تو کیا ایک کھلی جنگ کاالارم بج چکا ہے ؟

امریکہ شام میں آگ سے نہ کھیلے : روس

کیا فدک حضرت زہرا (س) کے موقوفات میں سے تھا یا نہیں؟

لعل شہباز قلندر کے مزار پہ بم دھماکے میں تکفیری دیوبندی خطیب لال مسجد کے رشتے دار ملوث ہیں – سندھ پولیس/ رپورٹ بی بی سی اردو

اسرائیل کے ناقابل شکست ہونے کا افسانہ ختم ہو چکا ہے

 فرانسیسی زبان میں حضرت زهرا (س) کے لیے مرثیه‌ خوانی 

سعودی عرب کو شرک اورکفر کے فتوے نہ دینے کا مشورہ

ایرانی طیارے کے حادثے پر پاکستان کی تعزیت

سعودی عرب میں غیر ملکی خاتون سے اجتماعی زیادتی

کوئی ملک پاکستان کو دہشت گردی کی بنا پر واچ لسٹ میں نہیں ڈال سکتا، احسن اقبال

بلوچ ـ مذہبی شدت پسندی – ذوالفقار علی ذوالفی

تصاویر: شام میں ترکی کے حمایت یافتہ افراد کی کردوں کے خلاف جنگ

دنیا پاکستان کا سچ تسلیم کیوں نہیں کرتی؟

سعودی عرب نے عورتوں کو شوہر کی اجازت کے بغیر کار و بار کی اجازت دیدی

اسرائیل، شام میں ایران کی موجودگی کو اپنے لئے خطرہ سمجھتا ہے؛ گوٹرش

اسمارٹ فون سے اب ڈیسک ٹاپ میں تصاویر منتقل کرنا آسان ہو گیا

نیب نے خادم پنجاب روڈ پروگرام اور میٹروبس میں کرپشن کی تحقیقات شروع کردیں

ایران کا مسافر بردار طیارہ گر کر تباہ، 66 مسافر سوار تھے

بھارتی اور داعشی کے خطرات میں پاک فوج کی سعودیہ عرب میں تعیناتی خلاف عقل ہے

عوام سے ووٹ لے کر آنا قانون سے بالاتر نہیں بنادیتا، عمران خان

حضرت فاطمہ زہرا (س) کی شہادت

آصف زرداری کا راؤ انوار سے متعلق اپنے بیان پر اظہارِ افسوس

توہین مذہب کا جھوٹا الزام لگانے پر سخت سزا کی تجویز

عمران کو سزا پاکستان کے عدالتی نظام پر سوالیہ نشان ہے

ڈونلڈ ٹرمپ نے جنرل باجوہ کو مشرف تصور کر کے غلطی کی: برطانوی تھنک ٹینک

فخر سے کہہ سکتے ہیں پاکستانی سرزمین پر دہشتگردوں کا کوئی منظم کیمپ موجود نہیں، پاک آرمی چیف

نائیجیریا میں یکے بعد دیگرے 3 خودکش حملوں میں 22 افراد ہلاک

سعودیہ میں فوجی دستوں کی تعیناتی

ایران اور ہندوستان نے باہمی تعاون کے 15 معاہدوں اور دستاویزات پر دستخط کردیئے

پاکستانی فوجیوں کو سعودی عرب کے زمینی دفاع کو مضبوط کرنے کیلئے بھیجا گیا ہے، خرم دستگیر

17 امریکی سیکیورٹی سروسز کا پاکستانی ایٹمی پروگرام سے اظہارِ خوف

شام سے برطانیہ کے 100 دہشت گردوں کی واپسی کا خدشہ

آرام سے کھانا کھائیے، موٹاپے سے محفوظ رہیے

علامہ سید ساجد علی نقوی کا شہدائے سیہون شریف کی پہلی برسی سے خطاب

زینب کے گھر والوں کا مجرم کو سرِعام پھانسی دینے کا مطالبہ

زینب کے قاتل عمران علی کو 4 بار سزائے موت کا حکم

کرپشن الزامات کے حوالے سے اسرائیلی وزیر اعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ زور پکڑ گیا

پاکستان کی 98 فیصد خواتین کو طبی و تعلیمی سہولیات میسر نہیں

شیعہ حریت لیڈر یوسف ندیم کی ہلاکت قتل ناحق ہے، بار ایسوسی ایشن

پاکستانی سینیٹ کا فوجی دستہ سعودی عرب بھیجنے پر تشویش کا اظہار

اسرائیل میں وزیراعظم نتین یاہو کے خلاف ہزاروں افراد کا مظاہرہ

سعودی علماء کونسل : عرب خواتین کے لئے چادر اوڑھنا ضروری نہیں ہے

صدر روحانی کا حیدر آباد کی تاریخی مسجد میں خطاب

افغانستان میں داعش کا بڑھتا ہوا اثر و رسوخ ایشیا کے امن کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے

