پاکستان سے منی لانڈرنگ

کس قسم کے طرز زندگی نےحضرت خدیجہ(س) کو ام المومنین بنا دیا تھا؟

قطر کا بحران حل ہونے کی فی الحال کوئی امید نہیں

پاکستان نے فاٹا انضمام پر افغانستان کے اعتراضات مسترد کردیے

کلبھوشن کی تعیناتی بدترین غلطی تھی، امرجیت دلت

مسئلہ فلسطین اور او آئی سی کا کردار

سعودی ولی عہد کے زخمی ہونے کی خبر صحیح ہے، سابق ولی عہد

رمضان المبارک کے گیارہویں دن کی دعا

تکفیری فاشزم ، مفہوم ، اصطلاح اور رد – عامر حسینی

رمضان المبارک کے دسویں دن کی دعا

2018 کے عام انتخابات 25 جولائی کو ہوں گے، صدر مملکت نے منظوری دیدی

روہنگیا مسلمانوں کو مدد کی ضرورت ہے، پری یانکا چوپڑا

کیا شکیل آفریدی کو فضل اللہ کے عوض پاکستان امریکہ کے حوالے کر دے گا؟

نوازشریف نے خطرے کی گھنٹی بجا دی

ایران ایٹمی معاہدے پر مکمل طور پر کار بندہے، آئی اے ای اے

چین پاکستان کے لئے دو سٹیلائٹس خلا میں بھیجے گا

امام کاظم (ع) کا حلال لذتوں کے بارے میں انتباہ

رمضان المبارک، مہمانی اور اللہ کی کرامات سےاستفادہ کا مہینہ ہے

انتخابات 2018: کیا نوجوان سیاسی منظرنامے کی تبدیلی میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں؟

واٹس ایپ کا نیا خطرناک بگ: اپنے موبائل کو محفوظ کیسے بنا سکتے ہیں؟

میرا بیان ہی میرابیانیہ ہے

کیا پاکستان امریکہ مخالف اقدامات میں ایران اور شمالی کوریا کو پیچھے چھوڑ دے گا؟

رمضان المبارک کے نویں دن کی دعا

فخر ہے ایک منی لانڈرر وزیراعظم کو ہٹانے میں ہم کامیاب ہوئے، عمران خان

امریکی صدر نے شمالی کوریا کے رہنما سے ملاقات منسوخ کردی

سعودی عرب اور ایتھوپیا کے تعلقات میں کشیدگی

شعیب میر : ایک جیالا خلاق فطرت نہ رہا – عامر حسینی

امریکا کا پاکستان میں اپنے سفارتکاروں سے برے سلوک کا واویلا

فوج مخالف بیانیے سے دھمکیوں تک: نواز شریف کی مریم کے خلاف مقدمات پر سخت تنبیہہ

سعودی کفیلوں کی جنسی درندگی: بنگلہ دیشی خاتون ملازمہ کی دلدوز کہانی

جنرل زبیر کی اسرائیل کو دھمکی کے پس پردہ محرکات :امریکہ نے اسرائیل کو پاکستان کے ایٹمی اثاثوں پر حملے کا گرین سگنل دیدیا

رمضان المبارک کے آٹھویں دن کی دعا

ادارہ جاتی کشمکش اور نواز شریف کا بیانیہ: کیا فوج مشکل میں گھر گئی ہے؟

ماہ رمضان کی دعاوں کا انتظار کے ساتھ ارتباط

امریکی حکام انتہا پسندانہ سوچ کے حامل ہیں، ایرانی صدر

پاکستان میں 35 لاکھ افراد بے روزگار ہیں، رپورٹ

نوازشریف کا مقصد صرف اپنی جائیداد بچانا ہے: فواد چوہدری

ایران ایٹمی معاہدے سے پہلے والی صورت حال پر واپسی کے لیے تیار

محمد بن سلمان کو آل سعود خاندان میں نفرت اور دشمنی کا سامنا

اسرائیل کو صفحہ ہستی سے مٹانے کے لیے پاکستان کو صرف12 منٹ درکار ہیں: جنرل زبیر حیات

روزہ رکھنے والے مسلمان معاشرے کیلیے سیکیورٹی رسک ہیں، ڈنمارک کی وزیر کی ہرزہ سرائی

سعودی حکومت کے خلاف بغاوت کی اپیل: کیا آل سعود کی بادشاہت کے خاتمے کا وقت آن پہنچا؟

