پاکستان میں مذہبی اور لبرل بیانیوں کی کشمکش

امریکہ شام میں آگ سے نہ کھیلے : روس

کیا فدک حضرت زہرا (س) کے موقوفات میں سے تھا یا نہیں؟

لعل شہباز قلندر کے مزار پہ بم دھماکے میں تکفیری دیوبندی خطیب لال مسجد کے رشتے دار ملوث ہیں – سندھ پولیس/ رپورٹ بی بی سی اردو

اسرائیل کے ناقابل شکست ہونے کا افسانہ ختم ہو چکا ہے

 فرانسیسی زبان میں حضرت زهرا (س) کے لیے مرثیه‌ خوانی 

سعودی عرب کو شرک اورکفر کے فتوے نہ دینے کا مشورہ

ایرانی طیارے کے حادثے پر پاکستان کی تعزیت

سعودی عرب میں غیر ملکی خاتون سے اجتماعی زیادتی

کوئی ملک پاکستان کو دہشت گردی کی بنا پر واچ لسٹ میں نہیں ڈال سکتا، احسن اقبال

بلوچ ـ مذہبی شدت پسندی – ذوالفقار علی ذوالفی

تصاویر: شام میں ترکی کے حمایت یافتہ افراد کی کردوں کے خلاف جنگ

دنیا پاکستان کا سچ تسلیم کیوں نہیں کرتی؟

سعودی عرب نے عورتوں کو شوہر کی اجازت کے بغیر کار و بار کی اجازت دیدی

اسرائیل، شام میں ایران کی موجودگی کو اپنے لئے خطرہ سمجھتا ہے؛ گوٹرش

اسمارٹ فون سے اب ڈیسک ٹاپ میں تصاویر منتقل کرنا آسان ہو گیا

نیب نے خادم پنجاب روڈ پروگرام اور میٹروبس میں کرپشن کی تحقیقات شروع کردیں

ایران کا مسافر بردار طیارہ گر کر تباہ، 66 مسافر سوار تھے

بھارتی اور داعشی کے خطرات میں پاک فوج کی سعودیہ عرب میں تعیناتی خلاف عقل ہے

عوام سے ووٹ لے کر آنا قانون سے بالاتر نہیں بنادیتا، عمران خان

حضرت فاطمہ زہرا (س) کی شہادت

آصف زرداری کا راؤ انوار سے متعلق اپنے بیان پر اظہارِ افسوس

توہین مذہب کا جھوٹا الزام لگانے پر سخت سزا کی تجویز

عمران کو سزا پاکستان کے عدالتی نظام پر سوالیہ نشان ہے

ڈونلڈ ٹرمپ نے جنرل باجوہ کو مشرف تصور کر کے غلطی کی: برطانوی تھنک ٹینک

فخر سے کہہ سکتے ہیں پاکستانی سرزمین پر دہشتگردوں کا کوئی منظم کیمپ موجود نہیں، پاک آرمی چیف

نائیجیریا میں یکے بعد دیگرے 3 خودکش حملوں میں 22 افراد ہلاک

سعودیہ میں فوجی دستوں کی تعیناتی

ایران اور ہندوستان نے باہمی تعاون کے 15 معاہدوں اور دستاویزات پر دستخط کردیئے

پاکستانی فوجیوں کو سعودی عرب کے زمینی دفاع کو مضبوط کرنے کیلئے بھیجا گیا ہے، خرم دستگیر

17 امریکی سیکیورٹی سروسز کا پاکستانی ایٹمی پروگرام سے اظہارِ خوف

شام سے برطانیہ کے 100 دہشت گردوں کی واپسی کا خدشہ

آرام سے کھانا کھائیے، موٹاپے سے محفوظ رہیے

علامہ سید ساجد علی نقوی کا شہدائے سیہون شریف کی پہلی برسی سے خطاب

زینب کے گھر والوں کا مجرم کو سرِعام پھانسی دینے کا مطالبہ

زینب کے قاتل عمران علی کو 4 بار سزائے موت کا حکم

کرپشن الزامات کے حوالے سے اسرائیلی وزیر اعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ زور پکڑ گیا

