ذاتی مراسم اور سعودی اتحاد: کیا نواز شریف پاکستان کو ذاتی ملکیت سمجھتے ہیں؟

’’ کالعدم تنظیموں کا انتخابات میں حصہ لینا، جمہوریت کے لیے خطرہ ہے‘‘،بلاول بھٹو

’پی پی اور ن لیگ میں پس پردہ نیا مک مکا چل رہا ہے‘

ٹیکس ادائیگی سے متعلق غلط بیانی عمران اسماعیل کے گلے پڑگئی

سعودی عرب: خواتین کو طیارے اڑانیکی تربیت کی اجازت

خان صاحب عوام میں مقبول نہیں ،بلاول کا دعویٰ

پارلیمنٹ نے اسرائیلی وزیراعظم سے جنگی اختیارات چھین لیے

کراچی:الیکشن میں دہشت گردی کی سازش،2 گرفتار

صہیونی جیل میں اسیر 4 فلسطینیوں کی بھوک ہڑتال ہنوز جاری

اسپین کے کئی شہروں کا اسرائیلی بائیکاٹ مہم میں شمولیت کا اعلان

ورثے میں ہمیں یہ غم ہے ملا، بلاول کا ٹوئٹ

پاکستان نے زمبابوے کو تیسرے ون ڈے میں شکست دے دی

لیبیا میں کنٹینر میں دم گھٹنے سے 8 غیرقانونی تارکین وطن ہلاک

برطانوی وزیر اعظم تھریسامے کی مشکلات میں اضافہ، ایک اور وزیر مستعفی

افغانستان میں امریکا کی حکمت عملی ناکام ہو گئی، حامد کرزئی

افغانستان میں داعش کا حملہ، طالبان کمانڈر سمیت 20 ہلاک

ایرانی افواج ہر طرح کی جارحیت کا جواب دینے کے لئے آمادہ و تیار ہیں:ایرانی وزیر دفاع

اسرائیل نے غزہ تک ایندھن کی ترسیل بند کر دی

بن سلمان کی ذاتی سیکورٹی "موساد” کے حوالے، امریکی تجزیہ کار

چین میں گرمی سے روڈ پگھلنے لگے

سعودی عرب : خواتین ڈرائیورزکیلئے زنانہ جیلوں کی تیاری

اسرائیل کی مسجد اقصیٰ کے قریب پھر کھدائی

زرداری اور فریال کا نام ای سی ایل سے خارج

مستونگ خود کش حملہ آور کا ڈی این اے ٹیسٹ

خواجہ حارث نے نواز شریف کے جیل ٹرائل کا مقصد بتادیا

عمران خان کو نیب نے آج طلب کرلیا

رؤف صدیقی سردارشیر محمد رند کے حق میں دستبردار

صفدر کی گرفتاری میں رکاوٹ ڈالنے والوں کی ضمانت میں توسیع

نادرا آج سے ’رزلٹ ٹرانسمیشن سروس‘ ایکٹیویٹ کرے گا

نواز اورمریم کی سزاؤں کیخلاف درخواست کی سماعت کل ہوگی

حافظ آباد میں پی ٹی آئی اور ن لیگی کارکنوں میں تصادم

اسکول جس میں صرف ایک بچی پڑھتی ہے

بجلی مہنگی کرنے کیلئے نیپرا کو درخواست ارسال

شہباز ، عمران، بلاول کو وزیر اعظم کے برابر سکیورٹی فراہم کرنے کا فیصلہ

شیعہ رہنماوں کی کالعدم جماعت کے سرغنہ لدھیانوی سے ملاقات کی رُداد، علامہ امین شہیدی کی زبانی

