یکم صفر المظفرتاریخی تناظر میں

شیعہ نسل کشی: اکتوبر کے دو ہفتوں میں چار شیعہ ٹارگٹ کلنگ کا شکار ہوگئے

محمد بن سلمان کی بادشاہت جمال خاشقجی کے خون میں غرق ہوجائے گی

فلسطین کو اقوام متحدہ میں ترقی پذیر ممالک کی تنظیم جی -77 کی سربراہی مل گئی

پاکستان کے ساتھ مل کر دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کے لئے آمادہ ہیں، ایران کا اعلان

جمال خاشقجی کا قتل: محمد بن سلمان کی بادشاہت خطرے میں پڑگئی؟

نالج منیجمنٹ کیا ہے ؟

احتساب کے عمل کو بہتر نہ کرنا ہماری مشترکہ ناکامی ہے: خواجہ آصف

بدقسمتی سے جس سیل میں رکھا گیا وہاں لائٹ،کھڑکی نہیں ،شہباز شریف

عابد باکسر کی عبوری ضمانت میں توسیع

اورنج ٹرین غیرضروری منصوبہ تھا جوشہرت کے لیے رکھا گیا‘ہاشم جواں بخت

معیشت میں بہتری کےلیےاہم اورمشکل فیصلےکرنا چاہتے ہیں‘ وزیراعظم

کیلے سے بیماریوں کا علاج

وزیراعظم ہاؤس میں گاڑیوں کی نیلامی، پھر ناکامی

’’نیب کا موجودہ سیٹ اپ نواز ، خورشید نے لگایا‘‘

’آئین میں تو نہیں لکھا کہ یوٹرن نہیں لے سکتے‘

اسد جیت گئے،واشنگٹن ہار گیا

آسٹریلیا کی پوری ٹیم 145 رنز بنا کر آؤٹ

برطانیہ: مذہبی منافرت پر مبنی جرائم میں 40 فیصد اضافہ

نائجیریا: مذہبی عسکریت پسند گروپ بوکو حرام نے طبی رضاکار کو قتل کر دیا

پاکستان، ایران کے سرحدی محافظوں کی بازیابی کے لیے فوری اور ٹھوس اقدامات عمل میں لائے

سعودی صحافی قتل: سعودی قونصلخانہ کے اہلکار شامل، قتل براہ راست محمد بن سلمان کے حکم پر کیا

’’سعودی عرب نے صحافی گمشدگی پر احتساب کا یقین دلایا ہے‘‘

فلسطین اقوام متحدہ کی اہم باڈی کا سربراہ بن گیا

امریکا نے ایران پر ایک مرتبہ پھر اقتصادی پابندیاں عائد کردیں

صومالیہ: امریکی فوج کا فضائی حملہ، 60 شدت پسند ہلاک

آسٹریلیا کا بھی مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا فیصلہ

بھارت، کشمیری طلباء و طالبات کی یونیورسٹی چھوڑنے کی دھمکی

مائیک پومپیو کی شاہ سلمان اور محمد بن سلمان سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں

’چونکا دینے والے سوالات اور واقعات بتانے آیا ہوں‘

سیمنٹ فیکٹریوں نے سارا ماحولیاتی نظام خراب کردیا‘ چیف جسٹس

ترک نائب وزیر دفاع کی نیول چیف سے ملاقات

ہلمند دھماکا،انتخابی امیدوار سمیت 3 ہلاک

آسٹریلیا کے 7 کھلاڑی لنچ سے پہلے پویلین لوٹ گئے

قومی اسمبلی اجلاس: شہباز شریف کے اداروں پر بھرپور الزامات

شور شرابہ اور ہنگامہ کرنے سے احتساب کا عمل نہیں رکے گا، وزیر اطلاعات فواد چوہدری

کیلاشی عوام بھی پاکستانی شہری ہیں، انھیں کلمہ پڑھنے پر مجبورنہیں کیا جاسکتا،چیف جسٹس

لاہور : سانحہ ماڈل ٹاؤن میں ملوث116پولیس اہلکاروں کوعہدوں سے ہٹا دیا گیا

بھوک وافلاس امن اورعالمی ہم آہنگی کےلیے خطرہ ہیں ‘بلاول بھٹو

سعودی صحافی خاشقجی کے قتل میں محمد بن سلمان براہ راست ملوث ہیں: امریکی سینیٹر

سعودی صحافی کی لاش کے ٹکڑے کئے گئے، امریکی میڈیا کا دعویٰ

پاکستان کی مدد کے بغیر القاعدہ کو شکست نہیں ہوسکتی تھی، ترجمان پاک فوج

زائرین کو درپیش ویز ے کے حصول میں مشکلات ،علامہ راجہ ناصرعباس کی عراقی سفیر اور قافلہ سالاروں سے ملاقات

