تاریخی تناظر میں تین محرم

ایشیا کپ سپر فور،پاکستان کی بھارت کیخلاف ٹاس جیت کر بیٹنگ

شمالی وزیرستان میں شہید جوانوں کی نماز جنازہ، آرمی چیف کی شرکت

حالات کشیدہ ہونےکےباوجود پاکستان کرتار پور بارڈر کھولنے کو تیار‘ فواد چوہدری

گرمی کی لہر کے پیش نظر وزیراعلیٰ سندھ کےاحکامات

بھارت کی جانب سے ستلج، راوی اورچناب میں پانی چھوڑے جانے کا امکان

بھارت کچھ کرے توسہی اس کو صحیح سبق سکھایا جائے گا‘ پرویز مشرف

عمران خان بانیان پاکستان کے خواب کو تعبیردے رہے ہیں ‘ وزیراعلیٰ پنجاب

وزیراعظم عمران خان لاہور پہنچ گئے

بارہ محرم کے اہم واقعات

مصر میں شیعہ مسلمانوں کو یوم عاشور منانے نہیں دیا گیا

پیوٹن کا اسرائیلی ایئرفورس چیف سے نہ ملنے کا عزم

برطانیہ میں قبل از وقت انتخابات کا مطالبہ

الیکشن بائیکاٹ کے علاوہ بھارت کو اپنی بات سنانے کا اور کوئی راستہ باقی نہیں رہ گیا تھا، عمر عبداللہ

چین نے امریکہ کے ساتھ تجارتی مذاکرات منسوخ کر دیئے

روسی صدر کی اہواز میں فوجی پریڈ پر دہشتگردانہ حملے کی شدید مذمت

افغانستان میں بم دھماکہ، 8 بچے جاں بحق اور 6 زخمی

تنزانیہ: جھیل میں کشتی الٹ گئی، 100 سے زائد افراد ہلاک

بھارت کشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے تک مذاکرات نہیں کرے گا، تجزیہ کار

ترکی میں 110 فوجی اہلکار گرفتار

عراقی وزير خارجہ نیویارک روانہ ہو گئے

انصار اللہ کا سعودی عرب کی جارح فوج کے خلاف دفاعی کارروائیاں جاری رکھنے کا عزم

اقتصادی جنگ میں امریکہ کی شکست یقینی ہے: ایرانی صدر حسن روحانی

اہواز کے دھشتگردانہ حملے کے موقع پر قوم کے نام رہبر انقلاب اسلامی کا تعزیتی پیغام

تصاویر: ایران میں فوجی پریڈ پر مسلح افراد کا حملہ

قتل حسین کے بعد نساء اہل بیت کے مرثیے – عامر حسینی

ایران میں فوجی پریڈ پر حملے میں شہدا کی تعداد 29 ہو گئی

شام میں روسی جہاز گرنے کا ذمہ دار اسرائیل: روسی وزیر دفاع

افغانستان: بم دھماکے میں 8 بچے جاں بحق، 6 زخمی

سعودی جارحیت سے یمنیوں کو خطرناک قحط کا سامنا ہے، انسانی حقوق

’قانون نافذ کرنے والوں نے عاشورہ محرم پرامن بنایا‘

حضرت امام حسینؑ کی جدوجہد نے ثابت کر دیا کہ دین کا نظم سب سے بڑھ کر ہے، طاہرالقادری

جنگ یمن نے سعودی معیشت کی چولیں ہلا دیں، شاہی حکومت قرضہ لینے پر مجبور

یمنی عوام امن و استحکام کے خواہاں ہیں: انصاراللہ

کربلا سے ہم سیکھتے کیا ہیں؟

’بھارت کے منفی جواب پر مایوسی ہوئی‘

حضرت امام حسینؑ نے عظیم مقصد کیلئے قربانی دی ‘ ڈاکٹر رخسانہ جبین

پاکستان کی ایران میں فوجی پریڈ پرحملے کی شدید مذمت

واقعہ کربلا تاریخ اسلام کاہی نہیں تاریخ کا درخشندہ باب ہے،گورنرپنجاب

امام حسین ؑنے امت کو جبر کے خلاف ڈٹ جانے کا ولولہ دیا، علامہ اوکاڑوی

مسلم حکمران اقتدار بچانے کیلئے یزیدان عصر کے کیمپ میں جا بیٹھے ہیں،آغا سید حامد علی شاہ موسوی

امریکا پابندیاں ختم کرے یا نتائج کیلئے تیار رہے،چین

بریکنگ نیوز| اہوازمیں فوجی پریڈ پر دہشت گردوں کا حملہ، سپاہ پاسداران کے 8 اہلکار شہید 7 زخمی

