ذاتی مراسم اور سعودی اتحاد: کیا نواز شریف پاکستان کو ذاتی ملکیت سمجھتے ہیں؟

سعودی عرب کی ’توہین‘: کویتی بلاگر کو پانچ سال سزائے قید

دنیا، کس قسم کے افراد کو تباہ وبرباد کردیتی ہے؟

ٹرمپ کے خلاف لاکھوں امریکی خواتین کا تاریخی احتجاج

نقیب اللہ قتل؛ راؤ انوار کو پولیس پارٹی سمیت گرفتار کرنے کا فیصلہ

فتویٰ اور پارلیمینٹ

کل بھوشن کے بعد اب محمد شبیر

سعودیہ فوج میں زبردستی بھرتی پر مجبور ہوگیا ہے؛ یمنی نیوز

پاکستان کی غیر واضح خارجہ پالیسی سے معاملات الجھے رہیں گے

پارلیمنٹ پر لعنت

نائیجیریا میں آیت اللہ زکزکی کی حمایت میں مظاہرہ

ایٹمی معاہدے میں کوئی خامی نہیں، امریکی جوہری سائنسداں کا اعتراف

سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان مکار، دھوکہ باز، حیلہ گر اور فریبکار ہیں: قطری شیخ

امریکا نے دہشت گردی کے بجائے چین اور روس کو خطرہ قرار دے دیا

سلامتی کونسل میں پاکستان اور امریکی مندوبین کے درمیان لفظی جنگ

ایک اورماورائے عدالت قتل

کالعدم سپاہ صحابہ کا سیاسی ونگ پاکستان راہ حق پارٹی بھی اھل سیاسی جماعتوں میں شامل

امریکہ اور دہشتگردی کا دوبارہ احیاء

ایرانی جوان پوری طرح اپنے سیاسی نظام کے حامی ہیں؛ ایشیا ٹائمز

دنیائے اسلام، فلسطین اور یمن کے بارے میں اپنی شجاعت کا مظاہرہ کرے

شام کے لیے نئی سازش کا منصوبہ تیار

پاک فوج کیخلاف لڑنا حرام ہے اگر فوج نہ ہوتی تو ملک تقسیم ہوچکا ہوتا: صوفی محمد

امام زمانہ عج کی حکومت میں مذہبی اقلیتوں کی صورت حال

سعودی عرب نائن الیون کے واقعے کا تاوان ادا کرے، لواحقین کا مطالبہ

امریکہ کو دوسرے ممالک کے بارے میں بات کرنے سے باز رہنا چاہیے: چین

پاکستان میں حقانی نیٹ ورک موجود نہیں

سعودی عرب نے یمن میں انسانی، اسلامی اور اخلاقی قوانین کا سر قلم کردیا

پاکستان کو ہم سے دشمن کی طرح برتاؤ نہیں کرنا چاہیے: اسرائیلی وزیراعظم

آرمی چیف نے 10 دہشت گردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی

بھارت: ’حج سبسڈی کا خاتمہ، سات سو کروڑ لڑکیوں کی تعلیم کے لیے

صہیونی وزیر اعظم کے دورہ ہندوستان کی وجوہات کچھ اور

پاکستانی سرزمین پر امریکی ڈرون حملہ، عوام حکومتی ایکشن کے منتظر

روس، پاکستان کی دفاعی حمایت کے لئے تیار ہے؛ روسی وزیر خارجہ

عام انتخابات اپنے وقت پر ہونگے: وزیراعظم

ناصرشیرازی اور صاحبزادہ حامد رضا کی چوہدری پرویزالہیٰ سے ملاقات، ملکی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال

پارلیمنٹ نمائندہ ادارہ ہے اسے گالی نہیں دی جاسکتی: آصف زرداری

زائرین کے لیے خوشخبری: پاک ایران مسافر ٹرین سروس بحال کرنے کا فیصلہ

شریف خاندان نے اپنے ملازموں کے ذریعے منی لانڈرنگ کرائی، عمران خان

امریکہ کی افغانستان میں موجودگی ایران، روس اور چین کو کنٹرول کرنے کے لئے ہے

ایرانی پارلیمنٹ اسپیکر کی تہران اسلام آباد سیکورٹی تعاون بڑھانے پر تاکید

دورہ بھارت سے نیتن یاہو کے مقاصد اور ماحصل

ایوان صدر میں منعقد پیغام امن کانفرنس میں داعش سے منسلک افراد کی شرکت

امریکہ، مضبوط افغانستان نہیں چاہتا

عربوں نے اسرائیل کے خلاف جنگ میں اپنی شکست خود رقم کی

سیاسی لیڈر کا قتل

مقاصد الگ لیکن نفرت مشترکہ ہے

انتہا پسندی فتوؤں اور بیانات سے ختم نہیں ہوگی!