انٹیلی جینس بیورو (آئی بی) کے خفیہ راز

’سعودی عرب عراق کو میدان جنگ بنانے سے احتراز کرے‘

رمضان المبارک کے ساتویں دن کی دعا

نگراں وزیراعظم کیلیے وزیراعظم اور قائد حزب اختلاف میں ڈیڈلاک برقرار

کیا نواز شریف کی جارحیت تبدیلی لا سکتی ہے؟

کیا لشکر جھنگوی تحریک طالبان کی جگہ سنبھال چکی ہے؟

جوہری ہتھیاروں سے لیس ممالک دنیا کو دھمکا رہے ہیں

مجھے کیوں نکالا: نواز شریف کے احتساب عدالت میں اہم ترین انکشافات

بغداد میں العامری کی مقتدی الصدر سے ملاقات، حکومت کی تشکیل پر تبادلہ خیال

دہشت گردوں کے مکمل خاتمے تک شام میں ہی رہیں گے، ایران

رمضان المبارک کے چھٹے دن کی دعا

ایران نے رویہ تبدیل نہ کیا تو اسے کچل دیا جائے گا، امریکی وزیرخارجہ کی دھمکی

کیا بغدادی انتقام کی کوئی نئی اسکیم تیار کر رہا ہے؟

بحرین میں خاندانی آمریت کے خلاف مظاہرے

ماہ رمضان میں امام زمانہ(ع) کی رضایت جلب کرنےکا راستہ

ایم آئی، آئی ایس آئی کا جے آئی ٹی کا حصہ بننا نامناسب تھا، نوازشریف

فضل الرحمان کی فصلی سیاست: فاٹا انضمام کا بہانا اور حکومت سے علیحدگی

مذہبی جذباتیت کا عنصر اور انتخابات

مادے کا ہم زاد اینٹی میٹر کیا ہوا؟

ایرانی جوہری ڈیل سے امریکی علیحدگی، افغان معیشت متاثر ہو گی

امریکہ ایرانی قوم کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور نہیں کرسکتا

رمضان المبارک کے پانچویں دن کی دعا

ماہ مقدس رمضان میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ اور ناجائز منافع خوری نے عوام کو عذاب میں مبتلا کررکھا ہے: علامہ مختار امامی

کیا سویلین-ملٹری تعلقات میں عدم توازن دکھانے سے جمہوری نظام خطرے میں پڑگیا؟ – عامر حسینی

روزے کا ایک اہم ترین فائدہ حکمت ہے

نگراں وزیراعظم پر حکومت اور اپوزیشن میں اتفاق ہوگیا، ذرائع

موٹروے نہیں قوم بنانا اصل کامیابی ہے: عمران خان

ایک چشم کشا تحریر: عورتوں کو جہاد کے ليے کيسے تيار کيا جاتا ہے؟

روزہ خوروں کی نشانیاں: طنزو مزاح

2017-03-05 11:47:24

پاکستان سے منی لانڈرنگ

jامریکی حکومت کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان کا صرف ایک گروپ ہر سال اربوں ڈالر منی لانڈرنگ کے ذریعے ملک سے باہر بھجواتا ہے۔ یہ دولت اسمگلنگ ، کرپشن اور دیگر غیر قانونی دھندوں سے حاصل کی جاتی ہے جنہیں ملک کے سیاسی حکمرانوں کی سرپرستی حاصل ہوتی ہے۔ منشیات کی روک تھام کیلئے امریکی ادارے نے دنیا بھر میں ناجائز طریقے سے دولت کو منتقل کرنے اور اس حوالے سے منظم جرائم پیشہ گروہوں اور دہشت گرد گروپوں کے ملوث ہونے کے بارے میں تفصیلی رپورٹ امریکی کانگریس کو پیش کی ہے۔ اس رپورٹ میں ایک پورا باب پاکستان میں کالے دھن کے کاروبار سے متعلق ہے۔ رپورٹ کے مطابق الطاف خانانی گروہ کا سربراہ اگرچہ امریکہ میں گرفتار ہے لیکن یہ گروپ بدستور غیر قانونی دھندے میں مصروف ہے۔
 
یہ سنسنی خیز معلومات پاکستانی اخبارات میں شائع ہونے کے باوجود حکومت یا اس کے اداروں کی طرف سے کسی ردعمل کا اظہار سامنے نہیں آیا ہے۔ حالانکہ اصولی طور پر تو حکومت کو خود ملک میں غیر قانونی کاروبار اور ناجاز دولت کے بارے میں اقدامات کرنے چاہئیں۔ لیکن بیرون ملک سے اس بارے میں معلومات سامنے آنے کے بعد بھی کوئی خاص ردعمل سامنے نہیں آیا۔ حالانکہ اس حکومت کے وزیر خزانہ یہ دعوے کرتے نہیں تھکتے کہ وہ ملک میں ٹیکس نیٹ کو بڑھا کر حکومت کی آمدنی میں اضافہ کرنا چاہتے ہیں۔ وزیراعظم بھی گاہے بگاہے خود انحصاری کے حوالے سے باتیں کرتے ہیں لیکن ملک کے رہنما یہ بتانے سے قاصر ہیں کہ ملک میں وسیع پیمانے پر کالے دھن کا کاروبار ہونے اور کثیر رقوم بیرون ملک روانہ کرنے کی صورت میں کس طرح ملک کی معیشت خود کفالت کی طرف بڑھ سکتی ہے۔
 
