بناتِ زینب اور ابنائے آدم

فتویٰ اور پارلیمینٹ

کل بھوشن کے بعد اب محمد شبیر

سعودیہ فوج میں زبردستی بھرتی پر مجبور ہوگیا ہے؛ یمنی نیوز

پاکستان کی غیر واضح خارجہ پالیسی سے معاملات الجھے رہیں گے

پارلیمنٹ پر لعنت

نائیجیریا میں آیت اللہ زکزکی کی حمایت میں مظاہرہ

ایٹمی معاہدے میں کوئی خامی نہیں، امریکی جوہری سائنسداں کا اعتراف

سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان مکار، دھوکہ باز، حیلہ گر اور فریبکار ہیں: قطری شیخ

امریکا نے دہشت گردی کے بجائے چین اور روس کو خطرہ قرار دے دیا

سلامتی کونسل میں پاکستان اور امریکی مندوبین کے درمیان لفظی جنگ

ایک اورماورائے عدالت قتل

کالعدم سپاہ صحابہ کا سیاسی ونگ پاکستان راہ حق پارٹی بھی اھل سیاسی جماعتوں میں شامل

امریکہ اور دہشتگردی کا دوبارہ احیاء

ایرانی جوان پوری طرح اپنے سیاسی نظام کے حامی ہیں؛ ایشیا ٹائمز

دنیائے اسلام، فلسطین اور یمن کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرے

شام کے لیے نئی سازش کا منصوبہ تیار

پاک فوج کیخلاف لڑنا حرام ہے اگر فوج نہ ہوتی تو ملک تقسیم ہوچکا ہوتا: صوفی محمد

امام زمانہ عج کی حکومت میں مذہبی اقلیتوں کی صورت حال

سعودی عرب نائن الیون کے واقعے کا تاوان ادا کرے، لواحقین کا مطالبہ

امریکہ کو دوسرے ممالک کے بارے میں بات کرنے سے باز رہنا چاہیے: چین

پاکستان میں حقانی نیٹ ورک موجود نہیں

سعودی عرب نے یمن میں انسانی، اسلامی اور اخلاقی قوانین کا سر قلم کردیا

پاکستان کو ہم سے دشمن کی طرح برتاؤ نہیں کرنا چاہیے: اسرائیلی وزیراعظم

آرمی چیف نے 10 دہشت گردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی

بھارت: ’حج سبسڈی کا خاتمہ، سات سو کروڑ لڑکیوں کی تعلیم کے لیے

صہیونی وزیر اعظم کے دورہ ہندوستان کی وجوہات کچھ اور

پاکستانی سرزمین پر امریکی ڈرون حملہ، عوام حکومتی ایکشن کے منتظر

روس، پاکستان کی دفاعی حمایت کے لئے تیار ہے؛ روسی وزیر خارجہ

عام انتخابات اپنے وقت پر ہونگے: وزیراعظم

ناصرشیرازی اور صاحبزادہ حامد رضا کی چوہدری پرویزالہیٰ سے ملاقات، ملکی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال

پارلیمنٹ نمائندہ ادارہ ہے اسے گالی نہیں دی جاسکتی: آصف زرداری

زائرین کے لیے خوشخبری: پاک ایران مسافر ٹرین سروس بحال کرنے کا فیصلہ

شریف خاندان نے اپنے ملازموں کے ذریعے منی لانڈرنگ کرائی، عمران خان

امریکہ کی افغانستان میں موجودگی ایران، روس اور چین کو کنٹرول کرنے کے لئے ہے

ایرانی پارلیمنٹ اسپیکر کی تہران اسلام آباد سیکورٹی تعاون بڑھانے پر تاکید

دورہ بھارت سے نیتن یاہو کے مقاصد اور ماحصل

ایوان صدر میں منعقد پیغام امن کانفرنس میں داعش سے منسلک افراد کی شرکت

امریکہ، مضبوط افغانستان نہیں چاہتا

عربوں نے اسرائیل کے خلاف جنگ میں اپنی شکست خود رقم کی

سیاسی لیڈر کا قتل

مقاصد الگ لیکن نفرت مشترکہ ہے

انتہا پسندی فتوؤں اور بیانات سے ختم نہیں ہوگی!

