دو لاشیں نہیں ایک مجرم چاہیئے

بنی اسرائیل کی حقیقت قرآن مجید کی روشنی میں

ارجنٹینا فٹبال ٹیم کی شکست کی کہانی چہروں کی زبانی

دھوپ اور بارش سے محفوظ رکھنے والی ’’ڈرون چھتری‘‘

میلانیا کی جیکٹ پر لکھا جملہ: مجھے واقعی کوئی فرق نہیں پڑتا کیا آپ کو پڑتا ہے؟

میرا اختلاف نواز شریف کے فائدے میں تھا، چوہدری نثار

10 غذائیں جو آپ کو ہر عمر میں جوان رکھیں

’ لگتا ہے سیاسی وڈیروں نے پمپ کھول لئے ہیں‘

ﺑﻘﯿﻊ ﺍﻭﺭ ﻗﺪﺱ ﭘﺮ ﺳﯿﺎﺳﺖ کیوں؟

کینسر کے خطرے سے بچانے والی بہترین غذا

داعش کی معاونت پر مذہبی رہنما کو سزائے موت

اسرائیلی وزیراعظم کی اہلیہ پر بھی فرد جرم عائد

پاکستان کی طالبان امیر ملا فضل اللہ کی ہلاکت کی تصدیق

مہران یونیورسٹی میں ڈیجیٹل ٹرانسفرمیشن سینٹر قائم کیا جائیگا،ڈاکٹر عقیلی

پرویز مشرف آل پاکستان مسلم لیگ کی صدارت سے مستعفی

ڈونلڈ ٹرمپ کی روسی صدر سے ملاقات کے لیے نئی حکمت عملی تیار

یمن میں سعودی جاسوسی ڈرون طیارہ تباہ

چھوٹی سی چیری بڑے فائدوں والی

بیگم کلثوم کی طبیعت قدرے بہتر پر خطرے سے مکمل طور پر باہر نہیں: میاں نواز شریف

انتخابی نشانات کی سیاست: ووٹر حیران، امیدوار پریشان

امریکہ افغان طالبان سے بات چیت کی خواہش کیوں ظاہر کر رہا ہے؟

آیت اللہ سید خامنہ ای نے قومی فٹبال ٹیم کو اچھی کاکردگی پر سراہا

بحرینی عدالت نے شیخ علی سلمان کو جاسوسی کے الزامات سے بری کردیا

فیفا ورلڈ کپ 2018: اسپین نے ایران کو 0-1 سے شکست دے دی

آئی بی اے کراچی میں منعقدہ پاکستان کی پہلی فائنل ائیر پروجیکٹس کی آن لائن نمائش کا احوال

امریکہ کی خارجہ پالیسی بحران سے دوچار

صحافی کے قتل کے خلاف بھارتی کشمیر میں ہڑتال، مظاہرے

زعیم قادری کیا شریف خاندان کے بوٹ پولش کر پائیں گے ؟

کیا عدالت فوج کے خلاف اقدام اٹھائے گی؟

کیا نواز شریف اور مریم نواز کا نام ای سی ایل میں شامل ہوگا ؟

’کراچی والوں کی جان ٹینکر مافیا سے چھڑائیں گے‘

پاکستان کے یہودی ووٹر کہاں گئے؟

پاکستان کی خاندانی سیاسی بادشاہتیں

یاہو‘ نے اپنی انسٹنٹ میسیج سروس ایپلی کیشن ’یاہو‘ میسینجر کو بند کرنے کا اعلان کردیا

انفیکشن کی بروقت شناخت سے دنیا بھرمیں ہزاروں لاکھوں جانیں بچائی جاسکتی ہیں

سفید سرکے کے کئی فوائد ہیں، اس طرح سیب کے سرکے کے بھی متعدد طبی فوائد ہیں

یمن تا فلسطین، دشمن ایک ہی ہے

کیا افغان سیکیورٹی اہلکار طالبان کو کنٹرول کر سکے گے ؟

ٹویٹر کیا ایسا کر پائے گا ؟

پاکستان میں سمندری پانی کیا قابل استعمال ہوگا ؟

عمران خان، آصف زرداری اور مریم نواز کے اثاثوں کی تفصیلات منظر عام پر آ گئیں

فٹبال ورلڈ کپ کے شوروغل میں دبی یمنی بچوں کی چیخیں

رپورٹ | یمن کی تازہ صورتحال ۔۔۔ یہاں سب بکنے لگا ہے !!!

