مذہبی سلیبرٹیز کا دور

ترکی میں فوجی بغاوت کی ناکامی کے دو سال مکمل

کموڈور عدنان خالق کی ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی

افغان صدر کانگراں وزیراعظم اور آرمی چیف کو ٹیلی فون

یوٹا میں طوفانی بارشوں نے تباہی مچادی

شہزادہ چارلس اور ولیم نے ٹرمپ سے ملنے سے انکار کر دیا

بھارت میں گوگل کاسوفٹ ویئر انجینئر بے دردی سے قتل

امریکی سفارت کاروں کو طالبان سے براہ راست مذاکرات کی ہدایت

روسی بمبار جہازجنوبی کوریا میں داخل،کوریا کا احتجاج

میاں صاحب نے کشکول کے بجائے معیشت توڑدی،اسد عمر

بلاول کو پارٹی میں صرف ’ابا‘ ہی کیوں نظر آتا؟سراج الحق

ن لیگ ،پی پی نے کرپشن کے ریکارڈ توڑدئیے،عمران خان

فخر زمان کی سنچری، پاکستان 9وکٹ سے فاتح

’عمران خان کو ناکام جلسوں کی ہیٹ ٹرک مبارک ہو‘

سعید اجمل کا پی ٹی آئی امیدوار کی حمایت کا اعلان

ایم کیو ایم سے لوگوں کو صلہ نہیں ملا، حافظ نعیم

فاروق ستار پر خواتین برس پڑیں،سیاست چمکانے کا الزام لگا دیا

شدت پسندوں کو انسان بنانیکی ناکام کوششیں

دہشتگردی کے سائے اور اہل پاکستان

کراچی عسکری پارک میں جھولا گر گیا بچی جاں بحق 9 افراد زخمی

عالمی کپ کی اختتامی تقریب، مشعل قطر کے سپرد

حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیھا کی ولادت باسعادت مبارک ہو

فرانس فٹبال کا نیا عالمی چیمپئن، کروشیا کو شکست

اسرائیل کا 2014 کے بعد غزہ پر سب سے بڑے حملے کا دعویٰ

یمن میں سامراج کی مخالفت کا قومی دن

اسکاٹ لینڈ: امریکی صدرکے خلاف مختلف اندازمیں احتجاج

کس قانون کے تحت کالعدم جماعتوں کو کلین چٹ دی ہے، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

’اعتزاز احسن کی آنکھ میں ککرے پڑگئے ہیں‘

صحت بخش اور توانائی سے بھرپور. . . سلاد

آمدنی اور اخراجات میں بہت فرق ہے، شمشاد اختر

سراج رئیسانی کا جنازہ ، آرمی چیف کوئٹہ پہنچ گئے

کریمینل ایڈمنسٹریشن آف جسٹس میں محکمہ پولیس کا کلیدی کردار ہے، قاضی خالد علی

ٹرمپ دورہ برطانیہ میں اپنے الفاظ سے پھر گئے

بھارتی فوج کا کنٹونمنٹ علاقے ختم کرنے پر غور

بلوچستان کے مختلف شہروں میں سیکیورٹی ہائی الرٹ

’لیگی قیادت نے نواز اور مریم کو دھوکا دیا‘

داعش نےسعودی چیک پوسٹ پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کیخلاف مقدمہ درج

آئرش پارلیمنٹ میں اسرائیلی اشیاء کی در آمدات پر پابندی کا بل منظور

’’حکومت بنا کر سب کو ایک پیج پر لاؤں گا ‘‘

ٹرمپ کے دورۂ برطانیہ پر احتجاج کا سلسلہ جاری

نواز،مریم اور صفدر کے پاس صرف ایک دن کی مہلت

یمن میں متحدہ عرب امارات کے اقدامات جنگی جرائم ہیں، ایمنسٹی انٹرنیشنل

سندھ میں رینجرز کےخصوصی اختیارات میں 90روز کی توسیع

آپ یہ پلے باندھ لیں

تحریک انصاف نے کوئٹہ جلسہ ملتوی کردیا

ترکی کا کمرشل اتاشی اسرائیل میں ترک سفار خانے میں واپس

فلسطینیوں کی حمایت میں واشنگٹن میں مظاہرہ

ایران ایک مضبوط ابھرتی ہوئی طاقت کا نام ہے،خطیب جمعہ تہران

چوہدری نثار نے اپنے دکھ کی وجہ بیان کر دی

اسامہ بن لادن کا سابق ذاتی محافظ جرمنی سے بے دخل

سعودی عرب خطے میں امریکہ اور اسرائیل کا سب سے بڑا اتحادی ملک ہے:سربراہ انصار اللہ

’’مجرم اعظم آگئے، 300ارب واپس کریں‘‘

امریکا کے گیس اسٹیشن پر لاکھوں پتنگوں نے ڈیرا ڈال لیا

اسحاق ڈار کےریڈ وارنٹ جاری

محمد وسیم کی ورلڈ فلائی ویٹ ٹائٹل فائٹ کل ہوگی

ٹوئٹر پرمشہور شخصیات کے فالوورز کم ہو گئے

دبئی:ریسٹورنٹ میں کھانا سرو کرتا روبوٹ

نواز شریف نے اڈیالہ جیل میں پہلے دن ناشتے میں کیا کھایا؟

گزین مری 23 سال بعد آبائی علاقے پہنچ گئے

قیدیوں نے اپنے حق کے لیے درخواست جمع کروادی

ہم نے قانونی جنگ لڑ کر جیتی ہے، شاہ محمود قریشی

ن لیگیوں کیلئے اطمینان بخش خبر

مستونگ انتخابی جلسہ دھماکا، یورپی یونین، سعودی عرب کی مذمت

نواز شریف اور مریم نواز اڈیالہ جیل منتقل

امریکا تجارتی میدان کا غنڈہ اور بلیک میلر ہے، چین

ہم عراق میں نیٹو افواج کی موجودگی کے خلاف ہیں: عصائب اہل الحق

اربیل شہر میں نیا امریکی قونصل خانہ پورے علاقے کیلئے خطرہ ہے: عراقی سیاستدان

داعش سے نمٹنے کے لیے چین، پاکستان، روس، ایران کا مشترکہ اجلاس

یمنی فورسز نے سعودی عرب کے 34 فوجیوں کو ہلاک کر دیا

نواز شریف کا پوتا اور نواسہ رہا

2018-04-13 12:10:03

مذہبی سلیبرٹیز کا دور

muslim-990x556

سلیبریٹی celebrity انگریزی زبان میں آج کے دور کی ایک عوامی اصطلاح ہے جو ایسی مشہور زمانہ شخصیات کے لئے بولی جاتی ہے جو وسیع پیمانے پر میڈیا کے ذریعہ عوام کی توجہ کا مرکز بنتے ہیں۔ سلیبریٹی کی وجہ شہرت مختلف ہو سکتی ہے جیسے کھیل، گلوکاری، اداکاری، کامیڈی وغیرہ لیکن ہر طرح کی سلیبریٹی میں ایک چیز مشترک ہے وہ ہے دولت کی فروانی اور اس کی نمائش۔

 سلیبریٹی کو خوش قسمت لوگ سمجھا جاتا ہے کیونکہ وہ  شہرت کی بلندیوں تک پہنچ جاتے ہیں اور ان کے چاہنے والوں کی کثرت ہوتی ہے اور یہی شہرت اور چاہنے والوں کی کثرت ان کی آمدن میں اضافہ کا باعث بنتی ہے۔ اسی لئے کاروباری افراد کی کوشش ہوتی ہے کہ کسی سلیبرٹی کو اپنے اشتہار کی زینت بنائیں اور ان کے ذریعے اپنی پراڈکٹ کی مارکیٹ میں جگہ بنائیں۔

