سعودی عرب کی پالیسی میں بڑی تبدیلی کیوں آئی؟

کراچی عسکری پارک میں جھولا گر گیا بچی جاں بحق 9 افراد زخمی

عالمی کپ کی اختتامی تقریب، مشعل قطر کے سپرد

حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیھا کی ولادت باسعادت مبارک ہو

فرانس فٹبال کا نیا عالمی چیمپئن، کروشیا کو شکست

اسرائیل کا 2014 کے بعد غزہ پر سب سے بڑے حملے کا دعویٰ

یمن میں سامراج کی مخالفت کا قومی دن

اسکاٹ لینڈ: امریکی صدرکے خلاف مختلف اندازمیں احتجاج

کس قانون کے تحت کالعدم جماعتوں کو کلین چٹ دی ہے، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

’اعتزاز احسن کی آنکھ میں ککرے پڑگئے ہیں‘

صحت بخش اور توانائی سے بھرپور. . . سلاد

آمدنی اور اخراجات میں بہت فرق ہے، شمشاد اختر

سراج رئیسانی کا جنازہ ، آرمی چیف کوئٹہ پہنچ گئے

کریمینل ایڈمنسٹریشن آف جسٹس میں محکمہ پولیس کا کلیدی کردار ہے، قاضی خالد علی

ٹرمپ دورہ برطانیہ میں اپنے الفاظ سے پھر گئے

بھارتی فوج کا کنٹونمنٹ علاقے ختم کرنے پر غور

بلوچستان کے مختلف شہروں میں سیکیورٹی ہائی الرٹ

’لیگی قیادت نے نواز اور مریم کو دھوکا دیا‘

داعش نےسعودی چیک پوسٹ پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کیخلاف مقدمہ درج

آئرش پارلیمنٹ میں اسرائیلی اشیاء کی در آمدات پر پابندی کا بل منظور

’’حکومت بنا کر سب کو ایک پیج پر لاؤں گا ‘‘

ٹرمپ کے دورۂ برطانیہ پر احتجاج کا سلسلہ جاری

نواز،مریم اور صفدر کے پاس صرف ایک دن کی مہلت

یمن میں متحدہ عرب امارات کے اقدامات جنگی جرائم ہیں، ایمنسٹی انٹرنیشنل

سندھ میں رینجرز کےخصوصی اختیارات میں 90روز کی توسیع

آپ یہ پلے باندھ لیں

تحریک انصاف نے کوئٹہ جلسہ ملتوی کردیا

ترکی کا کمرشل اتاشی اسرائیل میں ترک سفار خانے میں واپس

فلسطینیوں کی حمایت میں واشنگٹن میں مظاہرہ

ایران ایک مضبوط ابھرتی ہوئی طاقت کا نام ہے،خطیب جمعہ تہران

چوہدری نثار نے اپنے دکھ کی وجہ بیان کر دی

اسامہ بن لادن کا سابق ذاتی محافظ جرمنی سے بے دخل

سعودی عرب خطے میں امریکہ اور اسرائیل کا سب سے بڑا اتحادی ملک ہے:سربراہ انصار اللہ

