علی عبداللہ صالح کی ہلاکت سے سعودی پالیسیز خاک میں مل گئیں

ترکی میں فوجی بغاوت کی ناکامی کے دو سال مکمل

کموڈور عدنان خالق کی ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی

افغان صدر کانگراں وزیراعظم اور آرمی چیف کو ٹیلی فون

یوٹا میں طوفانی بارشوں نے تباہی مچادی

شہزادہ چارلس اور ولیم نے ٹرمپ سے ملنے سے انکار کر دیا

بھارت میں گوگل کاسوفٹ ویئر انجینئر بے دردی سے قتل

امریکی سفارت کاروں کو طالبان سے براہ راست مذاکرات کی ہدایت

روسی بمبار جہازجنوبی کوریا میں داخل،کوریا کا احتجاج

میاں صاحب نے کشکول کے بجائے معیشت توڑدی،اسد عمر

بلاول کو پارٹی میں صرف ’ابا‘ ہی کیوں نظر آتا؟سراج الحق

ن لیگ ،پی پی نے کرپشن کے ریکارڈ توڑدئیے،عمران خان

فخر زمان کی سنچری، پاکستان 9وکٹ سے فاتح

’عمران خان کو ناکام جلسوں کی ہیٹ ٹرک مبارک ہو‘

سعید اجمل کا پی ٹی آئی امیدوار کی حمایت کا اعلان

ایم کیو ایم سے لوگوں کو صلہ نہیں ملا، حافظ نعیم

فاروق ستار پر خواتین برس پڑیں،سیاست چمکانے کا الزام لگا دیا

شدت پسندوں کو انسان بنانیکی ناکام کوششیں

دہشتگردی کے سائے اور اہل پاکستان

کراچی عسکری پارک میں جھولا گر گیا بچی جاں بحق 9 افراد زخمی

عالمی کپ کی اختتامی تقریب، مشعل قطر کے سپرد

حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیھا کی ولادت باسعادت مبارک ہو

فرانس فٹبال کا نیا عالمی چیمپئن، کروشیا کو شکست

اسرائیل کا 2014 کے بعد غزہ پر سب سے بڑے حملے کا دعویٰ

یمن میں سامراج کی مخالفت کا قومی دن

اسکاٹ لینڈ: امریکی صدرکے خلاف مختلف اندازمیں احتجاج

کس قانون کے تحت کالعدم جماعتوں کو کلین چٹ دی ہے، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

’اعتزاز احسن کی آنکھ میں ککرے پڑگئے ہیں‘

صحت بخش اور توانائی سے بھرپور. . . سلاد

آمدنی اور اخراجات میں بہت فرق ہے، شمشاد اختر

سراج رئیسانی کا جنازہ ، آرمی چیف کوئٹہ پہنچ گئے

کریمینل ایڈمنسٹریشن آف جسٹس میں محکمہ پولیس کا کلیدی کردار ہے، قاضی خالد علی

ٹرمپ دورہ برطانیہ میں اپنے الفاظ سے پھر گئے

بھارتی فوج کا کنٹونمنٹ علاقے ختم کرنے پر غور

بلوچستان کے مختلف شہروں میں سیکیورٹی ہائی الرٹ

’لیگی قیادت نے نواز اور مریم کو دھوکا دیا‘

داعش نےسعودی چیک پوسٹ پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کیخلاف مقدمہ درج

آئرش پارلیمنٹ میں اسرائیلی اشیاء کی در آمدات پر پابندی کا بل منظور

’’حکومت بنا کر سب کو ایک پیج پر لاؤں گا ‘‘

ٹرمپ کے دورۂ برطانیہ پر احتجاج کا سلسلہ جاری

نواز،مریم اور صفدر کے پاس صرف ایک دن کی مہلت

یمن میں متحدہ عرب امارات کے اقدامات جنگی جرائم ہیں، ایمنسٹی انٹرنیشنل

سندھ میں رینجرز کےخصوصی اختیارات میں 90روز کی توسیع

آپ یہ پلے باندھ لیں

تحریک انصاف نے کوئٹہ جلسہ ملتوی کردیا

ترکی کا کمرشل اتاشی اسرائیل میں ترک سفار خانے میں واپس

فلسطینیوں کی حمایت میں واشنگٹن میں مظاہرہ

ایران ایک مضبوط ابھرتی ہوئی طاقت کا نام ہے،خطیب جمعہ تہران

چوہدری نثار نے اپنے دکھ کی وجہ بیان کر دی

اسامہ بن لادن کا سابق ذاتی محافظ جرمنی سے بے دخل

سعودی عرب خطے میں امریکہ اور اسرائیل کا سب سے بڑا اتحادی ملک ہے:سربراہ انصار اللہ