ہر کھلاڑی سلیبرٹی بن پاتا ہے اور نہ ہر اداکار و گلوکار اور نہ ہر مولوی۔ اس میں جہاں ذاتی کشش اور  خوش قسمتی کا ہاتھ ہے وہاں یقیناً کوئی خاص حربے بھی ہیں جو ایک پیشے سے وابستہ فرد کو سلیبرٹی کی منزل تک لے جاتے ہے۔ 

جدید دور میں سلیبرٹی بننے کا رجحان اس قدر بڑھ گیا ہے کہ اس نے سیاست اور مزہب کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔  آج کامیاب سیاست دان وہ سمجھا جا رہا ہے تو سلیبرٹی بھی ہے بلکہ ایسا بھی ہو رہا ہے کہ کھیل، گلوکاری اور مزہبی ٹی وی پروگراموں کے ذریعے سلیبرٹی بننے والے کچھ لوگ سیاست میں وارد ہو رہے ہیں اور سیاسی جماعتیں ان کی شہرت اور فین فولونگ Fan Following کے ذریعے اپنے ووٹوں میں اضافے کے خواب دیکھ رہے ہیں۔

سلیبرٹی بننے کی جدید دوڑ نے مذہبی راہنماؤں کو بھی نہیں بخشا اور آج ہم مذہبی سلیبرٹیز کی کثیر تعداد کا مشاہدہ کر رہے ہیں۔ واعظ و نصیحت بھی اس کی سنی جا رہی ہے جو سلیبرٹی ہے۔ مذہبی پروگرام چاہے ٹی وی میں ہو یا کسی مسجد و امام بارگاہ میں، منتظمین کی خواہش ہوتی ہے کہ کسی مذہبی سلیبرٹی کو بلوایاجائے تاکہ ان کا پروگرام چل جائے۔ مذہبی سلیبرٹی واعظین پھر اپنی اس حیثیت کے مطابق بھاری معاوضے بھی وصول کرتے ہیں۔

 عوامی اور عمومی سطح پر مذہب کو چونکہ مقدس اور ریاکاری سے پاک تصور کیا جاتا ہے لہذا سلیبرٹی کے رجحان کو معیوب سمجھا جاتا ہے۔ لیکن اس کے باوجود یہ ایک ناقابل تردید حقیقت ہے کہ دیگر پیشوں کی طرح مذہبی سلیبرٹی بننا بھی کامیابی کی علامت بن گیا ہے۔

 اب چونکہ سلیبرٹی بننے کے کچھ تقاضے ہیں لہذا ان کا لحاظ رکھنا بھی ضروری ہو گیا ہے۔ اچھے لباس کی نمائش، مخصوص جبہ قبہ پہننا، لمبی اور چمکدار داڑھیاں، پروٹوکول کا اظہار، چاہنے والوں کے جھرمٹ میں رہنا، متانت اور آہستگی کے ساتھ چلنا اور بات کرنا، میڈیا پر وقتا فوقتا موجود رہنا، انوکھی اور متنازع باتیں کرنا وغیرہ وہ ایسے تقاضے ہیں جو مذہبی سلیبرٹیز کو پورا کرنا پڑتے ہیں۔ اب تو یہ مذہبی سلیبرٹیز تشہیری مہم کا حصہ بھی بننے لگے ہیں۔ دیسی دوائیاں، مسواک و منجن، خیرات و زکوٰۃ جمع کرنے کے اشتہارات کے علاوہ حج، عمرہ اور زیارات کے قافلوں کے اشتہارات پر مذہبی سلیبرٹیز کی تصاویر نمایاں نظر آتی ہیں۔