آغا سید حسن کی قیادت میں بڈگام اور جڈی بل میں جلوس ہائے عاشورا

عراق: ابوبکر البغدادی کے نائب کو سزائے موت سنادی گئی

ایران شام میں تعمیری کردارادا کررہا ہے:تجریہ نگار جان کرسٹن

حکومتی قدغن کے باوجود لالچوک سے جلوس عاشورا برآمد، عزاداروں کی گرفتاریاں اور پولیس تشدد

بحرین: حسینی عزاداروں پر حملہ، جمعیت الوفاق کی جانب سے شدید مذمت

امام حسین علیہ السلام کا راستہ عزت و کرامت اور آزادی کا راستہ ہے، سید حسن نصراللہ

آپ کیا جانیں کربلا کیا ہے

کربلا میں گیارہ محرم

یمن کی سڑکوں کی فضا میں لبیک یاحسین اور ھیہات منا الذلہ کی گونج

نائیجیریا میں عزاداروں پر پولیس اور فوج کے حملے

سعودی عرب ،یمن میں جنگی جرائم کی تحقیقات کے سلسلے میں رکاوٹ ڈال رہا ہے

سفرِ کربلا ۔ امام حسین علیہ السلام کی آخری قربانی

حضرت امام زمان (عج) کی حضرت علی اکبر(ع) سے شباہت

واقعہ کربلا کا سوز اوردرد و غم 14 صدیاں گزرنے کے باوجود ہمارے دلوں میں موجود ہے

پاکستان میں یوم عاشور عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا

محرم میں نواسہ رسول کی یاد منانے والوں پر تنقید کرنے والوں کی خدمت میں

تصاویر: لندن میں 29 واں سالانہ روز عاشورا کا جلوس عزا

بھارت پاکستانی وزیر خارجہ سے ملاقات طے کرکے مُکرگیا

واقعہ کربلا ثابت قدمی اور استقامت کی مثال ہے: وزیراعظم عمران خان

حضرت امام حسین(ع) غیروں کی نظر میں

کیا امام حسین (علیہ السلام) اپنی شہادت سے باخبر تھے ؟

کربلائے معلیٰ میں لاکھوں زائرین کی موجودگی میں مقتل خوانی

عراق و ایران میں شام غریباں

امام حسین علیہ السلام کی شہادت

یوم عاشورا حضرت امام حسین (ع) کے ساتھ تجدید بیعت کا اعلان

لندن میں حسینی عزاداروں کے اجتماع پر گاڑی کے ذریعہ حملہ

مسجد نبویﷺ کے بیرونی صحن میں فائرنگ کرنے والا ملزم گرفتار

پاراچنار، شب ہشتم کا ماتمی جلوس

2018-09-14 05:17:25

تاریخی تناظر میں تین محرم

26

1-حضرت یوسف (علیہ السلام) کا کنویں سے باہر آنا
حضرت یوسف(علیہ السلام) کے بھائیوں نے حسد کی وجہ سے آپ کو کنویں میں ڈالدیا تھا، جبرئیل امین نے آپ کو پکڑ کر ایک تختہ پر بٹھایا، اور آپ کی دلجوئی کی۔ اس وقت ایک قافلہ وہاں پہنچا اوروہ اپنے گھوڑوں کو پانی پلانے کیلئے کنویں کے پاس آئے تاکہ وہاں سے مصر کی طرف روانہ ہوں ، اس قافلہ کے سردار ، ”مالک“ نے اپنے غلام کو حکم دیا:کنویںمیں ڈول ڈال کر پانی نکالو، غلام نے ڈول میں رسی باندھ کر اس کو کنویں میں ڈالا، جب ڈول کنویں میں پہنچی تو حضرت یوسف(علیہ السلام) نے ڈول کی رسی کو کھول دیا۔ غلام نے رسی کو کھینچا تو ڈول واپس نہیں آئی، وہ گھبرایا ہوا ”مالک“ کے پاس آیا اور قضیہ بیان کیا۔ مالک خود کنویں کے پاس آئے : اور آواز دی: جس کسی نے بھی اس ڈول کی رسی کو کھولا ہے وہ انسان ہے یا جن؟ حضرت یوسف(علیہ السلام) نے کہا: میں انسان ہوں مجھ پر ظلم کیا گیا ہے مجھے کنویں سے باہر نکالو۔
مالک نے مضبوط رسی کنویں میں ڈالی اور حضرت یوسف(علیہ السلام) کو کنویں سے باہر نکالااور ان کے بارے میں معلومات حاصل کیں، حضرت یوسف (علیہ السلام) نے پورا واقعہ سنایا، جناب یوسف (علیہ السلام) کے بھائیوں نے جب یہ دیکھا کہ جناب یوسف کو نجات مل گئی تو مالک کے پاس آئے اور کہا : یہ ہمارا غلام ہے جو ہمارے پاس سے بھاگ گیا تھا،اس کو ہمیں واپس دیدو، یا اس کو ہم سے خرید لو۔ مالک نے کہا: اس کوواپس نہیں دوں گا لیکن میں تم سے اس کو خرید لیتا ہوں۔مالک نے بہت کم قیمت ان کو دی اور حضرت یوسف(علیہ السلام) کو اپنے ساتھ لے کر مصر گئے اور وہاں پر عزیز مصر کو فروخت کردیا (۱)۔
۱۔ حوادث الایام، ص ۱۴۔