آیت اللہ زکزی کی رہائی کا مطالبہ

فاروق ستار کا اپنے سینیٹ امیدواروں کے ناموں سے دستبرداری کا اعلان

بن سلمان کا سعودی عرب؛ حرام سے حلال تک

پاکستان کی دہشت گردی کے معاملات میں کوتاہیوں پر تشویش ہے، امریکہ

اسلام آباد دھرنوں اور احتجاج پر خزانے سے 95 کروڑ روپے خرچ ہوئے، انکشاف

نقیب قتل کیس؛ راؤ انوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم واپس، بینک اکانٹس منجمد

مغربی موصل کو بارودی مواد سے صاف کرنے کے لئے دس سال درکار ہیں؛ اقوام متحدہ

جو شخص یقین کی منزل پر فائز ہوتا ہے وہ گناہ نہیں کرتا ہے

عالمی دباؤ کا مقابلہ داخلی ہم آہنگی سے کیا جائے

تعاون اور اعتماد سازی

عدالت جواب دے یا سزا ۔ فیصلہ چیف جسٹس کو کرنا ہے

میں نہیں مان سکتا کوئی ڈکیت پارٹی صدر بن کر حکومت کرے، چیف جسٹس

انسانی حقوق کے عالمی چیمپئن کے دعویدار مسئلہ کشمیر و فلسطین پر خاموش کیوں ہیں

ایران کی ترکی کو ایک نرم دھمکی

معاشرہ، امربالمعروف ونہی عن المنکرسے زندہ ہوتا ہے

یمن پر سعودی جنگی طیاروں کے حملے جاری

ریڑھ کی ہڈی کا پانی کیا ہےاور یہ کیوں نکالا جاتا ہے؟

زینب قتل کیس کا فیصلہ محفوظ، ہفتے کو سنایا جائے گا

جنوبی ایشیا میں امن کی تباہی کا ذمہ دار بھارت ہے: وزیر دفاع

لودھراں الیکشن ہارنے کی وجہ ہمارے لوگوں کی (ن) لیگ میں شمولیت ہے: عمران خان

شام میں اسرائیل اور ایران کے مابین ایک علاقائی جنگ کے واقع ہونے کی علامتیں

بیلجیئم کی حکومت کا سعودی عرب کی تعمیر کردہ جامع مسجد کو اپنی تحویل میں لینے کا مطالبہ

حضرت زہرا(س) کی شہادت سےمربوط واقعات کا تجزیہ وتحلیل

امام زمانہ(عج) کی عالمی حکومت میں انبیاء کا کردار

بن سلمان کا سعودی عرب؛ حرام سے حلال تک

ٹرمپ: نئی جوہری دوڑ اور جنوبی ایشیا

نقیب قتل کیس؛ چیف جسٹس پاکستان کا راؤ انوار کو گرفتار نہ کرنے کا حکم

2018-02-12 14:03:23

تو کیا ایک کھلی جنگ کاالارم بج چکا ہے ؟

 

Israeli

یہ ایک تاریخی دن ہے ،آج پریکٹیکلی طور پرطاقت کا توازن بدل چکا ہے ،ہم نے اس قسم کے ایک تاریخی لمحے کا بڑا انتظار کیا تھا ۔۔،آج ایک نئی اسٹراٹیجی کا آغاز ہوچلا ہے ،شام کی سڑکوں پر جشن کا سماں ہے تو عرب عوام خاص کر فلسطینی مٹھائیاں بانٹ رہے ہیں ۔۔۔

 

