پاکستان ممبی حملوں میں ملوث تھا: نواز شریف کا نیا بیان ملک سے غداری یا یا فوج کو بدنام کرنے کی کوشش

ایشیا کپ سپر فور،پاکستان کی بھارت کیخلاف ٹاس جیت کر بیٹنگ

شمالی وزیرستان میں شہید جوانوں کی نماز جنازہ، آرمی چیف کی شرکت

حالات کشیدہ ہونےکےباوجود پاکستان کرتار پور بارڈر کھولنے کو تیار‘ فواد چوہدری

گرمی کی لہر کے پیش نظر وزیراعلیٰ سندھ کےاحکامات

بھارت کی جانب سے ستلج، راوی اورچناب میں پانی چھوڑے جانے کا امکان

بھارت کچھ کرے توسہی اس کو صحیح سبق سکھایا جائے گا‘ پرویز مشرف

عمران خان بانیان پاکستان کے خواب کو تعبیردے رہے ہیں ‘ وزیراعلیٰ پنجاب

وزیراعظم عمران خان لاہور پہنچ گئے

بارہ محرم کے اہم واقعات

مصر میں شیعہ مسلمانوں کو یوم عاشور منانے نہیں دیا گیا

پیوٹن کا اسرائیلی ایئرفورس چیف سے نہ ملنے کا عزم

برطانیہ میں قبل از وقت انتخابات کا مطالبہ

الیکشن بائیکاٹ کے علاوہ بھارت کو اپنی بات سنانے کا اور کوئی راستہ باقی نہیں رہ گیا تھا، عمر عبداللہ

چین نے امریکہ کے ساتھ تجارتی مذاکرات منسوخ کر دیئے

روسی صدر کی اہواز میں فوجی پریڈ پر دہشتگردانہ حملے کی شدید مذمت

افغانستان میں بم دھماکہ، 8 بچے جاں بحق اور 6 زخمی

تنزانیہ: جھیل میں کشتی الٹ گئی، 100 سے زائد افراد ہلاک

بھارت کشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے تک مذاکرات نہیں کرے گا، تجزیہ کار

ترکی میں 110 فوجی اہلکار گرفتار

عراقی وزير خارجہ نیویارک روانہ ہو گئے

انصار اللہ کا سعودی عرب کی جارح فوج کے خلاف دفاعی کارروائیاں جاری رکھنے کا عزم

اقتصادی جنگ میں امریکہ کی شکست یقینی ہے: ایرانی صدر حسن روحانی

اہواز کے دھشتگردانہ حملے کے موقع پر قوم کے نام رہبر انقلاب اسلامی کا تعزیتی پیغام

تصاویر: ایران میں فوجی پریڈ پر مسلح افراد کا حملہ

قتل حسین کے بعد نساء اہل بیت کے مرثیے – عامر حسینی

ایران میں فوجی پریڈ پر حملے میں شہدا کی تعداد 29 ہو گئی

شام میں روسی جہاز گرنے کا ذمہ دار اسرائیل: روسی وزیر دفاع

افغانستان: بم دھماکے میں 8 بچے جاں بحق، 6 زخمی

سعودی جارحیت سے یمنیوں کو خطرناک قحط کا سامنا ہے، انسانی حقوق

’قانون نافذ کرنے والوں نے عاشورہ محرم پرامن بنایا‘

حضرت امام حسینؑ کی جدوجہد نے ثابت کر دیا کہ دین کا نظم سب سے بڑھ کر ہے، طاہرالقادری

جنگ یمن نے سعودی معیشت کی چولیں ہلا دیں، شاہی حکومت قرضہ لینے پر مجبور

یمنی عوام امن و استحکام کے خواہاں ہیں: انصاراللہ

کربلا سے ہم سیکھتے کیا ہیں؟

’بھارت کے منفی جواب پر مایوسی ہوئی‘

حضرت امام حسینؑ نے عظیم مقصد کیلئے قربانی دی ‘ ڈاکٹر رخسانہ جبین

پاکستان کی ایران میں فوجی پریڈ پرحملے کی شدید مذمت

واقعہ کربلا تاریخ اسلام کاہی نہیں تاریخ کا درخشندہ باب ہے،گورنرپنجاب

امام حسین ؑنے امت کو جبر کے خلاف ڈٹ جانے کا ولولہ دیا، علامہ اوکاڑوی

مسلم حکمران اقتدار بچانے کیلئے یزیدان عصر کے کیمپ میں جا بیٹھے ہیں،آغا سید حامد علی شاہ موسوی

امریکا پابندیاں ختم کرے یا نتائج کیلئے تیار رہے،چین

بریکنگ نیوز| اہوازمیں فوجی پریڈ پر دہشت گردوں کا حملہ، سپاہ پاسداران کے 8 اہلکار شہید 7 زخمی

آغا سید حسن کی قیادت میں بڈگام اور جڈی بل میں جلوس ہائے عاشورا

عراق: ابوبکر البغدادی کے نائب کو سزائے موت سنادی گئی

ایران شام میں تعمیری کردارادا کررہا ہے:تجریہ نگار جان کرسٹن

حکومتی قدغن کے باوجود لالچوک سے جلوس عاشورا برآمد، عزاداروں کی گرفتاریاں اور پولیس تشدد

