حسن مثنی کون تھے؟ کیا وہ کربلا میں موجود تھے؟

تصاویر: امریکہ میں ہتھیار رکھنے کے خلاف مظاہرہ

جس سے فاطمہ (س) ناراض ہوں اس سے اللہ تعالی ناراض ہوتا ہے

پارلیمنٹ کو عدلیہ کے خلاف استعمال کیا گیا تو سڑکوں پر نکلیں گے، عمران خان

رسول خدا کی بیٹی کی شہادت کا سوگ

سی پیک کے تحفظ کیلئے چین اور بلوچ علیحدگی پسندوں میں خفیہ مذاکرات کا انکشاف

تمام عالم میں جگر گوشہ رسول کا ماتم

مسجد الحرام میں تاش کھیلنے والی خواتین کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل

پاکستانی سکولوں میں چینی زبان لازمی، سینیٹ میں قرارداد منظور

خود کشی کی کوشش جرم نہیں بیماری، سینیٹ میں سزا ختم کرنے کا ترمیمی بل منظور

امریکہ شام میں آگ سے نہ کھیلے : روس

کیا فدک حضرت زہرا (س) کے موقوفات میں سے تھا یا نہیں؟

لعل شہباز قلندر کے مزار پہ بم دھماکے میں تکفیری دیوبندی خطیب لال مسجد کے رشتے دار ملوث ہیں – سندھ پولیس/ رپورٹ بی بی سی اردو

اسرائیل کے ناقابل شکست ہونے کا افسانہ ختم ہو چکا ہے

 فرانسیسی زبان میں حضرت زهرا (س) کے لیے مرثیه‌ خوانی 

سعودی عرب کو شرک اورکفر کے فتوے نہ دینے کا مشورہ

ایرانی طیارے کے حادثے پر پاکستان کی تعزیت

سعودی عرب میں غیر ملکی خاتون سے اجتماعی زیادتی

کوئی ملک پاکستان کو دہشت گردی کی بنا پر واچ لسٹ میں نہیں ڈال سکتا، احسن اقبال

بلوچ ـ مذہبی شدت پسندی – ذوالفقار علی ذوالفی

تصاویر: شام میں ترکی کے حمایت یافتہ افراد کی کردوں کے خلاف جنگ

دنیا پاکستان کا سچ تسلیم کیوں نہیں کرتی؟

سعودی عرب نے عورتوں کو شوہر کی اجازت کے بغیر کار و بار کی اجازت دیدی

اسرائیل، شام میں ایران کی موجودگی کو اپنے لئے خطرہ سمجھتا ہے؛ گوٹرش

اسمارٹ فون سے اب ڈیسک ٹاپ میں تصاویر منتقل کرنا آسان ہو گیا

نیب نے خادم پنجاب روڈ پروگرام اور میٹروبس میں کرپشن کی تحقیقات شروع کردیں

ایران کا مسافر بردار طیارہ گر کر تباہ، 66 مسافر سوار تھے

بھارتی اور داعشی کے خطرات میں پاک فوج کی سعودیہ عرب میں تعیناتی خلاف عقل ہے

عوام سے ووٹ لے کر آنا قانون سے بالاتر نہیں بنادیتا، عمران خان

حضرت فاطمہ زہرا (س) کی شہادت

آصف زرداری کا راؤ انوار سے متعلق اپنے بیان پر اظہارِ افسوس

توہین مذہب کا جھوٹا الزام لگانے پر سخت سزا کی تجویز

عمران کو سزا پاکستان کے عدالتی نظام پر سوالیہ نشان ہے

ڈونلڈ ٹرمپ نے جنرل باجوہ کو مشرف تصور کر کے غلطی کی: برطانوی تھنک ٹینک

فخر سے کہہ سکتے ہیں پاکستانی سرزمین پر دہشتگردوں کا کوئی منظم کیمپ موجود نہیں، پاک آرمی چیف

نائیجیریا میں یکے بعد دیگرے 3 خودکش حملوں میں 22 افراد ہلاک

سعودیہ میں فوجی دستوں کی تعیناتی

ایران اور ہندوستان نے باہمی تعاون کے 15 معاہدوں اور دستاویزات پر دستخط کردیئے

پاکستانی فوجیوں کو سعودی عرب کے زمینی دفاع کو مضبوط کرنے کیلئے بھیجا گیا ہے، خرم دستگیر