پاکستان کی 98 فیصد خواتین کو طبی و تعلیمی سہولیات میسر نہیں

شیعہ حریت لیڈر یوسف ندیم کی ہلاکت قتل ناحق ہے، بار ایسوسی ایشن

پاکستانی سینیٹ کا فوجی دستہ سعودی عرب بھیجنے پر تشویش کا اظہار

اسرائیل میں وزیراعظم نتین یاہو کے خلاف ہزاروں افراد کا مظاہرہ

سعودی علماء کونسل : عرب خواتین کے لئے چادر اوڑھنا ضروری نہیں ہے

صدر روحانی کا حیدر آباد کی تاریخی مسجد میں خطاب

افغانستان میں داعش کا بڑھتا ہوا اثر و رسوخ ایشیا کے امن کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے

آیت اللہ زکزی کی رہائی کا مطالبہ

فاروق ستار کا اپنے سینیٹ امیدواروں کے ناموں سے دستبرداری کا اعلان

بن سلمان کا سعودی عرب؛ حرام سے حلال تک

پاکستان کی دہشت گردی کے معاملات میں کوتاہیوں پر تشویش ہے، امریکہ

اسلام آباد دھرنوں اور احتجاج پر خزانے سے 95 کروڑ روپے خرچ ہوئے، انکشاف

نقیب قتل کیس؛ راؤ انوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم واپس، بینک اکانٹس منجمد

مغربی موصل کو بارودی مواد سے صاف کرنے کے لئے دس سال درکار ہیں؛ اقوام متحدہ

جو شخص یقین کی منزل پر فائز ہوتا ہے وہ گناہ نہیں کرتا ہے

عالمی دباؤ کا مقابلہ داخلی ہم آہنگی سے کیا جائے

تعاون اور اعتماد سازی

عدالت جواب دے یا سزا ۔ فیصلہ چیف جسٹس کو کرنا ہے

میں نہیں مان سکتا کوئی ڈکیت پارٹی صدر بن کر حکومت کرے، چیف جسٹس

انسانی حقوق کے عالمی چیمپئن کے دعویدار مسئلہ کشمیر و فلسطین پر خاموش کیوں ہیں

ایران کی ترکی کو ایک نرم دھمکی

معاشرہ، امربالمعروف ونہی عن المنکرسے زندہ ہوتا ہے

یمن پر سعودی جنگی طیاروں کے حملے جاری

ریڑھ کی ہڈی کا پانی کیا ہےاور یہ کیوں نکالا جاتا ہے؟

زینب قتل کیس کا فیصلہ محفوظ، ہفتے کو سنایا جائے گا

جنوبی ایشیا میں امن کی تباہی کا ذمہ دار بھارت ہے: وزیر دفاع

لودھراں الیکشن ہارنے کی وجہ ہمارے لوگوں کی (ن) لیگ میں شمولیت ہے: عمران خان

شام میں اسرائیل اور ایران کے مابین ایک علاقائی جنگ کے واقع ہونے کی علامتیں

بیلجیئم کی حکومت کا سعودی عرب کی تعمیر کردہ جامع مسجد کو اپنی تحویل میں لینے کا مطالبہ

حضرت زہرا(س) کی شہادت سےمربوط واقعات کا تجزیہ وتحلیل

امام زمانہ(عج) کی عالمی حکومت میں انبیاء کا کردار

بن سلمان کا سعودی عرب؛ حرام سے حلال تک

ٹرمپ: نئی جوہری دوڑ اور جنوبی ایشیا

نقیب قتل کیس؛ چیف جسٹس پاکستان کا راؤ انوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم

