خون پھر خون ہے ٹپکے گا تو جم جائے گا

خواتین سافٹ بال ٹیم کا قیام، حشمت اللہ لودگی باسکٹ بال کا آج آغاز

جمال خاشقجی کے قتل پہ سعودی اعترافی بیان افسانہ ترازی ہے- واشنگٹن پوسٹ

ادلب: دہشت گردوں کے کیمیائی ہتھیاروں کے کارخانے میں دھماکہ، گیارہ ہلاک

اللہ تعالی نے جمال خاشقجی کے واقعہ میں سعودی عرب کو عالمی سطح پر رسوا کردیا ہے،سید حسن نصراللہ

اسرائیل کی دھمکیاں کھوکھلی ہیں: حزب اللہ کے نائب سربراہ

مہران باڈر میں طوفان کے نتیجے میں ایک زائر شہید ۱۵ زخمی

یمن: الحالی شہر پر سعودی بمباری پانچ عام شہری شہید، متعدد زخمی

نواز شریف، شاہد خاقان عباسی کے خلاف بغاوت کیس کی سماعت ملتوی

’’خاشقجی کے قتل کی وضاحت ضروری ہے‘‘

افغانستان میں دھماکا، بچوں اور عورتوں سمیت 11 شہری ہلاک

پاکستان ایران گیس پائپ لائن کا ٹھیکہ روس نے لے لیا

تائیوان میں خطرناک ٹرین حادثہ، 18 افراد ہلاک، درجنوں زخمی

اسرائیلی وزیراعظم نے فلسطینی آبادی کو مسمار کرنے کا ارادہ مؤخر کردیا

صحافی جمال خشوگی کی ہلاکت پر سعودی وضاحت ناکافی ہیں، جرمن چانسلر مرکل

کراچی: ’غلط چالان‘ پر خودسوزی کرنے والا رکشہ ڈرائیور چل بسا

آئندہ ای سی ایل میں نام کی اطلاع 24 گھنٹے میں کردی جائے گی: سیکریٹری داخلہ

9کشمیریوں کی شہادت پر وادی میں مکمل ہڑتال

مشترکہ تربیتی مشقوں کیلئے روسی فوجی دستے کی پاکستان آمد

’’جعلی اکاؤنٹس معاملہ، سندھ حکومت تعاون نہیں کر رہی‘‘

جنوبی پنجاب صوبے کا خواب پی ٹی آئی کے دور میں پورا ہوگا، وزیراعلیٰ پنجاب

وقت آگیاہےبھارت مسئلہ کشمیرکومذاکرات سےحل کرے، وزیراعظم عمران خان

جمال خاشقجی کا قتل ایک سنگین غلطی تھی: عادل الجبیر

وزیر اعظم عمران خان کی بنی گالہ رہائش گاہ کو بچانے کی کوششیں

ڈیرہ غازی خان میں دو بسوں میں خوفناک تصادم، 19 افراد جاں بحق

امریکا اور روس آمنے سامنے: ایٹمی ہتھیاروں کے معاہدے کی منسوخی پر روس کی امریکا کو دھمکی

عالمی قوتوں کا صحافی کی موت پر سعودی وضاحت کو ماننے سے انکار، ٹرمپ یو ٹرن لینے پر مجبور

ایم ڈبلیوایم رہنما ناصرشیرازی کا وفد کے ہمراہ دورہ بہاولنگر، پولیس گردی کا نشانہ بننے والے خاندان سے اظہار یکجہتی

صحیفہ سجادیہ میں اسلامی سیاست کے طور طریقے موجود ہیں

33 ہزار پاکستانی زائرین ایران کے راستے کربلا کیلئے روانہ

سعودی عرب نے خاشقجی کے قتل کے بارے میں تمام حقائق بیان نہیں کئے

سعودی تعاون مگر کس قیمت پہ؟

ایرانی محافظوں کی بازیابی کیلئے آرمی چیف سے مدد کی درخواست

جمال خشوگی کیس، سعودی وضاحت سے مطمئن نہیں، ٹرمپ

بابری مسجد کی شہادت میں ملوث ہندو انتہا پسند شہری نے اسلام قبول کرلیا

کراچی این اے 247 میں 12 امیدوارمیدان میں

این اے 247 ضمنی الیکشن‘ صدر پاکستان ڈاکٹرعارف علوی نےاپنا ووٹ کاسٹ کردیا

نئے پاکستان کی تعمیر کی جدوجہد میں سب کوکردار ادا کرنا ہوگا ‘ عثمان بزدار

ملتان، جعلی ڈگریاں فروخت کرنے والال ٹیچر گرفتار

زائرین کو درپیش مسائل کیخلاف علمائے بلتستان کا احتجاج

شام: داعش نے 27 مغویوں میں سے دو خواتین اور 4 بچوں کو رہا کر دیا

روز لیلة الہریر

سینیٹر رحمن ملک کا وزیراعظم کو خط

جمال خاشقجی قونصل خانے کے اندر جھگڑے میں مارا گیا: سعودی اٹارنی جنرل

مقبوضہ کشمیر: بھارتی فوج کا ریاستی جبر جاری، مزید 3 کشمیری جاں بحق

کابل پولنگ اسٹیشن دھماکہ: 5 پولیس اہلکاروں سمیت 15 افراد جاں بحق

آئی این ایف معاہدہ: ’روس نے خلاف ورزی کی، امریکہ اس معاہدے سے نکل جائے گا‘

جمال خاشقجی کی ہلاکت کے معاملے پر برطرف کیے گئے جنرل احمد العسیری کون ہیں؟

قندھار حملہ: ’طالبان اور پاکستان مخالف‘ جنرل عبدالرازق کون تھے؟

ایران کے خلاف امریکی اقدامات، مشرق وسطیٰ بحران کے لئے زہر قاتل: پیوٹن

غزہ: اسرائیلی فوج کا فلسطینیوں پر طاقت کا وحشیانہ استعمال، دسیوں افراد زخمی

ساڑھے تین منٹ میں 300 فلسطینیوں کو شہید کر دیا تھا: ایہود باراک

ضمنی الیکشن: قومی وصوبائی اسمبلیوں کی 3 نشستوں پر پولنگ جاری

غزہ: فلسطین کا بچہ بچہ سروں پر کفن باندھ کر دشمن کے خلاف میدان جہاد میں اترے گا: القسام

خشوگی کی لاش حوالے کی جائے، حقوق انسانی کی تنظیم کا سعودی عرب سے مطالبہ

افغانستان کے خونریز پارلیمانی انتخابات

پاکستانی زائرین اربعین کے لئے ایران میں سہولتیں

امریکی اراکین کانگریس کا سعودی عرب کے ساتھ تعلقات پر نظرثانی کی ضرورت پر زور

جمال خاشقجی کے قاتلوں کے نام اور تفصیلات

عمران خان کا نیا پاکستان عوام کیلئے ڈراؤنا خواب بن چکا ہے، بلاول بھٹو

آئی ایم ایف سے لیا جانے والا موجودہ قرضہ آخری ہوگا، اسد عمر

وزیراعلیٰ سندھ نے بجلی بریک ڈاؤن کا نوٹس لے لیا

’’صوبہ بنانے کیلئے آئینی طریقہ کار موجود ہے‘‘

اساتذہ کی تربیت کے لیے عالمی اسکالرز کو پاکستان بلائیں گے: صوبائی وزیر تعلیم

سانحہ ماڈل ٹاؤن پر لاہور ہائی کورٹ کافیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج

’’بجلی بریک ڈاؤن، وفاق، نیپرا کے الیکٹرک سے جواب طلب کرے‘‘

کاروبارمیں اتارچڑھاؤآتے رہتے ہیں پریشان نہیں ہونا چاہیے‘ اسد عمر

خاشقجی کے دو مشتبہ قاتلوں کی نئی تصاویر منظرعام پر

پاکستان کیلئےکھیلوں کی دنیا سےایک اوراعزاز

سعودی صحافی بہیمانہ قتل:خطیب جمعہ تہران کا سعودی عرب کے سنگین اور مجرمانہ جرائم کی طرف اشارہ

