کالعدم اہلسنت و الجماعت میں دراڑ: احمد لدھیانوی اور مسرور جھنگوی آمنے سامنے

خاشقجی کے دو مشتبہ قاتلوں کی نئی تصاویر منظرعام پر

پاکستان کیلئےکھیلوں کی دنیا سےایک اوراعزاز

سعودی صحافی بہیمانہ قتل:خطیب جمعہ تہران کا سعودی عرب کے سنگین اور مجرمانہ جرائم کی طرف اشارہ

عرب علاقوں پر صیہونی قبضہ علاقے میں بدامنی کی سب سے بڑی وجہ: بشار جعفری

شیعہ سعودی شہری انتہائی سخت حالات میں زندگی بسر کر رہے ہیں: ہیومن رائٹس

اسرائیل، فلسطینی قصبے "الخان الاحمر” کی مسماری سے باز رہے: عالمی عدالت

غزہ واپسی مارچ: دو سو سے زائد فلسطینی شہید، بائیس ہزار سے زائد زخمی

سعودی عرب: شیعہ نشین شہر قطیف پر حملہ سعودی بربریت کا ثبوت

امام مسجد کی نشاندہی پر 37 برس بعد کعبے کا رخ ٹھیک کردیا گیا

شام کی صورت حال سے کیسے نمٹیں؟ ترکی نے اہم اجلاس طلب کرلیا

سعودی وضاحت قابل اعتبار ہے،ٹرمپ

جمال خشوگی… کیا کہیں؟

کابل : پولنگ اسٹیشن کے قریب 2 دھماکے ، متعدد افراد زخمی

پاکستان ہرفورم پرکشمیریوں کی جدوجہد کواجاگر کرتا رہے گا‘ فواد چوہدری

افغان انتخابات، اشرف غنی نے ووٹ ڈالا

جمال خاشقجی: مبینہ سعودی ’ہٹ سکواڈ‘ میں کون کون شامل تھا؟

’’ریلوے میں بھرتیوں سمیت ہر کام قانون کے تحت ہوگا‘‘

نہال ہاشمی کے فوج کے حوالے سے متنازع بیان پر پیمرا کا نوٹس

عباس ٹیسٹ کرکٹ میں گزشتہ 100سال کے بہترین باؤلر

بھارت میں ٹرین حادثے پر وزیراعظم کا افسوس

حکومتی اخراجات کا بوجھ شہریوں پرڈالاجا رہا ہے‘ نیئربخاری

خاشقجی بحران: محمد بن سلمان پر کیا اثر پڑے گا؟

غزہ میں پُرامن فلسطینی مظاہرین کا خون بہایا جا رہا ہے‘ ملیحہ لودھی

ایک اور ڈیم سے دریائے سندھ کا گلا گُھٹ جائے گا؟

’’ ہر کام میرٹ پر کیا اور کریں گے‘‘

پاکستان کے مختلف علاقوں میں 5.3 شدت کا زلزلہ

کوئٹہ میں سردی، شہریوں نے گرم کپڑے نکال لیے

’جمال خاشقجی کی موت قونصل خانے میں لڑائی کے بعد ہوئی‘

آرمی چیف سے قطری وزیرخارجہ کی ملاقات

جمال خاشقجی سعودی قونصل خانے میں قتل ہوا: سعودی عرب

وزیر خارجہ سے عراق کے سفیر کی ملاقات

’’12ووٹ چوری کرنے والا اسپیکر بنا ہوا ہے‘‘

جمال خاشقجی نے آخری کالم میں کیا لکھا؟

جمال خاشقجی کی جنگل میں تلاش

خاشقجی قتل اور یمن جنگی جرائم: امریکہ سعودی عرب کی حمایت جاری رکھے گا

قندھار: گورنر زالمے، صوبائی پولیس چیف اور صوبائی انٹیلی جنس چیف ہلاک

ایران کے دشمن بھی ایران کی طاقت اور قدرت کے معترف ہیں

سعودی سرمایہ کاری کانفرنس: امریکا کا شرکت نہ کرنے کا فیصلہ

افغان پالیسی بدلنے تک پاکستان پر دباؤ قائم رکھا جائے گا: امریکا

ایران کے خلاف پابندیوں کا امریکی ہتھکنڈہ اب اس کے ہاتھ سے نکل چکا: محمد جواد ظریف

پاکستان آسٹریلیا کیخلاف سیریز کی فتح سے5 وکٹ دور

غلط پالیسیاں، ظالمانہ اقدامات نیز خاشقجی کا قتل: بن سلمان کو برطرف کئے جانے کا مطالبہ

زندہ سعودی نامہ نگار خاشقجی کے ٹکڑے کرنے میں 7 منٹ لگے ...