بحرین: حسینی عزاداروں پر حملہ، جمعیت الوفاق کی جانب سے شدید مذمت

امام حسین علیہ السلام کا راستہ عزت و کرامت اور آزادی کا راستہ ہے، سید حسن نصراللہ

آپ کیا جانیں کربلا کیا ہے

کربلا میں گیارہ محرم

یمن کی سڑکوں کی فضا میں لبیک یاحسین اور ھیہات منا الذلہ کی گونج

نائیجیریا میں عزاداروں پر پولیس اور فوج کے حملے

سعودی عرب ،یمن میں جنگی جرائم کی تحقیقات کے سلسلے میں رکاوٹ ڈال رہا ہے

سفرِ کربلا ۔ امام حسین علیہ السلام کی آخری قربانی

حضرت امام زمان (عج) کی حضرت علی اکبر(ع) سے شباہت

واقعہ کربلا کا سوز اوردرد و غم 14 صدیاں گزرنے کے باوجود ہمارے دلوں میں موجود ہے

پاکستان میں یوم عاشور عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا

محرم میں نواسہ رسول کی یاد منانے والوں پر تنقید کرنے والوں کی خدمت میں

تصاویر: لندن میں 29 واں سالانہ روز عاشورا کا جلوس عزا

بھارت پاکستانی وزیر خارجہ سے ملاقات طے کرکے مُکرگیا

واقعہ کربلا ثابت قدمی اور استقامت کی مثال ہے: وزیراعظم عمران خان

حضرت امام حسین(ع) غیروں کی نظر میں

کیا امام حسین (علیہ السلام) اپنی شہادت سے باخبر تھے ؟

کربلائے معلیٰ میں لاکھوں زائرین کی موجودگی میں مقتل خوانی

عراق و ایران میں شام غریباں

امام حسین علیہ السلام کی شہادت

یوم عاشورا حضرت امام حسین (ع) کے ساتھ تجدید بیعت کا اعلان

لندن میں حسینی عزاداروں کے اجتماع پر گاڑی کے ذریعہ حملہ

مسجد نبویﷺ کے بیرونی صحن میں فائرنگ کرنے والا ملزم گرفتار

پاراچنار، شب ہشتم کا ماتمی جلوس

2018-05-13 06:03:59

پاکستان ممبی حملوں میں ملوث تھا: نواز شریف کا نیا بیان ملک سے غداری یا یا فوج کو بدنام کرنے کی کوشش

Pakistan's former prime minister Nawaz Sharif speaks during a news conference in Islamabad, Pakistan September 26, 2017. REUTERS/Faisal Mahmood

سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے ڈان اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے ایک سوال کے جواب میں یہ کہا ہے کہ کیا وجہ ہے کہ ممبئی حملوں کے ملزمان کا ٹرائل پاکستان میں مکمل نہیں ہوسکا اور یہ کہ کیا ہمیں نان اسٹیٹ ایکٹرز کو ممبئی طرز کے حملوں میں لوگوں کو قتل کرنے کی کھلی چھٹی دینی چاہیئے!

اس بیان کے ساتھ ہی میڈیا پر پورے زوروشور سے یہ کمپین شروع ہوگئی ہے کہ نواز شریف نے انڈیا کی خوشنودی کے لئے یہ بیان دیا ہے اور دراصل یہ پاکستان کے سابق وزیر اعظم کی طرف سے اقبال جرم ہے اور انڈیا کے موقف کی تائید ہے۔ اس ضمن میں سب سے پہلی بات تو یہ ہے کہ جانے نہ جانے گل ہی نہ جانے باغ تو سارا جانے ہے!

نواز شریف وہ پہلے شخص اور اہم منصب پر فائز رہنے والے راہنما نہیں ہیں جنہوں نے یہ بات کی ہے۔ اس سے قبل متعدد سابق فوجی جرنیل اسی سے ملتے جلتے بیانات دے چکے ہیں۔ جہادی لیڈروں کے بیانات اور جہادی تنظیموں کے لٹریچر ممبئی حملوں کا کریڈٹ لینے کے حوالے سے سب کے سامنے ہیں۔ سو یہ راگ الاپنا کہ نواز شریف نے کوئی نئی “غداری” کردی ہے اور اس پر ففتھ جنریشن وارفئیر کے سائیبر مجاہدین کی برگیڈ کو چڑھا دینا کسی طور پر دانشمندی نہیں ہے۔