یورپ کے حالیہ دورہ میں یہ دیکھ کر حیرانی ہوئی کہ یہاں کے تقریباً تمام گرجا گھر، ویٹیکن سٹی سمیت ٹورسٹ پوائنٹ بن چکے ہیں یہاں تک کہ ان مذہبی اداروں کے ذرائع آمدن کا وسیع حصہ ان ٹورسٹ (زائرین) کے ٹکٹ اور امداد پر مشتمل ہوتا ہے۔ یوگا اور ہندو و سکھ روحانیت بھی یہاں مقبول ہے اور جا بجا ان مزہبی راہنماؤں کی تصاویر اور لیکچرز کے اشتہاری مہم بھی دیکھنے کو ملی۔ اس سب میں بھی سلیبرٹی بننے اور ہونے کی ذہنیت کار فرما نظر آئی کیونکہ اگر آپ سلیبرٹی نہیں ہوں گے تو کون آپ کے لیکچرز سننے کو آئے گا۔

سوشل میڈیا نے بھی مذہبی سلیبرٹی بننے کے خواہشمند راہنماؤں کا کام آسان کر دیا ہے اور اب ایسے افراد نے اپنی ایک مکمل سوشل میڈیا ٹیم بنائی ہوئی ہوتی ہے جو ان کی تقاریر کو مختلف کلپس میں بدل کر تشہیر کرتے ہیں اور ان کی تصاویر اور اقوال زریں کو نمایاں کرکے نشر کرتے ہیں اور اسے وقت کا تقاضا کہتے ہیں کیونکہ اگر یہ نہ ہو تو گویا دین و مذہب کی تبلیغ رک جائے گی اور جو کچھ ہے وہ ان ہی کے دم سے قائم ہے۔

اس سارے رجحان کی وجہ نئے نسل کی سلیبرٹی پرستی کا مزاج ہے۔ آج ان لوگوں کو وہی شخص مزہبی کام کرتا نظر آتا ہے جو سلیبرٹی ہے۔ اپنے کردار و عمل سے، اپنی سادگی اور تقویٰ و پرہیزگاری سے وہ بھی اپنے قریہ اور محلے میں رہ کر  تبلیغ شاید اب خواب ہی رہ گیا ہے۔ خلاص بے معنی ہو گیا ہے اور ریاکاری عین دانشمندی۔ رمضان المبارک کے روزے بھی اب تو مزہبی سلیبرٹیز کے ساتھ ٹی وی پر گذر جاتے ہیں۔ غالب امکان ہے کہ شاید مساجد میں اعتکاف کی کامیابی کے لئے بھی کسی مذہبی سلیبرٹی کا اس مسجد میں اعتکاف بیٹھنے کا اعلان کرنا پڑے۔ والله اعلم۔

مذہبی سلیبرٹیز کی اس نئی ثقافت کا منفی  اور سب سے زیادہ خطرناک پہلو یہ ہےکہ ہر مذہبی سلیبرٹی کے فینز (چاہنے والے) ایک دوسرے کے سامنے حریف کے طور پر آجاتے ہیں اور اپنے درمیان ایک مقابلے بازی شروع کر دیتے ہیں یہاں تک کہ ایک دوسرے کو منافق، کافر، کاہل اور استعماری ایجنٹ کہنے سے بھی نہیں کتراتے۔ فٹ بال کے سلیبرٹی فینز اور مذہبی سلیبرٹیز کے فینز میں فرق تو ہوناچاہئیے۔ فٹ بال تو ایک کھیل ہے لیکن مذہب ایک ایسی سنجیدہ چیز ہے جس کا انسان کی آخرت سے تعلق ہے۔ اگرچہ جدید دور کے تقاضوں کو قبول کرنا چاہئیے اور اس کے مطابق ہی اپنی زندگی گذارنا چاہئیے لیکن دیکھنا یہ ہے کہ ہم یہ کس قیمت پر کر رہے ہیں۔

 

پروفیسر عالم شاہ

 

زمرہ جات:   Horizontal 5 ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)