عرب علاقوں پر صیہونی قبضہ علاقے میں بدامنی کی سب سے بڑی وجہ: بشار جعفری

2018-06-24 22:34:55

خون پھر خون ہے ٹپکے گا تو جم جائے گا

(تحریر:عظمت علی )
گذشتہ ایام کے مقابل آج لوگوں نے اس قدر ترقی کے زینے طے کر لئے ہیں کہ موبائیل ،ٹیب لیٹ، لیپ ٹاپ اور کمپوٹر کی صورت میں دنیا مٹھی میں سمٹ کر آ گئی ہے۔ دور حاضر کا انسان روزانہ صبح سویرے اٹھتے ہی اخبار کا مطالعہ کرتا ہے ۔جس میں ظلم ،ظالم ،مظلوم ،اور قتل ،قاتل ،مقتول کے نت نئے چہرے نمایاں طور پر نظر آتے ہیں ۔ ان تمام واقعات کی مشترکہ روداد غم یہ ہوتی ہے کہ ان میں معصوم مسلمان مردو عورت اور بچوں کو ظلم کو نشانہ بنایا جانا واضح طور پر دکھائی دیتاہے۔ قابل تعجب بات یہ ہے کہ اس سفاکانہ کارنامے کو بروئے کار لانے والے دشمن عناصرنے مسلمانوں کاحلیہ اپنالیا ہے اور اپنی شناخت ایک متدین اور حقیقی مسلمان کی حیثیت سے کراتے ہیں۔ جس کا واحد مقصد یہ ہے کہ سانپ بھی مرجائے لاٹھی بھی نہ ٹوٹے!

جب ان مجرموں کو اپنے کئے کی سزا نہ ملی اور مسلمان دشمن نہیں بلکہ انسان دشمن ایجنسیوں نے ان کی جنگی اسلحہ اور دیگر تمام وسائل زندگی فراہم کئے تو ان کی جسارتیں اور جوان ہو گئیں ۔جس کے چلتے ان درندہ صفت لوگوں نے مسجد ،مندر ،گرجا گھر،عزاخانہ ،مقدس روضوں اور مذہبی مقامات کی برملا توہین کر کے عالم انسانیت کے زخموں پر نمکچھڑک دیا ہے۔

آج سے تقریباً 93 برس قبل 8 شوال المکرم 1344ھ بمطابق .1925.1926ء میں آل سعود نے بنی امیہ و بنی عباس کے نقش قدم پر چلتے ہوئے خاندان نبوت وعصمت کے لعل و گہر کی قبروں کو جنت البقیع (مدینہ منورہ ) اور اسی سال جنت المعلیٰ (مکہ معظمہ ) میں ویران کر کے اپنے اس بغض و عداوت کا ثبوت دیاجو صدیوں سے ان کے سینوں میں کروٹیں لے رہا تھا۔ چوری کے بعد سینہ زوری کا عالم یہ ہو اکہ ان کے زرخرید غلاموں نے یہ فتویٰ صادر کیا کہ قبر پر سائباں ،چھت ،گنبد ،مینار اور قبور و حرم بنانا اور اس کی زیارت کرنا حرام ہے۔جبکہ قرآن مجید کی صریحی بیان ہےکہ :ومن یعظم شعائراللہ فانھا من تقو ی القلوب ” اور جو بھی اللہ کی نشانیوں کی تعظیم کرے گا یہ تعظیم اس کےدل کے تقویٰ کا نتیجہ ہو گا۔(حج 32)