ایران پاکستان سرحد سے ایرانی سیکورٹی اہلکاروں کا اغوا

ملکوں کو دھمکی دینا امریکہ کی خارجہ پالیسی : ایرانی مندوب

بن سلمان کو معزول کر کے اسے جیل بھیج دیں۔ نیویارک ٹائمز

نیا پاکستان بھی آئی ایم ایف اور امریکی اتحاد کا محتاج(2)

پاکستان کوسٹ گارڈز کو مزید فعال بنانے کے لیے شہریار آفریدی کی یقین دہانی

نیب کی سعد رفیق اور سلمان رفیق سے الگ الگ تحقیقات

سعودی عرب کو اسرائیل سے سیکھنا چاہیے کہ سیاسی قتل کس طرح کیا جاتا ہے؟ اسرائیلی اخبار

ریاض: جمال خاشقجی کے صاحبزادے صلاح خاشقجی پر تین ماہ سے سفری پابندی عائد، پاسپورٹ معطل

ایران: کرمانشاہ میں علیحدگی پسند دہشت گرد گروپ کے افراد گرفتار

سعودی فوج کا تربیتی طیارہ ٹریننگ مشن کے دوران گر کر تباہ

استنبول: سعودی عرب قونصلخانہ کی تفتیش کا کام مکمل، نتائج کا اعلان 2 یا 3 دن میں کیا جائے گا

امریکہ اپنے مفادات کے تحفظ کے لئے اقتصادی پابندیوں سے استفادہ کر رہا ہے:نمائندہ ایران

غزہ سرحد پار کرنے والے ہر فلسطینی کو گولی مار دو: اسرائیلی وزیر

’دو ماہ کی کارکردگی نے حکومت کا پول کھول دیا ‘

سعودی عرب کی جمال خاشقجی قتل کے اعتراف کی تیاری: امریکی میڈیا کا دعویٰ

رقہ: 2521 اموات امریکی اتحادیوں کے فضائی حملوں سے ہوئیں: ایمنسٹی انٹرنیشنل

ایران کے بینکاری نظام سے پوری طرح مطمئن ہیں: ایف اے ٹی ایف

’4 روپے فی یونٹ اضافہ عوام کی کمر توڑ دیگا ‘

سعودی عرب چار قطری شہریوں کو رہا کر دے: قطر انسانی حقوق کمیٹی

’نیب کے پیچھے نیازی ہے‘

مائیکروسافٹ کے شریک بانی’پال ایلن‘چل بسے

100روزہ ایجنڈا ترقی اور خوشحالی کا مربوط پروگرام ہے‘ عثمان بزدار

دشمن کی اقتصادی اور نفسیاتی جنگ کا مقابلہ کرنے کے لیے بھرپور منصوبہ بندی کر لی ہے: صدر حسن روحانی

عراق ایران جنگ:صدام حکومت نے پانچ سو ستر بار ایران پر کیمیائی بمباری کی تھی: وزیر دفاع

