پاکستان: ’کوئی واضح پالیسی نہیں، سرمایہ کار پریشان‘

ہائوسنگ منصوبے میں پنجاب کے دس شہروں کو شامل کرنے کا فیصلہ

پہلی مرتبہ مداخلت سے پاک ضمنی انتخابات ہوئے،وزیراعظم

یہودیوں کو مقبوضہ فلسطین میں ایک اور بستی بسانے کی منظوری مل گئی

’الہ آباد ‘ کا نام تبدیل کرنے کا اعلان

نائن الیون حملوں میں ملوث ملزم کو جرمنی سے ملک بدر کرنے کا فیصلہ

ڈونلڈ ٹرمپ کا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کو ٹیلی فون، لاپتا صحافی کے معاملے پر گفتگو

یورک ایسڈ بڑھنے سے خطرناک بیماریوں کے امکانات کئی گنابڑھ جاتے ہیں

سردار احمد یار ہراج وزیراعظم انسپکشن ٹیم کے سربراہ مقرر

خیبر پختونخوا کا بجٹ پیش ، اپوزیشن کا احتجاج

دنیا کا تیز رفتار ترین کیمرا تیار

ملالہ آکسفورڈ سوسائٹی کی سرگرم رکن منتخب

سعد رفیق اور سلمان رفیق کی عبوری ضمانت منظور

وزیر اعظم کے دورہ چین کو حتمی شکل دے دی گئی

’’مشرف وڈیو لنک پر بیان ریکارڈ نہیں کرانا چاہتے‘‘

حضرت رقیہ (علیہا السلام) کی شہادت

گزشتہ ہفتے 5 سعودی شہزادے غائب کرائے گئے ہیں

اقبال تیری قوم کا اقبال کھو گیا

ننگر ہار لیپرڈز کیخلاف شاہد آفریدی کی عمدہ پرفارمنس

’’قیام امن کیلئے پاک بھارت بات چیت ہونی چاہیے‘‘

ٹرمپ نے بھی ایران کی طاقت اور قدرت کا اعتراف کرلیا/ ام عماد صبر و استقامت کا مظہر

اقوام متحدہ شام میں امریکہ کی جانب سے فاسفورس بم استعمال کئے جانے کی تحقیقات کرے، روس

ترکی سے رہائی پانے والے امریکی پادری کی صدر ٹرمپ سے ملاقات

آل سعود کے خلاف احتجاجی لہر وائٹ ہاوس کی دہلیز پر

ترک حکام کا سعودی حکومت پر دباؤ ڈالنے کا مطالبہ

ترکی میں تیز رفتار ٹرک نہر میں جا گرا، 22 افراد ہلاک

ٹرمپ کا دھمکی آمیز بیان، سعودی اسٹاک مارکیٹ مندی کا شکار

اسرائیلی جارحیت سے غزہ کی احتجاجی تحریک میں ولولہ پیدا ہوگا: حماس

کینیڈا کی فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے 50 ملین ڈالر کی ہنگامی امداد

ترقی کے اسلامی ایرانی ماڈل کو فروغ دیا جائے،آیت اللہ سید علی خامنہ ای

بیلجیئم میں ٹیکنیشن کی فائرنگ سے ایف 16 طیارہ تباہ

افغانستان: طالبان کا امریکا کے ساتھ بات چیت جاری رکھنے کا فیصلہ

امریکا اقتصادی پابندیوں کے ذریعے ایرانی حکومت تبدیل کرنا چاہتا ہے: حسن روحانی

پاکستان کا دورہ جنوبی بھارت جانے سے زیادہ اچھا لگا، نوجوت سنگھ سدھو

خیبرپختونخوا کا 613 ارب روپے سے زائد کا بجٹ آج پیش کیا جائے گا

پنجاب میں (ن) لیگ کے کارکنوں کا بھرپور جشن، بھنگڑے، مٹھائیاں تقسیم کی گئیں

اللہ تعالیٰ کا شکر گزار ہوں کہ ہم سرخرو ہوئے‘ آصف کرمانی

’باب دوستی‘ آج بھی آمدورفت، تجارت کیلئے بند

سپریم کورٹ نے خواجہ سراؤں کا شناختی کارڈ اجراء کیس نمٹا دیا

اپنی ہڈیوں سے پیار کریں

سابق وزیراعظم نوازشریف احتساب عدالت پہنچ گئے

حضرت بہائوالدین زکریا کےتین روزہ عرس کا آغاز

آصف زرداری کی ضمنی الیکشن میں پارٹی کے کامیاب امیدواروں کو مبارکباد

’’لوگوں کو قبروں سے نکال کر ٹرائل کئے جائیں گے‘‘

جمال خشوگی کا معاملہ، پابندیاں عائد کی گئیں تو جوابی کارروائی کرینگے، سعودی عرب

خاشقجی کےلاپتہ ہونے کے بعد سےعادل الجبیر میڈیا کی نظروں سے غائب

ترک حکام کو خاشقجی کے سعودی قونصل خانے میں قتل سے متعلق ٹھوس شواہد مل گئے

پی ٹی آئی (ن) لیگ 4، 4، (ق) لیگ 2 اور ایم ایم اے قومی اسمبلی کی 1 نشست پر کامیاب

نیا پاکستان اور شیعہ نسل کشی کا نہ رکنے والا سلسلہ

35 نشستوں پر ضمنی انتخابات کیلئے پولنگ کا وقت ختم

زائرین کے مسائل کے حل کیلئے ایران،پاکستان اورعراق کی کمیٹی کا قیام ضروری

امریکہ قانونی اور سیاسی جنگ ہار چکا ہے، صدر ڈاکٹر حسن روحانی

لاپتہ صحافی پر امریکا اور برطانیہ کا سعودی کانفرنس کے بائیکاٹ پر غور

سعودی حکومت جمال خشوگی کے قتل میں ملوث ہوئی تو سزا دیں گے، ٹرمپ کی دھمکی

شام میں امریکہ کی غیر قانونی موجودگی جنگ جاری رہنے کا اصلی سبب ہے

آئی ایم ایف نے ناقابل قبول شرائط رکھیں تو معاہدہ نہیں کریں گے، وزیر خزانہ

(ن) لیگ کی حکومت نے ہماری ہر ضرورت پر توجہ دی، ترجمان پاک فوج

انسٹاگرام پوسٹس کیلئے بھی ٹیپنگ فیچر آزمائشی مراحل میں

امریکہ کا ہتھیاروں کا سسٹم ’آسانی سے ہیک کیا جا سکتا ہے‘

عراقی فوج نے شام کے ساتھ ملنے والی سرحد بند کر دی

وزیراعظم عمران خان نے ’گرین اینڈ کلین پاکستان‘ مہم کا آغاز کردیا

سب انسپکٹرتشدد کیس:مقدمے سے دہشتگردی کی دفعات معطل کرنے کی وکلا کی درخواست مسترد

وائٹ ہیلمٹ گروپ کو شام سے باہر نکالا جائے، روس کا مطالبہ

فلسطینیوں نے انتفاضہ قدس مارچ کا آغاز کر دیا

عرب حکمراں ٹرمپ پر بھروسہ نہ کریں، سید حسن نصراللہ

ترکی میں داعش کے اعلی ارکان کی گرفتاری

سعودی عرب نے یمن کا اسپتال مریضوں اور عملے سمیت تباہ کر دیا

اسرائیلی فورسز کی فائرنگ سے مزید 6 فلسطینی جاں بحق

ایرانی میزائل کے سامنے صیہونی حکومت سر تسلیم

حکومت کی جانب سے زائرین کو درپیش مشکلات کے خلاف شیعہ علماکونسل کی احتجاجی ریلی

شام اور عراق کی جنگ کے بعد مزاحمتی محاذ طاقتور ہوا ہے:جنرل محمد علی جعفری

2018-10-10 16:55:32

پاکستان: ’کوئی واضح پالیسی نہیں، سرمایہ کار پریشان‘

 

doll
پاکستانی معیشت کی بدحالی کے باعث ملکی کرنسی امریکی ڈالر کے مقابلے میں سخت دباؤ کا شکار ہے۔ انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت ایک سو چونتیس روپے جبکہ اوپن مارکیٹ میں ایک سو چھتیس روپے کی ریکارڈ سطح پر پہنچ چکی ہے۔