2-قید خانہ سے حضرت یوسف(علیہ السلام) کی رہائی
حضرت یوسف (علیہ السلام) عزیز مصر کی بیوی کے ساتھ خیانت نہ کرنے کے جرم میں چند سال قیدخانہ میں رہے، قیدخانہ میں آپ کے دوستوں نے خواب دیکھا اور حضرت یوسف (علیہ السلام) نے ان کے خواب کی تعبیر اس طرح کی : ایک کو فرعون قتل کردے گا اور دوسرے کو آزاد کردے گا۔ حضرت یوسف (علیہ السلام) نے آزاد ہونے والے شخص سے کہا: فرعون سے میرا تذکرہ کرنا تاکہ وہ مجھے قید خانہ سے آزاد کردے۔
اتفاقا وہ شخص آزاد ہوگیا، لیکن حضرت یوسف (علیہ السلام) کی سفارش کو بھول گیا۔ اس کو کئی سال گذر گئے ، ایک رات کو فرعون نے خواب میں دیکھا جس کی تعبیر بتانے والوں نے صحیح تعبیر نہیں بتائی۔ آزادہ شدہ قیدی کو حضرت یوسف(علیہ السلام) کی یاد آئی اور فرعون سے کہا: میں ایسے شخص کو جانتا ہوں جو خواب کی تعبیر بتانے میں ماہر ہے، وہ حضرت یوسف (علیہ السلام) کے پاس گیا اور آپ سے فرعون کے خواب کی تعبیر معلوم کی، اس نے حضرت یوسف(علیہ السلام) کی تعبیرکو فرعون تک پہنچا دیا ، فرعون نے کہا: یہ شخص بہت زبردست اور عالم ہے اس کو میرے پاس لاؤاور حضرت یوسف(علیہ السلام) کو آزاد کردیا۔
حضرت یوسف(علیہ السلام) کی مصر میں وفات ہوئی، آپ کودفن کرنے کی جگہ پر لوگوں میں اختلاف ہوا ، ہر کوئی چاہتاتھا کہ آپ کو اس کے محلہ میں دفن کریں تاکہ اس کا محلہ بابرکت ہوجائے ۔ آخر کار آپ کو سنگ مرمر کے ایک صندوق میں رکھ کر نیل میں دفن کیا اور اس کے اوپر سے پانی کو جاری کردیا تا کہ تمام اہل مصر اس کی برکت اور خیر میں شریک ہوں۔ حضرت موسی(علیہ السلام) نے مصر سے نکلتے وقت آپ کی ہڈیوں کو اٹھا کر اپنے والد کے پاس دفن کیں۔مشہور ہے کہ حضرت یوسف (علیہ السلام) کامل طور سے ۱۲ سال قید رہے ، پانچ سال تعبیر خواب سے پہلے اور سات سال تعبیر خواب کے بعد۔ لیکن بعض لوگ کہتے ہیں کہ آپ سات سال قید خانہ میں رہے۔ یہ بات بھی قابل توجہ ہے کہ سب سے پہلے کاغذ کو حضرت یوسف (علیہ السلام) نے ایجاد کیا اس سے پہلے اینٹوں کے اوپر لکھتے تھے۔(۱)۔
۱۔ حوادث الایام، ص ۱۴۔