تہران میں او آئی سی کانفرنس، فلسطین ایجنڈہ سرفہرست

زینب کے قاتل کی گرفتاری کے حوالے سے شہباز شریف کی بے بسی

یورپ کی جانب سے جامع ایٹمی معاہدے کی حمایت کا اعادہ

بن گورین ڈاکٹرین میں ہندوستان کی اہمیت

دہشت گردی کے خلاف متفقہ فتویٰ

شام میں امریکی منصوبہ؛ کُرد، موجودہ حکومت کی جگہ لینگے

شفقنا خصوصی: کیا زینب کے قاتل کی گرفتاری کو سیاسی مقاصد کے لیے چھپایا جا رہا ہے؟

مسئلہ فلسطین، عالم اسلام کا اہم ترین مسئلہ ہے

پاپ کی طرف سے میانمار کے مسلمانوں کی عالمی سطح پر حمایت

امریکا مشترکہ مفادات کی بنیاد پر پاکستان سے نئے تعلقات بنانا چاہتا ہے، ایلیس ویلز

کالعدم تحریک طالبان پاکستان کا بینظیر بھٹو کو قتل کرنے کا دعویٰ

امریکہ، بیت المقدس کے بارے میں اپنے ناپاک منصوبوں ميں کامیاب نہیں ہوگا

پاکستان کے ساتھ تعلقات مزید مستحکم کرنےکےلیے پرعزم ہیں: امریکی جنرل جوزف ڈنفورڈ

اسلامی ممالک کو اختلافات دور کرنے اور باہمی اتحاد پر توجہ مبذول کرنی چاہیے

بھارت ایسے اقدامات سے باز رہے جن سے صورتحال خراب ہو، چین

عمران خان اور آصف زرداری کل ایک ہی اسٹیج سے خطاب کریں گے، طاہرالقادری

اسرائیلی وزیراعظم کا 6 روزہ دورہ بھارت؛ کیا پاکستان اور ایران کے روایتی دشمنوں کیخلاف علاقائی اتحاد ناگزیر نہیں؟

مودی، یاہو اور ٹرمپ کی مثلث

سید علی خامنہ ای، دنیا کے تمام مسلمانوں کے لیڈر ہیں؛ آذربائیجانی عوام

لسانی حمایت کافی نہیں، ایرانی معترضین تک اسلحہ پہنچایا جائے؛ صہیونی ادارہ

خود کش حملے حرام ہیں، پاکستانی علما کا فتوی

پاکستان افغان جنگ میں قربانی کا بکرا نہیں بنے گا ، وزیردفاع

امریکہ کے شمالی کوریا پر حملے کا وقت آن پہنچا ہے؛ فارن پالیسی

یمن پر مسلط کردہ قبیلۂ آل سعود کی جنگ پر ایک طائرانہ نظر

پاکستان اور امریکہ کے روابط میں اندھیر

مقبوضہ کشمیر، برہان وانی کے بعد منان وانی !!!

آج دنیا کی تمام اقوام کی تباہی و بربادی کا ذمہ دار امریکہ ہے، جنوبی پنجاب کو الگ صوبہ بنایا جائے،

پاک و ہند میں امن کی ضرورت ہے ، جنگ کی نہیں

2018-01-14 07:55:34

 بناتِ زینب اور ابنائے آدم

Pakistani students light candles during a protest rally to condemn the rape and killing of Zainab Ansari, an 8-year-old girl, last week in Kasur, Thursday, Jan. 11, 2018, in Lahore, Pakistan. Anees Ansari, Zainab's father, accused the police of being slow to respond when his daughter went missing. Two people were killed and three others were wounded in clashes between angry Kasur residents and police after protesters enraged over her death attacked a police station in the city. (AP Photo/K.M. Chaudary)

 

حضور! یہ درندہ کیا ہوتا ہے؟ یہ بھیڑیا، یہ وحشی، مگر کیا یہ اپنے ہم جنسوں پہ ظلم ڈھاتا ہے؟ یہ انسان ہے، حضرتِ آزاد  فرماتے ہیں کہ  اتنی سفاکیت انسان میں ہی ہے کہ اپنے ہی قبیلے پہ ظلم ڈھاتا اور پیالوں میں بھر کے لہو پیتا ہے۔اشرف علی المخلوقات کا زعم الگ، عقل و دانش مگر طرہِ امتیاز، لیکن خدا کا فرمانِ برحق، کہ شرالدوآبّ یہی ہے۔ انسان ملائک سے برتر کہلایا، جب آدم تھا، لیکن فراعنہ و نمرود کا روپ دھارا تو جانوروں سے بدتر ہوا، جانور نہیں، کہ وہ اپنوں سے پیار کرتے ہیں، جنگل میں کہاوت مشہور ہے کہ کوئی اپنوں کے لہو کا پیاسا ہو جائے تو انسان کہلاتا ہے۔

 

