افغانستان کے صوبہ ہلمند میں برطانوی فوجی بھی تعینات+تصاویر

بچوں کا جنسی استحصال – علامات اور تحفظ

سعودی عرب کے ولی عہد بھی بغداد کا دورہ کریں گے

عراقی فوج کا امریکا پر اعتراض، داعش کی مدد کا ہوا انکشاف

خوف پر قابو پانے کا راستہ

ریاستی ادارے شیعہ ٹارگٹ کلنگ روکنے میں ناکام رہے، ڈی آئی خان کو فوج کے حوالے کیا جائے، علامہ سبطین سبزواری

کونسل آف امریکن مسلم ریلشنز سلفی۔دیوبندی تکفیریوں کے ہاتھوں تباہ ہونے والے مزارات کی تعمیر نو کے لئے چندہ مہم کب شروع کرے گی ؟

جرمنی میں تارکین وطن پر روزانہ اوسطاً 10 حملے ہوتے ہیں، رپورٹ

پاکستان سپر لیگ کا فائنل لاہور میں ہی ہوگا

فوجی عدالتوں کی توسیع: مولانا فضل الرحمان کوتکلیف کیوں؟

ایرانی سپاہ پاسداران کو بلیک لسٹ کرنا وائٹ ہاؤس کیلیے بڑا چیلنج

پی ایس ایل فائنل: کیا پاکستان دہشت گردوں کے سامنے گھٹنے ٹیک دے گا؟

شفقنا خصوصی: سہون دھماکہ اور وفاقی وزیر داخلہ کی پارسائی

ہم بھی پاکستان میں امن کے خواہاں ہیں

Holy Prophet (PBUH) Reveals Fatima’s Future to Her

سعودی عرب کے وزیر خارجہ کے عراق دورے کا سبب کیا تھا؟

آپریشن رد الفساد: موٹر وے پر پاک فوج کی چوکیاں قائم

ایرانی صدر حسن روحانی منگل کے دن پاکستان روانہ ہوں گے

پیرس امریکا نہیں جہاں لوگوں کو سرعام گولیاں مار دی جائیں، فرانس کا ٹرمپ کو کرارا جواب

پاکستانی سفیر کا افغان حکام کو پاک فوج کی کارروائی پر دو ٹوک جواب

صحافت زوال پذیر ہے!

دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کو عبرت کا نشان بنائیں گے: ایپکس کمیٹی پنجاب

حکمران دہشتگردوں کی ڈھکی چھپی اوراعلانیہ پشت پناہی کررہے ہیں، ردالنثار کیا جاتا تو آپریشن رد الفساد کی ضرورت ہی پیش نہ آتی: مولابخش چانڈیو

وزیراعظم نے پی ایس ایل کا فائنل لاہور میں کرانے کا گرین سگنل دیدیا

کیا 'محفوظ پناہ گاہیں' صرف افغانستان میں ہیں؟

رینجرز کے لیے پنجاب کیسے مختلف ہوگا؟

ڈاکٹر ولایتی کا ترک حکام کی جانب سے ایران مخالف بیانات پر رد عمل

شفقنا خصوصی: آپریشن رد الفساد اور آپریشن رد النثار

6th International Conference in support of the Palestinian Intifada

آپریشن ’’ردالفساد‘‘: کراچی سے افغان اور ازبک باشندوں سمیت 80 گرفتار

میں کیسا مسلمان ہوں بھائی

'امریکی صدر کو فرانس کے ساتھ ایسا نہیں کرنا چاہیے'

امیر جماعت اسلامی کی لعل شہباز قلندر کے مزار پر حاضری

دہشت گردی کی روک تھام

آپریشن ’’ردالفساد‘‘ کے تحت 4 دہشت گرد ہلاک: آئی ایس پی آر

یمنی فوج سے مقابلے کی، سعودیوں میں طاقت کہاں

 افغان اور ہندوستانی انٹیلجنس ایجنسیوں کا گٹھ جوڑ اور پاکستان میں‌قیامت صغرٰی

شفقنا خصوصی: کیا پاکستان سپر لیگ کا فائنل لاہور میں منعقد ہو سکتا ہے؟

ملک میں دہشتگردی کا خاتمہ ملک دشمن تکفیری دہشتگردوں سہولت کاروں کو بلاتاخیرسزائیں دیئے بغیر ممکن نہیں: علامہ مقصودڈومکی

پیپلز پارٹی سے اختلاف کی بنیادی وجہ ذوالفقار مرزا تھے: نبیل گبول

سعودی عرب میں پیسے کمانے کے لیے اچھا وقت گزر چکا

پاکستان میں افغانستان ،اسرائیل اور بھار ت کی خفیہ ایجنسیاں مقامی سہولت کارپیدا کررہی ہیں: ایمنسٹی انٹرنیشنل

