ﺑﻘﯿﻊ ﺍﻭﺭ ﻗﺪﺱ ﭘﺮ ﺳﯿﺎﺳﺖ کیوں؟

شیعہ رہنماوں کی کالعدم جماعت کے سرغنہ لدھیانوی سے ملاقات کی رُداد، علامہ امین شہیدی کی زبانی

گورنر اسٹیٹ بینک کیخلاف 22 سینیٹرز کی درخواست مسترد

شاہد آفریدی کی سراج رئیسانی کے اہلخانہ سے تعزیت

یادداشت کیلئے چارسائنسی انداز

یاہو میسنجر کی موت واقع ہو گئی

جنوبی کوریا:ہیلی کاپٹر حادثے میں5افراد ہلاک

سی ای او پی آئی اے کی دعوت پر ایئر سفاری کی، ڈی جی سی اے اے

الیکشن کمیشن عمران خان کی تقاریر پر پابندی لگائے، ن لیگ

این اے124: پیپلز پارٹی تحریک انصاف کے حق میں دستبردار

نواز شریف کو پیش نہ کر کے کیا چھپایا جا رہا ہے؟

فواد حسن فواد ایک روزہ ریمانڈ پر نیب کی تحویل میں

نگراں حکومت نے شہباز شریف کے خط کا جواب دےدیا

بھارت میں چاند ستارے والا سبزجھنڈا لگانے پر سماعت

امریکی صدر کے دورے کے خلاف فنلینڈ کے عوام کے مظاہرے

روس کا ایران میں 50 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا فیصلہ

اماراتی شہزادہ قطر فرار، ابوظہبی کے حکمراں خاندان پر تنقید

دبئی نے نئے ویزہ قوانین متعارف کروا دیے

اسرائیل کا حماس کے ساتھ جنگ میں شکست کا اعتراف

اسرائیل کو ‘صیہونی ریاست’ قرار دینے کیلئے بل تیار

ایران کی مسلح افواج کے سربراہ کی صدر ممنون حسین سے ملاقات

امریکہ کو ایرانی بحریہ کی طاقت کا اندازہ ہوگیا ہے؛بریگیڈیر رمضان شریف

فلسطین کے بارے میں امریکی شیطانی پالیسیاں ناکام ہوں گی:آیت اللہ سید علی خامنہ ای

سعودیہ میں ایران کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت نہیں ہے:علی محمد دوشنبہ

’’تمام جماعتوں سے نئے میثاقِ جمہوریت پر بات کرنا چاہتا ہوں‘‘

فرانسیسی ٹیم کا وطن واپسی پر شاندار استقبال

ترکی میں فوجی بغاوت کی ناکامی کے دو سال مکمل

کموڈور عدنان خالق کی ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی

افغان صدر کانگراں وزیراعظم اور آرمی چیف کو ٹیلی فون

یوٹا میں طوفانی بارشوں نے تباہی مچادی

شہزادہ چارلس اور ولیم نے ٹرمپ سے ملنے سے انکار کر دیا

بھارت میں گوگل کاسوفٹ ویئر انجینئر بے دردی سے قتل

امریکی سفارت کاروں کو طالبان سے براہ راست مذاکرات کی ہدایت

روسی بمبار جہازجنوبی کوریا میں داخل،کوریا کا احتجاج

میاں صاحب نے کشکول کے بجائے معیشت توڑدی،اسد عمر

بلاول کو پارٹی میں صرف ’ابا‘ ہی کیوں نظر آتا؟سراج الحق

ن لیگ ،پی پی نے کرپشن کے ریکارڈ توڑدئیے،عمران خان

فخر زمان کی سنچری، پاکستان 9وکٹ سے فاتح

’عمران خان کو ناکام جلسوں کی ہیٹ ٹرک مبارک ہو‘

سعید اجمل کا پی ٹی آئی امیدوار کی حمایت کا اعلان

ایم کیو ایم سے لوگوں کو صلہ نہیں ملا، حافظ نعیم

فاروق ستار پر خواتین برس پڑیں،سیاست چمکانے کا الزام لگا دیا

شدت پسندوں کو انسان بنانیکی ناکام کوششیں

دہشتگردی کے سائے اور اہل پاکستان

کراچی عسکری پارک میں جھولا گر گیا بچی جاں بحق 9 افراد زخمی

عالمی کپ کی اختتامی تقریب، مشعل قطر کے سپرد

حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیھا کی ولادت باسعادت مبارک ہو

فرانس فٹبال کا نیا عالمی چیمپئن، کروشیا کو شکست

اسرائیل کا 2014 کے بعد غزہ پر سب سے بڑے حملے کا دعویٰ

یمن میں سامراج کی مخالفت کا قومی دن

اسکاٹ لینڈ: امریکی صدرکے خلاف مختلف اندازمیں احتجاج

کس قانون کے تحت کالعدم جماعتوں کو کلین چٹ دی ہے، علامہ راجہ ناصر عباس جعفری

’اعتزاز احسن کی آنکھ میں ککرے پڑگئے ہیں‘

صحت بخش اور توانائی سے بھرپور. . . سلاد

آمدنی اور اخراجات میں بہت فرق ہے، شمشاد اختر

سراج رئیسانی کا جنازہ ، آرمی چیف کوئٹہ پہنچ گئے

کریمینل ایڈمنسٹریشن آف جسٹس میں محکمہ پولیس کا کلیدی کردار ہے، قاضی خالد علی

ٹرمپ دورہ برطانیہ میں اپنے الفاظ سے پھر گئے

بھارتی فوج کا کنٹونمنٹ علاقے ختم کرنے پر غور

بلوچستان کے مختلف شہروں میں سیکیورٹی ہائی الرٹ

’لیگی قیادت نے نواز اور مریم کو دھوکا دیا‘

داعش نےسعودی چیک پوسٹ پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کیخلاف مقدمہ درج

