اسرائیلی وزیراعظم کرپشن کے گرداب میں

بنی اسرائیل کی حقیقت قرآن مجید کی روشنی میں

ارجنٹینا فٹبال ٹیم کی شکست کی کہانی چہروں کی زبانی

دھوپ اور بارش سے محفوظ رکھنے والی ’’ڈرون چھتری‘‘

میلانیا کی جیکٹ پر لکھا جملہ: مجھے واقعی کوئی فرق نہیں پڑتا کیا آپ کو پڑتا ہے؟

میرا اختلاف نواز شریف کے فائدے میں تھا، چوہدری نثار

10 غذائیں جو آپ کو ہر عمر میں جوان رکھیں

’ لگتا ہے سیاسی وڈیروں نے پمپ کھول لئے ہیں‘

ﺑﻘﯿﻊ ﺍﻭﺭ ﻗﺪﺱ ﭘﺮ ﺳﯿﺎﺳﺖ کیوں؟

کینسر کے خطرے سے بچانے والی بہترین غذا

داعش کی معاونت پر مذہبی رہنما کو سزائے موت

اسرائیلی وزیراعظم کی اہلیہ پر بھی فرد جرم عائد

پاکستان کی طالبان امیر ملا فضل اللہ کی ہلاکت کی تصدیق

مہران یونیورسٹی میں ڈیجیٹل ٹرانسفرمیشن سینٹر قائم کیا جائیگا،ڈاکٹر عقیلی

پرویز مشرف آل پاکستان مسلم لیگ کی صدارت سے مستعفی

ڈونلڈ ٹرمپ کی روسی صدر سے ملاقات کے لیے نئی حکمت عملی تیار

یمن میں سعودی جاسوسی ڈرون طیارہ تباہ

چھوٹی سی چیری بڑے فائدوں والی

بیگم کلثوم کی طبیعت قدرے بہتر پر خطرے سے مکمل طور پر باہر نہیں: میاں نواز شریف

انتخابی نشانات کی سیاست: ووٹر حیران، امیدوار پریشان

امریکہ افغان طالبان سے بات چیت کی خواہش کیوں ظاہر کر رہا ہے؟

آیت اللہ سید خامنہ ای نے قومی فٹبال ٹیم کو اچھی کاکردگی پر سراہا

بحرینی عدالت نے شیخ علی سلمان کو جاسوسی کے الزامات سے بری کردیا

فیفا ورلڈ کپ 2018: اسپین نے ایران کو 0-1 سے شکست دے دی

آئی بی اے کراچی میں منعقدہ پاکستان کی پہلی فائنل ائیر پروجیکٹس کی آن لائن نمائش کا احوال

امریکہ کی خارجہ پالیسی بحران سے دوچار

صحافی کے قتل کے خلاف بھارتی کشمیر میں ہڑتال، مظاہرے

زعیم قادری کیا شریف خاندان کے بوٹ پولش کر پائیں گے ؟

کیا عدالت فوج کے خلاف اقدام اٹھائے گی؟

کیا نواز شریف اور مریم نواز کا نام ای سی ایل میں شامل ہوگا ؟

’کراچی والوں کی جان ٹینکر مافیا سے چھڑائیں گے‘

پاکستان کے یہودی ووٹر کہاں گئے؟

پاکستان کی خاندانی سیاسی بادشاہتیں

یاہو‘ نے اپنی انسٹنٹ میسیج سروس ایپلی کیشن ’یاہو‘ میسینجر کو بند کرنے کا اعلان کردیا

انفیکشن کی بروقت شناخت سے دنیا بھرمیں ہزاروں لاکھوں جانیں بچائی جاسکتی ہیں

سفید سرکے کے کئی فوائد ہیں، اس طرح سیب کے سرکے کے بھی متعدد طبی فوائد ہیں

یمن تا فلسطین، دشمن ایک ہی ہے

کیا افغان سیکیورٹی اہلکار طالبان کو کنٹرول کر سکے گے ؟

ٹویٹر کیا ایسا کر پائے گا ؟

پاکستان میں سمندری پانی کیا قابل استعمال ہوگا ؟

عمران خان، آصف زرداری اور مریم نواز کے اثاثوں کی تفصیلات منظر عام پر آ گئیں

فٹبال ورلڈ کپ کے شوروغل میں دبی یمنی بچوں کی چیخیں

رپورٹ | یمن کی تازہ صورتحال ۔۔۔ یہاں سب بکنے لگا ہے !!!

