’افغان جہاد ‘ کے نام پر پشاور میں دہشتگردوں کی کھلے عام بھتہ خوری اور ریاست خاموش

امریکا نے میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کے خلاف بربریت کو نسل کشی قرار دے دیا

کویت میں برطانیہ کا نیا فوجی اڈہ

بھارت: پیلٹ گن کا نشانہ بننے والی کشمیری بچی کے آنکھوں کا آپریشن

غیروں کے ساتھ امیرالمؤمنین علی بن ابی طالب علیہ السلام کا طرزِ معاشرت

وہ معاشرہ جو عقل کی بنیاد پر قائم ہو وہ کامیاب و متمدن ہوتا ہے | انسان کو چاہیئے کہ علمی فکر کرے اور عدلی عمل کرے

پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبے کو جلد پایہ تکمیل تک پہنچتا ہوا دیکھیں گے، چیف سیکرٹری بلوچستان

ایران کا یمنی گروہوں کے درمیان کامیاب مذاکرات کا خیرمقدم

بیت المقدس فلسطین کا تاریخی دارالحکومت

مذہبی آزادی کی آڑمیں امریکہ پاکستان پر دباؤ بڑھانے کی مضحکہ خیز کوشش کر رہا ہے، شیریں مزاری

’نیب حمزہ شہباز کو بھی گرفتار کرسکتا ہے‘

یمن جنگ میں امریکی امداد پر پابندی

کوئٹہ سے نیورو سرجن ڈاکٹر ابراہیم خلیل اغوا

پنجاب کے مختلف علاقوں میں شدید دھند کا راج

چین میں کینیڈا کے سابق سفیر کی گرفتاری کے بعد کاروباری شخصیت بھی زیرحراست

اسد عمر کے انٹرویو سے کلبھوشن کا حصہ نکالنا 'سینسرشپ' نہیں تھا، بی بی سی

فرانس:کرسمس بازار میں تین افراد کا قتل ،حملہ آورگرفتار نہیں ہوسکا

بھارت کے زیرانتظام کشمیر کی 14 سالہ لڑکی وادی کی سب سے کم عمر مصنفہ بن گئیں ہیں

یمن جنگ: امریکی سینیٹرز کا سعودی عرب کی پشت پناہی نہ کرنے کا فیصلہ

ایڈیشنل آئی جی کراچی کے حکم پر رشوت لینے والا ایس ایچ او سپر مارکیٹ معطل

سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے ٹیکس نظام کو بدلنا ہوگا، وزیر اعظم