ہمیں ابھی بھی خوش فہمی کہ ہم ان سے برتر کوئی شےہیں۔ وہ بے زبان زمین، جو ہماری جزوِ تخلیق ہے، سو ماں بھی، جس نے اپنے ہی بیٹوں کے ظلم سہے، جو صدیوں سے ہماری خوں آشا میوں کی گواہ ہے، بولتی نہیں، مگر کھولتی ضرور ہے۔ یہی وجہ  ہےکہ جہنم اس کےا ندر پنپ رہی ہے، کسی کافر یا کسی مسلمانِ نا ہنجار کے لیے نہیں، مگر انسان کے لیے، ہاں فقط انسان کے لیے۔وہ جنہیں عہدِ الست یاد نہیں، جو خود سر ہیں، جنہیں زعمِ شرف و نیابت نے اندھا کر دیا ہے۔ کیسے لوگ ہیں، جو اپنے ہم جنسوں کی تباہ کاریوں کو بڑے دھڑلے سے جانوروں اور دور افتادہ جنگلوں کے “بے عقل” وحشیوں کے کھاتے ڈال دیتے ہیں۔ حوصلہ اور ہمت نہیں کہ سامنا کر پائیں اپنی اصلیت کا، کہیں کہ انسان ہے، وہ جو دشمنِ انساں ہے، وہ ہمیں میں سے ہے، کسی اور سیارے یا کسی اور بستی کی مخلوق نہیں۔ مگر یہاں یہ چلن عام کہ جھوٹ کہیں، آؤ مل کر جھوٹ کہیں۔ گھر کو آگ لگ گئی گھر کے چراغ سے، کہ حقیقت یہی ہے۔

 

دہشت گردی و قتل و غارت نے مذہب کے دامانِ عافیت میں پناہ لی تو علماء  نے کہا یہ اہلِ مذہب نہیں، ان کا اصرار مگر قہر ڈھاتا رہا۔ ہمارا گریز ،ان کا استقرار بنا، ان کی من مانیاں بے کراں ہوئیں، انہوں نے کلماتِ نور کہے، انسانوں کی بستیوں پر چڑھ دوڑے، خدا کا نام لے کر خد ا کی مخلوق کو لہو لہان کردیا۔ اہلِ مذہب مگر گریزاں، حل کہاں نکلتا، انکار سے حل کہاں نکلتا ہے، انکار سے ہلا شیری ملتی ہے، سو ملی۔ اور اب ایک اور راگ الاپا جا رہا ہے، ہر ایک کو برتری کا زعم، کہ وہ جو ماں حوا کا مجرم ہے، وہ جو سیدہ زینب کا مجرم ہے، وہ ہم میں سے نہیں، وہ کوئی اور مخلوق ہے، وہ ہم سے بدتر ہے، مگر ہم کیوں بھول جاتے ہیں کہ وہ ہمیں میں سے ہے۔ اس کا نام، چہرہ مہرہ، خدو خال، حتیٰ کہ قوم و مذہب بھی ہم جیسا ہے۔ وہ اسی سماج کا حصہ ہے، جسے ہمارے رویے تشکیل دیتے ہیں یا پھر جس سے ہمارے رویے تشکیل پاتے ہیں۔

 

سو یہ ماننے میں کیا قباحت ہے کہ برائی سماج میں ہے  اورمعاشرتی اخلاقیات و معیارات کی تشکیلِ نو اصل ضرورت ہے۔ جرم ہوا، مانا ہم شریکِ جرم نہیں تھے، مگر ہمارا وجود، ہماری خاموشی، ہمارا معذرت خواہانہ رویہ، انکار و گریزکی پرانی روش، چند دن شور شرابا اور پھر سکوتِ مرگ، اسے کیا نام دیں؟ اہلِ سیاست کی شعبدہ بازیاں، صاحبان اقتدار کے جھوٹے دلاسے، ہرحادثے کے بعد بڑا حادثہ یہی، برسوں کا رونا بھی یہی، کہ ہم انہیں پہ ایمان لے آتے، انہیں کی طفل تسلیوں پہ سر تسلیمِ خم کر لیتے ہیں۔زینب نہیں، بنتِ زینب کہو، اور معلوم نہیں کتنی بناتِ زینب ،  یہ بچپنا، یہ معصومیت، یہ فارغ البالی، یہ لا ابالی کے دن کہ شیطان بھی  بہکاوے میں لانے سے گریز کرے، مگر یہ انسان ،کہ شیطان بھی پناہ مانگے۔  معصوم ابنائے آدم و بناتِ حوا، جو اپنے ہم جنس انسانوں کی بھینٹ چڑھے، ان کاہم  پر قرض یہی ہے کہ نفاق   و انکار کی روش ترک کر کے حقیقتوں کا ادراک کرتے ہوئے سماجی نفسیات و معاشرتی اخلاقیات کی پیش بندی کا سامان کریں کہ ماں دھرتی کا  ازل ازل سے خواب اور  ابنِ آدم کے وجود کا جواز  یہی ہے۔

حذیفہ مسعود

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

ہم اتنے بے حس کیوں ہیں؟

- ایکسپریس نیوز

21 ویں صدی کے دو تقاضے

- ایکسپریس نیوز