2018-02-10 05:39:38

پاکستان میں مذہبی اور لبرل بیانیوں کی کشمکش

Pakistan

اسلام ہی نہیں کسی بھی مذہب، اصولوں اور تہذیب سے کوسوں دور مٹھی بھرعناصر پاکستان میں اپنی جڑیں مضبوط کرنے کےلیے تقسیمِ ہند کے ساتھ ہی متحرک ہوگئے تھے لیکن چونکہ معاشرہ اور ریاست خالص اسلامی نظریاتی بنیادوں پر وجود میں آئی تھی، اس وجہ سے اب تک یہ طبقہ اشرافیہ اپنے بڑے چھوٹے مغربی اور ہندوستانی آقاؤں کی توقعات پر پورا اترنے میں ناکام دکھائی دیتا ہے۔

خود کو روشن خیال اورلبرل کہنے والے اس قدر تنگ نظرہیں کہ وہ اپنے نظریات کے علاوہ کسی دوسرے کو برداشت کرنے کے قائل ہی نہیں۔ ان کی نظر میں صرف وہ درست اور کامل ہیں؛ باقی تمام عناصر اس دنیا میں فضول تر ہیں۔ دوقومی نظریئے کی بنیاد پر وجود میں آنے والے پاکستان کا بیانیہ بھی یقینی طور پر مذہبی ہی ہونا چاہیے تھا اور قائداعظمؒ کی دلی خواہش بھی یہی تھی کہ اس ریاست کو مذہبی بیانیے کے تناظر میں ایک اسلامی وفلاحی ریاست بنایا جائے۔

بانی پاکستان محمدعلی جناحؒ کے مذہبی بیانیے کے حق میں نظریات کے باعث اس طبقہ اشرافیہ کے سینوں پر سانپ لوٹ رہے تھے اور ان کی شدید ترخواہش تھی کہ کسی بھی طور قائد کو راستے سے ہٹا کر اسلامی ریاست کو ایک سیکولر اور لبرل ریاست بنایا جائے۔ قائد کے بقول ان کی جیب کے کھوٹے سکے، جو پاکستان کی اساس کے دشمن تھے، بالآخر اس حد تک کامیاب ہوئے کہ انہوں نے قائداعظمؒ کو جنگل میں ایک خراب ایمبولینس کے سپرد کردیا جس میں پیٹرول بھی اتنا ڈالا گیا کہ وہ صرف چارمیل ہی طے کرپائی اور پھر وہ عظیم قائد جس نے اہل پاکستان پر کروڑوں احسانات کرکے انہیں آزاد فضاؤں میں سانس لینے کےلیے ایک سمت متعین کرکے منزل پر پہنچایا تھا، ایک ویران سڑک پر شدید گرمی اور حبس میں اپنی لاڈلی بہن فاطمی (محترمہ فاطمہ جناح) کے ساتھ بے بس پڑا تھا، اور… پھر… مذہبی بیانیi کا موجد ’’کشمیر… انہیں فیصلہ کرنے کا حق دو… آئین… میں اسے بہت جلد مکمل کروں گا…‘‘ کے آخری الفاظ ادا کرکے ہمیشہ کےلیے اہل پاکستان سے روٹھ گیا۔
قائدؒ کی رحلت کے بعد کرپٹ اشرافیہ کی تو امیدیں بر آئیں کہ اب کوئی رکاوٹ نہیں۔ اب ہم اس ملک میں مذہبی بیانیہ دفن کرکے لبرل اور لادین بیانیے کو فروغ دیں گے اور قرارداد پاکستان کی دھجیاں بکھیر کر رکھ دیں گے۔ لیکن ان کی بدقسمتی ایسی کہ ان کے یہ خواب مذہبی طبقات اور اسلام پسندوں نے ناکام بنا دیئے۔ ان کے ہر وار کو ناکام بناتے ہوئے محمد عربیﷺ کے غلام، مدینہ جیسی اسلامی ریاست کو اسی انداز میں ڈھالنے کےلیے پرعزم رہے، بارہا ان کی جدوجہد کے مقابلے میں جیل، مقدمات، لاٹھیاں اورگولیاں آئیں۔