رہنما پی ٹی آئی مراد سعید کو وفاقی وزیر مقرر کر دیا گیا

امریکی سینیٹ نے سعودی ولی عہد کو خاشقجی کے قتل کا ذمہ دار ٹھہرا دیا

بلوچستان میں دہشت گردی کا بڑا منصوبہ ناکام

امریکی دباؤ سے کیا مذہبی شدت پسندی کم ہو گی؟

مائنس امریکہ مستقبل کیجانب گامزن شام

چین میں کینیڈا کے ایک اور شہری کی گرفتاری

ایرانی سیکورٹی اہلکاروں کو بازیاب کرانے کی پاکستان کی کوشش

غرب اردن میں تین صیہونی فوجیوں کی ہلاکت

علاقائی تعاون پر افغان صدر اشرف غنی کی تاکید

پنجاب کے عوام کو آئی فون دکھا کر نوکیا 3310 تھما دیا گیا، مریم اورنگزیب

بھارت بھی ہاکی ورلڈ کپ سے باہر ہوگیا

فواد چودھری کی پی اے سی سربراہی شہباز شریف کو دینے کی مخالفت

منی لانڈرنگ اور اسمگلنگ کو ایک طرح سے ہی ڈیل کریں گے، وزیراعظم

علیمہ خان کون ہیں؟

ایرانی سیکورٹی اہلکاروں کو بازیاب کرانے کی پاکستان کی کوشش

یمنی حکومت اور حوثی جنگجووں کے درمیان امن مذاکرات کامیاب

بحریہ ٹاؤن کراچی: سستی ہاؤسنگ کے نام پر زمین کروڑوں کی کیسے بن گئی؟

امریکہ نے بڑی تعداد میں داعش دہشت گردوں کو افغانستان منتقل کردیا

کیا ’مودی کا جادو‘ ختم ہو رہا ہے؟

برطانوی وزیر اعظم کو درپیش قیادت کا چیلنج: کیوں اور کیسے؟

بنگلا دیش:انتخابی مہم کے دوران تصادم 30 ہلاک و زخمی

مصر: فوج کی کارروائی میں 27 شدت پسند ہلاک

حزب اللہ کے ہاتھ لگی موساد کی اہم اطلاعات... اسرائیل میں بوکھلاہٹ

زرداری اور بلاول کے وکیل نیب کے سامنے پیش

پاکپتن مزاراراضی کیس: نوازشریف کے کردار کا جائزہ لینے کیلئے جے آئی ٹی تشکیل

ایف بی آر کا سابق گورنر پنجاب کو نوٹس

بیرون ملک جائیداد کیس: علیمہ خان کو 2 کروڑ 95 لاکھ روپے جمع کرانے کا حکم

پاکستانی معیشت کو شعبہ توانائی کے سبب 18 ارب ڈالر کے بحران کا سامنا

بحریہ ٹاؤن کراچی: سستی ہاؤسنگ کے نام پر زمین کروڑوں کی کیسے بن گئی؟

سعد رفیق کے پروڈکشن آرڈر جاری نہ ہوئے تو ایوان نہیں چلے گا، (ن) لیگ

لاہور میں پنجاب اسمبلی کی خالی نشست پی پی 168 پر ضمنی انتخاب

عمران خان انسٹاگرام پر فعال ترین عالمی رہنماؤں کی فہرست میں دوسرے نمبر پر

بااثر علاقائی اور عالمی ممالک ایٹمی معاہدے کی حفاظت کریں، گوترش

ایرانی عوام کی تندرستی پر امریکہ کی ظالمانہ پابندیوں کا اثر

راہ خدا میں خطرات مول لینے والی قوم سربلند رہتی ہے، رہبرانقلاب اسلامی

اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے یمنی شہریوں کا مظاہرہ

ہاکی ورلڈ کپ: انگلینڈ اور آسٹریلیا سیمی فائنل میں

صییہونی فوجیوں کی بربریت ایک اور فلسطینی نوجوان شہید

فلسطینی بچے کی شہادت

بشاراسد کے اس بیان نے مغرب اور اس کےاتحادیوں کی نیندیں حرام کردیں

پاکستان نیوی وار کالج لاہور میں دوسری میری ٹائم سیکیورٹی ورکشاپ کا آغاز

ایسا نظام لارہے ہیں ہر واردات ریکارڈ ہوگی، پولیس چیف کراچی

گیس کا بحران، ایم ڈیز سوئی سدرن و ناردرن کیخلاف انکوائری کا حکم

برطانیہ تاریخی بحران کیطرف جا رہا ہے؟

بلیک لسٹ معاملہ، امریکی حکام کی دفتر خارجہ طلبی، شدید احتجاج

ریاست مدینہ کے قیام میں بنیادی انسانی حقوق کی فراہمی پہلی سیڑھی ہے،علامہ ساجد نقوی

امریکا نے پاکستان کو مذہبی پابندیوں کی خصوصی تشویشی ’بلیک لسٹ‘ سے نکال دیا

مردان: اسکول میں پی ٹی آئی ترانہ پڑھنے کا معاملہ، ہیڈماسٹر کی جبری ریٹائرمنٹ

مسلم لیگ(ن) کے 7 رہنماؤں نے مجھ سے این آر او مانگا، مراد سعید کا دعویٰ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے ممکنہ مواخذے پر پریشان

2018-12-06 10:45:53

’افغان جہاد ‘ کے نام پر پشاور میں دہشتگردوں کی کھلے عام بھتہ خوری اور ریاست خاموش