فلسطینی فوٹو گرافر محمود الھمص کی لی گئی تصویر، بہترین تصویر قرار

بن سلمان اور اس کی ٹیم جنایت کاروں کی ٹیم ہے: حزب الله سربراہ

قندھار حملہ افغانستان میں امریکی ارادے پر اثر انداز نہیں ہوگا، جیمزمیٹس

برطانیہ: نفرت پر مبنی جرائم کا دائرہ وسیع

یورپ کا سب سے بڑا مالیاتی اسکینڈل

خواجہ آصف کی اہلیت سے متعلق سپریم کورٹ کا تفصیلی فیصلہ جاری

امریکی خلا باز آنکھوں سے محروم ہونے والے ہیں؟

راولپنڈی جانیوالی جعفر ایکسپریس کے قریب دھماکا

عمار بن یاسر کی شہادت اور جنگ نہروان

مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فورسز کی فائرنگ‘ 4 کشمیری شہید

چینی سرمایہ کاری میں کمی سے ایف ڈی آئی میں 42 فیصد تنزلی

عالمی طاقتوں کا شرکت سے انکار، سعودی سرمایہ کاری کانفرنس خطرے میں پڑ گئی

قطری وزیر خارجہ آج اسلام آباد پہنچیں گے

سب سے بڑا ’ڈرامہ کوئین‘ کون؟

پراپرٹی ڈیلرزنے پورے ملک میں فساد برپا کیا ہوا ہے‘ چیف جسٹس

تھر کی صورت حال پر وزیر اعلیٰ کاہنگامی اجلاس کل طلب

توہین عدالت کیس، ایف آئی اےجسمانی ریمانڈ کے بعد فیصل رضاعابدی کو آج عدالت میں پیش کرے گی

6لیگی ایم پی ایز کا پنجاب اسمبلی میں داخلہ بند، دیگر کا دھرنا

پوپ فرانسس شمالی کوریا جائیں گے

کراچی میں رینجرز کی کارروائی‘ ملزم گرفتار

پنجاب فوڈ اتھارٹی کا ناقص دودھ سپلائی کیخلاف کریک ڈاؤن

عمرہ زائرین کو دوسرے سعودی شہر جانے کی اجازت

ننیوا عراق: شباک کمیونٹی کی اکثریت نے شیعہ ہونے کی قیمت کیسے چکائی؟ – فناک ویب سائٹ رپورٹ

امریکی وزیر خارجہ کی خاشقجی کے بارے میں محمد بن سلمان کو 72 گھنٹوں کی مہلت

عمران خان کی اہلیت کیخلاف حنیف عباسی کی نظرثانی درخواست مسترد

ابوظبہی ٹیسٹ،پاکستان کی پوزیشن مستحکم، بیٹنگ جاری

واٹس ایپ نے پیغامات ڈیلیٹ کرنے کے فیچر میں تبدیلی کردی

2018-06-12 10:55:12

کالعدم اہلسنت و الجماعت میں دراڑ: احمد لدھیانوی اور مسرور جھنگوی آمنے سامنے

MJ

 جھنگ کے شہری حلقوں میں کالعدم سپاہِ صحابہ (موجودہ اہلسنت و الجماعت) کے ووٹرز کو ناقابل تقسیم سمجھا جاتا تھا اور گزشتہ 30 برسوں کے دوران تلخ حالات کے باوجود اس جماعت کے ووٹ بینک پر کوئی خاص فرق نہیں پڑا بلکہ گزشتہ عام انتخابات کے دوران ان کے ووٹ بینک میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔لیکن آئندہ عام انتخابات کے قریب آتے ہی جھنگ کے شہری حلقے این اے 115 اور پی پی 126 کی سیاست میں بھونچال آگیا جس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ گزشتہ 30 سال سے  حق نواز جھنگوی کے نام پر سیاست کرنے والی جماعت میں امیدواروں کی نامزدگی کے معاملے پر پھوٹ پڑ گئی ہے۔

 

جماعت کے موجودہ سرغنہ احمد لدھیانوی نے کالعدم جماعت کے بانی جماعت حق نواز جھنگوی کے بیٹے سابق ایم پی اے مسرور نواز جھنگوی کو منظر عام سے ہٹانے کی کوشش کی تو مولانا مسرور نے اُن کے اس فیصلے سے بغاوت کرتے ہوئے قومی و صوبائی اسمبلی کے دونوں حلقوں سے انتخابات میں حصہ لینے کا اعلان کر دیا ہے۔گزشتہ 30 سال کے انتخابات کا جائزہ لیا جائے تو جھنگ سے کالعدم سپاہ صحابہ نے حق نواز جھنگوی کے نام پر ووٹ حاصل کیے لیکن اُن کے قتل کے بعد 2016ء کے ضمنی انتخابات میں پہلی بار اُن کے خاندان سے امیدوار کو انتخابات میں حصہ لینے کے لیے نامزد کیا گیا۔

 