دہشتگرد کالعدم جماعتوں کو الیکشن لڑنے کی اجازت دینے کی بجائے قانون کے شکنجے میں کسنے کی ضرورت ہے، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

انڈونیشیا کی جھیل میں کشتی الٹنے سے 200 افراد ہلاک

بلوچستان: سی ٹی ڈی آپریشن،خاتون سمیت 4 دہشت گرد ہلاک

ہائیڈرو گرافی کا عالمی دن ، پاک بحریہ کے سر براہ کا پیغام

امریکہ کے شکست قریب ہے؟

شیخ علی سلمان پر مقدمہ، غیر سرکاری تنظیموں کا احتجاج

عمران، شاہد خاقان، گلالئی،فہمیدہ مرزا، فاروق ستار، لدھیانوی، مشرف کے کاغذات مسترد

ایران نے امریکی صدر سے بات چیت کا امکان مسترد کر دیا

راہ حق پارٹی، جے یو آئی (ف) کے آشرباد سے کالعدم جماعتوں کا سیاسی پلٹ فارم

لندن کی سڑکوں پر بھاگتا پاکستانی سیاست دان

بن زاید کی اسرائیلی عہدے داروں سے ملاقات ؟

انتخابات 2018: الیکشن کمیشن نے ساڑھے تین لاکھ فوجی اہلکاروں کی خدمات مانگ لیں

علماء یمن نے بڑا کردیا

چوہدری نثار تھپڑ مار کیوں نہیں دیتے؟

ٹرمپ بھیڑیا ہے

ٹرمپ نے بوکھلاہٹ میں شمالی کورین جنرل سے مصافحہ کے بجائے سلیوٹ کر ڈالا

الیکشن کمیشن پاکستان راہ حق پارٹی کی رجسٹریشن منسوخ کرے

اسرائیلی فوج نے اپنا الحاج شیخ الاسلام متعارف کرادیا – عامر حسینی

این اے 53 سے عمران خان کے کاغذات نامزدگی مسترد

الحدیدہ۔۔۔اب میڈیا خاموش کیوں ہے!؟

کیا احد چیمہ شہباز شریف کے لیے خطرے کی گھنٹٰی ہے؟

فضل اللہ کی ہلاکت کے بعد امریکا پاکستان سے کیا مطالبہ کرے گا؟

یمن میں پاکستانی لاشیں کیا کر رہی ہیں؟

جدید تر ہوتی جوہری ہتھیار سازی: آرمجدون زیادہ دور نہیں

نواز شریف اور ان کی بیٹی کا کردار سامنے لانا چاہتا ہوں، چوہدری نثار

مسلم لیگ نواز اور نادرا چئیرمین کے مبینہ ساز باز کی کہانی

آنیوالے انتخابات میں کسی مخصوص امیدوار کی حمایت نہیں کرتے، علامہ عابد حسینی

امریکی مرضی سے ملی حکومت پر لعنت بھیجتا ہوں، سراج الحق

2018-01-11 05:57:53

اسرائیلی وزیراعظم کرپشن کے گرداب میں

corruption

اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کچھ عرصے سے کرپشن کے الزامات کے گرداب میں ہیں۔ ان کے خلاف بڑے پیمانے پر عوامی مظاہرے بھی ہو چکے ہیں۔ اسرائیلی پولیس کی طرف سے ان کے خلاف دو مقدمات کی بنیادپر تحقیقات کا عمل جاری ہے۔

 

اس سلسلے میں پولیس کئی مرتبہ ان کی رہائش گاہ پر آکر ان سے پوچھ گچھ کر چکی ہے۔بعض اوقات انھوں نے تحقیقاتی اداروں کے ساتھ تعاون سے انکار بھی کیا ہے۔ الزامات کے گرداب میں فقط نیتن یاہو نہیں بلکہ ان کا پورا خاندان ہے۔ 8جنوری 2018 کو اسرائیل کے چینل 2نیوز نے اسرائیلی وزیراعظم کے بیٹے یائیر کی ایک آڈیو ریکارڈنگ نشر کی ہے جس میں وہ نشے کی حالت میں اسرائیلی گیس ٹائیکون کوبی میمن (Kobe Mammon) کے بیٹے سے کہہ رہا ہے کہ میرے باپ نے تمھارے باپ کے مفاد میں پارلیمنٹ میں 2015میں ایک متنازعہ بل کی حمایت کی تھی۔ یہ کہتے ہوئے دراصل وہ اس سے کچھ تقاضا کررہا ہے۔ آڈیو ریکارڈنگ میں اس کے الفاظ کچھ یوں ہیں:

“Bro, you got to spot me. My dad made an awesome deal for your dad, bro, he fought, fought in the Knesset for this, bro,”

“Bro, my dad now arranged for you a $20bn deal and you can’t spot me 400 shekels?”

یہ لیک یقینی طور پر اسرائیلی وزیراعظم کے لیے پاکستان کے وزیراعظم کے خلاف مشہور ہونے والی پاناما لیک سے کم ثابت نہیں ہوگی، کیونکہ اس سے پہلے بھی بہت کچھ اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کے خلاف لیک ہو چکا ہے۔

دسمبر2017کے آغاز میں اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کی مبینہ کرپشن کے خلاف اسرائیلی عوام سڑکوں پر نکل آئے تھے۔ اسرائیلی شہر تل ابیب میں بیس ہزار افراد نے وزیراعظم کے خلاف سڑکوں پر احتجاج کیا تھا۔ عوام کا مطالبہ تھا کہ نتین یاہو کے خلاف شفاف تحقیقات ہونا چاہییں۔ ادھر عوام یہ مطالبہ کررہے تھے اور ادھر وزیراعظم اپنے اثر و رسوخ سے اسرائیلی پارلیمنٹ میں کرپشن تحقیقات محدود کرنے کا بل منظور کروا رہے تھے۔