ہاں یہ ضرور ہے کہ اس بات پر غور کیا جائے کہ نواز شریف نے اس بیان کو داغنے کے لیے اس ٹائمنگ کا انتخاب کیوں کیا ہے؟ اچھے خاصے منجھے ہوئے تجزیہ نگار یہ کہہ رہے ہیں نواز شریف نے بہت بڑی غلطی کی ہے اور نیب کی احمقانہ حرکت کے بعد جو اخلاقی برتری نواز شریف کو میسر آگئی تھی، اسے اس بیان نے تاراج کر دیا ہے۔ ہماری دانست میں یہ ایک سادگی پر مبنی بات ہے۔ میاں نواز شریف تین مرتبہ وزیر اعظم رہ چکے ہیں اور وہ سیاست کی پر پیچ اور سطح دار نیرنگیوں کو پوری طرح سمجھتے ہیں۔ اس وقت ان کا بیان جو ارتعاش پیدا کررہا ہے اس کا انہیں یقیناً احساس و شعور رہا ہوگا اور غالبا یہ بیان دینے کے مقاصد میں بعینہ یہ بات شامل ہے کہ اس کے نتیجے میں ان موضوعات پر بحث شروع ہوجائے جو بوجوہ اسٹیبلشمنٹ کے لیے ناگوار اور ناپسندیدہ ہیں۔ سول ملٹری تعلقات پاکستانی سیاست کی فالٹ لائن ہیں اور اس پر گفتگو ہمیشہ فریقین کے لیے مشکل اور الجھاؤ کا باعث بنتی ہے۔ نواز شریف پر اسٹیبلشمنٹ کے اندرونی اور بیرونی دوستوں کا دباؤ بڑھ رہا ہے کہ وہ اپنے مستقبل کے حوالے سے کسی کمپرومائز کو قبول کرلیں تاکہ آنے والے انتخابات میں معاملات کو قابل قبول ڈگر پر لایا جاسکے۔ میاں نواز شریف ابھی تک کسی کمپرومائز کو اس انداز میں قبول کرنے کو تیار نہیں ہیں جس سے انہیں سبکی اٹھا کر ہمیشہ کے لیے سیاست سے آؤٹ ہونا پڑے۔

گو کہ میاں صاحب کی مزاحمت کی تاریخ کوئی زیادہ بولڈ اقدامات پر مبنی نہیں رہی اور وہ ایک حد تک گیم کو اٹھا کر اس کے بعد نیم دلانہ کمپرومائز کر جانے کا ریکارڈ رکھتے ہیں مگر اس دفعہ میاں نواز شریف ابھی تک احتیاط کے ساتھ اپنے پتے کھیل رہے ہیں اور اعصاب کی اس جنگ میں نہ صرف مسلسل شریک ہیں بلکہ اس میں اپنے مخالف فریق پر موقع تاک کر زوردار حملہ بھی کر دیتے ہیں۔ ممبئی حملوں کے بارے میں ان کا تازہ بیان اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے۔

ہماری دانست میں نواز شریف کو اس بات کا بخوبی احساس ہے کہ فوج اور ٹرمپ انتظامیہ کے تعلقات اس وقت خاصے کشیدہ ہیں۔ یہی وہ موقع ہے جب لوہے کو گرم دیکھ کر نواز شریف نے یہ بیان داغ دیا ہے کہ اس سے اسٹیبلشمنٹ مزید دباؤ کا شکار ہوگی۔ نواز شریف کے لیے ڈان لیکس کی وہی حیثیت ہے جو آصف زرداری کے لیے میموگیٹ کی تھی۔ نواز شریف کو معلوم ہے کہ اس ملک میں اسٹیبلشمنٹ آخری تجزیے میں اگر کسی سے دبتی ہے اور کمپرومائز کرتی ہے تو وہ امریکہ ہی ہے۔ ان کے سامنے اس ضمن میں متعدد مثالیں موجود ہیں جب اسٹیبلشمنٹ نے اپنے ناپسندیدہ ترین عناصر سے نہ چاہتے ہوئے بھی امریکی ایماء پر نہ صرف ہاتھ ملایا بلکہ اپنے ہاتھوں سے اقتدار بھی پیش کیا۔ البتہ یہ درست ہے کہ اس طرح کے پریشرز سے وقتی طور پر ایک فریق جیت تو سکتا ہے مگر اس سے وہ فالٹ لائن مزید گہری ہوجاتی ہے جس کی طرف اوپر اشارہ کیا گیا ہے۔

نواز شریف کے لیے بھی سوچنے کا مقام ہے کہ سویلین بالادستی کے جس ہمالیہ پر وہ چڑھ چکے ہیں، وہاں پر ٹہراؤ اور استقرار ان کے لیے کتنی دیر ممکن ہوگا۔ امریکہ کی یہ بھی تاریخ رہی ہے کہ عملیت پسندی میں اس کا کوئی ثانی نہیں۔ خطے کے معروضی حقائق اور مشرق وسطیٰ میں بیٹھے اسٹیبلشمنٹ کے دوست کسی وقت بھی ٹرمپ انتظامیہ کو یہ باور کروانے میں کامیاب ہوسکتے ہیں کہ معاملات اسی فریق کے ساتھ حل کرلیں جنہوں نے سرد جنگ کی جہنم سے نکلنے میں امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی مدد کی تھی۔ اگر ایسا ہوگیا تو نواز شریف تاریخ کے غبار میں لپٹی کسی گمنام کتاب کے ایک ورق کا نام ہی رہ جائے گا۔

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

یادوں کے جھروکے

- سحر نیوز

خوابوں کی تعبیر

- ایکسپریس نیوز

بحران بڑا یا لیڈر؟

- ایکسپریس نیوز