اس سارے معاملے کو لے کر نہ صرف پاکستان کی تاجر برادری شدید تشویش سے دوچار ہے بلکہ بڑے کاروباری ادارے، سرمایہ کار، درآمدکنندگان کو بھی خدشات لاحق ہیں۔ روپے کی قدر میں کمی اور ڈالر کی قیمت میں اضافے کو عام طور پر مہنگائی کا اشارہ قرار دیا جاتا ہے۔

پاکستان جیسے ترقی پذیر اور زرعی ملک میں، جہاں صنعتی پیداوار کم اور انڈسٹری سیکٹر کا انحصار درآمدات پر ہے، وہاں یہ بات یقینی ہے کہ جب ڈالر کی قیمت بڑھتی ہے تو خام مال یا درآمدی اشیا کے دام بھی بڑھ جاتے ہیں، جس سے صنعتوں کی پیداواری لاگت بڑھ جاتی ہے اور صنعت کار خود نقصان سے بچنے کے لیے سارا بوجھ صارفین تک منتقل کر دیتے ہیں۔

ایوان صنعت و تجارت کراچی کے سابق صدر اور درآمدکنندہ ہارون اگر نے ڈوئچے ویلے سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’ڈالر مہنگا ہونے سے درآمدی مال کی لاگت بڑھ جائے گی، پہلے جو چیز سو یا ایک سو چوبیس ڈالر میں درآمد ہو رہی تھی اب وہ ایک سو پینتیس یا چھتیس ڈالر میں آئے گی، ظاہر ہے ہم مفت میں تو کام نہیں کریں گے، منافع کے لئے ہم بھی اپنی اشیا کے دام بڑھانے پر مجبور ہوجاتے ہیں، پہلے ہی بجلی اور گیس کے نرخ اس قدر بڑھ گئے ہیں کہ صنعت چلانا مشکل ہوگیا ہے۔‘‘

پاکستان میں شرح تبادلہ کا نظام آزاد مارکیٹ کے تحت کام کرتا ہے، البتہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان وقتاﹰ فوقتاﹰ مارکیٹ کا جائزہ لیتا رہتا ہے۔ منگل کو پاکستان کے بازار مبادلہ میں پہلی بار ایک امریکی ڈالر کی قیمت تیرہ روپے اضافے سے ایک سو سینتیس روپے پر دیکھی گئی جبکہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر ایک سو اڑتیس تک پہنچ گیا۔

اقتصادی ماہرین کا کہنا ہے کہ ڈالر کی قیمت میں اچانک اضافے کی اہم ترین وجہ حکومت کی جانب سے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ سے قرض لینے کا اعلان ہے، جس کے فوری بعد پاکستان کی کرنسی کی قدر ڈالر کے مقابلے میں تقریباﹰ آٹھ سے دس فیصد کم ہوئی۔

ماہر معاشیات ڈاکٹر شاہد حسن صدیقی نے ڈی ڈبلیو کو بتایا کہ ’’حکومت نے الیکشن سے پہلے جو وعدے کئے تھے، وہ انہیں پورا نہیں کر پا رہی، صرف گاڑیاں اور بھینسیں بیچنے سے ملک کی معیشت بہتر نہیں ہوگی، بجلی، گیس اور ڈالر کی قیمت میں اضافے سے بھی بہتری کی کوئی خاص امید نہیں، بلکہ حکومت نے وعدہ کیا تھا کہ وہ لوٹی ہوئی دولت واپس پاکستان لائے گی، اس پر عمل کرے۔‘‘