’’مجرم اعظم آگئے، 300ارب واپس کریں‘‘

امریکا کے گیس اسٹیشن پر لاکھوں پتنگوں نے ڈیرا ڈال لیا

اسحاق ڈار کےریڈ وارنٹ جاری

محمد وسیم کی ورلڈ فلائی ویٹ ٹائٹل فائٹ کل ہوگی

ٹوئٹر پرمشہور شخصیات کے فالوورز کم ہو گئے

دبئی:ریسٹورنٹ میں کھانا سرو کرتا روبوٹ

نواز شریف نے اڈیالہ جیل میں پہلے دن ناشتے میں کیا کھایا؟

گزین مری 23 سال بعد آبائی علاقے پہنچ گئے

قیدیوں نے اپنے حق کے لیے درخواست جمع کروادی

ہم نے قانونی جنگ لڑ کر جیتی ہے، شاہ محمود قریشی

ن لیگیوں کیلئے اطمینان بخش خبر

مستونگ انتخابی جلسہ دھماکا، یورپی یونین، سعودی عرب کی مذمت

نواز شریف اور مریم نواز اڈیالہ جیل منتقل

امریکا تجارتی میدان کا غنڈہ اور بلیک میلر ہے، چین

ہم عراق میں نیٹو افواج کی موجودگی کے خلاف ہیں: عصائب اہل الحق

اربیل شہر میں نیا امریکی قونصل خانہ پورے علاقے کیلئے خطرہ ہے: عراقی سیاستدان

داعش سے نمٹنے کے لیے چین، پاکستان، روس، ایران کا مشترکہ اجلاس

یمنی فورسز نے سعودی عرب کے 34 فوجیوں کو ہلاک کر دیا

نواز شریف کا پوتا اور نواسہ رہا

’’انتخابات میں فتح کا مکمل یقین ہے‘‘

ٹرمپ نے نیٹو سے نکلنے کی دھمکی دے دی

آئرلینڈ کے ایوان بالا نے اسرائیلی منصوعات کی درآمدات پر پابندی عائد کرنے کی تجویز کی حمایت کا اعلان کردیا

منی لانڈرنگ کی رقم کا بڑا حصہ اویس مظفر ٹپی کے اکائونٹ میں چلا گیا

مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کی نظربندی کے احکامات جاری

مصرکےقاہرہ ایئرپورٹ کے قریب دھماکا، پروازیں معطل

یوم شہداء پر مقبوضہ کشمیر میں آج مکمل ہڑتال

سپریم کورٹ نے شاہد خاقان کو الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی

چین کے کیمیکل پلانٹ میں دھماکا، 19 افراد ہلاک

نواز، مریم واپسی، لاہور میں میٹرو بس سروس معطل

آرمی چیف نے 12دہشتگردوں کی سزائے موت کی توثیق کردی

’’دھماکے میں محفوظ رہا، گاڑی تباہ ہوگئی‘‘

عمران کا سیاسی کارکنوں کو گدھا کہنا قابل مذمت ہے، مریم اورنگزیب

کوئٹہ:ایم ڈبلیو ایم کیجانب سے علمدارروڈ جلسہ عام کا انعقاد

زمبابوے کا ٹاس جیت کر پاکستان کو بیٹنگ کی دعوت

بنوں، جے یو آئی ف کے قافلے پر بم حملہ،4 افراد شہید

نواز شریف کی واپسی: ’یہ قربانی پاکستان کے مستقبل کے لیے دے رہا ہوں‘

زرداری کیخلاف کارروائی روک دی گئی،فریال اور آصف ملزم نہیں،نام ای سی ایل میں ڈالے نہ طلب کیا،ایف آئی اے الیکشن تک نہ بلائے،سپریم کورٹ

2016-05-16 23:16:39

سعودی عرب کی پالیسی میں بڑی تبدیلی کیوں آئی؟

20150429Salmanبہار عربی کی تبدیلیوں سے پہلے تک سعودی عرب  روایتی طریقے سے بہت ہی محتاط اور پرامن خارجہ پالیسی اختیار کئے ہوئے تھا اور وہ کھلے ٹکراو اور تصادم سے گریز کرتا تھا اور حالات سے حساب سے بدل جاتا تھا لیکن 2011 میں عرب تحریکوں کے سبب سعودی عرب اپنے پرامن اور چین و سکون کے خول سے باہر نکل گیا۔  اس طرح سے سعودی عرب کی خارجہ پالیسی کی ماہیت اور لہجے میں اساسی تبدیل رونما ہوگئی اور وہ زیادہ گستاخ ہوگئیں۔ گرچہ بہت ہی کم سعودی تجزیہ نگاروں کا یہ کہنا ہے کہ یہ تبدیلی، اعتماد بہ نفس میں اضافے کا سبب بنتی ہے لیکن اصل ماجرا یہ ہے کہ یہ گستاخی، نقصانات کے احساس سے برآمد ہوئی ہے۔

در حقیقیت سعودی عرب میں خطرے کا احساس 2011 کی تحریکوں سے قبل ہی پیدا ہو گیا تھا اور عراق پر امریکا کے حملے کے بعد علاقے میں طاقت کے توازن کے احساس نے یہ کام شروع کرنے پر مجبور کر دیا۔ حالیہ عشروں کے دوران، شامات کے علاقے پر سعودی عرب کے اثر و رسوخ کے فقدان کا پوری طرح احساس کیا جا سکتا تھا اور اس کی خارجہ پالیسی عراق، شام اور حزب اللہ اور حماس کے بارے میں ایران سے پوری طرح متضاد تھی۔