کالے دھن اور ناجائز کاروبار کا سب سے بھیانک پہلو یہ ہے کہ اس کے ذریعے ملک میں متحرک دہشت گرد گروہوں کو وسائل حاصل ہوتے ہیں۔ قومی ایکشن پلان کے تحت دہشت گردوں کو ملنے والے مالی وسائل کی روک تھام کیلئے کرپشن کا خاتمہ کرنے کے اقدامات کا عزم کیا گیا تھا۔ سابق آرمی چیف جنرل (ر) راحیل شریف نے متعدد بار یہ قصد کیا تھا کہ وہ کرپشن اور دہشت گردوں کے وسائل کا گٹھ جوڑ توڑ کر دم لیں گے۔ بدقسمتی سے ان کے عہدے کی مدت ختم ہو گئی لیکن کرپشن اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے خلاف قابل ذکر کامیابی دیکھنے میں نہیں آئی۔ یہ بات تسلیم کی جاتی ہے کہ کرپشن اور دہشت گردوں کو ملنے والے وسائل کا گہرا رشتہ ہے۔ اور کرپشن کی سرپرستی ملک کے سیاستدان کرتے ہیں جو کسی نہ کسی طریقہ سے خود کو بچانے میں کامیاب ہو رہے ہیں۔
 
امریکی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان کی معیشت کا وسیع حصہ کالے کاروبار پر مشتمل ہے۔ اس میں اسمگلنگ، دھوکہ دہی، فراڈ ، کرپشن ، جعلی اشیا کی فروخت جیسے ہتھکنڈوں سے حاصل شدہ وسائل کو معیشت کا حصہ بنا لیا گیا ہے۔ ان وسائل کو الطاف خانانی جیسے گروپوں کے ذریعے متحدہ عرب امارات ، امریکہ ، برطانیہ، آسٹریلیا اور دیگر ملکوں کو منتقل کیا جاتا ہے۔ اس مقصد کیلئے جعلی کمپنیوں کا قیام ، رسیدوں اور بلوں کا اجرا یا املاک میں سرمایہ کاری کالے دھن کو چھپانے اور ادھر سے ادھر کرنے کے موثر ترین ذریعے ہیں۔ رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ ملک میں رئیل اسٹیٹ کا کاروبار زیادہ تر نقد رقوم کے تبادلے کی صورت میں ہوتا ہے اور اس بزنس میں دستاویزی کنٹرول کی بھی شدید کمی ہے۔ اس طرح ناجائز دولت کمانے والے اور اس کو منی لانڈرنگ کے ذریعے منتقل کرنے کا کاروبار کرنے والوں کو اس شعبہ سے بہت مدد ملتی ہے۔
 
اس امریکی رپورٹ میں یہ تسلیم کیا گیا ہے کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی عام طور سے بینکوں کے ذریعے
قانونی طریقے سے رقوم پاکستان بھیجتے ہیں۔ انہوں نے 2016 میں 19.7 ارب ڈالر پاکستان بھیجے تھے۔ اس کے علاوہ یہ لوگ ہنڈی اور حوالہ کا استعمال بھی کرتے ہیں لیکن ان ذرائع کو دولت کا ناجائز کاروبار کرنے والے لوگ زیادہ استعمال میں لاتے ہیں۔ الطاف خانانی جیسے گروہ پیچیدہ مالی انتظامات کے تحت ناجائز دولت کو چھپانے اور قانونی کرنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔ یہ بات شدید تشویش کا سبب ہونی چاہئے کہ یہ اربوں ڈالر پاکستانی عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈال کر حاصل کئے جاتے ہیں اور پھر انہیں ملکی معیشت سے غائب کر دیا جاتا ہے۔ اس طرح ملک اور اس کے عوام دونوں خسارے میں رہتے ہیں۔ تاہم اس ناجائز کاروبار کو کنٹرول کرنے والے ادارے اپنی نااہلی ، بدنظمی یا سیاسی تائید نہ ہونے کی وجہ سے کوئی اقدام کرنے سے قاصر رہتے ہیں۔
 
ملک میں پاناما لیکس کے ہنگامہ میں عوام میں سیاستدانوں اور حکمرانوں کے وسائل اور غیر قانونی دھندوں کے بارے میں شدید شبہات موجود ہیں۔ اس کے علاوہ غیر قانونی دھندے کے بارے میں شواہد اور معلومات بھی سامنے آ رہی ہیں۔ حکومت کا فرض ہے کہ ان معلومات کا سختی سے نوٹس لے اور ملک کے وسائل سے عوام کو محروم کرنے والے عناصر کا سراغ لگائے۔ یہ کام جس قدر جلد شروع ہوگا، اتنا ہی ملک اور اس کے حکمرانوں کےلئے بہتر ہو گا۔ ورنہ بداعتمادی کی خلیج کسی نئے بحران کو جنم دے سکتی ہے۔
 
تحریر: سید مجاہد علی

 

زمرہ جات:   Horizontal 3 ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

عنوان کے بغیر

- اسلام ٹائمز