عالم اسلام کا اہم ترین مسئلہ ہے

پاپ کی طرف سے میانمار کے مسلمانوں کی عالمی سطح پر حمایت

امریکا مشترکہ مفادات کی بنیاد پر پاکستان سے نئے تعلقات بنانا چاہتا ہے، ایلیس ویلز

کالعدم تحریک طالبان پاکستان کا بینظیر بھٹو کو قتل کرنے کا دعویٰ

امریکہ، بیت المقدس کے بارے میں اپنے ناپاک منصوبوں ميں کامیاب نہیں ہوگا

پاکستان کے ساتھ تعلقات مزید مستحکم کرنےکےلیے پرعزم ہیں: امریکی جنرل جوزف ڈنفورڈ

اسلامی ممالک کو اختلافات دور کرنے اور باہمی اتحاد پر توجہ مبذول کرنی چاہیے

بھارت ایسے اقدامات سے باز رہے جن سے صورتحال خراب ہو، چین

عمران خان اور آصف زرداری کل ایک ہی اسٹیج سے خطاب کریں گے، طاہرالقادری

اسرائیلی وزیراعظم کا 6 روزہ دورہ بھارت؛ کیا پاکستان اور ایران کے روایتی دشمنوں کیخلاف علاقائی اتحاد ناگزیر نہیں؟

مودی، یاہو اور ٹرمپ کی مثلث

سید علی خامنہ ای، دنیا کے تمام مسلمانوں کے لیڈر ہیں؛ آذربائیجانی عوام

لسانی حمایت کافی نہیں، ایرانی معترضین تک اسلحہ پہنچایا جائے؛ صہیونی ادارہ

خود کش حملے حرام ہیں، پاکستانی علما کا فتوی

پاکستان افغان جنگ میں قربانی کا بکرا نہیں بنے گا ، وزیردفاع

امریکہ کے شمالی کوریا پر حملے کا وقت آن پہنچا ہے؛ فارن پالیسی

یمن پر مسلط کردہ قبیلۂ آل سعود کی جنگ پر ایک طائرانہ نظر

پاکستان اور امریکہ کے روابط میں اندھیر

مقبوضہ کشمیر، برہان وانی کے بعد منان وانی !!!

آج دنیا کی تمام اقوام کی تباہی و بربادی کا ذمہ دار امریکہ ہے، جنوبی پنجاب کو الگ صوبہ بنایا جائے،

پاک و ہند میں امن کی ضرورت ہے ، جنگ کی نہیں

اتحاد اور ایمریٹس ایئر لائن کا پی آئی اے کی خریداری میں دلچسپی کا اظہار

آصف زرداری کا طاہر القادری کی حکومت مخالف تحریک میں شمولیت کا فیصلہ

ستر سال کا بوڑھا پروفیسر قومی سلامتی کے لئے خطرہ تھا؟ عامر حسینی

فلسطینی قسام بریگیڈ کی پہلی مسلحانہ کاروائی ،صہیونی مزہبی پیشوا فائرنگ میں ہلاک

سعودی عوام مہنگائی کی وجہ سے پریشان ہیں؛ ہوفنگٹن پوسٹ

کویت نے لبنان کے شیعہ سفیر کو آخر کار قبول کرلیا

افغان حکومت اور طالبان کے درمیان ترکی میں مذاکرات

2017-09-06 22:12:52

مقبوضہ بیت المقدس کو یہودیت کا رنگ دینے میں امارات کے کردار کا پردہ فاش

jpeg

مقبوضہ فلسطین کی اسلامی تحریک کے نائب سربراہ شیخ کمال الخطیب نے قطری روزنامے “الشرق” کے ساتھ ایک مفصل گفتگو میں اس بات سے پردہ اٹھایا ہے کہ امارات کی کمپنیاں اور وہاں کے لوگ مقبوضہ فلسطین کے لوگوں کی املاک کو خرید کر صہیونی حکومت کو فائدہ پہنچا رہے ہیں ۔

 مقبوضہ فلسطین میں اسلامی تحریک کے نائب سربراہ نے اس چیز کی جکانب اشارہ کرتے ہوئے کہ امارات والے جن املاک کو خرید رہے ہیں ان کا تعلق خاص طور سے مسجد الالقصی کے قریب کی زمینوں سے ہے ۔ ، تاکید کی کہ اس اقدام کے نتیجے میں مقبوضہ بیت المقدس میں فلسطینیوں کے قدم جمیں گے جس کا مقصد مقبوضہ بیت المقدس کو یہودیت کا رنگ دینا ہے ۔

شیخ خطیب نے امارات والوں کی خریداری کے بارے میں وضاحت کی ، سچ تو یہ ہے کہ اس سلسلے میں جو امارات والوں کا واقعی کردار ہے وہ برملا نہیں ہوا ہے اور اس موضوع کا بڑا حصہ مخفی رہ گیا ہے ،لیکن جتنا ہمیں معلوم ہوا ہے وہ یہ ہے کہ امارات نے امریکی یہودیوں کے توسط سے کہ جنہوں نے  اس ملک میں دفتر کھول رکھے ہیں ، مقبوضہ قدس کے رہنے والے فلسطینیوں کے گھر خریدے ہیں ۔

انہوں نے اپنی بات جاری رکھی کہ اس کمپنی کے نمایندے مقبوضہ قدس کا سفر کرنے کے بعد بطور مستقیم فلسطینی واسطوں سے ان املاک کو خریدتے ہیں جو ان املاک کی خریداری کے کام کو آسان بنانے کا کام کرتے ہیں ۔