17 امریکی سیکیورٹی سروسز کا پاکستانی ایٹمی پروگرام سے اظہارِ خوف

شام سے برطانیہ کے 100 دہشت گردوں کی واپسی کا خدشہ

آرام سے کھانا کھائیے، موٹاپے سے محفوظ رہیے

علامہ سید ساجد علی نقوی کا شہدائے سیہون شریف کی پہلی برسی سے خطاب

زینب کے گھر والوں کا مجرم کو سرِعام پھانسی دینے کا مطالبہ

زینب کے قاتل عمران علی کو 4 بار سزائے موت کا حکم

کرپشن الزامات کے حوالے سے اسرائیلی وزیر اعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ زور پکڑ گیا

پاکستان کی 98 فیصد خواتین کو طبی و تعلیمی سہولیات میسر نہیں

شیعہ حریت لیڈر یوسف ندیم کی ہلاکت قتل ناحق ہے، بار ایسوسی ایشن

پاکستانی سینیٹ کا فوجی دستہ سعودی عرب بھیجنے پر تشویش کا اظہار

اسرائیل میں وزیراعظم نتین یاہو کے خلاف ہزاروں افراد کا مظاہرہ

سعودی علماء کونسل : عرب خواتین کے لئے چادر اوڑھنا ضروری نہیں ہے

صدر روحانی کا حیدر آباد کی تاریخی مسجد میں خطاب

افغانستان میں داعش کا بڑھتا ہوا اثر و رسوخ ایشیا کے امن کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے

آیت اللہ زکزی کی رہائی کا مطالبہ

فاروق ستار کا اپنے سینیٹ امیدواروں کے ناموں سے دستبرداری کا اعلان

بن سلمان کا سعودی عرب؛ حرام سے حلال تک

پاکستان کی دہشت گردی کے معاملات میں کوتاہیوں پر تشویش ہے، امریکہ

اسلام آباد دھرنوں اور احتجاج پر خزانے سے 95 کروڑ روپے خرچ ہوئے، انکشاف

نقیب قتل کیس؛ راؤ انوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم واپس، بینک اکانٹس منجمد