آئرش پارلیمنٹ میں اسرائیلی اشیاء کی در آمدات پر پابندی کا بل منظور

’’حکومت بنا کر سب کو ایک پیج پر لاؤں گا ‘‘

ٹرمپ کے دورۂ برطانیہ پر احتجاج کا سلسلہ جاری

نواز،مریم اور صفدر کے پاس صرف ایک دن کی مہلت

یمن میں متحدہ عرب امارات کے اقدامات جنگی جرائم ہیں، ایمنسٹی انٹرنیشنل

سندھ میں رینجرز کےخصوصی اختیارات میں 90روز کی توسیع

آپ یہ پلے باندھ لیں

تحریک انصاف نے کوئٹہ جلسہ ملتوی کردیا

2018-06-22 10:37:29

ﺑﻘﯿﻊ ﺍﻭﺭ ﻗﺪﺱ ﭘﺮ ﺳﯿﺎﺳﺖ کیوں؟

ﺑﻘﯿﻊ ﺍﻭﺭ ﻗﺪﺱ ﭘﺮ ﺳﯿﺎﺳﺖ کیوں؟

ﺳﻮﺷﻞ ﻣﯿﮉﯾﺎ ﭘﺮ ﯾﻘﯿﻨﺎ ﻣﯿﺮﯼ ﻃﺮﺡ ﺁﭖ ﮐﯽ ﻧﮕﺎﮨﻮﮞ ﺳﮯ ﺑﮭﯽ ﺍﺱ ﻗﺴﻢ ﮐﯽ ﭘﻮﺳﭧ ﮔﺰﺭﯼ ﮨﻮﮔﯽ” ﮐﮩﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﻗﺪﺱ ﮐﺎ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻡ ﻣﻨﺎﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ؟ ﮐﮩﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﻓﻠﺴﻄﯿﻦ ﮐﯽ ﺁﺯﺍﺩﯼ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻣﻈﺎﮨﺮﮮ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ؟ ﮐﮩﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﺑﯿﺖ ﺍﻟﻤﻘﺪﺱ ﮐﮯ ﺳﻠﺴﻠﮧ ﻣﯿﮟ ﺟﻠﻮﺱ ﻧﮑﺎﻟﻨﮯ ﻭﺍﻟﮯ؟ ﺑﻘﯿﻊ ﻭﯾﺮﺍﻥ ﮨﮯ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﭼﺎﺭ ﺍﻣﺎﻣﻮﮞ ﮐﯽ ﻗﺒﺮﯾﮟ ﺳﻨﺴﺎﻥ ﮨﯿﮟ ﻟﯿﮑﻦ ﻧﮧ ﻗﺪﺱ ﮐﮯ ﺟﻠﻮﺱ ﻧﮑﺎﻟﻨﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﯽ ﺧﺒﺮ ﮨﮯ ﻧﮧ ﻓﻠﺴﻄﯿﻦ ﮐﺎ ﺩﻡ ﺑﮭﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﺎ ﭘﺘﮧ ، ﮐﯿﺎ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﮐﯽ ﻋﻈﻤﺖ ﺍﻭﺭ ﻣﻈﻠﻮﻣﯿﺖ ﺑﯿﺖ ﺍﻟﻤﻘﺪﺱ ﺳﮯ ﮐﻢ ﮨﮯ ﺟﻮ ﺁﺝ ﺍﻧﮭﺪﺍﻡ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﭘﺮﻭﮦ ﻟﻮﮒ ﺧﺎﻣﻮﺵ ﮨﯿﮟ ﺟﻮ ﻗﺪﺱ ﻗﺪﺱ ﮐﺮﺗﮯ ﮔﮭﻮﻣﺘﮯ ﮨﯿﮟ؟ ” ﺷﮏ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﯿﺖ ﺍﻟﻤﻘﺪﺱ ﮨﻮ ﮐﮧ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﮐﯽ ﺍﮨﻤﯿﺖ ﺍﭘﻨﯽ ﺍﭘﻨﯽ ﺟﮕﮧ ﻣﺴﻠﻢ ﮨﮯ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﮐﯽ ﻗﺪﺍﺳﺖ ﻭ ﭘﺎﮐﯿﺰﮔﯽ ﺍﭘﻨﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﻣﻘﺎﻡ ﭘﺮ ﻃﮯ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﮨﯽ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﻇﺎﻟﻤﻮﮞ ﮐﮯ ﻗﺒﻀﮧ ﻣﯿﮟ ﮨﯿﮟ ﺍﮔﺮ ﺍﯾﮏ ﻗﺒﻠﮧ ﺍﻭﻝ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﮐﺎ ﺗﻌﻠﻖ ﮐﻌﺒﮧ ﺩﻝ ﺳﮯ ﮨﮯ ﻧﮧ ﺍﻧﮭﺪﺍﻡ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﮐﮯ ﺩﺭﺩ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺍﮨﻤﯿﺖ ﮐﻮ ﻧﻈﺮﺍﻧﺪﺍﺯ ﮐﯿﺎ ﺟﺎ ﺳﮑﺘﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﻧﮧ ﮨﯽ ﺑﯿﺖ ﺍﻟﻤﻘﺪﺱ ﮐﯽ ﺗﺎﺭﯾﺨﯽ ﺣﯿﺜﯿﺖ ﮐﻮﺍﯾﮏ ﻧﺒﯽ ﮐﯽ ﻣﻌﺮﺍﺝ ﮐﯽ ﯾﺎﺩﮔﺎﺭ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺩﻭﺳﺮﯼ ﺍﺳﻼﻡ ﮐﯽ ﻣﻌﺮﺍﺝ ﮐﯽ، ﮐﮧ ﺑﻘﯿﻊ ﻣﯿﮟ ﻭﮦ ﺷﺨﺼﯿﺘﯿﮟ ﺩﻓﻦ ﮨﯿﮟ ﺟﻨﮑﯽ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺍﺳﻼﻣﯽ ﺳﻤﺎﺝ ﮐﻮﻣﻌﺮﺍﺝ ﺑﺨﺸﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﮔﺰﺭﯼ ﺟﻨﮑﮯ ﺗﻌﻠﯿﻤﺎﺕ ﮐﮯ ﭼﺮﺍﻏﻮﮞ ﮐﯽ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﺁﺝ ﺑﮭﯽ ﺑﺸﺮﯾﺖ ﻣﻌﺮﺍﺝ ﺑﻨﺪﮔﯽ ﺗﮏ ﭘﮩﻨﭽﻨﮯ ﮐﯽ ﺩﻋﻮﺕ ﺩﮮ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ .
ﻟﯿﮑﻦﺍﻓﺴﻮﺱ ﮐﺎ ﻣﻘﺎﻡ ﮨﮯ ﮐﭽھ ﮐﺞ ﻓﮑﺮ ﺍﻭﺭ ﭼﻠﯿﭙﺎ ﻃﺮﺯ ﻓﮭﻢ ﺭﮐﮭﻨﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﻧﺎﻋﺎﻗﺒﺖ ﺍﻧﺪﯾﺸﻮﮞ ﻧﮯ ﺍﻥ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﻣﺴﺌﻠﻮﮞ ﮐﻮ ” ﺍﻧﺎ” ﮐﯽ ﺳﯿﺎﺳﺖ ﮐﯽ ﻧﺬﺭﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ . ﻋﺠﯿﺐ ﺑﺎﺕ ﺗﻮ ﯾﮧ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻗﺪﺱ ﮐﮯ ﺳﻠﺴﻠﮧ ﻣﯿﮟ ﭘﯿﺶ ﭘﯿﺶ ﺭﮨﻨﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﺗﻮ ﺁﭖ ﮐﻮ ﺍﻧہﺪﺍﻡ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﮐﮯ ﻣﻮﻗﻊ ﭘﺮ ﺿﺮﻭﺭ ﺩﯾﮑﮭﻨﮯ ﮐﻮ ﻣﻠﯿﮟ ﮔﮯ ﻟﯿﮑﻦ ﺍﻧﮭﺪﺍﻡ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﮐﮯ ﺳﻠﺴﻠﮧ ﮨﻮﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻣﻮﮞ ﮐﮯ ﻣﻨﺘﻈﻤﯿﻦ ﻭ ﺍﺭﺍﮐﯿﻦ ﻗﺪﺱ ﮐﮯ ﻣﻮﻗﻊ ﭘﺮ ﺷﺎﺫ ﻭ ﻧﺎﺩﺭ ﮨﯽ ﻧﻈﺮ ﺁﺋﯿﮟ ﮔﮯ ﺍﺳﮑﯽ ﺍﯾﮏ ﺍﺩﻧﯽ ﺳﯽ ﻣﺜﺎﻝ ﺟﻮ ﻣﯿﺮﮮ ﭘﯿﺶ ﻧﻈﺮ ﮨﮯ ﺷﮭﺮﻣﻤﺒﺌﯽ ﮨﮯ ﺟﮩﺎﮞ ﻗﺪﺱ ﮐﻤﯿﭩﯽ ﻭ ﺁﺋﯽ ﻭﺍﺋﯽ ﺍﯾﻒ ﮐﮯ ﻣﺸﺘﺮﮐﮧ ﺗﻌﺎﻭﻥ ﺳﮯ ﻗﺪﺱ ﮐﺎ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻡ ﺑﮭﯽ ﺷﺎﻧﺪﺍﺭ ﻃﺮﯾﻘﮧ ﺳﮯ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﮭﺪﺍﻡ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﭘﺮ ﺑﮭﯽ ﻣﺨﺘﻠﻒ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻡ ﻣﻨﻌﻘﺪ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﺒﮑﮧ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺑﺮﺧﻼﻑ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﮐﮯ ﺍﻧﮭﺪﺍﻡ ﮐﯽ ﻣﻨﺎﺳﺒﺖ ﻭ ﺩﯾﮕﺮ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻣﻮﮞ ﮐﮯ ﻣﻨﺘﻈﻤﯿﻦ ﻭ ﻋﻤﺎﺋﺪﯾﻦ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺗﺮ ﻗﺪﺱ ﮐﮯ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻡ ﻣﯿﮟ ﻏﺎﺋﺐ ﮨﯽ ﺭﮨﺘﮯ ﮨﯿﮟ . ﻣﯿﮟ ﮨﺮﮔﺰ ﻋﻮﺍﻡ ﮐﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮ ﺭﮨﺎ ﺑﮯ ﭼﺎﺭﮮ ﻋﻮﺍﻡ ﮨﯽ ﺗﻮ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﺟﮕﮧ ﮐﮯ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻣﻮﮞ ﮐﯽ ﮐﺎﻣﯿﺎﺑﯽ ﮐﯽ ﮐﻠﯿﺪ ﮨﯿﮟ .ﺑﺎﺕ ﺍﻥ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﯽ ﮨﮯ ﺟﻮ ﺻﻨﻒ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺳﮯ ﻣﺘﻌﻠﻖ ﮨﯿﮟ ﯾﺎ ﮐﺴﯽ ﺍﺩﺍﺭﮦ ﻭ ﭨﺮﺳﭧ ﺳﮯﺟﮍﮮ ﮨﻮﻧﮯ ﯾﺎ ﺧﺎﻧﺪﺍﻥ ﻭ ﻭﺭﺍﺛﺖ ﮐﯽ ﺑﻨﺎ ﭘﺮ ﺧﺎﺹ ﮨﯿﮟ . ﻣﯿﺮﺍ ﺳﻮﺍﻝ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﺧﺎﺹ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﺳﮯ ﮨﮯ ﺟﻮ ﮐﺲ ﺍﯾﮏ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻡ ﮐﻮ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﭘﺮ ﺗﺮﺟﯿﺢ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻡ ﻣﯿﮟ ﺟﺎﻧﺎ ﺑﮭﯽ ﮔﻮﺍﺭﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ ﮐﮧ ﺁﺧﺮ ﺍﻧﮑﮯ ﺍﺱ ﻋﻤﻞ ﮐﮯ ﭘﯿﭽﮭﮯ ﮐﻮﻧﺴﯽ ﻣﻨﻄﻖ ﮐﺎﺭ ﻓﺮﻣﺎ ﮨﮯ ﮐﮩﯿﮟ ﺍﯾﺴﺎ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﻧﮯ ﺍﻧﺠﺎﻧﮯ ﮐﺴﯽ ﺍﯾﮏ ﭘﺮﻭﮔﺮﺍﻡ ﮐﻮ ﮐﻤﺰﻭﺭ ﮐﺮ ﮐﮯ ﻭﮦ ﺩﺷﻤﻦ ﮐﮯ ﺧﯿﻤﮧ ﮐﻮ ﻣﻀﺒﻮﻁ ﮐﺮ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ؟ ﮐﮧ ﺍﻥ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﯾﮏ ﺑﮭﯽ ﭼﺎﮨﮯ ﻭﮦ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﮨﻮ ﯾﺎ ﻗﺪﺱ ﺳﯿﺎﺳﺖ ﮐﺎ ﺷﮑﺎﺭ ﮨﻮ ﮐﺮ ﺍﻧﺠﺎﻧﮯ ﻣﯿﮟ ﺩﺷﻤﻨﻮﮞ ﮐﯽ ﻧﯿﺮﻧﮕﯿﻮﮞ ﮐﯽ ﺑﮭﭩﯽ ﮐﮯ ﮨﺘﮭﮯ ﭼﮍﮪ ﮔﯿﺎ ﺗﻮ ﺁﺝ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﻮ ﮐﻞ ﺍﺱ ﮐﺎ ﺩﮬﻮﺍﮞ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺟﺎﻧﮯ ﻭﺍﻻ ﮨﮯ . ﺍﮔﺮ ﮐﺴﯽ ﮐﮯ ﺫﮨﻦ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﺧﯿﺎﻝ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﮐﯽ ﻣﻈﻠﻮﻣﯿﺖ ﺍﻭﺭ ﺁﻝ ﺳﻌﻮﺩ ﮐﮯ ﻣﻈﺎﻟﻢ ﺗﻮ ﺑﮩﺮﺣﺎﻝ ﻣﺴﻠﻤﺎﻧﻮﮞ ﮐﺎ ﺩﺍﺧﻠﯽ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﮨﮯ ﺗﻮﻭﮦ ﺍﻣﺎﻡ ﺧﻤﯿﻨﯽ ﺭﮦ ﮐﮯ ﺍﻥ ﺟﻤﻠﻮﮞ ﭘﺮﻏﻮﺭ ﮐﺮﮮ ” ﺍﮔﺮ ﮨﻢ ﺻﺪﺍﻡ ﮐﻮ ﻣﻌﺎﻑ ﺑﮭﯽ ﮐﺮ ﺩﯾﮟ، ﻗﺪﺱ ﮐﻮ ﺑﮭﻼ ﺑﮭﯽﺩﯾﮟ، ﺍﻣﺮﯾﮑﮧ ﮐﯽ ﺑﺮﺑﺮﯾﺖ ﮐﻮ ﺑﮭﻮﻝ ﺑﮭﯽ ﺟﺎﺋﯿﮟ ﻟﯿﮑﻦ ﺁﻝ ﺳﻌﻮﺩ ﮐﻮ ﮐﺒﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﺨﺸﯿﮟ ﮔﮯ ﺍﻧﺸﺎﺀ ﺍﻟﻠﮧ ﺍﭘﻨﮯ ﺩﻟﻮﮞ ﮐﮯ ﺯﺧﻤﻮﮞ ﮐﯽ ﺣﺪﺕ ﮐﻮﻣﻨﺎﺳﺐ ﻭﻗﺖ ﻣﯿﮟ ﺍﻣﺮﯾﮑﮧ ﻭ ﺁﻝ ﺳﻌﻮﺩ ﺳﮯ ﺍﻧﺘﻘﺎﻡ ﻟﯿﮑﺮ ﮨﯽ ﭨﮭﻨﮉﺍ ﮐﺮﯾﮟﮔﮯ، ﺍﺳﯽ ﻃﺮﺡ ﺍﮔﺮ ﮐﻮﺋﯽ ﯾﮧ ﺳﻮﭼﺘﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻗﺪﺱ ﺗﻮ ﺍﮬﻠﺴﻨﺖ ﺳﮯ ﻣﺘﻌﻠﻖ ﮨﮯ ﻓﻠﺴﻄﯿﻦ ﻣﯿﮟ ﮐﻮﻥ ﺳﮯ ﺷﯿﻌﮧ ﮨﯿﮟ ﺗﻮ ﻭﮦ ﻗﺮﺁﻥ ﮐﯽ ﺍﺱ ﺁﯾﺖ ﮐﺎ ﺟﻮﺍﺏ ﺩﯾﮟ ﮔﮯ ﺟﺲ ﻣﯿﮟ ﺍﺭﺷﺎﺩ ﮨﻮ ﺭﮨﺎ ﮨﮯ” ﺍﻭﺭ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﮐﯿﺎ ﮨﻮ ﮔﯿﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺗﻢ ﺍﻟﻠﮧ ﮐﯽ ﺭﺍﮦ ﻣﯿﮟ ﻗﺘﺎﻝ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ ﺍﻭﺭ ﻣﺴﺘﻀﻌﻔﯿﻦ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﻟﮍﺗﮯ ﺟﻦ ﮐﮯ ﻣﺮﺩ، ﺑﭽﮯ، ﺍﻭﺭ ﻋﻮﺭﺗﯿﮟ ﻓﺮﯾﺎﺩ ﮐﺮ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺍﺋﮯﻣﺎﻟﮏ !ﮨﻤﯿﮟ ﺍﺱ ﻗﺮﯾﮧ ﺳﮯ ﻧﺠﺎﺕ ﺩﮮ ﺟﻮ ﻇﺎﻟﻤﯿﻦ ﮐﺎ ﻣﺴﮑﻦ ﮨﮯ ﺍﻭﺭﮨﻤﺎﺭﮮ ﻟﺌﯿﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﭘﺎﺱ ﺳﮯ ﺍﯾﮏ ﻭﻟﯽ ﻭ ﻣﺪﺩﮔﺎﺭ ﻗﺮﺍﺭ ﺩﮮ ﺟﻮ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﻣﺪﺩ ﮐﺮ ﺳﮑﮯ،، ﺳﻮﺭﮦ ﻧﺴﺎﺀ ۷۵۔