’’مجرم اعظم آگئے، 300ارب واپس کریں‘‘

امریکا کے گیس اسٹیشن پر لاکھوں پتنگوں نے ڈیرا ڈال لیا

اسحاق ڈار کےریڈ وارنٹ جاری

محمد وسیم کی ورلڈ فلائی ویٹ ٹائٹل فائٹ کل ہوگی

ٹوئٹر پرمشہور شخصیات کے فالوورز کم ہو گئے

دبئی:ریسٹورنٹ میں کھانا سرو کرتا روبوٹ

نواز شریف نے اڈیالہ جیل میں پہلے دن ناشتے میں کیا کھایا؟

گزین مری 23 سال بعد آبائی علاقے پہنچ گئے

قیدیوں نے اپنے حق کے لیے درخواست جمع کروادی

ہم نے قانونی جنگ لڑ کر جیتی ہے، شاہ محمود قریشی

ن لیگیوں کیلئے اطمینان بخش خبر

مستونگ انتخابی جلسہ دھماکا، یورپی یونین، سعودی عرب کی مذمت

نواز شریف اور مریم نواز اڈیالہ جیل منتقل

امریکا تجارتی میدان کا غنڈہ اور بلیک میلر ہے، چین

ہم عراق میں نیٹو افواج کی موجودگی کے خلاف ہیں: عصائب اہل الحق

اربیل شہر میں نیا امریکی قونصل خانہ پورے علاقے کیلئے خطرہ ہے: عراقی سیاستدان

داعش سے نمٹنے کے لیے چین، پاکستان، روس، ایران کا مشترکہ اجلاس

یمنی فورسز نے سعودی عرب کے 34 فوجیوں کو ہلاک کر دیا

نواز شریف کا پوتا اور نواسہ رہا

2017-12-07 07:22:38

علی عبداللہ صالح کی ہلاکت سے سعودی پالیسیز خاک میں مل گئیں

Ali abdullah

 

سعودیہ «علی عبد اللہ صالح» اور انصار اللہ کے درمیان اختلافات ایجاد کر کے یمن کے حالات بگاڑنا چاہتا تھا، پر «علی عبد اللہ صالح» کے قتل ہونے سے بن سلمان کی سیاست ناکام ہوگئی۔

 

صالح کے مسلح گروہ یمن کے اندر سے بغاوت کرنا چاہتے تھے، جس کے پیچھے علاقائی طاقتوں کا ہاتھ تھا۔

 

کچھ دنوں سے صنعا میں جو کچھ ہو رہا تھا، وہ سعودیہ کی ایک ناکام کوشش تھی، جو وہ صالح کی پارٹی الموتمر الشعبی کے ذریعے قومی اتحاد کو توڑ کر سعودی فورسز کے صنعا میں داخلے کرنا چاہتے تھے۔

 

اس منصوبے کے مطابق سعودی فورسز «نهم» کے راستے سے صنعا میں داخل ہونی تھیں۔

 

صالح کی پارٹی کے سربراہان چاہتے تھے روس اور مغربی ممالک کے واسطے سے سعودیہ کے ساتھ جنگ بندی کا معاہدہ کر کے خود کو یمنی عوام کا ترجمان قراد دیں۔

 

صالح نے غلط راستہ انتخاب کیا اور وہ یہ سمجھتے تھے کہ انصار اللہ ایک کمزور تنظیم ہے، اور صنعا میں ان کی اتنی طاقت نہیں ہے، اس لیے انہوں نے سوچا اپنے حمایت یافتہ قبائل کے ذریعے اپنے منصوبوں میں کامیاب ہو جائیں گے، پر ایک طرف قبائل نے صالح کا ساتھ نہیں دیا اور دوسری جانب انصار اللہ نے فوری عمل کر کے دارالحکومت کو ایک خونی جنگ سے بچا دیا ہے۔

 

صالح کے اقدامات سے انصار اللہ کو موقع دیا کے جلد میدان میں اتر کر شہر کے داخلی راستوں اور اہم مقامات پر کنٹرول حاصل کر لیں۔

 

اس کے علاوہ المؤتمر الشعبی پارٹی کے بہت سے ارکان اور فورسز، انصار اللہ کے حامی تھے، جس کی وجہ سے بھی صالح کو شکست ہوئی ہے۔

 

صالح کا مسلح گروہ یمن کے اندر سے بغاوت کرنا چاہتا تھا، تاکہ قومی اتحاد کو نقصان ہو جس کے پیچھے علاقائی طاقتوں کا ہاتھ تھا، تاکہ یمن میں داخل ہو جائیں۔

 

اس منصوبے کے بعد یمن میں مزید اتحاد قائم ہو گا، جس سے دشمن کو یمن کے خلاف جنگ کو روکنا ہوگا، اور اب اسلامی مزاحمت سے یہ مطالبہ ہے کہ جو نقصان ہوا ہے، اس کو دوبارہ بنانے میں مدد کرے۔

 

صالح ایک کمزور رسی کے سہارے کنوے میں اترے تھے، اور یہی ان کی ناکامی کی وجہ بنی ہے۔

 

بے شک جو بھی سعودیہ کے کمزور ارادوں کے ساتھ چلے گا اس کا بھی ایسا ہی انجام ہو گا۔

 

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)