شہبازشریف کو کل اسلام آباد لے جایا جائے گا

جمال خشوگی گمشدگی: مائیک پومپیو، شاہ سلمان سے ملاقات کے لیے ریاض پہنچ گئے

ٹرمپ کی یکطرفہ پالیسیاں شکست سے دوچار ہو جائیں گی: جنرل یحیی صفوی

42 فیصد اسرائیلی عوام ملک میں قبل از وقت انتخابات کروانے کے خواہاں

2018-10-11 08:07:47

یکم صفر المظفرتاریخی تناظر میں

57

1.جنگ صفین
جنگ صفین پہلی صفر ۳۷ ہجری کو صفین کے میدان میں شروع ہوئی ۔ یہ جنگ حضرت علی (علیہ السلام) اور معاویہ کے درمیان ہوئی ۔ اس جنگ میں دونوں لشکروں میں سے بہت سے لوگ قتل ہوئے اور جنگ اس مرحلہ پرپہنچ گئی تھی کہ معاویہ شکست کھانے والا تھا، معاویہ کے لشکر نے عمروعاص کی تدبیر سے قرآن کو نیزوں پر بلند کردیا اور علی (علیہ السلام) کے لشکر کے سامنے کھڑے ہوکر کہنے لگے: ہمارے درمیان قرآن فیصلہ کرے گا۔
ان کی اس تدبیر کی وجہ سے حضرت علی (علیہ السلام) کے لشکر سے بہت سے افراد نے جنگ کرنے سے منع کردیا ، اچانک حضرت علی (علیہ السلام) کے لشکر سے اشعث بن قیس بیس ہزار افراد کے ساتھ نکلا اور کہنے لگا: شام والے صحیح کہتے ہیں، امام علی (علیہ السلام) نے فرمایا: چونکہ ان کی شکست اور موت نزدیک تھی اس لئے وہ دھوکہ اور فریب سے کام لے رہے ہیں اگر یہ قرآن پر ایمان رکھتے تو اتنے لوگوں کو قتل نہ کرواتے، لیکن اشعث کے اس لشکر کے بہت سے لوگ جن کی پیشانیوں پر سجدوں کے نشان اور بہت سے حافظ قرآن تھے ، کہنے لگے: یا علی یا تو قرآن کے فیصلہ پر راضی ہوجاؤ ، ورنہ ہم تمہیں قتل کردیں گے۔ امام علی نے فرمایا : ان کی مراد قرآن نہیں ہے انہوں نے قرآن کو بہانہ بنایا ہے، آپ نے ان کو جس قدر بھی نصیحت فرمائی انہوں نے قبول نہیں کیا، آخر آپ نے فرمایا: تمہیں اختیار ہے۔ معاویہ کے لشکر سے عمروعاص ، نمایندہ کے عنوان سے منتخب ہوا اور حضرت علی علیہ السلام نے فرمایا: ہمارے لشکر سے عبداللہ بن عباس اور اگر ان پر راضی نہیں ہو تو مالک اشتر نخعی نمایندہ کے طور جائے، اشعث اور حضرت علی کے لشکر کے قراء و حافظ نے کہا: ہم ان دونوں پر راضی نہیں ہیں اور ابوموسی اشعری نمایندہ کے لئے ٹھیک ہے، حضرت علی (علیہ السلام) ناراض ہوئے اور فرمایا: لا رآی لمن لا یطاع۔
ابو موسی اور عمرو عاص شام اور مدینہ کے درمیان ”دومة الجندل“ نامی قلعہ میں فیصلہ کرنے کے لئے جمع ہوئے ، عمرو بن عاس نے ابوموسی سے کہا : میں معاویہ کو خلافت سے عزل کرتا ہوں اور تم بھی علی کو خلافت سے عزل کردواور اگر مصلحت ہو تو عبداللہ بن عمر کو خلافت کیلئے منصوب کردیں اور اگر مصلحت نہ ہو تو اس کام کو شوری پر چھوڑ پر دیں۔
ابوموسی نے قبول کرلیا اور کہا: کل لوگوں کے درمیان حاضر ہو کر یہ بات ان کو سنا دیں گے۔
جب یہ لوگوں کے سامنے آئے تو ابو موسی اشعری نے عمرو عاص سے کہا : تو معاویہ کو خلافت سے عزل کر۔ عمرو عاص مکار نے کہا: میں کبھی بھی تم پر مقدم نہیں ہوسکتا، تو مجھ سے پہلے ایمان لایا اور ہجرت کی ۔ عبداللہ بن عباس نے کہا: اے ابوموسی ! اس مرد نے تجھے دھوکا دے رہا ہے لیکن ابوموسی نے ان کی بات کو نہیں سنا اور کہا : ائے لوگو! میں نے علی اور معاویہ کو خلافت سے عزل کردیا ، جو شخص خلافت کیلئے بہتر ہو اس کو خلافت کیلئے منصوب کرلو۔ اس نے انگوٹھی کو انگلی سے نکالا اور کہا : میں نے علی کو خلافت سے عزل کردیا۔ عمرو عاص نے کہا: اے لوگو! جو ابوموسی نے کہا تم نے سنا، میں بھی علی کو خلافت سے عزل کرتا ہوں اور معاویہ کو خلافت کے لئے منصوب کرتا ہوں کیونکہ وہ علی سے زیادہ خلافت کا مستحق ہے، پھر اس نے اپنی انگوٹھی کو پہن لیا اور کہا میں معاویہ کو منصوب کرتے وقت انگوٹھی کو پہن رہا ہوں ۔
ابوموسی ، امیر المومنین علیہ السلام کے اصحاب کے ڈر کی وجہ سے ناقہ پر سوار ہو ا اور مکہ چلا گیا اور خانہ کعبہ کے نزدیک رہنے لگا۔ حضرت امیر المومنین (علیہ السلام) کوفہ اور معاویہ ، شام واپس چلا گیا۔
بعض علماء نے کہا ہے: یہ جنگ ۱۱۰ دن تک جاری رہی اور بعض نے کہا ہے کہ ۱۴ مہینہ تک جاری رہی (۱) ۔
۱۔ حوادث الایام، ص ۵۵۔