ﮐﯿﺎ ﺑﯿﺖ ﺍﻟﻤﻘﺪﺱ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﻣﯿﺮﺍﺙ ﻧﮩﯿﮟ، ﮐﯿﺎ ﻓﻠﺴﻄﯿﻦ ﮐﮯ ﻣﻈﻠﻮﻡ ﺍﺱ ﺁﯾﺖ ﮐﮯ ﻣﻮﺟﻮﺩﮦ ﺩﻭﺭ ﻣﯿﮟ ﻣﺼﺪﺍﻕ ﻧﮩﯿﮟ؟ ﮐﯿﺎ ﯾﮧ ﺁﯾﺖ ﻣﻨﺴﻮﺥ ہو ﮔﺌﯽ؟ ﮐﯿﺎﺍﺱ ﮐﮯ ﻣﺨﺎﻃﺐ ﮨﻢ ﻧﮩﯿﮟ؟ ….ﮨﻢ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﺑﻌﺾ ﮐﺞ ﻓﮑﺮ ﻟﻮﮒ ﺟﺲ ﺑﻘﯿﻊ ﮐﻮ ﻗﺪﺱ ﺳﮯ ﻣﺘﺼﺎﺩﻡ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﮯ ﺩﺭ ﭘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﺱ ﻗﺒﺮﺳﺘﺎﻥ ﻣﯿﮟ ﺳﻮﻧﮯ ﻭﺍﻻ ﺍﮬﻠﺒﯿﺖ ﺍﻃﮭﺎﺭ ﻋﻠﯿﮭﻢ ﺍﻟﺴﻼﻡ ﺳﮯ ﻣﺘﻌﻠﻖ ﺍﯾﮏ ﺍﯾﮏ ﻓﺮﺩ ﺩﻧﯿﺎ ﮐﮯ ﻣﻈﻠﻮﻣﻮﮞ ﺍﻭﺭ ﻧﺎﺩﺍﺭﻭﮞ ﮐﯽ ﭘﻨﺎﮦ ﮔﺎﮦ ﺗﮭﺎ ﮐﯿﺎ ﺑﻘﯿﻊ ﻭ ﻗﺪﺱ ﮐﮯ ﺗﺼﺎﺩﻡ ﺳﮯ ﺍﻥ ﺭﻭﺣﻮﮞ ﮐﻮ ﺍﺫﯾﺖ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﮩﻨﭽﺘﯽ ﮨﻮﮔﯽ ﺟﻨﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺍﻧﺴﺎﻧﯽ ﺣﺮﯾﺖ ﻭ ﺁﺯﺍﺩﯼ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻃﻮﻕ ﺳﻼﺳﻞ ﭘﮩﻨﻨﺎ ﮔﻮﺍﺭﺍ ﮐﯿﺎ ﻟﯿﮑﻦ ﺑﺸﺮﯾﺖ ﮐﻮ ﻏﻼﻣﯽ ﺳﮯ ﻧﺠﺎﺕ ﺩﻻﻧﮯ ﮐﺎ ﻧﺴﺨﮧ ﺑﻌﻨﻮﺍﻥ ”ﮐﺮﺑﻼ” ﮨﻤﺎﺭﮮ ﺣﻮﺍﻟﮧ ﮐﺮ ﮔﺌﮯ ﺍﻭﺭ ﺁﺝ ﮨﻢ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﮨﯽ ﺑﻌﺾ ﺍﻥ ﮐﮯ ﻣﻨﺸﻮﺭ ﺣﺮﯾﺖ ﺳﮯ ﻧﮧ ﺻﺮﻑ ﻏﺎﻓﻞ ﺑﻠﮑﮧ ﺍﺱ ﮐﯽ ﻏﻠﻂ ﺗﻔﺴﯿﺮ ﮐﺮ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ …ﺟﺲ ﺑﻘﯿﻊ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺁﺝ ﮨﻢ ﺳﻮﮔﻮﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺍﺳﯽ ﺑﻘﯿﻊ ﮐﯽ ﻗﺴﻢ ﺑﯿﺖﺍﻟﻤﻘﺪﺱ ﺍﻭﺭ ﻓﻠﺴﻄﯿﻦ ﮐﺎ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﺷﯿﻌﮧ ﺳﻨﯽ ﮐﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﯾﮧ ﺑﺎﻟﮑﻞ ﺑﻘﯿﻊ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﻣﺴﺘﻀﻌﻒ ﻭ ﻣﺴﺘﮑﺒﺮﯾﻦ ﮐﮯ ﻣﺎ ﺑﯿﻦ ﺟﻨﮓ ﮐﺎ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻗﺮﺁﻥ ﻧﮯ ﺑﮭﯽ ﻣﺴﺘﻀﻌﻒ ﻭ ﻣﺴﺘﮑﺒﺮ ﮐﮯ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﮐﻮ ﺍﮨﻢ ﺟﺎﻧﺎ ﮨﮯ ﭼﻨﺎﻧﭽﮧ ﺍﯾﮏ ﯾﮭﻮﺩﯼ ﺍﻭﺭ ﻣﺴﻠﻤﺎﻥ ﮐﮯ ﺩﺭﻣﯿﺎﻥ ﺍﺧﺘﻼﻑ ﮨﻮﺍ ﺍﻭﺭ ﺣﻖ ﯾﮩﻮﺩﯼ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﺗﮭﺎ ﯾﮩﻮﺩﯼ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﭘﯿﻐﻤﺒﺮ (ﺹ ) ﮐﻮ ﺍﭘﻨﺎ ﺣﮑﻢ ﻗﺮﺍﺭ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﻮ ﻓﯿﺼﻠﮧ ﻭﮦ ﮐﺮﯾﮟ ﺍﺳﮯ ﺗﺴﻠﯿﻢ ﮐﯿﺎ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﺎ ﻟﯿﮑﻦ ﻣﺴﻠﻤﺎﻥ ﻧﮯ ﺍﺱ ﺗﺠﻮﯾﺰﮐﻮ ﯾﻮﮞ ﺭﺩ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﮐﮧ ﺟﺎﻧﺘﺎ ﺗﮭﺎ ﭘﯿﻐﻤﺒﺮ (ﺹ ) ﮐﺎ ﻓﯿﺼﻠﮧ ﮐﯿﺎ ﮨﻮﮔﺎ ﺍﺳﯽ ﻟﺌﮯ ﯾﮩﻮﺩﯼ ﮐﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮧ ﻣﺎﻥ ﮐﺮ ﯾﮩﻮﺩﯾﻮﮞ ﮐﮯ ﺍﯾﮏ ﺳﺮﺩﺍﺭ ” ﮐﻌﺐ ﺑﻦﺍﺷﺮﻑ” ﮐﮯ ﭘﺎﺱ ﭘﮩﻨﭽﺎ ﮐﮧ ﻭﮦ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﮐﮯ ﺩﺭﻣﯿﺎﻥ ﻓﯿﺼﻠﮧ ﮐﺮﮮ ﺍﺱ ﻟﺌﮯ ﮐﮧ ﺭﺷﻮﺕ ﺩﮮ ﮐﺮ ﻓﯿﺼﻠﮧ ﺍﭘﻨﮯ ﺣﻖ ﻣﯿﮟ ﮐﺮﺍﻧﺎ ﺗﮭﺎ ﻣﺴﻠﻤﺎﻥ ﻧﮯ ﯾﮧ ﭼﺎﻝ ﭼﻠﯽ ﺍﺳﯽ ﻣﻘﺎﻡ ﭘﺮ ﺁﯾﺖ ﻧﺎﺯﻝ ﮨﻮﺋﯽ ” ﮐﮧ ﺑﻌﺾ ﻟﻮﮒ ﺩﻋﻮﺍﺋﮯ ﺍﺳﻼﻡ ﺗﻮ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﻟﯿﮑﻦ ﻃﺎﻏﻮﺕ ﺳﮯ ﻣﺨﺎﻟﻔﺖ ﮐﯽ ﺟﺐ ﺑﺎﺕ ﺁﺗﯽ ﮨﮯ ﺗﻮﻣﺨﺎﻟﻔﺖ ﺗﻮ ﺩﻭﺭ ﻓﯿﺼﻠﮧ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻻ ﮨﯽ ﺍﺳﮯ ﺑﻨﺎ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ” ۶۰ ﺳﻮﺭﮦﻧﺴﺎﺀ۔
ﻣﺬﮐﻮﺭﮦ ﻣﺎﺟﺮﮮ ﻣﯿﮟ ﻗﺮﺁﻥ ﺍﯾﮏ ﻣﺴﻠﻤﺎﻥ ﮐﮯ ﻃﺮﯾﻘﮧ ﻋﻤﻞ ﮐﻮ ﺭﺩ ﮐﺮ ﮐﮯ ﯾﮩﮭﻮﺩﯼ ﮐﻮ ﺣﻖ ﭘﺮ ﻗﺮﺍﺭ ﺩﮮ ﺭﮨﺎ ﮨﮯ ﯾﻌﻨﯽ ﻗﺮﺁﻥ ﮐﺎ ﻭﺍﺿﺢ ﺍﻋﻼﻥ ﮐﮧ ﺍﮔﺮ ﻣﺴﻠﻤﺎﻥ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﻋﺪﺍﻟﺖ ﻭ ﺍﻧﺼﺎﻑ ﮐﯽ ﻗﺪﺭ ﺳﮯ ﻋﺎﺭﯼ ﮨﻮ ﺗﻮﺳﺐ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﺟﻮ ﻣﺬﻣﺖ ﮐﺮﮮ ﮔﺎ ﻭﮦ ﻗﺮﺁﻥ ﮨﻮﮔﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺑﺮﺧﻼﻑ ﺍﮔﺮ ﯾﮭﻮﺩﯼ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﻣﻨﺼﻒ ﮨﻮﮔﮯ ﺗﻮ ﻗﺮﺁﻥ ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﺣﻤﺎﯾﺖ ﮐﺮﮮ ﮔﺎ ﺑﺎﻟﮑﻞ ﺍﯾﺴﮯ ﮨﯽ ﺟﻨﺖ ﺍﻟﺒﻘﯿﻊ ﻭ ﻗﺪﺱ ﮐﺎ ﻣﻌﺎﻣﻠﮧ ﮨﮯ ﺷﯿﻌﮧ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﺑﮭﯽ ﺍﮔﺮ ﮨﻢ ﻣﻈﻠﻮﻣﻮﮞ ﺳﮯ ﻏﺎﻓﻞ ﮨﯿﮟ ﺑﻠﮑﮧ ﯾﮩﻮﺩ ﻭ ﺍﺳﺘﮑﺒﺎﺭﮐﻮ ﺣﮑﻢ ﻗﺮﺍﺭ ﺩﮮ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ ﺑﻘﯿﻊ ﮐی ﭘﺎﻣﺎﻟﯽ ﻗﺪﺱ ﮐﺎ ﺳﺒﺐ ﺑﻨﺎ ﺭﯾﮯ ﮨﯿﮟ ﺗﻮ ﯾﻘﯿﻨﺎ ﻣﺤﺎﻓﻈﯿﻦ ﻗﺮﺁﻥ ﻗﺒﺮﺳﺘﺎﻥ ﺑﻘﯿﻊ ﻣﯿﮟ ﺳﻮﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﻭﺍﺭﺛﺎﻥ ﻗﺮﺁﻥ ﮨﻢ ﺳﮯ ﻧﺎﺧﻮﺵ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﻗﺮﺁﻥ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﻋﺰﯾﺰ ﺍﻧﮩﯿﮟ ﮐﭽﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﺏ ﺍﮔﺮ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﮨﯽ ﻣﺎﻧﻨﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﻗﺮﺁﻥ ﮐﮯ ﺧﻼﻑ ﺟﺎﺋﯿﮟ ﺗﻮ ﻭﮦ ﮐﯿﺴﮯ ﺑﺮﺩﺍﺷﺖ ﮐﺮﯾﮟ ﮔﮯ .ﺁﺝ ﭘﻮﺭﯼ ﺍﯾﮏ ﻻﺑﯽ ﮨﮯ ﺟﻮ ﮐﺎﻡ ﮐﺮ ﺭﮨﯽ ﯾﮯ ﮐﮧ ﻗﺪﺱ ﮐﻮ ﺍہلسنت ﮐﺎ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﺑﻨﺎﺩﯾﺎ ﺟﺎﺋﮯ ﺍﻭﺭ ﺑﻘﯿﻊ ﮐﻮ ﺷﯿﻌﻮﮞ ﺳﮯ ﻣﺨﺼﻮﺹ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ ﺟﺎﺋﮯ ﻟﯿﮑﻦ ﮐﯿﺎ ﮐﮩﻨﺎ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﺍﻣﺎﻡ ﮐﺎ ﺟﻮ ﻓﺮﻕ ﺷﮕﺎﻓﺘﮧ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﺁﺧﺮ ﻭﻗﺖ ﻣﯿﮟ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﮨﺎﺗﮭﻮﮞ ﻣﻌﯿﺎﺭ ﺩﮮ ﮔﯿﺎ ” ﮐﻮﻧﺎ ﻟلظالم ﺧﺼﻤﺎ ﻭﻟﻠﻤﻈﻠﻮﻡ ﻋﻮﻧﺎ. ﯾﮧ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﻇﺎﻟﻢ ﮐﻮﻥ ﮨﻮ ﯾﮧ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﮩﺎ ﮐﮧ ﻣﻈﻠﻮﻡ ﮐﻮﻥ ﮨﻮ۔ ﮨﻢ ﻧﮯ ﻋﻠﯽ (ﻉ ) ﮐﯽ ﻭﺻﯿﺖ ﺳﮯ ﯾﮩﯽ ﺳﻤﺠﮭﺎ ﮐﮧ ﻇﺎﻟﻢ ﺟﻮ ﺑﮭﯽ ﮨﻮﺍﺱ ﺳﮯ ﺗﻌﻠﻖ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﻋﻠﯽ ﮐﺎ ﻣﺮﺍﻡ ﻧﮩﯿﮟ ﻣﻈﻠﻮﻡ ﺟﻮ ﺑﮭﯽ ﮨﻮ ﺍﺱ ﺳﮯ ﺍﻇﮭﺎﺭ ﮨﻤﺪﺭﺩﯼ ﻣﮑﺘﺐ ﻋﻠﯽ (ﻉ ) ﮐﺎ ﺷﯿﻮﮦ ﮨﮯ … ﺑﻘﯿﻊ ﮐﮯ ﺯﺧﻤﻮﮞ ﮐﻮﺳﻨﺒﮭﺎﻟﮯ ﺁﺝ ﺍﻧﮭﺪﺍﻡ ﺑﻘﯿﻊ ﮐﮯ ﻣﻮﻗﻊ ﭘﺮ ﺟﺲ ﻃﺮﺡ ﮨﻢ ﺍﭘﻨﮯ ﻏﻢ ﻣﯿﮟ ﻏﻤﮕﯿﻦ ﮨﯿﮟ ﻭﯾﺴﮯ ﮨﯽ ﺍﺭﺽ ﻓﻠﺴﻄﯿﻦ ﮐﯽ ﺁﺯﺍﺩﯼ ﻭ ﺑﯿﺖ ﺍﻟﻤﻘﺪﺱ ﮐﯽ ﺑﺎﺯﯾﺎﺑﯽ ﮐﮯ ﻟﺌﯿﮯ ﺑﮭﯽ ﺩﻋﺎﺀ ﮔﻮ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻟﺒﻮﮞ ﭘﺮ ﯾﮧ ﺯﻣﺰﻣﮧ ﮨﮯ ﭘﺮﻭﺭﺩﮔﺎﺭ ! ﺍﺏ ﻭﺍﺭﺙ ﺣﯿﺪﺭ ﮐﺮﺍﺭ ﮐﻮ ﺑﮭﯿﺞ ﺩﮮ ﮐﮧ ﺩﻧﯿﺎ ﺍﻧﺪﮬﯿﺮ ﮨﮯ . ﺍﻟﻠﮭﻢﺍﺭﻧﯽ ﺍﻟﻄﻠﻌﮧ ﺍﻟﺮﺷﯿﺪﮦ

زمرہ جات:   Horizontal 3 ، اسلام ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

ووٹ کی عزت کی جدوجہد

- ایکسپریس نیوز

نگران حکومت اور عوام

- ایکسپریس نیوز

اِس مٹی کی محبت میں

- ایکسپریس نیوز

کیا ہوا، کیسے ہوا؟

- ایکسپریس نیوز

حق بہ حقدار رسید

- ایکسپریس نیوز

افکار و نظریات

- سحر نیوز

یادوں کے جھروکے

- سحر نیوز