مقبوضہ فلسطین میں اسلامی تحریک کے نائب سربراہ نے یہ بھی بتایا : ان املاک میں سے کچھ کو ان یہودی ۔ امریکی کمپنیوں کے توسط سے کہ جو امارات کے لوگوں کے درمیان سرگرم عمل ہیں اور پانچویں ستون کا کام کرتے ہیں ، خریدتے ہیں ۔

شیخ خطیب نے مقبوضہ قدس میں اماراتیوں کی دیگر سرگرمیوں کے بارے میں بھی بتایا : گذشتہ برسوں میں امارات والے شہر قدس میں خاص کر ماہ مبارک رمضان میں نمایاں کام کرتے رہے ہیں جن میں ایک کام اس ملک سے وابستہ لوگوں کے ذریعے فلسطینی روزہ داروں کو افطاری دینا تھا ۔ لیکن جب اس امداد کی واقعیت کا پتہ چلا تو فلسطینیوں نے اس طرح کی امداد لینے سے انکار کر دیا اور انہیں ٹھکرا دیا ۔

انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ فلسطین والے اس پیسے سے اپنے پیٹ بھرنے کے بدلے میں کہ جو ان کے گھر بیچنے کے لیے دیا جاتا ہے  اور اس سے ان عرب ملکوں کے لوگوں کے قتل عام میں مدد ہوتی ہے کہ جو عوامی انقلاب برپا کرنا چاہتے ہیں بھوک سے مر جانے کو ترجیح دیتے ہیں، بیان کیا : اب تمام فلسطینیوں کو امارات والوں کے واقعی کردار کا پتہ چل چکا ہے ، اور سبھی جانتے ہیں کہ اس ملک نے کس طرح ایک بار مصر کے لوگوں کے خلاف انقلاب کی حمایت کی تھی ، اور مصر کی موجودہ حکومت کو ۱۲ ارب ڈالر کی امداد دے کر اس ملک کے لوگوں کے قتل عام کے لیے سرمایہ لگایا تھا ۔ جیسا کہ سبھی لوگ ترکی کے کودتا میں اور غزہ کے محاصرے میں ابو ظبی کے کردار ، اور لیبیا اور یمن میں اس کے کردار سے واقف ہیں ۔

فلسطین میں اسلامی تحریک کے نائب سربراہ نے   یہ بیان کرتے ہوئے کہ امارات کی سیاسی چالیں اس حد تک نہیں تھیں  بلکہ انہوں نے قدس کے رہنے والے فلسطینیوں کی املاک کو خرید کر اسرائیل کو فائدہ پہنچایا ، تاکید کی کہ اس سیاست نے امارات کے سلسلے میں ملت فلسطین کے موقف کو  کہ جو زہر آلود خنجر کی مانند ہے جو ملت فلسطین اور امت عربی کی پیٹھ میں گھونپا گیا ہے ، بدل دیا ہے ۔

شیخ خطیب نے یاد دلایا ؛ یہ بتا دیں کہ آج کوئی فلسطینی امارات کا نام سسنا بھی گوارا نہیں کرتا چونکہ وہ اس ملک کو دنیائے عرب میں فتنے اور سازش کا مرکز مانتے ہیں ۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ صہیونی حکومت کے جرائم کے مقابلے میں سکوت اور خاموشی کا دور ختم ہو چکا ہے  اور اب وہ کھل کر اس کی حمایت کر رہے ہیں ، افسوس کا اظہار کیا کہ ان اقدامات کے نتیجے میں ایک دن ہمیں مسجد الاقصی میں آتش سوزی کی سالگرہ منانا پڑے گی کہ جس کے بعد اسلامی ملکوں کی کانفرنس کا اجلاس منعقد ہو گا اور ان اقدامات کی مذمت کی جائے گی ۔

مقبوضہ فلسطین میں اسلامی تحریک کے نائب سربراہ نے اس انٹرویو میں آگے قدس کی حمایت اور قدس میں رہنے والے فلسطینیوں کی حمایت اور کلی طور مسئلہء فلسطین کی حمایت کے سلسلے میں دوحہ کے کردار کی تعریف کی اور قدر دانی کی اور تاکید کی کہ مسئلہء فلسطین اور فلسطینیوں کی حمایت تمام عربی اور اسلامی ملکوں کی ذمہ داری ہے ۔

شیخ خطیب نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ خلیج فارس کے بحران کی ایک وجہ فلسطین کے مسئلے کے سلسلے میں قطر کی حمایت ہے یاد دلایا: سعودیہ کے وزیر خارجہ کے بیان میں یہ موضوع بالکل آشکار تھا ۔وہاں کہ جب اس نے یورپ میں کسی ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ قطر والے جو مسئلہء فلسطین کی حمایت کرتے ہیں وہی کافی ہے ۔

انہوں نے بعض عرب ملکوں کی طرف سے ایسے موقعے پر روابط کو معمول پر لانے کو کہ جب اسرائیل بیت المقدس کو یہودیت کا رنگ دینے کے اپنے منصوبے پر تیزی سے کام شروع کر دیا ہے ، ناپسندیدہ فعل بتایا اور خلیج فارس کے بحران کو صہیونیوں کو مقبوضہ فلسطین اور بیت المقدس میں اپنے ناپاک منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کا موقعہ فراہم کرنے کے مترادف قرار دیا ۔ 

زمرہ جات:   Horizontal 3 ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)