دہشتگرد کالعدم جماعتوں کو الیکشن لڑنے کی اجازت دینے کی بجائے قانون کے شکنجے میں کسنے کی ضرورت ہے، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

انڈونیشیا کی جھیل میں کشتی الٹنے سے 200 افراد ہلاک

بلوچستان: سی ٹی ڈی آپریشن،خاتون سمیت 4 دہشت گرد ہلاک

ہائیڈرو گرافی کا عالمی دن ، پاک بحریہ کے سر براہ کا پیغام

امریکہ کے شکست قریب ہے؟

شیخ علی سلمان پر مقدمہ، غیر سرکاری تنظیموں کا احتجاج

عمران، شاہد خاقان، گلالئی،فہمیدہ مرزا، فاروق ستار، لدھیانوی، مشرف کے کاغذات مسترد

ایران نے امریکی صدر سے بات چیت کا امکان مسترد کر دیا

راہ حق پارٹی، جے یو آئی (ف) کے آشرباد سے کالعدم جماعتوں کا سیاسی پلٹ فارم

لندن کی سڑکوں پر بھاگتا پاکستانی سیاست دان

بن زاید کی اسرائیلی عہدے داروں سے ملاقات ؟

انتخابات 2018: الیکشن کمیشن نے ساڑھے تین لاکھ فوجی اہلکاروں کی خدمات مانگ لیں

علماء یمن نے بڑا کردیا

چوہدری نثار تھپڑ مار کیوں نہیں دیتے؟

ٹرمپ بھیڑیا ہے

ٹرمپ نے بوکھلاہٹ میں شمالی کورین جنرل سے مصافحہ کے بجائے سلیوٹ کر ڈالا

الیکشن کمیشن پاکستان راہ حق پارٹی کی رجسٹریشن منسوخ کرے

اسرائیلی فوج نے اپنا الحاج شیخ الاسلام متعارف کرادیا – عامر حسینی

این اے 53 سے عمران خان کے کاغذات نامزدگی مسترد

الحدیدہ۔۔۔اب میڈیا خاموش کیوں ہے!؟

کیا احد چیمہ شہباز شریف کے لیے خطرے کی گھنٹٰی ہے؟

فضل اللہ کی ہلاکت کے بعد امریکا پاکستان سے کیا مطالبہ کرے گا؟

یمن میں پاکستانی لاشیں کیا کر رہی ہیں؟

جدید تر ہوتی جوہری ہتھیار سازی: آرمجدون زیادہ دور نہیں

نواز شریف اور ان کی بیٹی کا کردار سامنے لانا چاہتا ہوں، چوہدری نثار

مسلم لیگ نواز اور نادرا چئیرمین کے مبینہ ساز باز کی کہانی

آنیوالے انتخابات میں کسی مخصوص امیدوار کی حمایت نہیں کرتے، علامہ عابد حسینی

امریکی مرضی سے ملی حکومت پر لعنت بھیجتا ہوں، سراج الحق

2018-01-12 08:14:02

دو لاشیں نہیں ایک مجرم چاہیئے

KASUR: Anger people burn tyre block road during protest against young girl who was raped and killed, in Kasur, Pakistan, Wednesday, Jan. 10, 2018. Pakistani police said a mob angered over the recent rape and murder of an 8-year-old girl has attacked a police station in eastern Punjab province, triggering clashes that left at least two people dead and several injured. INP PHOTO by Hamid Musa

یہ بیس سیکنڈز کی ایک ویڈیو ہے جسے بی بی سی نے نشر کیا ہے ۔ بیس سیکنڈز کی اس ویڈیو میں آٹھ فائر ہوئے ہیں،جس میں دو افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔

قصور کے یہ شہری بپھرے ہوئے تھے اور ان کا مطالبہ معصوم زینب کے قاتل کی گرفتاری تھا۔ یہ لوگ تھانوں پراور ڈی سی آفس پر پتھراؤ کررہے تھےانہوں نے کچھ توڑ پھوڑ بھی کی ہے۔ ویڈیو غور سے دیکھیں تو سہو اور عمدا دونوں ہی معاملے دکھائی دیتے ہیں۔ ویڈیو میں ایک اہلکار گولیاں چلاتا ہوا دکھائی دیتا ہے۔ یہ اہلکار اپنی خودکار بندوق انسانی قد کے برابر لا کر سینوں اور چہروں کی بلندی پہ بندوق کی نالی کو لے جا کر مسلسل پانچ گولیاں چلاتا ہے۔ عین اسی لمحے ایک اور آواز پوری شدت سے گونجتی ہے جو فائرنگ کرنے والے کو سیدھے فائر کرنے سے روکنے کی کوشش کررہی ہے،مگر اتنی ہی دیر میں جتنی دیر میں یہ تین چار جملے بولے جاتے ہیں۔ پانچ فائر ہوچکے تھے۔ ایک جوان کی چلائی پانچ گولیوں سے دو جانیں ضائع ہوگئیں۔ بندوق بردار پولیس اہلکار وںکی تعداد پانچ تھی۔ گولیاں چلانے والے دو اہلکار تھے اور ان کی شناخت کوئی پیچیدہ گتھی نہیں ہے۔ اس ویڈیو میں دو پتھر آتے ہوئے دکھائی دیتے ہیں۔ جسے ہم بپھرے ہوئے ہجوم کا پتھراؤ کہہ سکتے ہیں۔ ہجوم کا مطالبہ بھی ہمیں معلوم ہے۔ ہجوم کی نفسیات کیا ہوتی ہیں اور وہ کس حد تک متشدد ہوسکتا ہے ، اس کے نتیجے میں کیا کچھ جانی و مال نقصان ہوسکتا ہے، اسے سمجھنا بھی کوئی پیچیدگی نہیں ہے۔ ہمارے سامنے ایسی کئی مثالیں موجود ہیں جس میں ہجوم نے کسی بھی اشتعال کے سبب ایک یا ایک سے زائد معصوم جانیں لی ہوں۔