3-کربلا میں عمر سعد کا وارد ہونا
سعد بن ابی وقاص کے رسول خدا (صلی اللہ علیہ و آلہ) کے خاندان سے اچھے تعلقات نہیں تھے ، یہاں تک کہ عمر کی شوری میں اس نے اپنا ووٹ عبدالرحمن بن عوف کو دیا تھا اور عثمان کے قتل ہونے کے بعد اس نے حضرت علی(علیہ السلام) کی بیعت نہیں کی تھی ۔ اس کا بیٹے عمربن سعد اپنے باپ کے راستہ پر گیا اور اس خاندان کے ساتھ اس کے بھی تعلقات اچھے نہیں تھے ، ابن زیاد نے شہر رے کی ملکیت عمر سعد کو دی تھی ۔ جب ابن زیاد کو امام حسین (علیہ السلام) کے عراق میں وارد ہونے کی خبر ملی تو اس نے عمر بن سعد کے پاس ایک قاصد بھیجا کہ پہلے وہ امام حسین بن علی(علیہ السلام) سے جنگ کرنے کیلئے جائے اور ان کو قتل کرنے کے بعد شہر رے کی طرف روانہ ہو۔عمر سعد ، ابن زیاد کے پاس آیا اور کہا: مجھے معاف کر، اس نے کہا: تجھے معاف کرتا ہوں لیکن شہر رے کی ملکیت تجھ سے واپس لیتا ہوں ۔ عمر بن سعد نے کہا ایک رات کی مہلت دے۔ آخر کار شہر رے کی ریاست نے اس پر غلبہ کرلیا اوروہ امام حسین (علیہ السلام) کے ساتھ جنگ کرنے کا فیصلہ کرکے اگلے روز ابن زیاد کے پاس آیا اور امام حسین (علیہ السلام) کو قتل کرنے کی ذمہ داری لے لی۔ ابن زیاد نے عظیم لشکر کے ساتھ اس کو کربلا کی طرف روانہ کیا، یہاں تک کہ وہ تین محرم کو کربلا میں وارد ہوگیا۔ابن قولویہ نے کتاب ”کامل“ کے صفحہ نمبر ۷۴ اور طبرسی نے کتاب احتجاج کے صفحہ نمبر ۱۳۴ پر معتبر سند کے ساتھ اصبغ بن نباتہ وغیرہ سے نقل کیا ہے کہ ایک روز حضرت علی(علیہ السلام)منبر کوفہ پر خطبہ دے رہے تھے اورفرمارہے تھے: جو کچھ پوچھنا چاہتے ہو مجھ سے پوچھ لو، قبل اس کے کہ میں اس دنیا میں نہ رہوں۔ خدا کی قسم گذشتہ اور آئندہ سے متعلق جو بھی سوال کرو گے میں ا س کا جواب دوںگا۔عمر سعد کا باپ سعد بن ابی وقاص کھڑا ہوا اور کہا: یا امیر المومنین! مجھے یہ بتاؤ کہ میری ڈاڈھی اور سر میں کتنے بال ہیں۔حضرت نے فرمایا: رسول خدا (صلی اللہ علیہ و آلہ نے مجھے خبر دی ہے کہ تیرے ہر بال میں ایک شیطان ہے جو تجھے گمراہ کرتا ہے اور تیرے گھر میں ایک بچہ ہے جو میرے بیٹے حسین (علیہ السلام) کو شہید کرے گا اور اگرمیں تجھے یہ بتادوں کہ تیرے بالوں کی تعداد کتنی ہے تو پھر بھی تو میری تصدیق نہیں کرے گا، لیکن جس حقیقت کی میںنے خبر دی ہے وہ ظاہر ہوگی۔توجہ رہے کہ اس وقت عمر بن سعد بہت چھوٹا بچہ تھا جس نے ابھی چلنا شروع کیا تھا ، بعض کہتے ہیں کہ کربلا میں اس کی عمر ۲۳ سال کی تھی، لیکن بعض قائل ہیں ۳۶ سال کی تھی، سعد بن وقاص کا ۷۵ ہجری میں ۷۴ سال کی عمر میں انتقال ہوا اور بقیع میں دفن ہوا (۱)۔۱۔ حوادث الایام، ص ۱۵۔

4-امام حسین (علیہ السلام) کا خط ،اہل کوفہ کے نام
آپ نے اس دن بزرگان کوفہ کے نام خطوط جاری فرمائے۔ یہ خطوط لکھ کر قیص بن مسہر صیداوی کے حوالے کئے کہ وہ کوفہ پہنچائیں۔ ابن زیاد کے فوجیوں نے انہیں راستے میں گرفتار کرلیا۔ انہیں یزید اور ابن زیاد کی مخالفت کرنے پر شہید کردیا گیا۔(۱)۔
۱۔ تقویم شیعہ، ص ۱۷۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:   Horizontal 3 ، اسلام ،
ٹیگز:   محرم ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

بڑھاپے کا بچپن

- ایکسپریس نیوز

7 ارب انسانوں کی نجات

- ایکسپریس نیوز

خدا کے لیے کچھ سوچو

- ایکسپریس نیوز

بھولی بسری یادیں

- ایکسپریس نیوز

دنیا 100 سیکنڈ میں

- سحر ٹی وی

جام جم - 23 ستمبر

- سحر ٹی وی