مغربی موصل کو بارودی مواد سے صاف کرنے کے لئے دس سال درکار ہیں؛ اقوام متحدہ

جو شخص یقین کی منزل پر فائز ہوتا ہے وہ گناہ نہیں کرتا ہے

عالمی دباؤ کا مقابلہ داخلی ہم آہنگی سے کیا جائے

تعاون اور اعتماد سازی

عدالت جواب دے یا سزا ۔ فیصلہ چیف جسٹس کو کرنا ہے

میں نہیں مان سکتا کوئی ڈکیت پارٹی صدر بن کر حکومت کرے، چیف جسٹس

انسانی حقوق کے عالمی چیمپئن کے دعویدار مسئلہ کشمیر و فلسطین پر خاموش کیوں ہیں

ایران کی ترکی کو ایک نرم دھمکی

معاشرہ، امربالمعروف ونہی عن المنکرسے زندہ ہوتا ہے

یمن پر سعودی جنگی طیاروں کے حملے جاری

ریڑھ کی ہڈی کا پانی کیا ہےاور یہ کیوں نکالا جاتا ہے؟

زینب قتل کیس کا فیصلہ محفوظ، ہفتے کو سنایا جائے گا

2017-09-24 23:30:53

حسن مثنی کون تھے؟ کیا وہ کربلا میں موجود تھے؟

مرمسلم
حسن بن حسن، امام حسن مجتبی ﴿ع﴾ کے دوسرے فرزند تھے۔ ان کی ماں کا نام خولہ تھا، جو منطور فزاریہ کی بیٹی تھیں۔[1] حسن بن حسن ، المعروف حسن مثنی، ایک گراں قدر باتقوی اور با فضیلیت شخصیت تھے۔ وہ امیرالمومنین ﴿ع﴾ کے صدقات کے مسؤل اور متولی تھے۔ حسن مثنی، عبدالملک بن مروان کی حکومت کے زمانہ میں بھی زندہ تھے اور صدقات کے سلسلہ میں حجاج سے اختلاف کیا۔[2] حسن مثنی، قیام کربلا میں اپنے چچا امام حسین ﴿ع﴾ کے ہمراہ تھے۔ حسن بن حسن ﴿ع﴾ اسراء میں شامل تھے اور زخمی ھوئے تھے۔ اسماء بن خارجہ نے انھیں اسراء سے جدا کرکے ان کی رکھوالی کی۔ حسن مثنی کی ازدواج کے بارے میں لکھا گیا ہے کہ امام حسین ﴿ع﴾ نے اپنی ایک بیٹی کے بارے میں ان سے خواستگاری کی۔ امام ﴿ع﴾ نے ان سے فرمایا:“ میری بیٹیوں میں سے جسے پسند کرتے ھو، اس کو چن لو۔“ لیکن حسن مثنی نے شرم و حیا کی وجہ سے کوئی جواب نہیں دیا۔ امام حسین﴿ع﴾ نے ان کے لئے فاطمہ [3]کو منتخب کیا اور فرمایا:“ میری یہ بیٹی دوسری تمام بیٹیوں کی بہ نسبت میری ماں حضرت زہراء ﴿ع﴾ سے شباہت رکھتی ہے ۔” حسن مثنی ۳۵ سال کی عمر میں رحلت کرگئے۔[4]ان کی رحلت کے بعد، ان کی شریک حیات فاطمہ نے ان کی قبر پر ایک خیمہ نصب کرکے ایک سال تک اس میں بیٹھ کرعبادت کی۔[5]
سید بن طاؤس حسن مثنی اور امام حسن ﴿ع﴾کے بعض دوسرے فرزندان کی فضیلت اور شرافت کے سلسلہ میں لکھتے ہیں:“ یہ وہ افراد ہیں کہ تمام مسلمان ان کے بلند مقام کا اعتراف کرتے ہیں۔”[6]
امام حسن﴿ع﴾ اور امام حسین ﴿ع﴾ کی نسل کے بارے میں امام رضا ﴿ع﴾ سے نقل کی گئی ایک روایت کے ایک حصہ سے معلوم ھوتا ہے کہ حسن مثنی کے کئی فرزند تھے اور امام حسن ﴿ع﴾ کی نسل ان سے اور زید نامی ان کے ایک دوسرے بھائی سے جاری رہی ہے۔ اس روایت میں آیا ہےکہ:“ حسن بن علی ﴿ع﴾ کی نسل ان کے دو بیٹوں زید و حسن سے جاری رہی ہے۔ زید کا حسن نامی ایک بیٹا تھا اور حسن مثنی کے کئی بیٹے تھے جن کے نام عبداللہ، ابراھیم، داؤد، جعفر اور حسن تھے اور حسن مثلث کے نام سے مشہور تھے، امام حسن مجتبی ﴿ع﴾ کی نسل ان ہی سے جاری رہی ہے۔[7]
 

[1][1] ۔ شیخ مفید، محمد بن محمد، الارشاد فی معرفة حجج اللہ علی العباد، ج ۲،ص ۲۰، کنگرہ شیخ مفید، قم، طبع اول، ١۴١۳ق ۔۔
[2]۔ ایضا، ص ۲۳۔ ۲۴۔
[3] ۔ وہ امام حسین ﴿ع﴾ کی ایک بیٹی تھیں ، ان کی والدہ ام اسحاق بنت طلحہ بن عبداللہ تیمیہ تھیں۔ الارشاد فی معرفة حجج اللہ علی العباد، ج ۲، ص ١۳۵۔
[4] ۔ ایضا، ص ۲۵۔
[5] ۔ ایضا، ص ۲٦۔
[6] ۔ سید ابن طاووس ، الطرائف فی معرفة مذاھب الطوائف، ص ۵۲۰، الخیام، قم طبع اول، ١۴١۳ق۔
[7] ۔ ابن بابویہ ، محمد بن علی، الخصال، مھقق، مصحح، غفاری، علی اکبر، ج ۲، ص ۴٦٦، دفتر انتشارات اسلامی، قم، طبع اول، ١۳٦۲ش۔
 
زمرہ جات:   Horizontal 4 ،
ٹیگز:   حسن مثنی ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)