ستمبر 1948 میں قائد کی وفات ہوئی اور اس کے صرف ایک ماہ بعد اکتوبر 1948 میں سید ابوالاعلی مودودیؒ کو محض اس جرم کی پاداش میں گرفتار کرکے پابند سلاسل کر دیا گیا کہ انہوں نے اسلامی نظام کے قیام کا مطالبہ کیا تھا۔ گرفتاری سے قبل جماعت اسلامی کے اخبارات ’’کوثر،‘‘ ’’جہانِ نو‘‘ اور ’’روزنامہ تسنیم‘‘ بھی بند کردیئے گئے۔ لیکن طاغوت کے تمام تر ہتھکنڈوں کے باوجود یہ جدوجہد ماند نہ پڑی اور پاکستان کی آئین ساز اسمبلی کو 12 مارچ 1949 کے روز ’’قراردادِ مقاصد ‘‘ منظور کرنا پڑی۔ اس قرارداد کی وجہ سے لبرلز آج بھی شدید تر جھنجھلاہٹ کا شکار ہیں اور اپنے بال نوچنے پر مجبورہیں۔ آج بھی ان کا ہدف ’’قراردادِ مقاصد‘‘ ہے کیونکہ اس قرارداد نے واضح کردیا کہ پاکستان کے ’’آئین کا ڈھانچہ یورپی طرز کا قطعی نہیں ہوگا بلکہ اس کی بنیاد اسلامی جمہوریت و نظریات پر ہوگی۔‘‘

یہی وجہ ہے کہ لبرل بیانیے کے حمایتی طبقات، اہل اسلام کے خلاف بے بنیاد گرد اڑانے کی کوشش کرتے ہیں۔ کبھی دہشت گردی کو اسلام سے جوڑا جاتا ہے تو کبھی کسی حجام کا الزام ایک عالم دین پر لگا کرمولوی کو ایک گالی بنانے کی کوشش کی جاتی ہے۔ لیکن ان کی سازشیں ہمیشہ سے ان پر ہی الٹ رہی ہیں۔ جو تدبیر وہ کرتے ہیں، وہ ان ہی کے مخالف ہوجاتی ہے اور رسوائی و ہزیمت ان کے حصے میں آتی ہے۔ عالمی سطح پر مسلح دہشت گردوں کو پروان چڑھانے کی کوشش لبرلز کے آقاؤں کومہنگی پڑگئی۔ جس آگ سے مغربی الحاد، امت مسلمہ کو جلا کر راکھ کرنے کی سازش کررہا تھا، آج وہ سازش الٹی ہوئی اور وہ آگ دھیرے دھیرے اس کے اپنے گھروں کو جلا رہی ہے۔
پاکستانی اسلام پسند عوام اس ضمن میں بالکل یکسو ہیں کہ یہاں اسلامی نظام کے قیام کےلیے مسلح جدوجہد ملک میں خانہ جنگی اور تفرقہ بازی کا باعث بنے گی؛ اس لیے محب وطن اسلام پسند، پاکستان میں جمہوریت اور بیلٹ کے ذریعے تبدیلی لاکراس مملکت خداداد میں اسلامی نظام کے قیام کی جدوجہد جاری رکھے ہوئے ہیں۔ ان شاء اللہ، وہ وقت دورنہیں کہ جب یہ ریاست قائداعظمؒ اور علامہ اقبالؒ کے خوابوں کی تعبیرمیں حقیقی اسلامی و فلاحی ریاست بنے گی۔

انعام الحق اعوان

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

مرحوم منشور کی یاد میں

- ایکسپریس نیوز

کرائے کی مائیں

- ایکسپریس نیوز

جمہوری اصلاحات کا مسئلہ

- ایکسپریس نیوز

مشورے کی اہمیت

- ایکسپریس نیوز

تاریخ رقم ہوگی

- ایکسپریس نیوز

ریٹائرڈ ملازمین

- ایکسپریس نیوز

سچا اور امانت دار

- ایکسپریس نیوز