عراق کی حمایت، شام کے ساتھ اتحاد قائم کرنا اور حزب اللہ اور حماس کی حمایت، ایران کی خارجہ پالیسی میں ترجیحات میں ہے۔ سعودی عرب نے علاقے میں ایران کی طاقت کا مقابلہ کرنے کے لئے مصر اور اردن جیسے دوست ممالک کے ساتھ اتحاد کو مزید مضبوط کر لیا اور اپنی خام خیالی میں ہلال شیعی کے مقابلے میں محور سنی قائم کر لیا۔

2011 کی نا امنی نے ریاض کا پوری طرح محاصرہ کر لیا اس طرح سے کہ مشرق سے بحرین میں بغاوت، جنوب سے یمن، مغرب سے شام اور شمال سے عراق میں جاری مسلسل ناامنی کی وجہ سے سعودی حکام خوف زدہ ہوگئے خاص طور پر ملک کے مشرقی علاقوں میں حکومت مخالف شیعہ اقلیت کی تحریک نے آل سعود کی نیندیں حرام کر دیں۔ اس کے بعد سے سعودی عرب نے سفارتی، ذرائع ابلاغ اور تمام حربوں کا استعمال بحرین، یمن اور شام میں کیا۔  سعودی عرب نے علاقے میں اپنی سربراہی اور قیادت کو مضبوط کرنے کی کوشش کی لیکن اس کی کوششوں کو شدید دھچکا اس وقت لگا جب وہ خلیج فارس تعاون کونسل کے ارکان کو ایک پلیٹ فارم پر لانے میں ناکام ہو گیا۔

 2011 میں خلیج فارس کے ممالک کو متحد کرنے اور واشنگٹن  کی حمایت کے باوجود خلیج فارس کی فوجی توانائی کو زیادہ متحد کرنے کا سعودی عرب کا منصوبہ ناکام ہو گیا ۔ ایران اور عرب تحریکوں کے بارے میں خلیج فارس کے ساحلی ممالک کے درمیان ہونے والا معاہدہ پائدار نہیں تھا اور یہ سیاسی اختلافات، لیبیا کے بارے میں قطر اور امارات،  مصر اور اخوان المسلمین کے درمیان دشمنی کا سبب بن گئے اور انھیں اختلافات کے سبب قطر اور سعودی عرب کا تصادم شام میں ہو گیا۔

 در ایں اثنا شاہ سلمان کی قیادت میں سعودی عرب نے شطرنج کی اپنی چال بدل دی اور سعودی عرب کی بادشاہی کو ایران کے  خلاف اقدامات پر مرکوز کر دیا۔ اسی کے ساتھ اس نے داعش کے خطرے سے مقابلے کے لئے قابل توجہ حمایت بھی حاصل کر لی۔ سعودی عرب نے اسی طرح نام نہاد اسلامی ممالک کے اتحاد کی تشکیل کا نعرہ دیا جس میں عمان کو چھوڑ کر اردن، مغرب، مصر، سوڈان جیسے ممالک نے اس کا ساتھ دیا۔ سعودی عرب نے پاکستان کو بھی اپنے ساتھ لانے اور علاقائی مسائل میں اسے بھی الجھانے کی کوشش کی تاہم وہ اس حد تک کامیاب نہ ہو سکا۔

بہرحال سعودی عرب اپنے  مفاد کی حفاظت کے لئے اپنے مالی اور فوجی وسائل کا جم کر استعمال کر رہا ہے۔ سعودی عرب نے علاقے میں اپنی پوزیشن کو مضبوط کرنے کو اپنی ترجیحات قرار دیا ہے تاکہ علاقے کی خطرناک صورتحال سے مقابلہ کر سکے۔ سعودی عرب علاقے کے حالات سے جیسا فائدہ اٹھانا چاہتا تھا وہ نہیں اٹھا سکا اور اس سے اس کی خارجہ پالیسی پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ 

زمرہ جات:   Horizontal 4 ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

“پاکستان کا سپاہی”

- ایکسپریس نیوز

بت سرنگوں ہوں گے

- ایکسپریس نیوز

احتساب، مگر سب کا

- ایکسپریس نیوز

الیکشن ہنگامے

- ایکسپریس نیوز

بلور جیسے چمکنے والے

- ایکسپریس نیوز

بت سرنگوں ہوں گے

- ایکسپریس نیوز

احتساب، مگر سب کا

- ایکسپریس نیوز

دنیا 100 سیکنڈ میں

- سحر ٹی وی