ایم کیو ایم العالمی سے ایم کیو ایم الزمینی

صحافی کے قتل کے خلاف بھارتی کشمیر میں ہڑتال، مظاہرے

زعیم قادری کیا شریف خاندان کے بوٹ پولش کر پائیں گے ؟

کیا عدالت فوج کے خلاف اقدام اٹھائے گی؟

کیا نواز شریف اور مریم نواز کا نام ای سی ایل میں شامل ہوگا ؟

’کراچی والوں کی جان ٹینکر مافیا سے چھڑائیں گے‘

پاکستان کے یہودی ووٹر کہاں گئے؟

پاکستان کی خاندانی سیاسی بادشاہتیں

لہسن کے یہ حیران کن فوائد جانتے ہیں؟

یاہو‘ نے اپنی انسٹنٹ میسیج سروس ایپلی کیشن ’یاہو‘ میسینجر کو بند کرنے کا اعلان کردیا

انفیکشن کی بروقت شناخت سے دنیا بھرمیں ہزاروں لاکھوں جانیں بچائی جاسکتی ہیں

سفید سرکے کے کئی فوائد ہیں، اس طرح سیب کے سرکے کے بھی متعدد طبی فوائد ہیں

یمن تا فلسطین، دشمن ایک ہی ہے

کیا افغان سیکیورٹی اہلکار طالبان کو کنٹرول کر سکے گے ؟

ٹویٹر کیا ایسا کر پائے گا ؟

پاکستان میں سمندری پانی کیا قابل استعمال ہوگا ؟

عمران خان، آصف زرداری اور مریم نواز کے اثاثوں کی تفصیلات منظر عام پر آ گئیں

فٹبال ورلڈ کپ کے شوروغل میں دبی یمنی بچوں کی چیخیں

رپورٹ | یمن کی تازہ صورتحال ۔۔۔ یہاں سب بکنے لگا ہے !!!

دہشتگرد کالعدم جماعتوں کو الیکشن لڑنے کی اجازت دینے کی بجائے قانون کے شکنجے میں کسنے کی ضرورت ہے، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

انڈونیشیا کی جھیل میں کشتی الٹنے سے 200 افراد ہلاک

بلوچستان: سی ٹی ڈی آپریشن،خاتون سمیت 4 دہشت گرد ہلاک

ہائیڈرو گرافی کا عالمی دن ، پاک بحریہ کے سر براہ کا پیغام

امریکہ کے شکست قریب ہے؟

شیخ علی سلمان پر مقدمہ، غیر سرکاری تنظیموں کا احتجاج

عمران، شاہد خاقان، گلالئی،فہمیدہ مرزا، فاروق ستار، لدھیانوی، مشرف کے کاغذات مسترد