گورنر اسٹیٹ بینک کیخلاف 22 سینیٹرز کی درخواست مسترد

شاہد آفریدی کی سراج رئیسانی کے اہلخانہ سے تعزیت

یادداشت کیلئے چارسائنسی انداز

یاہو میسنجر کی موت واقع ہو گئی

جنوبی کوریا:ہیلی کاپٹر حادثے میں5افراد ہلاک

سی ای او پی آئی اے کی دعوت پر ایئر سفاری کی، ڈی جی سی اے اے

الیکشن کمیشن عمران خان کی تقاریر پر پابندی لگائے، ن لیگ

این اے124: پیپلز پارٹی تحریک انصاف کے حق میں دستبردار

نواز شریف کو پیش نہ کر کے کیا چھپایا جا رہا ہے؟

فواد حسن فواد ایک روزہ ریمانڈ پر نیب کی تحویل میں

نگراں حکومت نے شہباز شریف کے خط کا جواب دےدیا

بھارت میں چاند ستارے والا سبزجھنڈا لگانے پر سماعت

امریکی صدر کے دورے کے خلاف فنلینڈ کے عوام کے مظاہرے

روس کا ایران میں 50 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا فیصلہ

اماراتی شہزادہ قطر فرار، ابوظہبی کے حکمراں خاندان پر تنقید

دبئی نے نئے ویزہ قوانین متعارف کروا دیے

اسرائیل کا حماس کے ساتھ جنگ میں شکست کا اعتراف

اسرائیل کو ‘صیہونی ریاست’ قرار دینے کیلئے بل تیار

ایران کی مسلح افواج کے سربراہ کی صدر ممنون حسین سے ملاقات

امریکہ کو ایرانی بحریہ کی طاقت کا اندازہ ہوگیا ہے؛بریگیڈیر رمضان شریف

فلسطین کے بارے میں امریکی شیطانی پالیسیاں ناکام ہوں گی:آیت اللہ سید علی خامنہ ای

سعودیہ میں ایران کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت نہیں ہے:علی محمد دوشنبہ