ام قیس بنت محض کابیان ہےکہ ایک دفعہ میں رسول خدا کے ہمراہ بقیع پہنچی تو آپ نے فرمایا: اس قبرستان سے ستر ہزار افراد محشور ہوں گے جو بغیر حساب و کتاب داخل بہشت ہوں گے ۔نیز ان کے چہرے چودھویں رات کے چاند کے مانند دمک رہے ہوں گے۔ (صحیح بخاری جلد 4حدیث4 ،سنن نسائی جلد 4 حدیث 91سنن ابن ماجہ جلد 1 صفحہ 493)

اگر بفرض محال مذکورہ فتویٰ کو تسلیم کرلیں تو اس کا یہ مطلب ہوگاکہ 1115ھ سے پہلے جہاں جہاں بھی قبورکی زیارت ،احترام ،تعمیر و مرمت ہوئی وہ سب کفر و شرک کےزمرے میں شامل تھا۔یعنی اس کا کھلاہوا مفہوم یہ ہوا کہ محمدابن عبدالوہاب سے قبل گذشتہ تمام علماء اسلام غیر اسلامی و حرام افعال میں ملوث تھے جبکہ بات ازلحاظ عقل و منطق بالکل بعید نظر آتی ہے ۔آل سعود کی یہ کارستانیاں کہ عراق اورشام سے حج و عمرہ کی انجام دہی کی خاطر تشریف لانے والوں پر پابندی عائد کرنا اور سعودی عرب میں مقیم حضرات پر یہ دباؤ کہ وہابیت قبول کرو ورنہ جلاوطن کر دیئے جاؤگے ۔جس کے باعث ہزاروں مسلمان ان کےمظالم سے تنگ آکر حجازکو الوداع کہنے پر مجبورہو گئے۔

مقامات مقدسہ کی بے حرمتی کرنا کوئی نیا مسئلہ نہیں ہے بلکہ یہ سیاہ کارنامے صدیوں کا سفر کر چکے ہیں۔لیکن چونکہ آج میڈیا کا دور ہے اس سبب سے اگر دنیا کےکسی بھی گوشہ و کنار میں دہشت گرد انہ واردات ہوتی ہیں تو اس کی خبریں لمحوں میں جنگل کی آگ کے مانند پھیل جاتی ہے۔مثلاً 2013 ء میں صحابی رسول اکرم جناب حجر ابن عدی کی قبر مطہر کو سلفی گروہ نے مسمار کرکے جب ان کے ترو تازہ جسم اطہر کی تصویریں سوشل میڈیاپر شائع کیں تو لمحوں میں اس دردناک خبر نے پوری دنیا میں غم وآلام کی فضا قائم کردی ۔لوگوں نےان کےاس وحشیانہ عمل پر صدائے احتجاج بلند کرکے رسول اعظم اور ان کےاصحاب باوفا سےاظہار محبت کا ثبوت پیش کیا۔اسی طرح 2014 ء میں جب ان سلفی وہابی گروہ نے انبیائے خدا جناب یونس اور جناب شیث علیہماالسلام کے مزارات پر دہشت گردانہ حملہ کیا تو اس المناک واقعہ کی خبر پورے عالم میں جاپہنچی ۔پوری دنیاکےحریت پسند افراد نے اس شیطانی عمل کی سخت الفاظ میں مذمت کی اور مسلم و غیر مسلم حلقوںنے ایک عظیم پیمانہ پر احتجاجی جلوس بھی نکالا ۔

المختصر! یہ سلسلہ روز ازل سے جاری وساری ہے مگر جس کر وفر سے اس ظالمانہ روش کو اختیار کیاگیا اسی شد ت سے مظلومیت میں نکھار پیدا ہوتاگیا اور پھر ان مظالم کااختتام ظالم کے تابوت کی آخری کیل ثابت ہوا جس کے بعد ظلم و ظالم دونوں پور ی دنیا میں رسوائے زمانہ ہوئے اور یہ ہونا ہی تھا کیوں کہ ’’ظلم پھر ظلم ہے بڑھتا ہے تو مٹ جاتاہے‘‘

زمرہ جات:   Horizontal 3 ، اسلام ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

یادوں کے جھروکے

- سحر ٹی وی

عمران خان کے استاد

- بی بی سی اردو