عبرانی میڈیا کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم کے خلاف زیر تحقیق مقدمہ 1000 کی بنیاد پر فرد جرم تیار کی جا چکی ہے جس کے مطابق نیتن یاہو کے بدعنوانی میں ملوث ہونے کے ٹھوس شواہد موجود ہیں۔ان کے خلاف رشوت وصول کرنے، امانت میں خیانت کرنے اوردیگر الزامات عائد کیے گئے ہیں۔پولیس کو ایک آسٹریلوی یہودی جیمز پاکر کی گواہی میسر آئی ہے جس کے بعد وہ اس نتیجے تک پہنچی ہے کہ انھوں نے وزیراعظم اور ان کے خاندان کی جانب سے مطالبے پر تحائف دیے اور انھیں ایسا کرنے پر مجبور کیا گیا تھا۔

اسرائیلی ذرائع کے مطابق رواں ہفتے میں پولیس کرپشن کے الزامات میں وزیراعظم  نتین یاہو کے خلاف فوج داری تحقیقات کا آغاز کرنے والی ہے۔اسرائیل میں سب سےزیادہ  دیکھے جانے والے چینل 2کے مطابق وزیراعظم نے دو بڑے تاجروں سے قیمتی تحائف یا مراعات حاصل کی ہیں۔ مشہور ویب سائٹ وائے نیٹ نے بھی یہی دعویٰ کیا ہے۔بظاہر یوں لگتا ہے کہ نیتن یاہو کے بیٹے کی آڈیو سامنے آنے کے بعد صورت حال میں تیز رفتاری سے مزید پیش رفت ہوگی۔ کہا جارہا ہے کہ کیس میں اسرائیلی وزیراعظم کے خاندان کے متعدد افراد بھی شامل ہیں۔ خاص طور پر ان کے بیٹے نے جس انداز سے مراعات حاصل کیں اور بڑے بڑے اسرائیلی سرمایہ داروں کی سرپرستی میں امریکا جا کرعیاشی کی اس کے واقعات بھی سامنے آ چکے ہیں۔

اسرائیلی وزیراعظم کے خلاف ملک کی حزب اختلاف بھی تحقیقات کے لیے مہم چلا رہی ہے۔ حزب اختلاف کے اہم قانون ساز اور صہیونی یونین پارٹی کے ایئریل مرجالیت نے نیتن یاہو اور ان کو عطیات فراہم کرنے والی نمایاں شخصیات کے مابین تعلق کے حوالے سے تحقیقات کروانے کے لیے تحریک چلا رکھی ہے۔ڈاؤچے ویلے کی رپورٹ کے مطابق ماضی میں نتین یاہو اعتراف کر چکے ہیں کہ انھوں نے فرانس میں مقید ٹائیکون آرنو میمران سے رقم وصول کی تھی ۔ وزیراعظم کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق 2001میں چالیس ہزار ڈالر وصول کیے گئے تھے جب نیتن یاہو ابھی وزیراعظم نہیں تھے۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کی رپورٹ کے مطابق قبل ازیں اسرائیلی وزیراعظم پر عائد ہونے والے الزامات کی وجہ سے اسرائیل اور جرمنی کے مابین ہونے والا آبدوز معاہدہ بھی کھٹائی میں پڑ گیا تھا۔ ڈولفن کے نام سے مشہور یہ آبدوزیں سمندر کی گہرائیوں میں ایٹمی وار ہیڈ لے جانے کی صلاحیت رکھتی ہیں۔ اسرائیل کی نیشنل سیکورٹی کونسل کے ذرائع کے مطابق جرمنی نے اسرائیل کو تین عدد ڈولفن آبدوزوں کی فروخت مؤخر کر رکھی ہے۔ مبینہ کرپشن کے الزامات میں اسرائیلی پولیس پہلے ہی تین افراد کو گرفتار کر چکی ہے۔ جرمنی نے تل ابیب پر یہ واضح کر دیا ہے کہ اگر اس سودے میں کرپشن ثابت ہوئی تو برلن اس معاہدے کو منسوخ کردے گا۔ یاد رہے کہ جرمن حکومت اس نوعیت کی چار آبدوزیں پہلے بھی اسرائیل کو فروخت کر چکی ہے۔

نیتن یاہو کے خلاف عوامی مظاہروں، تحقیقات، رپورٹوں، الزامات اور اپوزیشن کے شور شرابے کا نتیجہ کیا نکلتا ہے، اس کے بارے میں ابھی حتمی طور پر کچھ نہیں کہا جاسکتا تاہم اس امر کا امکان موجود ہے کہ نئے شواہد سامنے آنے کی وجہ سے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کے خلاف فضا مزید سنگین ہو جائے اور شاید انھیں وقت سے پہلے اپنے سیاسی مستقبل کے بارے میں کوئی فیصلہ کرنا پڑے۔

 

ثاقب اکبر

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

گھر اور گھرانہ

- سحر نیوز

یادوں کے جھروکے

- سحر نیوز

ہفتہ نامہ - 22 جون

- سحر ٹی وی