روپے کی قدر میں کمی، غیر ملکی سرمایہ کاری کا نادر موقع

وزیر خزانہ اسد عمر نے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ حکومت نے عالمی مالیاتی فنڈ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کو بریفنگ دی گئی ہے۔ وزیراعظم نے فوری طور پر آئی ایم ایف سے مذاکرات کی منظوری دی ہے، اسد عمر کا کہنا تھا کہ حکومت مالی ضروریات کے پیش نظر آئی ایم ایف سے چھ سے سات ارب امریکی ڈالر کا قرض مانگے گی، اس کے علاوہ سعودی عرب، چین، اسلامی ترقیاتی بینک، ایشیائی ترقیاتی بینک اور سمندر پار پاکستانیوں کے لیے اوورسیز بانڈز کا اجرا بھی زیر غور ہے۔

وزیر خزانہ کے اس بیان کا پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں فوری اور مثبت ردعمل سامنے آیا۔ کاروبار کے آغاز پر ہی ایک ہزار پوائنٹس کا اضافہ ہوا اور ہنڈریڈ انڈیکس ایک سال بعد انتالیس ہزار پوائنٹس کی سطح پر دیکھا گیا۔

پاکستان اسٹاک ایکسچینج کے ڈائریکٹر عابد علی حبیب کہتے ہیں کہ ’’نئی حکومت کی جانب سے کسی واضح پالیسی کی عدم موجودگی کے سبب سرمایہ کار پریشانی سے دو چار تھے لیکن وزیر خزانہ کی جانب سے آئی ایم ایف سے قرضہ لینے کے اعلان پر سرمایہ کاروں کی بے چینی میں کچھ کمی آئی، جس سے مارکیٹ میں شیئرز کی خریداری سامنے آئی۔ تاہم بعض شیئرز کی قیمتیں نچلی ترین سطح پر ہیں، جبکہ ڈالر کی قدر بھی بڑھ رہی ہے، اس صورتحال سے غیرملکی سرمایہ کار تذبذب کا شکار ہیں اور وہ مارکیٹ سے پیسہ نکالنے کو ترجیح دے رہے ہیں۔‘‘

پاکستان کی معاشی صورتحال اس قدر بگاڑ کا شکار ہے کہ درآمدی ادائیگیوں کے لئے ماہانہ تین سے چار ارب ڈالر زرمبادلہ خرچ ہو رہا ہے، جبکہ جاری کھاتوں کا خسارہ اٹھارہ سے بیس ارب ڈالر سالانہ کے لگ بھگ ہے۔ آئی ایم ایف کو پچھلے قرضوں کی واپسی اور اس پر سود کی ادائیگی کے ساتھ ساتھ تجارتی ادائیگیاں حکومت کے لئے بڑے چینلج بنے ہوئے ہیں۔ اس صورتحال میں حکومت کے پاس فوری طور پر کوئی اور آپشن نظر نہیں آتا کہ وہ عالمی مالیاتی فنڈ کے پاس نہ جائے۔

وزیراعظم پاکستان عمران خان نے بدھ کو اسلا م آباد میں ایک تقریب سے خطاب میں پاکستان کی مالی اور معاشی مشکلات کا ایک بار پھر ذکر کرتے ہوئے قوم سے کہا کہ وہ تسلی رکھے، وہ ملک کو مشکلات سے نکالیں گے۔ لیکن وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے بتایا کہ آئی ایم ایف سے قرض لینے کا فیصلہ کرنا مجبوری تھی، اس سے قبل سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور چین سے قرض کی بات کی گئی لیکن جن شرائط پر یہ ممالک قرض دے رہے تھے وہ منظور کرنا حکومت کے لئے ممکن نہیں تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:  
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)

بیمار قوم کے امیر مسیحا

- ایکسپریس نیوز

چند اور سخت فیصلے؟

- بی بی سی اردو