’’تمام جماعتوں سے نئے میثاقِ جمہوریت پر بات کرنا چاہتا ہوں‘‘

فرانسیسی ٹیم کا وطن واپسی پر شاندار استقبال

ترکی میں فوجی بغاوت کی ناکامی کے دو سال مکمل

کموڈور عدنان خالق کی ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی

افغان صدر کانگراں وزیراعظم اور آرمی چیف کو ٹیلی فون

یوٹا میں طوفانی بارشوں نے تباہی مچادی

شہزادہ چارلس اور ولیم نے ٹرمپ سے ملنے سے انکار کر دیا

بھارت میں گوگل کاسوفٹ ویئر انجینئر بے دردی سے قتل

امریکی سفارت کاروں کو طالبان سے براہ راست مذاکرات کی ہدایت

روسی بمبار جہازجنوبی کوریا میں داخل،کوریا کا احتجاج

میاں صاحب نے کشکول کے بجائے معیشت توڑدی،اسد عمر

بلاول کو پارٹی میں صرف ’ابا‘ ہی کیوں نظر آتا؟سراج الحق

ن لیگ ،پی پی نے کرپشن کے ریکارڈ توڑدئیے،عمران خان

فخر زمان کی سنچری، پاکستان 9وکٹ سے فاتح

2015-12-20 05:30:31

ذاتی مراسم اور سعودی اتحاد: کیا نواز شریف پاکستان کو ذاتی ملکیت سمجھتے ہیں؟

najo

پاکستان نے سعودی عرب کی زیر قیادت فوجی اتحاد میں شمولیت کی باضابطہ تصدیق کر دی ہے تاہم ساتھ ہی یہ بھی واضح کر دیا ہے کہ سعودی عرب سے موصول ہونیوالی تفصیلات کے بعد طے کیا جائیگا کہ اس فوجی اتحاد میں پاکستان کا کردار کس نوعیت کا ہوگا اور کس حد تک اس اتحاد میں شرکت ہوگی۔ اس سلسلہ میں ترجمان دفتر خارجہ قاضی خلیل اللہ نے گزشتہ روز اپنی ہفتہ وارپریس بریفنگ میں بتایا کہ پاکستان نے پہلے ہی دہشت گردی اور انتہاء پسندی کے انسداد کیلئے اقوام متحدہ اور اوآئی سی کی قراردادوں پر عملدرآمد کے عزم کا اعادہ کیا تھا جبکہ ان قراردادوں میں بھی دہشت گردی‘ انتہاء پسندی کی سوچ کیخلاف علاقائی اور بین الاقوامی کوششوں میں حصہ لینے پر زور دیا گیا ہے۔ 24 گھنٹے کے اندر اسلام آباد کی یہ قلابازی صرف اس بات کا اعتراف ہے کہ حکومت دہشت گردی اور انتہا پسندی کے علاوہ خارجہ امور پر بھی کسی واضح اور دو ٹوک پالیسی پر عمل پیرا نہیں ہے۔ ملک میں مختلف سرکاری اداروں کے درمیان تعاون و اشتراک کی شدید کمی ہے۔ اسٹیبلشمنٹ کی بالا دستی اور اپنے طور پر فیصلے کرنے کی عادت قرار دیا جائے یا یہ کہا جائے کہ ملک کے سیاست دان فوج کے سامنے کوئی ٹھوس مؤقف اختیار کرنے کا حوصلہ نہیں رکھتے۔ یا یہ بھی سمجھا جا سکتا ہے کہ اسلام آباد کی اصل ترجیح قومی مفاد کی بجائے طاقتور اور مالدار دوست ملکوں کی ضرورتوں کا خیال رکھنا ہے۔ لیکن یہ بات واضح ہے کہ پاکستان کے طاقتور ادارے ایک دوسرے سے دست و گریبان ہیں۔ تاہم کسی بھی ادارے کے پاس خواہ وہ فوج ہو یا سیاسی حکومت تمام امور کو ملا کر دیکھنے اور دنیا میں رونما ہونے والے حالات اور تبدیلیوں کو پیش نظر رکھ کر فیصلے کرنے کا حوصلہ اور صلاحیت نہیں ہے۔ بین الریاستی مراسم میں ہمارے دوسرے ممالک کے ساتھ جنگی دفاعی تعاون کے معاہدے تو ہو سکتے ہیں تاہم یہ معاہدے ملکی سلامتی اور قومی مفادات کو پیش نظر رکھ کر ہی کئے جاتے ہیں جن میں یہ خیال بہرصورت رکھا جاتا ہے کہ جس ملک کے ساتھ دفاعی تعاون کا معاہدہ کیا جارہا ہے وہ ہماری افواج کو ہمارے کسی دوست ملک کی سالمیت کیخلاف استعمال نہیں کریگا۔ بلاشبہ ہر ملک کو اپنی خودمختاری اور سلامتی عزیز ہوتی ہے اس لئے کوئی ملک بیرونی تعلقات کے حوالے سے اپنی سلامتی اور خودمختاری کو دائو پر نہیں لگاتا۔ حرمین الشریفین کے حوالے سے سعودی دھرتی ہمارے لئے مقدس دھرتی ہے اور حرمین الشریفین کی حفاظت ہمارا ملی اور اسلامی فریضہ بھی ہے جس کی ادائیگی میں ہماری جانب سے پہلے بھی کبھی کوئی فروگزاشت نہیں ہوئی اور آئندہ بھی حرمین الشریفین کو کسی خطرہ کی صورت میں افواج پاکستان سیسہ پلائی دیوار بنیں گی تاہم سعودی مفادات ایک الگ معاملہ ہے جس میں دوطرفہ تعلقات کے حوالے سے ہمیں بھی اپنے مفادات کو اسی طرح پیش نظر رکھنا ہوگا جیسے برادر سعودی عرب اپنے مفادات کو فوقیت دیتا ہے۔ اسلامی فوجی اتحاد کا تصور خواہ شہزادہ محمد بن سلمان کی ذاتی مجبوریوں کا مظہر ہو یا اس کا اعلان مشرق وسطیٰ میں امریکی بدحواسی کو چھپانے کے لئے کیا گیا ہو، یہ بات طے ہے کہ نہ تو یہ اتحاد کسی مؤثر قوت میں تبدیل ہو سکتا ہے اور بالفرض محال امریکی سرپرستی اور سعودی دولت کے سہارے اس لولے لنگڑے اتحاد کو مصنوعی ٹانگیں فراہم بھی کر دی گئیں تو بھی یہ ” فوجی قوت “ مشرق وسطیٰ میں روس کی مداخلت اور ایران کے اثر و رسوخ کی موجودگی میں کوئی بڑا کارنامہ سرانجام دینے میں ناکام رہے گی۔ امریکہ ہو یا سعودی عرب یا ان دونوں کے آگے بے بس و مجبور پاکستان …….. اگر شام میں تبدیل ہوتے ہوئے حالات کا اندازہ کئے بغیر فرقہ بندی کی بنیاد پر دہشت گردی سے لڑنے کا ارادہ کریں گے اور اس کا مقصد دمشق میں اپنی مرضی کی حکومت کو مسلط کرنا ہو گا تو وہ علاقے میں رونما ہونے والے نئے اشتراک اور تبدیلیوں کی بنا پر اس مقصد میں کامیاب نہیں ہو سکتے۔ اب سوال یہ نہیں ہے کہ دمشق میں بشار الاسد کی حکومت قائم رہے یا اسے ختم کیا جائے بلکہ یہ ہے کہ کیا امریکہ مشرق وسطیٰ میں اپنی کئی دہائیوں پر محیط غلط کاریوں کو قبول کرنے اور یہ تسلیم کرنے پر تیار ہے کہ اب معاملات صرف واشنگٹن کی صوابدید اور خواہش کے مطابق طے نہیں ہو سکتے۔ اگر امریکہ یہ ادراک کرنے میں ناکام ہے تو اس کے کمزور حلیف یعنی سعودی عرب یا پاکستان کیوں کر اس حوالے سے درست اور بصیرت سے بھرپور حکمت عملی اختیار کر سکتے ہیں۔

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

یادوں کے جھروکے

- سحر ٹی وی