تہران میں او آئی سی کانفرنس، فلسطین ایجنڈہ سرفہرست

زینب کے قاتل کی گرفتاری کے حوالے سے شہباز شریف کی بے بسی

یورپ کی جانب سے جامع ایٹمی معاہدے کی حمایت کا اعادہ

بن گورین ڈاکٹرین میں ہندوستان کی اہمیت

دہشت گردی کے خلاف متفقہ فتویٰ

شام میں امریکی منصوبہ؛ کُرد، موجودہ حکومت کی جگہ لینگے

شفقنا خصوصی: کیا زینب کے قاتل کی گرفتاری کو سیاسی مقاصد کے لیے چھپایا جا رہا ہے؟

مسئلہ فلسطین، عالم اسلام کا اہم ترین مسئلہ ہے

پاپ کی طرف سے میانمار کے مسلمانوں کی عالمی سطح پر حمایت

امریکا مشترکہ مفادات کی بنیاد پر پاکستان سے نئے تعلقات بنانا چاہتا ہے، ایلیس ویلز

کالعدم تحریک طالبان پاکستان کا بینظیر بھٹو کو قتل کرنے کا دعویٰ

امریکہ، بیت المقدس کے بارے میں اپنے ناپاک منصوبوں ميں کامیاب نہیں ہوگا

پاکستان کے ساتھ تعلقات مزید مستحکم کرنےکےلیے پرعزم ہیں: امریکی جنرل جوزف ڈنفورڈ

اسلامی ممالک کو اختلافات دور کرنے اور باہمی اتحاد پر توجہ مبذول کرنی چاہیے

بھارت ایسے اقدامات سے باز رہے جن سے صورتحال خراب ہو، چین

عمران خان اور آصف زرداری کل ایک ہی اسٹیج سے خطاب کریں گے، طاہرالقادری

اسرائیلی وزیراعظم کا 6 روزہ دورہ بھارت؛ کیا پاکستان اور ایران کے روایتی دشمنوں کیخلاف علاقائی اتحاد ناگزیر نہیں؟