اس ضمنی انتخاب میں مولانا مسرور نے حکمران جماعت مسلم لیگ نون کے ٹکٹ ہولڈر حاجی آزاد ناصر شیخ کو شکست دی۔لیکن اب انتخابات قریب آتے ہی چند روز قبل مولانا احمد لدھیانوی نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں خود کو این اے 115 جبکہ سابق ایم این اے اور معروف دہشتگرد اعظم طارق کے صاحبزادے دہشتگرد معاویہ اعظم جو حال میں جیل سے رہا ہوا ہے کو پی پی 126 سے امیدوار نامزد کر دیا ہے۔

دہشتگرداحمد لدھیانوی کا پیغام منظرِ عام پر آتے ہی جماعت دو دھڑوں میں تقسیم ہو گئی ہے۔کارکن دہشتگردوں کے کچھ حلقوں نے اس فیصلے پر خوشی کا اظہار کیا اور مٹھائیاں بانٹیں جبکہ بعض حلقوں نے اس فیصلے پر ناگواری کا اظہار کیا ہے۔مولوی مسرور کے حمایتی دھڑے کا مؤقف ہے کہ چونکہ مسرور ایک بار الیکشن جیت چکے ہیں اس لیے جیتے ہوئے امیدوار کو انتخابات سے آؤٹ کرنا مناسب نہیں۔جبکہ دوسرے دھڑے کا کہنا ہے کہ جماعت کی طرف سے مسرور کو منتخب کیا گیا لیکن وہ جھنگ کے لیے کوئی خاطر خواہ کارنامہ سر انجام نہیں دے سکے اور نہ ہی اپنے دور میں حلقے کے لیے ترقیاتی فنڈز لا سکے اس لیے اب معاویہ اعظم کو موقع دینا چاہیے۔اس معاملے کو لے کر دھڑے بندی اس حد تک بڑھ گئی ہے کہ سربراہ جماعت کے ہر فیصلے کو حرف آخر ماننے والے کارکنان کے بعض حلقوں نے بھی احمد لدھیانوی کو تنقید کا نشانہ بنا ڈالا۔ان کارکنان کے مطابق مولانا لدھیانوی کو خود الیکشن نہیں لڑنا چاہیے بلکہ مسرور کو صوبائی اسمبلی جبکہ معاویہ اعظم کو قومی اسمبلی کی نشست پر الیکشن لڑواتے ہوئے ان کی سرپرستی کرنی چاہیے۔اپنے فیصلے پر شدید ردِ عمل کو دیکھتے ہوئے احمد لدھیانوی نے اب ایک نیا ویڈیو پیغام جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ معاویہ اعظم کو الیکشن لڑوانے کے معاملے پر مزید سوچ بچار کی جا رہی ہے۔اُدھر مولانا مسرور نے گزشتہ روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ معاویہ اعظم کو انتخاب لڑوانے کا فیصلہ جماعت کا نہیں بلکہ ان چند لوگوں کا ہے جو جماعت میں دراڑ ڈالنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ان کے بقول یہ وہی لوگ ہیں جنہوں نے ضمنی انتخابات میں بھی ان کی حمایت نہیں کی تھی۔”میرے والد حق نواز جھنگوی نے اس جماعت کی بنیاد رکھی تھی اور میں ہی جماعت کا حقیقی وارث ہوں لہذا میں کبھی بھی اپنے کارکنان کا ساتھ نہیں چھوڑوں گا۔”مولانا مسرور نے یہ الزام بھی عائد کیا ہے کہ مسلم کمرشل بنک سے گزشتہ دنوں پانچ کروڑ روپے کی خطیر رقم نکلوا کر کچھ لوگوں میں بندر بانٹ کی گئی ہے جس کا رزلٹ یہ نکلا ہے کہ ان کو الیکشن کی دوڑ سے باہر کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔اہلِ سنت و الجماعت کی اس دھڑے بندی سے این اے 115 اور پی پی 126 کی سیاست میں نیا موڑ آگیا ہے۔اگر آئندہ چند روز میں احمد لدھیانوی اور مسرور جھنگوی کے درمیان اختلافات دور نہیں ہوتے تو جھنگ میں جماعت کا ناقابل تقسیم سمجھا جانے والا ووٹ بینک تقسیم ہونے سے آئندہ انتخابات کے دوران انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

خیال رہے کہ این اے 115 سے متوقع طور شیخ وقاص اکرم نون لیگ اور غلام بی بی بھروآنہ پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑیں گے جبکہ عابدہ حُسین بطور آزاد اُمیدوار میدان میں اُتریں گی۔دوسری جانب پی پی 126 سے شیخ وقاض کے بھائی شیخ نواز اکرم (موجودہ چئیرمین میونسپل کمیٹی) اہلِ سنت و الجماعت کے اُمیدوار کے خلاف الیکشن لڑ سکتے ہیں۔ اس حلقے میں پی ٹی آئی اور پی پی پی کے پاس تاحال مضبوط اُمیدوار موجود نہیں ہیں۔

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)