آپریشن ردالفساد کے ساتھ ردالنثار بھی ہونا چاہیے

ایران جوہری معاہدے کی پاسداری کر رہا ہے: یو این واچ ڈاگ کی رپورٹ

داعش پاکستان میں اثرو رسوخ بڑھانے کی کوشش کر رہی ہے: ناصر درانی

آپریشن ’ردالفساد‘ اہم قدم ہے: چین

ملائیشیا نے پاکستان کو ویزا ختم کرنے کی پیشکش کر دی

سی پیک پر مغربی دنیا کی سازش نظر آ رہی ہے، وزیراعظم

  فلسطینیوں‌ کی پیٹھ میں چھرا: سعودیہ، خفیہ طور پر اسرائیل کے ساتھ تعاون کر رہا ہے

پاکستانی ریاست کے پاس انتہا پسندی کے خاتمے کا کوئی حل نہیں

 پاکستان کے سیاسی دہشت گرد : سیاسی قوتیں دہشت گردوں کو کیسے تحفظ فراہم کرتی ہیں؟

دہشت گردی بارے دیوبندی موقف

مختلف سلفی گروہ صوفیانہ اسلامی سوچ کے خلاف نفرت کو ہوا دے رہے ہیں: ڈاکٹر ہِپلر

عراقی فورسز نے داعش کو پسپا کرکے موصل ایئرپورٹ کا کنٹرول حاصل کرلیا

راحیل شریف پر کشمکش برقرار، کیا سعودی اتحاد کا حصہ بن گئے؟

آپریشن ردالفساد کااعلان عوامی خواہشات کی ترجمانی ہے: علامہ ناصر عباس جعفری

سی ٹی ڈی کا انتباہ: کیا سندھ سے زیادہ پنجاب داعش کے لیے زیادہ زرخیز سرزمین نہیں؟

شفقنا خصوصی: آپریشن ’رد الفساد‘ اور فساد کی اصل جڑ

لاہور میں دہشتگردی کا ایک اور واقعہ: ڈیفنس میں دھماکے سے 8 افراد جاں بحق، 30 زخمی

ترکی دنیا میں صحافیوں کا سب سے بڑا قیدخانہ

آصف زرداری کا ڈر اور دینی مدارس کا ٹائم بم

Prof. Jamal Wakim: US Seeks to Divert Muslim Nations from Palestinian Cause

’رد الفساد‘ سے فساد ختم نہیں ہوگا!

دہشت گردی کی شہ سرخیوں کے باجود پاکستانی معیشت عروج پر ہے: واشنگٹن پوسٹ

مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے ایران کا دورہ کیوں کیا؟

نئی امیگریشن پالیسی: لاکھوں امریکیوں کی ملک بدری کا خطرہ

پاک فوج کا ملک بھر میں ’’رد الفساد‘‘ آپریشن شروع کرنے کا اعلان

وہ دھماکہ کریں، تم کلچر کو پابند سلاسل

جمیعتِ علمائے اسلام (ف) کے صوبائی وفد کی سہون شریف آمد

یمنی افواج کا میزائل حملہ:  سعودیہ کا جدید ترین ڈیفنس پیٹریاٹ میزائل سسٹم ناکاراہ