قصور شہر میں گذشتہ چند سالوں میں ایسے واقعات مسلسل پیش آرہے ہیں ۔ قصور تو شاید اس لئے بدنام ہوگیا کہ وہاں پہلے پہل جنسی زیادتیوں کی ویڈیوز بنانے کا معاملہ سامنے آیااور اب معصوم زینب کا سانحہ برپا ہوا ہے۔ ورنہ حقیقت تو یہ ہے کہ سال دوہزار سولہ میں بچوں سے زیادتی کے ہوئے چار ہزار سے زائد واقعات میں چھبیس سو سے زیادہ تو محض پنجاب میں رپورٹ ہوئے تھے۔ ہرسال ایسے واقعات میں دس فیصد اضافہ ہوتا ہے۔ آسانی کے لئے یہ سمجھ لیجئے کہ ہرروز گیارہ بچے پاکستان میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنتے ہیں۔ یہ وہ اعداد ہیں جو رپورٹ ہوتے ہیں۔ عزت ،غیرت کے نام پر بیسیوں واقعات روزانہ ایسے بھی ہیں جنہیں چھپا لیا جاتا ہے۔

پولیس فورس کی تعدادانہیں دستیاب وسائل ، ان کی مشکلات اور ان کی عدم توجہی اور لاپرواہی ہمارا موضوع نہیں ،سو اسے بس اپنے دماغ میں پس منظر تک محدود رکھئے اور توجہ سے اپنے موضوع کو سوچیے کہ پانچ پولیس اہلکاروں نے جن کے ہاتھوں میں خودکار بندوقیں تھیں، میں سے دو اہلکاروں نے نہتے لوگوں پر جو کہ بپھرے ہوئے تھے اور ان کی ٹانگوں پر یا انہیں ڈرانے کے لئے ہوائی فائرنگ کی جاسکتی تھی جیسا کہ ان کے ہی ایک ساتھی انہیں آواز دے کر بلکہ چلا کر سمجھانے کی کوشش کی۔ مگر اس کی آواز کو نہیں سنا گیا اور لوگوں کے چہروں اور سینوں کو نشانہ بناکر گولیاں ماری گئیں۔

یہ قتل عام “ان ڈسکریمینٹ کلنگ” ہے اور یہ جرم ہے۔ عمداً جرم جسے برپا کیا گیا ہے ایک ایسے ہجوم پر جو معصوم زینب کے قاتل کی گرفتاری کا مطالبہ کررہا تھا ۔

یادرہے کہ زینب جمعرات کو اغوا ہوئی ۔ جمعرات ، جمعہ ، ہفتہ، اتوار ،پیر اور منگل تک وہ چھ روز گم رہی۔ پولیس میں رپٹ درج ہوچکی تھی اور پولیس اسے بازیاب نہیں کروا سکی تھی ، اس کی لاش منگل کو ایک کوڑے دان سے ملی۔ یہ چھ روز وہ اغواکار کے ہتھے رہی۔ چھ روز جبکہ وہ محض سات سال کی تھی۔ قصور شہر کے دیگر تھانوں میں چھ بچوں کے اغواء کے مقدمات درج ہیں جنکی لاشیں نہیں ملیں اور نہ ہی وہ بازیاب ہوسکے ہیں مگر مجھے اب توصرف یہ جاننا ہے کہ ان پانچ اہلکاروں کا معاملہ کیا ہوگا جنہوں نے ہجوم پربندوقیں تانیں اور ان دو اہلکاروں کو کیا سزا ملے گی جنہوں نے گولیاں برسائیں ۔

آخری بات جو یاد رکھنے کی ہے کہ لگ بھگ چھ سال پہلے کراچی میں پانچ رینجرز اہلکاروں نے ایک نہتے شخص کو چند انچ کے فاصلے سے دو گولیاں ماریں تھیں اور پھر اس کو تڑپ تڑپ کر مرنے کے واسطے چھوڑ دیا تھا۔ صدر پاکستان ممنون حسین نے رواں ہفتے مقتول سرفراز شاہ کے قاتل رینجرز اہلکاروں کو آزاد کرنے کاحکم سنایا ہے۔

صدر ممنون حسین کو مبارک باد کہ آپ نے ظلم اور بےدردی کے جس حکم کو آزاد کیا تھا وہ آج قصور میں دو نہتے شہریوں کے سینے میں بارود بن کے اتر گیا ہے۔

تجزیات

شوزیب عسکری

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

گھر اور گھرانہ

- سحر نیوز

یادوں کے جھروکے

- سحر نیوز

ہفتہ نامہ - 22 جون

- سحر ٹی وی