یہ عناوین آج زیادہ تر عرب میڈیا میں دیکھے جاسکتے ہیں کہ جس کے ساتھ اس اسرائیلی ایف سولہ طیارے کی فوٹیج دیکھائی دیتی ہے کہ جسے شام کے فضائی ڈیفنس نے سام 5نامی میزائل کے زریعے ماگرایا ہے ۔
اسرائیلی طیارے شامی حدود کے اندر داخل ہونا چاہ ہی رہے تھےکہ انہیں شام کی فضائیہ کے میزائل کا سامنا کرنا پڑا کہ جس میں ایک طیارہ تباہ جبکہ دوسرا طیارہ میزائل لگنے کے بعد واپسی کا رخ کرنے میں کامیاب رہا ۔
اسرائیل شام کی اس جوابی کاروائی کے بعد بری طرح سیراسمیگی میں دیکھائی دیتا ہے کہ جس نے امریکہ اور روس سے کہا کہ وہ فورا اس معاملے میں مداخلت کریں اور اس کے ساتھ اسرائیلی مسلسل یہ کہتے دیکھائی دیے کہ مزید کشیدگی اسرائیل کے حق میں نہیں ،شائد وہ یہ پیغام دینا چاہتے تھے کہ وہ مزید کشیدگی نہیں چاہتے لہذا شام کی افواج کو بھی یہی پر رکنا چاہیے ۔
اسرائیل کے لئے یہ جوابی کاروائی انتہائی غیر متوقع تھی شائد وہ سوچ بھی نہیں رہا تھا کہ اس قسم کی جوابی کاروائی بھی ہوسکتی ہے ۔
بات صرف اتنی نہیں کہ ایک اسرائیلی طیارہ مار ا گیا ہے بات دراصل خطے میں اسرائیلی جھوٹی برتری کو پہنچنے والے دھچکے کی ہے ۔
بات یہ ہے کہ اس کے بعد طاقت کا توازن بدل چکا ہے اور شام اور اس کے اتحادیوں نے کھلا پیغام دیا ہے کہ اب بات آگے بھی بڑھ سکتی ہے۔
تو کیا ایک کھلی جنگ کاالارم جنگ بج چکا ہے ؟
کیا موجودہ کشیدہ صورتحال میں کہا جاسکتا ہے کہ ایک کھلی جنگ کا اعلان ہوچکا ہے کم ازکم شمالی فرنٹ پر؟
ماہرین کا خیال ہے کہ اسرائیلی اندرونی صورتحال ایسی کسی بھی جنگ کے لئے تیار دیکھائی نہیں دیتی گرچہ شام کی جوابی کاروائی نے اسرائیلی بڑوں کو سخت مشکلات سے دوچار ضرور کیا ہے اور نتن یاہوحکومت پر اس وقت مختلف جوانب دے دباو میں اضافہ ہورہا ہے۔

اسرائیل شام میں موجود مزاحمتی بلاک کی مضبوط پوزیشن سے پوری طرح آگاہ ہے اور وہ جانتا ہے کہ کسی ایک جغرافیائی محاذ تک اس جنگ نے محدود نہیں رہنا بلکہ یہ جنگ لبنان سے لیکر شام اور فلسطین کے اندر تک ایک وسیع محاذ میں ہوگی اور ایک ایسی جنگ کا چند دن بھی سامناکرنا اسکے لئے مشکل ہوگا ۔
اسرائیل کے لئے شام کی جوابی کاروائی ایک سرپرائز سے بڑھکر ہے لہذا وہ چاہے گا کہ پہلے اس نئی صورتحال اور بدلتے طاقت کے توازن کا بغور جائزہ لے ۔

ماہرین کا خیال ہے کہ خطے میں موجود تمام قوتیں کھلی جنگ نہیں چاہتی لیکن اس کے باوجود اسرائیلی اس قسم کے ایڈونچر کسی بھی وقت جنگ کی آگ کو بڑھکا سکتی ہے خاص کر کہ وہ بدلتے ہوئے طاقت کے اس تواز ن کو کبھی بھی ہضم نہیں کرپائے گا ۔

اسرائیل نے خفت مٹانے کے لئے ایک کھلا جھوٹ بولا کہ اس نے شام میں ایرانی اور شامی اہم عسکری ٹھکانوں پر جوابی بمباری کی ہے جیساکہ اس واقعے سے پہلے بھی اس نے جھوٹ بولا تھا کہ ایک ایرانی ڈرون طیارے نے اسرائیلی حدود کی خلاوف ورزی کرتے ہوئے اس کی فضائی حدود میں پرواز کی تھی جسے مار گرایا گیا ۔
شام میں موجود مزاحمتی بلاک کے مشترکہ آپریشن روم کے اعلان کے مطابق جاسوسی ڈرون طیارہ شروع سے شام کے اندر دہشتگردوں کے ٹھکانوں کی نشاندہی کے لئے آپریشن میں شامل ہے ۔

ایرانی وزارت خارجہ نے بھی ڈرون گرانے کے اسرائیلی دعوے کو مضحکہ خیز قرادیتے ہوئے کہا صیہونی غاصب ریاست ہمیشہ اس قسم کے جھوٹ بولنے کی عادی ہے ۔
اس پر کوئی شک نہیں کہ آج کا دن تاریخی بھی ہے اورخوشی کے اظہار کے لئے مناسب بھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

مرحوم منشور کی یاد میں

- ایکسپریس نیوز

کرائے کی مائیں

- ایکسپریس نیوز

جمہوری اصلاحات کا مسئلہ

- ایکسپریس نیوز

مشورے کی اہمیت

- ایکسپریس نیوز

تاریخ رقم ہوگی

- ایکسپریس نیوز

ریٹائرڈ ملازمین

- ایکسپریس نیوز

سچا اور امانت دار

- ایکسپریس نیوز