ایران نے امریکی صدر سے بات چیت کا امکان مسترد کر دیا

راہ حق پارٹی، جے یو آئی (ف) کے آشرباد سے کالعدم جماعتوں کا سیاسی پلٹ فارم

لندن کی سڑکوں پر بھاگتا پاکستانی سیاست دان

بن زاید کی اسرائیلی عہدے داروں سے ملاقات ؟

انتخابات 2018: الیکشن کمیشن نے ساڑھے تین لاکھ فوجی اہلکاروں کی خدمات مانگ لیں

علماء یمن نے بڑا کردیا

چوہدری نثار تھپڑ مار کیوں نہیں دیتے؟

ٹرمپ بھیڑیا ہے

ٹرمپ نے بوکھلاہٹ میں شمالی کورین جنرل سے مصافحہ کے بجائے سلیوٹ کر ڈالا

الیکشن کمیشن پاکستان راہ حق پارٹی کی رجسٹریشن منسوخ کرے

اسرائیلی فوج نے اپنا الحاج شیخ الاسلام متعارف کرادیا – عامر حسینی

این اے 53 سے عمران خان کے کاغذات نامزدگی مسترد

الحدیدہ۔۔۔اب میڈیا خاموش کیوں ہے!؟

کیا احد چیمہ شہباز شریف کے لیے خطرے کی گھنٹٰی ہے؟

فضل اللہ کی ہلاکت کے بعد امریکا پاکستان سے کیا مطالبہ کرے گا؟

یمن میں پاکستانی لاشیں کیا کر رہی ہیں؟

جدید تر ہوتی جوہری ہتھیار سازی: آرمجدون زیادہ دور نہیں

نواز شریف اور ان کی بیٹی کا کردار سامنے لانا چاہتا ہوں، چوہدری نثار

مسلم لیگ نواز اور نادرا چئیرمین کے مبینہ ساز باز کی کہانی

آنیوالے انتخابات میں کسی مخصوص امیدوار کی حمایت نہیں کرتے، علامہ عابد حسینی

امریکی مرضی سے ملی حکومت پر لعنت بھیجتا ہوں، سراج الحق

افتخار چوہدری عدلیہ کے نام پر دھبہ ہیں، فواد چوہدری

کاغذات نامزدگی پر اعتراضات جھوٹے، من گھڑت اور صرف الزامات ہیں، عمران خان

نادرا ووٹرز کی معلومات افشا کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرے، الیکشن کمیشن

افغانستان میں جنگ بندی: ’ملا اشرف غنی زندہ باد‘

پشاور سے کالعدم ٹی ٹی پی کا انتہائی مطلوب کمانڈر گرفتار

جرمنی کی آسٹریا میں جاسوسی کا گھمبیر ہوتا معاملہ

کیا جرمنی نے آسٹریا میں جاسوسی کی؟

عورت چراغ خانہ ہے، شمع محفل نہیں!

کلثوم نواز کی حالت تشویشناک، نوازشریف اور مریم نواز کی وطن واپسی مؤخر

سانحہ ماڈل ٹاؤن کو چار سال گزر گئے لیکن ملزم آزاد ہیں، طاہر القادری

امریکی دباؤ کے باوجود ایران کیساتھ باہمی تعاون کو جاری رہیں گے: چین

انتخابات میں مخالفین کو عبرت ناک شکست دیں گے، آصف علی زرداری

آپ کی مدد کا شکریہ عمران خان، اب آپ جاسکتے ہیں!

کالعدم ٹی ٹی پی کا نیا امیر کون؟

امریکا کا چین کے خلاف بھی تجارتی جنگ کا اعلان

افغان صوبے ننگرہار میں خودکش دھماکا، 25 افراد ہلاک

عید الفطر 1439 ھ علامہ سید ساجد علی نقوی کا پیغام

انتخابات میں حصہ لینے کے خواہش مند 122 امیدوار دہری شہریت کے حامل نکلے

امریکا کے خلاف یورپ کا جوابی اقدام

سعودی عرب کا ذلت آمیز شکست کے بعد کھلاڑیوں کو سزا دینے کا اعلان

مُلا فضل اللہ کی ہلاکت، پاکستان اور خطے کے لیے ’اہم پيش رفت‘

’’رَبِّ النُّوْرِ الْعَظِیْم‘‘ کے بارے میں جبرئیل کی پیغمبر اکرمﷺ کو بشارت

پاکستان میں عید الفطر مذہبی جوش وجذبے کے ساتھ منائی جائے گی

یورپ میں بڑھتی مسلم نفرت اور اس کا حل

2017-11-12 04:45:50

ایم کیو ایم العالمی سے ایم کیو ایم الزمینی

mqm pak

بات یہ ہے کہ ایم کیو ایم کے مختلف دھڑوں کی حالیہ سیاست، سیاست سے کہیں زیادہ اُس سلسلہ وار کہانی کی شکل اختیار کرچکی ہے جس میں بیک وقت جذباتیت، سطحیت، مزاح، حماقت، یوٹرن اور نجانے کیا کیا شامل ہوچکا۔