اسرائیل کی نیندیں حرام: حزب اللہ نےجدید ترین اور اسٹریٹجک ہتھیار حاصل کرلئے

2015-12-22 07:15:17

افغانستان کے صوبہ ہلمند میں برطانوی فوجی بھی تعینات+تصاویر

151222045849_uk_troops_624x351_mod

شفقنا اردو: برطانیہ کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ برطانیہ کی ایک فوجی دستے کو افغانستان کے ہلمند صوبے میں تعینات کیا گیا ہے جہاں طالبان سگین شہر پر قبضے کے قریب ہیں۔ دوسری جانب افغان طالبان نے دعوی کیا ہے کہ انھوں نے جنوبی صوبے ہلمند کے ایک ضلع کو اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔ وزارت دفاع نے کہا ہے کہ ایک چھوٹے دستے کو ’مشاورتی کردار‘ میں ہلمند میں کیمپ شورابیک کے لیے روانہ کیا گيا ہے۔ وزارت دفاع نے کیا ہے کہ یہ ٹکڑی وسیع نیٹو ٹیم کا حصہ ہیں لیکن یہ لڑائی میں شرکت نہیں کرے گی۔  وزارت دفاع کی ایک ترجمان نے کہا ’یہ تعیناتی نیٹو کے ریزولیوٹ سپورٹ مشن میں برطانیوں تعاون کے طور پر کی جا رہی ہے۔ ’یہ فوجی وسیع نیٹو ٹیم کا حصہ ہیں جو افغان نیشنل آرمی کو صلاح و مشورے دے رہی ہیں۔ انھیں جنگ کرنے کے لیے تعینات نہیں کیا گیا ہے اور یہ کیمپ کے باہر تعینات نہیں رہیں گے۔‘ خیال رہے کہ برطانیہ نے گذشتہ سال افغانستان میں اپنا جنگی آپریشن ختم کر دیا تھا تاہم اس کے ساڑھے چار سو فوجی مانیٹرنگ اور سپورٹنگ کردار میں وہاں رہ گئے ہیں۔ دوسری جانب طالبان نے کہا ہے کہ شدید لڑائی کے مرکز سنگین پر اب ان کا قبضہ ہے۔ جبکہ ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ سنگین کا پولیس ہیڈکوارٹر ابھی بھی جنگجوؤں کے حصار میں ہے اور وہاں موجود فوجیوں کو کابل حکومت سے کوئی مدد نہیں مل پا رہی ہے۔ گذشتہ رات مشتبہ طالبان جنگجوؤں نے کابل کے مرکز میں تین راکٹ داغے۔ اس سے قبل طالبان نے کہا ہے کہ انھوں نے کابل کے باہر بگرام کے فوجی ہوائی اڈے پر حملہ کیا ہے جس میں ایک خودکش بمبار نے چھ امریکی فوجیوں کو ہلاک کر دیا ہے۔ وائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ وہ حملے کے باوجود افغان حکومت اور وہاں کے لوگوں کے لیے پابند عہد ہے۔ خیال رہے کہ یہ حالیہ مہینوں کے دوران ہونے والے شدید ترین حملوں میں سے ایک ہے۔ دوسری جانب ہلمند کے گورنر مرزا خان کا کہنا ہے کہ سنگین کا کنٹرول حکام کے پاس ہی ہے تاہم ان کے ایک نائب کے مطابق طالبان کا سنگین پر محاصرہ جاری ہے۔ بگرام کے اس فوجی اڈے میں نیٹو کی زیرِ قیادت بین الاقوامی اتحاد کے کم از کم 12,000 غیر ملکی فوجی تعینات ہیں۔ ہلمند کے گورنر مرزا خان کے نائب محمد جان رسول یار نے بین الاقوامی خبر رساں اداروں کو بتایا کہ طالبان نے اتوار کی رات گئے سنگین ضلع پر حملہ کیا۔ انھوں نے خبر رساں ادارے اے ایف کو بتایا ’طالبان نے سنگین میں واقع پولیس ہیڈ کوارٹر، گورنر کے دفتر کے علاوہ انٹیلیجنس کی عمارت پر قبضہ کر لیا ہے جبکہ ضلعے میں لڑائی جاری ہے۔‘ خبر رساں ادارے اے پی نے محمد جان رسول یار کے حوالے سے بتایا کہ سنگین میں جاری لڑائی میں افغان سکیورٹی افواج کو بہت نقصان پہنچا تاہم انھوں نے ان کی تعداد نہیں بتائی۔ دوسری جانب کابل میں حکومت کا کہنا ہے کہ سنگین میں مزید کمک بھیجی جا رہی ہے۔ افغانسان کی وزارتِ دفاع کے ترجمان دولت وزیر نے کہا ہے کہ طالبان کے جنگجوؤں میں پاکستان، ازبک، عرب، چین کے اوغر اور چیچن شامل ہیں۔ صوبے ہلمند کے پولیس کمانڈر محمد داؤد نے بی بی سی کو بتایا کہ طالبان نے سنگین کو بقیہ صوبے سے مکمل طور پر کاٹ دیا تھا جس کی وجہ سے وہاں خوراک اور اسلحے کی فراہمی متاثر ہو رہی تھی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم گذشتہ دو دنوں کے دوران پولیس ہیڈ کوارٹر میں گھرے ہوئے ہیں۔ محمد داؤد نے کہا کہ وہاں سے کوئی بھی باہر نہیں نکل سکتا تھا کیونکہ وہاں تمام راستے بند تھے۔ اس سے قبل ہلمند صوبے کے نائب گورنر محمد جان رسول یار نے فیس بک کے ذریعے ملک کے صدر اشرف غنی سے صوبہ ہلمند میں طالبان کے ساتھ جاری لڑائی میں مدد مانگی تھی۔ سماجی رابطوں کی سائٹ فیس بک پر محمد جان رسول یار نے صدر غنی کو اپنے پیغام میں لکھا کہ گذشتہ دو دنوں سے ہلمند میں ہونے والی لڑائی میں 90 فوجی مارے جا چکے ہیں۔ دریں اثنا ہلمند سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق طالبان کا کہنا ہے وہ ہلمند کے قریب ایک اور ضلعے پر قبضہ کرنے کے قریب پہنچ گئے ہیں۔ خبر رساں ادارے اے پی نے صوبے ہلمند کے صوبائی کونسل کے سربراہ محمد کریم کے حوالے سے بتایا ہے کہ ہلمند کا 65 فیصد علاقہ اب طالبان کے کنٹرول میں ہے۔ خیال رہے کہ حالیہ مہینوں میں طالبان جنگجوؤں نے ملک کے کئی علاقوں میں افغان فوج کے خلاف کارروائیاں کی ہیں جس کے باعث سکیورٹی فورسرز دباؤ کا شکار ہیں۔

151221085619_taliban_640x360_epa_nocredit 151221130723_helmand_sangeen_afghanistan_640x360_bbc_nocredit 151221203109__87325520_030657067-1 151222045849_uk_troops_624x351_mod

زمرہ جات:   Horizontal 1 ، تصاویر ، دنیا ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

Maarka 27 February 2017

- وقت نیوز

عنوان کے بغیر

- اسلام ٹائمز

یادوں کے جھروکے

- سحر ٹی وی

Ayena 27 February 2017

- وقت نیوز