مودی، یاہو اور ٹرمپ کی مثلث

سید علی خامنہ ای، دنیا کے تمام مسلمانوں کے لیڈر ہیں؛ آذربائیجانی عوام

لسانی حمایت کافی نہیں، ایرانی معترضین تک اسلحہ پہنچایا جائے؛ صہیونی ادارہ

خود کش حملے حرام ہیں، پاکستانی علما کا فتوی

پاکستان افغان جنگ میں قربانی کا بکرا نہیں بنے گا ، وزیردفاع

امریکہ کے شمالی کوریا پر حملے کا وقت آن پہنچا ہے؛ فارن پالیسی

یمن پر مسلط کردہ قبیلۂ آل سعود کی جنگ پر ایک طائرانہ نظر

2015-12-20 05:30:31

ذاتی مراسم اور سعودی اتحاد: کیا نواز شریف پاکستان کو ذاتی ملکیت سمجھتے ہیں؟

najo

پاکستان نے سعودی عرب کی زیر قیادت فوجی اتحاد میں شمولیت کی باضابطہ تصدیق کر دی ہے تاہم ساتھ ہی یہ بھی واضح کر دیا ہے کہ سعودی عرب سے موصول ہونیوالی تفصیلات کے بعد طے کیا جائیگا کہ اس فوجی اتحاد میں پاکستان کا کردار کس نوعیت کا ہوگا اور کس حد تک اس اتحاد میں شرکت ہوگی۔ اس سلسلہ میں ترجمان دفتر خارجہ قاضی خلیل اللہ نے گزشتہ روز اپنی ہفتہ وارپریس بریفنگ میں بتایا کہ پاکستان نے پہلے ہی دہشت گردی اور انتہاء پسندی کے انسداد کیلئے اقوام متحدہ اور اوآئی سی کی قراردادوں پر عملدرآمد کے عزم کا اعادہ کیا تھا جبکہ ان قراردادوں میں بھی دہشت گردی‘ انتہاء پسندی کی سوچ کیخلاف علاقائی اور بین الاقوامی کوششوں میں حصہ لینے پر زور دیا گیا ہے۔ 24 گھنٹے کے اندر اسلام آباد کی یہ قلابازی صرف اس بات کا اعتراف ہے کہ حکومت دہشت گردی اور انتہا پسندی کے علاوہ خارجہ امور پر بھی کسی واضح اور دو ٹوک پالیسی پر عمل پیرا نہیں ہے۔ ملک میں مختلف سرکاری اداروں کے درمیان تعاون و اشتراک کی شدید کمی ہے۔ اسٹیبلشمنٹ کی بالا دستی اور اپنے طور پر فیصلے کرنے کی عادت قرار دیا جائے یا یہ کہا جائے کہ ملک کے سیاست دان فوج کے سامنے کوئی ٹھوس مؤقف اختیار کرنے کا حوصلہ نہیں رکھتے۔ یا یہ بھی سمجھا جا سکتا ہے کہ اسلام آباد کی اصل ترجیح قومی مفاد کی بجائے طاقتور اور مالدار دوست ملکوں کی ضرورتوں کا خیال رکھنا ہے۔ لیکن یہ بات واضح ہے کہ پاکستان کے طاقتور ادارے ایک دوسرے سے دست و گریبان ہیں۔ تاہم کسی بھی ادارے کے پاس خواہ وہ فوج ہو یا سیاسی حکومت تمام امور کو ملا کر دیکھنے اور دنیا میں رونما ہونے والے حالات اور تبدیلیوں کو پیش نظر رکھ کر فیصلے کرنے کا حوصلہ اور صلاحیت نہیں ہے۔ بین الریاستی مراسم میں ہمارے دوسرے ممالک کے ساتھ جنگی دفاعی تعاون کے معاہدے تو ہو سکتے ہیں تاہم یہ معاہدے ملکی سلامتی اور قومی مفادات کو پیش نظر رکھ کر ہی کئے جاتے ہیں جن میں یہ خیال بہرصورت رکھا جاتا ہے کہ جس ملک کے ساتھ دفاعی تعاون کا معاہدہ کیا جارہا ہے وہ ہماری افواج کو ہمارے کسی دوست ملک کی سالمیت کیخلاف استعمال نہیں کریگا۔ بلاشبہ ہر ملک کو اپنی خودمختاری اور سلامتی عزیز ہوتی ہے اس لئے کوئی ملک بیرونی تعلقات کے حوالے سے اپنی سلامتی اور خودمختاری کو دائو پر نہیں لگاتا۔ حرمین الشریفین کے حوالے سے سعودی دھرتی ہمارے لئے مقدس دھرتی ہے اور حرمین الشریفین کی حفاظت ہمارا ملی اور اسلامی فریضہ بھی ہے جس کی ادائیگی میں ہماری جانب سے پہلے بھی کبھی کوئی فروگزاشت نہیں ہوئی اور آئندہ بھی حرمین الشریفین کو کسی خطرہ کی صورت میں افواج پاکستان سیسہ پلائی دیوار بنیں گی تاہم سعودی مفادات ایک الگ معاملہ ہے جس میں دوطرفہ تعلقات کے حوالے سے ہمیں بھی اپنے مفادات کو اسی طرح پیش نظر رکھنا ہوگا جیسے برادر سعودی عرب اپنے مفادات کو فوقیت دیتا ہے۔ اسلامی فوجی اتحاد کا تصور خواہ شہزادہ محمد بن سلمان کی ذاتی مجبوریوں کا مظہر ہو یا اس کا اعلان مشرق وسطیٰ میں امریکی بدحواسی کو چھپانے کے لئے کیا گیا ہو، یہ بات طے ہے کہ نہ تو یہ اتحاد کسی مؤثر قوت میں تبدیل ہو سکتا ہے اور بالفرض محال امریکی سرپرستی اور سعودی دولت کے سہارے اس لولے لنگڑے اتحاد کو مصنوعی ٹانگیں فراہم بھی کر دی گئیں تو بھی یہ ” فوجی قوت “ مشرق وسطیٰ میں روس کی مداخلت اور ایران کے اثر و رسوخ کی موجودگی میں کوئی بڑا کارنامہ سرانجام دینے میں ناکام رہے گی۔ امریکہ ہو یا سعودی عرب یا ان دونوں کے آگے بے بس و مجبور پاکستان …….. اگر شام میں تبدیل ہوتے ہوئے حالات کا اندازہ کئے بغیر فرقہ بندی کی بنیاد پر دہشت گردی سے لڑنے کا ارادہ کریں گے اور اس کا مقصد دمشق میں اپنی مرضی کی حکومت کو مسلط کرنا ہو گا تو وہ علاقے میں رونما ہونے والے نئے اشتراک اور تبدیلیوں کی بنا پر اس مقصد میں کامیاب نہیں ہو سکتے۔ اب سوال یہ نہیں ہے کہ دمشق میں بشار الاسد کی حکومت قائم رہے یا اسے ختم کیا جائے بلکہ یہ ہے کہ کیا امریکہ مشرق وسطیٰ میں اپنی کئی دہائیوں پر محیط غلط کاریوں کو قبول کرنے اور یہ تسلیم کرنے پر تیار ہے کہ اب معاملات صرف واشنگٹن کی صوابدید اور خواہش کے مطابق طے نہیں ہو سکتے۔ اگر امریکہ یہ ادراک کرنے میں ناکام ہے تو اس کے کمزور حلیف یعنی سعودی عرب یا پاکستان کیوں کر اس حوالے سے درست اور بصیرت سے بھرپور حکمت عملی اختیار کر سکتے ہیں۔

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

کراچی سے سامارو تک

- ایکسپریس نیوز

اسٹیٹ بینک کی رپورٹ

- ایکسپریس نیوز

دنیا 100 سیکنڈ میں

- سحر ٹی وی

گالی ہی تہذیب ہے

- بی بی سی اردو