پاکستان بنانے والے پڑھے لکھے مہاجروں کی نئی نسل کی سیاست دیکھ کر اب بہت افسوس ہوتا ہے کہ کیا تھے، کیا ہوگئے۔

گزشتہ تین چار روز میں ہونے والی تبدیلیوں کے بابت کراچی کے صحافتی حلقوں میں پہلے سے ہی بات ہورہی تھی کہ اب پاکستان میں موجود ایم کیو ایم کے مختلف دھڑے، چاہے وہ پاکستان کے نام سے ہوں، پاک سرزمین پارٹی یا دبئی میں بیٹھے سابق گورنر ڈاکٹر عشرت العباد، سب کو ایک ہی منزل کا راہی بن جانا ہے۔

بدھ کی سہ پہر جب مختلف نشریاتی اداروں کی اسکرینز پر سرخ پٹیاں چلنے لگیں کہ فاروق ستار نے اہم پریس کانفرنس بلُا لی ہے تو پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا کے صحافیوں کا جمِ غفیر پلک جھپکتے پریس کلب پہنچ گیا جہاں فاروق ستار اور مصطفیٰ کمال نے ایک اور تاریخی پریس کانفرنس کرنی تھی۔

دھماکہ خیز پریس کانفرنسوں کا طویل تجربہ پیپلزپارٹی کے سابق رہنماء ذوالفقار مرزا بھی رکھتے ہیں، خیر۔

متحدہ و پی ایس پی کی مشترکہ پریس کانفرنس سے ایک ہی بات سمجھ آئی کہ جو کچھ ہوا بہت تیزی اور کچھ بھونڈے انداز سے ہوا ہے، جلد بازی کا عنصر بتارہا تھا کہ دیگ وقت سے پہلے ہی اتر گئی اور بہت سے دانے کچے رہ گئے ہیں، یہی وجہ تھی کہ پریس کانفرنس میں بیک وقت اتحاد و انضمام کی بات ہوئی اور پھر یہی بات اس قدر آگے بڑھی کہ فاروق ستار جیسے صلح جو لیڈر نے اپنے بانی و قائد کی روش پر چلتے ہوئے سیاست و پارٹی قیادت سے الگ ہونے کا چند گھنٹوں کا فیصلہ کرلیا۔

ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ان کی غیر موجودگی میں ہوا اور اجلاس کے بعد پریس کانفرنس میں بتایا گیا کہ یہ سیاسی اتحاد ہے نہ کہ انضمام۔

شاید یہی بات فاروق ستار سیدھا دل پر لے گئے اور پارٹی سے روٹھ کر اپنے گھر چلے گئے، بعدازاں رابطہ کمیٹی ان کی رہائش گاہ پہنچیں اور بقول فاروق ستار کہ ان کی والدہ کے پیر پکڑ کر متحدہ پاکستان کی قیادت نے انہیں دوبارہ سیاست میں حصہ لینے پر مجبور کیا۔

کہانی کا یہ جذباتی لمحہ بھی مکمل ہوا اور دو دن پہلے پاک سرزمین پارٹی کے ساتھ ایک منشور و نشان کے تحت الیکشن لڑنے کا اعلان کرنے والے فاروق ستار نے نوید دی کہ ایم کیو ایم کا نام و نشان برقرار رہے گا، اب موجودہ صورتحال کب تک رہتی یہ الگ معاملہ ہے۔

پاکستان تحریک انصاف نے ایم کیو ایم و پی ایس پی کے اشتراک کو مسترد کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ یہ بے جوڑ نکاح دراصل ڈرامہ بازی اور جہیز کو لوٹنے کی ایک کوشش ہے، جسے تسلیم نہیں کرتے۔

پاکستان کے دیگر شہروں میں بسنے والے لوگوں اور بالخصوص سیاسی کارکنوں میں یہ سوال زیرِ بحث ہے کہ مہاجر سیاست کا یہ اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا اور 2018 کے عام انتخابات میں کس جماعت کو اپنی نمائندگی سونپے گا؟