64

خیبر پختونخوا اور سابق قبائلی علاقوں میں آپریشن ضرب عضب اور ردالفساد کے بعد تقریباً تمام علاقوں میں حکومتی عمل داری بحال کردی گئی ہے جبکہ دہشت گردی کے واقعات میں بھی خاطر خواہ حد تک کمی د یکھی گئی ہے۔تاہم دوسری طرف مبینہ طور پر مسلح تنظیموں کی طرف سے بھتہ خوری کے واقعات میں نہ صرف مسلسل اضافہ ہورہا ہے بلکہ اس نے ایک نئی شکل اختیار کرلی ہے اور اب تو بڑے شہروں میں بھی دن دھاڑے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ناک کے نیچے کھلے عام بھتہ خوری کے واقعات پیش آ رہے ہیں۔ان وارداتوں میں نہ صرف پاکستانی کالعدم تنظمیں ملوث بتائی جاتی ہیں بلکہ اب تو مبینہ طورپر افغان طالبان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ بھی پاکستانی علاقوں میں کھلے عام ’افغان جہاد‘ کے نام پر ٹرک ڈرائیوروں سے بھتہ وصول کرتے ہیں۔پشاور کے مضافاتی علاقے پندو میں تقریباً دس کے قریب ٹرکوں کے چھوٹے بڑے اڈے واقع ہیں جہاں سے روزانہ تقریباً سو سے لے کر دو سو کے قریب مال بردار ٹرک افغانستان جاتے ہیں۔ ان میں زیادہ تر ٹرکوں میں پاکستان سے سرحد پار پھل اور سبزیاں جاتی ہیں جن میں کیلے کا پھل نمایاں برآمد بتایا جاتا ہے۔پندو میں ایک ٹرک اڈے کے مالک نے نام نہ بتانے کی شرط پر بی بی سی کو بتایا کہ افغان طالبان کے کارندے صبح سویرے بھتہ وصول کرنے کےلیے اڈے پر پہنچ جاتے ہیں اور افغانستان جانے والے ہر ٹرک سے پانچ ہزار روپے وصول کیا جاتا ہے اور جو ٹرک ڈرائیور انکار کرتا ہے ان کو قتل کی دھمکیاں دی جاتی ہیں۔انھوں نے کہا کہ یہ سلسلہ تقریباً گذشتہ تین ماہ سے مسلسل جاری ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ بھتہ لینے افراد کا موقف ہے کہ وہ یہ رقم ’افغان جہاد‘ میں استعمال کرتے ہیں اور اسے ان افراد میں تقسیم کیا جاتا ہے جن کے عزیز رشتہ دار ’افغان جہاد‘ میں ہلاک یا زخمی ہو چکے ہیں۔اڈہ مالک کے بقول ’شروع میں جب ہم نے بھتہ دینے سے انکار کیا تو ہمیں قتل کی دھمکیاں دی گئیں اور ہمارے بعض ڈرائیوروں کو افغان علاقوں میں روک کر ان کو اغوا کیا گیا اور ان کا سامان قبضے میں لے لیا گیا جس کے بعد اب ہمیں مجبوراً ان کی بات ماننی پڑ رہی ہے۔‘انھوں نے کہا کہ پندو اور رنگ روڈ پر افغانستان کے تمام اڈوں میں صبح سے لے کر شام تک بھتہ لینے والے کارندے موجود ہوتے ہیں اور ہر ٹرک اور کنٹینر سے بلا خوف و خطر رقم وصول کرتے ہیں۔اطلاعات ہیں کہ افغانستان جانے والے سیمنٹ کی گاڑیوں سے بھی باقاعدہ ’ٹیکس‘ کے نام پر بھتہ لیا جاتا ہے جو ایک اندازے کے مطابق لاکھوں ہے۔ پاکستان سے روزانہ سینکڑوں سیمنٹ اور دیگر تعمیراتی سامان کی گاڑیاں سرحد پار جاتی ہیں۔ٹرک مالکان کا کہنا ہے کہ ابتدا میں سیمنٹ کا کاروبار کرنے والے تاجر بھتہ دینے سے انکاری تھے جس پر کئی مرتبہ افغان علاقوں میں ان کا سامان چھینا گیا اور ان کے ڈرئیوروں کو اغوا کیا گیا جس کے بعد وہ بھی اب مجبوراً بھتہ دینے پر آمادہ ہوئے۔بتایا جاتا ہے کہ بھتہ دینے والے ڈرائیوروں کو افغان طالبان کی طرف سے ایک رسید بھی جاری کی جاتی ہے جس کے بعد انھیں افغانستان میں طالبان کے زیر اثر علاقوں میں مزید ٹیکس نہیں دینا پڑتا اور نہ ڈرائیوروں کو بلاوجہ تنگ کیا جاتا ہے۔ایک اڈہ مالک سے جب پوچھا گیا کہ وہ پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو اس غیر قانونی ٹیکس سے آگاہ کیوں نہیں کرتے تو اس پر انھوں نے کہا کہ اس کا بظاہر کوئی فائدہ نظر نہیں آتا کیونکہ ان کے ٹرک افغانستان جاتے ہیں اور جہاں بیشتر مضافاتی علاقوں میں افغان طالبان کا کنٹرول ہے لہٰذا پاکستانی اداروں کے نوٹس میں لانے سے فائدے کی بجائے نقصان ہو سکتا ہے۔دریں اثنا افغان طالبان نے پاکستان میں افغان ٹرکوں سے ’ٹیکس یا بھتہ‘ لینے کی اطلاعات سے لاعلمی کا اظہار کیا ہے۔افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے بی بی سی پشتو کے نامہ نگار خدائے نور ناصر سے مختصر بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کا اس ٹیکس سے کوئی لینا دینا نہیں اور نہ ان کا اس سے کوئی تعلق ہے۔ادھر گذشتہ روز پشاور میں ضلع کونسل کے اجلاس میں حزب اختلاف کے ایک کونسلر کی طرف سے اس بات پر سخت تشویش کا اظہار کیا گیا کہ پشاور شہر میں دن دہاڑے افغانستان جانے والے ٹرکوں سے کھلے عام بھتہ وصول کیا جاتا ہے اور پولیس خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔انھوں نے اجلاس میں افغان طالبان کی طرف سے ڈرائیوروں کو جاری کردہ ایک رسید بھی دکھائی جس میں تمام تفصیلات درج ہوتی ہیں۔اس موقعے پر اجلاس میں موجود پشاور کے ڈپٹی کمشنر عمران حامد شیخ نے ارکان کو یقین دہانی کرائی کہ یہ ایک اہم معاملہ ہے جس پر وہ پولیس کے ساتھ بات کرکے متعلقہ افراد کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔تاہم اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر سے بار بار رابطے کی کوشش کی گئی تاہم اس معاملے پر تاحال ان کا کوئی جواب موصول نہیں ہوا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

زمرہ جات:   پاکستان ،
دیگر ایجنسیوں سے (آراس‌اس ریدر)