2.اہل بیت (علیہم السلام) کا شام میں داخل ہونا
ابن زیاد کے حامیوں نے اس کے حکم سے پہلی صفر ۶۱ ہجری کو شہداء کے سروں کو نیزہ پر رکھ کر رسول خدا کے اہل بیت کے سامنے لے گئے اور ان کو شہر شہر اور جگہ جگہ ذلیل و رسوا کرنے کے لئے پھراتے رہے اور جب بھی کوئی عورت یا بچہ روتا تھا تو نیزہ دار اس کو نیزہ سے مارتا تھا یہاں تک کہ پہلی صفر کو شام پہنچے جب کہ شہداء کے سروں کو لوگوں کے سامنے تھے ان کو بارہ گھنٹے تک لوگوں کے درمیان کھڑا رکھا ۔ وہ روز بنی امیہ کے لئے عید اور آل رسول کے لئے غم کا دن اور ان کے شیعوں کے لئے غم و اندوھ کادن تھا (۱) ۔
۱۔ حوادث الایام، ص ۵۵۔

3.جناب زید بن علی بن الحسین کی شہادت
امام زین العابدین (علیہ السلام) کے گیارہ بیٹے تھے جن میں سے ایک زید بن علی تھے جو کہ فضل و کرم میں امام محمد باقر (علیہ السلام) کے بعد اپنے بھائیوں میں سب سے افضل تھے، آپ کی والدہ ”ام ولد“تھیں ، آپ عابد، زاہد، سخی اور بہت شجاع تھے، امام حسین (علیہ السلام) کے خون کا بدلہ لینے کےلئے آپ نے قیام کیا اور کوفہ کی طرف چلے گئے ، قراء قرآن اور اشراف نے آپ کی بیعت کر لی تھی۔
زید بن علی ، ہشام بن عبدالملک کی خلافت کے زمانہ میں اس کی طرف سے عراق میں منصوب یوسف بن عمر ثقفی سے جنگ کرنے کے لئے روانہ ہوئے، جنگ شروع ہونے کے بعد جناب زید کے بہت سے ساتھیوں نے آپ کی بیعت کو توڑ دیا اور فرار کر گئے ، اور زید بہت کم فوج کے ساتھ یوسف بن عمر سے جنگ کرنے لگے یہاں تک کہ رات ہوگئی اور دونوں لشکروں نے جنگ بند کردی۔
زید کا بدن زخمی تھا اور آپ کی پیشانی پر بھی تیر لگا ہوا تھا ۔ ایک طبیب کو بلا کر لائے تاکہ وہ تیر کو ان کی پیشانی سے نکالے ، جیسے ہی آپ کی پیشانی سے تیر نکالا گیا آپ کی روح عالم بقاء کی طرف پرواز کر گئی ، سپاہیوں نے آپ کی لاش کو نہر میں دفن کردیا اور آپ کی قبر کے اوپر گھانس پھونس ڈال کر اس پر پانی جاری کردیا اور طبیب سے کہا کہ کسی سے کچھ نہیں کہنا۔ صبح کو طبیب نے یوسف بن عمر کے پاس جا کر اس کو دفن کی جگہ بتادی۔ یوسف نے تین دن کے بعد قبر کو کھولا اور جنازہ کو باہر نکال کر ان کے سر کو جدا کرکے ہشام کے پاس بھیجا ۔ ہشام نے حکم دیا کہ زید کی لاش کو برہنہ کر کے دیوار پر لٹکا دیں،لہذا ان کو کوفہ میں برہنہ کرکے سولی پر لٹکا دیا۔ کچھ دنوں کے بعد ہشام نے یوسف کو حکم دیا کہ زید کے بدن کو جلا کر اس کی مٹی کو ہوا میں اڑا دو۔
شیخ مفید کے مطابق آپ کی شہادت ۱۲۱ ہجری میں ۴۲ سال کی عمر میں واقع ہوئی۔
قابل ذکر ہے کہ فرقہٴ زیدیہ اپنے آپ کو زید کا پیروکار بتاتے ہیں اور امام زین العابدین کے بعد ان کی امامت کے قائل ہیں اور ان کا یہ عقیدہ ہے کہ اس دنیا میں علوی اور فاطمیوں میں سے جو بھی عالم ،زاہد اور شجاع ہو اور تلوار سے جنگ کرے اور لوگوں کو اسلام کی دعوت دے وہ امام ہے (۱) ۔

۱۔ حوادث الایام، ص ۵۴۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:   Horizontal 3 ، اسلام ،
ٹیگز:   صفر ، جنگ صفین ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)