سچی بات تو یہی ہے کہ اردو بولنے والوں کی اکثریت کا ووٹ اس وقت بھی ایم کیو ایم لندن سے جُڑا ہوا ہے اور اس کے بعد ایم کیو ایم پاکستان سے، الطاف حسین سے اردو بولنے والوں کے اس تعلق کی الگ وجہ ہے جسے تلاش کرنے کے لیے ایوب خان کے دور اور بعدازاں سندھی اردو تنازعے، اور پھر کوٹہ سسٹم نے اس خلیج کو مزید تقسیم کیا، کے ابواب کھولنے پڑیں گے۔

الطاف حسین سے بطور مہاجر شناخت پانے والی قوم بتدریج قومی سیاست سے لسانیت اور نسل پرستی کی سیاست کی اسیر ہوگئی اور بدقسمتی سے اب تک اس سے نہ نکل سکی، اس دوران کچے و پکے قلعے کے سانحات اور 12 مئی جیسے واقعات نے صورتحال کو تبدیل کیا اور گزشتہ برس پاکستان کے خلاف نعرے لگا کر الطاف حسین نے سیاسی صورتحال کو مکمل طور پر تبدیل کرلیا۔

یہ الگ موضوع ہے کہ الطاف حسین کی نظریاتی ایم کیو ایم کیسے بھتے اور قتل و غارت گری کی جانب متوجہ ہوئی اور لیاقت آباد میں رہنے والی غریب قیادت ڈیفنس کے پوش بنگلوں میں منتقل ہوئی؟ ممکن ہے کہ الطاف حسین یہاں ہوتے اور انہیں لندن میں اخراجات کے واسطے بھاری رقوم درکار نہ ہوتیں تو شاید مہاجر سیاست اپنے علاقوں میں رہتی اور شاید کرپشن اس درجے کو نہ پہنچتی اور نہ ہی شہری ادارے یوں برباد ہوتے۔

کراچی میں جاری آپریشن نے ایم کیو ایم کے عسکری ونگ کو کمزور کردیا، جس کا ٹیسٹ کیس نائن زیرو چھاپے اور صولت مرزا کی پھانسی کے بعد شہر کھلا رہنا اور ایک گملا بھی نہ ٹوٹنا تھا، اعصاب کی اس جنگ میں ایم کیو ایم کو شکست ہوئی لیکن انتخابی میدان میں وہ ابھی بھی ایک حقیقی چیلنج ہے جس کا مقابلہ پاک سرزمین پارٹی کرنے میں ناکام رہی ہے، البتہ 2013 کے عام انتخابات میں کراچی والوں نے تحریک انصاف کو ووٹ دے کر الطاف حسین کو سرپرائز دیا تھا لیکن خود تحریک انصاف ہی اپنی طرف آنے والے ووٹ کو سنبھالنے سے قاصر رہی جس کی وجہ سے یہی ووٹ دوبارہ ایم کیو ایم پاکستان کی طرف جاچکا، کراچی کی سیاست پلٹ ضرور رہی ہے مگر فی الحال اس میں جوہری تبدیلی کا امکان نہیں ہے کیونکہ ووٹر بہرحال ایم کیو ایم کے ساتھ ہے اور وہ تقسیم کچھ یوں ہے۔

ایم کیو ایم العالمی

ایم کیو ایم المقامی

ایم کیو ایم الحقیقی

ایم کیو ایم الزمینی

یعنی لندن پاکستان اور پاک سرزمین پارٹی کے درمیان ہی رہے گا، اس کا سادہ مطلب یہ ہے کہ ووٹ مہاجر نظریے ہی کا ہے، مگر کسی قدر ترمیم کیساتھ۔

فیض اللہ خان

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

Today is the longest day of 2018

- اے آر وائی